تازہ ترین

سرکاری سکولوں میں معیاری تعلیم کی فراہمی

سرینگر// ضلع انتظامیہ نے سرینگر میں 25سرکاری سکولوں کو سمارٹ کلاسوں کیلئے منتخب کیا ہے جس میں عملے کی تربیت کے علاوہ جدید درس و تدریس کے مواد کی فراہمی ہوگی۔اس اقدام کا مقصد سرکاری سکولوں کو ٹیکنالوجی سے آراستہ کرنا اور درس و تدریس کے تجربے کو بہتر بنانا ہے۔ منتخب سکولوں کے اساتذہ نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ایجوکیشنل پلاننگ اینڈ ایڈمنسٹریشن کے تیار کردہ صلاحیت سازی کے ماڈیولز سے گذریں گے۔ ضلع ترقیاتی کمشنر کی سربراہی میں عمل درآمد کمیٹی میںجوائنٹ ڈائریکٹر پلاننگ ، سپرانٹنڈنٹ انجینئر پی ڈبلیو ڈی ، چیف ایجوکیشن آفیسر ، ڈسٹرکٹ ایجوکیشن پلاننگ افسران کے ساتھ ساتھ  ماہرین تعلیم اس کے نمائندے ہوں گے۔یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ ضلع انتظامیہ نے اس سے قبل سرینگر سمارٹ سٹی لمیٹڈ کے اشتراک سے 25 سمارٹ سکول قائم کئے تھے جن کا افتتاح رواں سال کے شروع میں 3600 سے زیادہ طلباء  کے اندراج کے ساتھ

ساکھشر بھارت مشن ملازمین اور آئی سی ڈی ایس ہیلپروں کے احتجاجی مظاہرے

 سرینگر//ساکھشر بھارت مشن (ایس بی ایم )فورم نے جمعرات کو سرینگر کے پریس کالونی میں احتجاجی مظاہرہ کیا اور سرکار سے مستقلی کیلئے پالیسی مرتب کرنے کا مطالبہ کیا۔اپنے مطالبے کو لیکر نعرہ بازی کرتے ہوئے احتجاجیوں نے بتایا کہ سرکار نے انہیں سال 2011ء میں میرٹ کے بنیاد پر ہر پنچایت سے ایک مرد اور ایک خاتون امیدوار کوایک پنل کے ذریعے منتخب کیا ،جس کے بعد ان ملازمین سے اپنے فرائض خوش اسلوبی کے ساتھ انجام دئے ہیں ۔ انہوں نے بتایا سرکار کی جانب سے انہیں صرف 2000ہزار روپے ماہوار تنخواہ دی جاتی تھی تاہم 9سال گزرجانے کے باجودابھی تک سرکار 6ہزار کے قریب اعلیٰ تعلیم یافتہ امیدواروں کے حق میں جاب پالیسی ترتیب دینے میں ناکام رہی ہے ۔ا انہوں نے کہا کہ سرکار جلد از جلد ساکشر بھارت مشن کے اساتذہ کے لئے بھی کوئی مستقل جاب پالیسی مرتب کرے کیونکہ گزشتہ9سال کے دوران بیشتر امیدوار نوکری کے لئے مقررہ حد بھ

پنچایت کانفرنس کا سرینگر میں احتجاج

سرینگر//آل جموں و کشمیر پنچایت کانفرنس نے جمعرات کو اپنے مطالبات کے حق میں سرینگر کی پریس کالونی میں احتجاج کیا ۔پنچایت کانفرنس کے مطالبات میں 73 ویں آئینی ترمیم کو لاگو کرنا، بیک ٹو ولیج پروگرام کے تیسرے مرحلے کو شروع کرنے سے قبل ہر پنچایت کے حق میں 25 لاکھ روپے واگزار کرنا اور پنچوں و سرپنچوں کے مشاہرے میں اضافہ کرنا شامل ہیں۔  احتجاج کے دوران پنچایت کانفرنس کے ایک لیڈر نے بتایا کہ بیک ٹوولیج اول اور دوم کے دوران جو لوگوں سے وعدے کئے گئے تھے وہ ابھی تک پورے نہیں ہوئے ہیں۔ لوگ ہم سے پوچھ رہے ہیں کہ کام کیوں نہیں ہوئے۔ لیکن ہمارے پاس کوئی جواب نہیں ہے'۔ یو این آئی  18پروازوں میں2554 مسافر سرینگر پہنچے  

شکایات کا ازالہ شفاف حکمرانی کی فراہمی کا اہم حصہ:فاروق خان

سری نگر//لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر فاروق خان نے کل کہا ہے کہ جموں و کشمیر اِنتظامیہ کی شکایات کے ازالے کا میکانزم اچھی اور شفاف حکمرانی کی فراہمی کا ایک اہم حصہ بن گیا ہے۔مشیر خان نے کل لیفٹیننٹ گورنر شکایتی سیل چرچ لین میں ہفتہ وار عوامی شنوائی کے دوران مختلف عوامی وَفود اور اَفراد سے ملے اور اُن کے مطالبات اور مسائل سنے۔کشمیر کے مختلف علاقوں سے تعلق رکھنے والے 120 عوامی وَفود اور اَفراد نے محکمہ بجلی ، محکمہ حج و اوقاف ، سماجی بہبود ، قبائلی امور ، ثقافت ، زراعت ، باغبانی اور دیہی ترقی اور پنچایتی راج ، سکولی تعلیم ، تکنیکی تعلیم دیگر محکموں کے علاوہ دیگر عوامی اہمیت اور ترقیاتی امور سے متعلق متعدد معاملات مشیر موصوف کو گوش گذار کئے۔ اُنہوں نے ان مسائل اورمطالبات کا فوری اَزالہ یقینی بنانے کے لئے مشیر کی مداخلت طلب کی۔چند ایک مسائل مشیرموصوف نے موقعہ پر ہی متعلقہ محکموں کو فوری طور حل ک

ایس ایم سی میں چیف اکاونٹ آفیسر کی کرسی خالی

 سرینگر// سرینگر مونسپل کارپوریشن میں چیف اکاونٹ افسر کی عدم موجودگی کے نتیجے میں کارپوریشن کے امورات پر منفی اثرات مرتب ہونے سے ملازمین اور تعمیراتی معماروں کے سخت مشکلات میں آنے سے براہ راست کام کاج متاثر ہوا ہے۔مونسپل کانٹریکٹرس ایسو سی ایشن کا کہنا ہے کہ گزشتہ5ماہ سے اس حساس و اہم ادارے میں کئی بار چیف اکاونٹ افسران کی تعیناتی عمل میں لائی گئی اور کئی ماہ کے دوران ان کے تبادلے بھی ہوئے،جس کی وجہ سے براہ راست کارپوریشن کے کام کاج پر منفی اثر مرتب ہوئے۔ایسو سی ایشن کے صدر ارشد احمد بٹ نے کہا کہ ایسا نظر آرہا ہے کہ محکمہ خزانہ کے کمشنر دانستہ طور پر اس حساس ادارے کو نشانہ بنا رہی ہے،اگرنہ ایسا نہیں ہوتا کہ مستقل چیف اکاونٹ افسر کی تعیناتی عمل میں لائی جاتی۔انہوں نے کہا کہ کرونا کے اس دور میں وادی کے سب سے بڑے بلدیہ ادارے میں چیف اکاونٹ افسر کی کرسی خالی ہونا معنی خیز ہے۔انہوںنے

تازہ ترین