مسائل کا حل موجود حکومت کی اولین ترجیح:بصیر خان

سری نگر//ہفتہ وار شنوائی پروگرام کے تحت کل یہاں چرچ لین سونہ وار کے شکایتی سیل میں لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر بصیر احمد خان نے متعدد وَفود اور اَفراد سے ملے جنہوں نے مسائل اور شکایات پیش کر کے اُن کا حل طلب کیا۔زائد از ایک سو وَفود اور اَفراد مشیر موصوف سے ملے اور بنیادی شہری سہولیات تعلیم ، سڑک رابطہ دیگر ترقیاتی ضروریات وغیرہ سے متعلق مسائل پیش کئے جبکہ سرکاری ملازمین پر مشتمل چند وفود نے ملازمتوں سے متعلق مسائل بھی پیش کئے ۔اس موقعہ پرمشیر نے کہا کہ موجودہ حکومت کی ترجیح اوّل مفاد عامہ ہے اور عوامی شکایات کے ازالے کی جانب توجہ مرکوز کی جارہی ہے۔جے کے سمینٹس لمٹیڈ کے ملازمین پر مشتمل وفد نے تنخواہوں کی واگذاری کی مانگ کی۔ میونسپل کمیٹی ڈورو کے وفد نے ِلسر کوکر ناگ گرڈ سٹیشن میں ٹرانسفارمر کی توسیع کی مانگ کی ۔ٹھیکداروں پر مشتمل ایک وفد نے 2019ء کے دوران محکمہ تعلیم کے لئے کئے گئے تعمیرات

۔21ماہ سے بند پڑی تنخواہوں کی واگذاری اور دیگر مطالبات

 سرینگر//محکمہ آئی سی ڈی ایس میں کام کر رہی ہیلپروںاور سُپر وائزوں نے کل پریس کالونی میںاپنی مانگوں کو لے کر زور داراحتجاجی مظاہرہ کیا ہے ۔احتجاجی ملازمین کہنا تھا کہ ان کی تنخواہ21ماہ سے رکی پڑی ہے جس کے نتیجے میں یہ ملازمین طرح طرح کے مشکلات کا سامنا کر رہے ہیں ۔احتجاجیوںنے ہاتھوں میں بینر اور پلے کارڑ اٹھائے تھے ۔انہوں نے بتایا ہم محکمہ کے مستقل ملازمین ہیں لیکن ہمارے ساتھ کیجول ملازمین سے بُرا برتاو کیا جا رہا ہے۔احتجاجی سپر وئزوں کا کہنا تھا وہ بچوں کی فلاح بہبودکے لئے کام کر رہی ہیں تاہم ہمارے اپنے بچے مشکلات سے دو چار ہو رہے ہیں ۔انہوں نے اس حوالے سے ایل جی انتظامیہ اورمحکمے کے اعلیٰ حکام سے مداخلت کی اپیل کی ہے۔اس دوران محکمہ صحت میں عارضی بنیادوں پر کام کرنے والے ڈرائیوروں، جز وقتی خاکروبوں اور ہلپروں نے بھی پریس کالونی میں اپنے مطالبات کے حق میں احتجاج درج کیا۔احتجاجی &

جی اے میربھوک ہڑتال پر بیٹھے پنڈتوں سے ملاقی

سرینگر//پردیش کانگریس کے صدر جی اے میر نے کل گنپت یار حبہ کدل جاکرگنیش مندر میں اپنے کئی مطالبات کو لے کر بھوک ہڑتال پربیٹھے کشمیری پنڈت سنگھرش سمتی کے ارکین کے ساتھ  یکجہتی کا اظہار کیا ۔انہوں نے بھوک ہڑتال پر بیٹھے اراکین کو مکمل حمایت دینے کی یقین دہانی کراتے ہوئے مرکزی سرکار اور ایل جی انتظامیہ پر زور دیا کہ کشمیری پنڈت سنگھرش سمتی کے جائز مطالبات کو پورا کیا جائے ۔ سنگھرش سمتی کے مطالبات میں تعلیم یافتہ کشمیری پنڈت بے روزگار نوجوانوں کو نوکریاں فراہم کرنے کے بارے میں ہائی کورٹ اور وزارت امور داخلہ کے احکامات کی عمل آوری، کشمیر میں ہی رہائش پذیر 808 پنڈت گھرانوں کو ماہانہ مالی امداد کی فراہمی اور ہجرت نہ کرنے والے مستحق کشمیری پنڈتوں کو رہائشی سہولیات کی فراہمی خاص طور پر قابل ذکر ہیں۔اس موقعہ پر جی اے میر نے کہا کہ جموں و کشمیر میں لوگوں کو درپیش مسائل کی حل کرنے کی جانب کوئ

بٹہ مالو میں دولہے کے خلاف کیس درج

سرینگر//پولیس نے بٹہ مالو علاقے میں شادی بیاہ کی ایک تقریب کے دوران پٹاخے سر کنے پر دولہے کے خلاف مقدمہ درج کر لیا ہے۔ پولیس کی جانب سے منگل کو جاری ایک بیان میں کہا گیا کہ'پولیس تھانہ بٹہ مالو نے شادی بیاہ کی ایک تقریب کے دوران پٹاخوں کا استعمال کرنے پر دولہے کے خلاف مقدمہ درج کر لیا ہے'۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ ضلع سری نگر کے حدود میں پٹاخوں کے استعمال پر پابندی عائد ہے۔ اس سلسلے میں ایک حکم نامہ ڈپٹی کمشنر سری نگر پہلے ہی جاری کر چکے ہیں۔پولیس بیان میں کہا گیا ہے کہ بٹہ مالو میں گذشتہ رات پٹاخوں کی آواز سنی گئی اور انکوائری کرنے پر معلوم ہوا کہ پٹاخوں کا استعمال شادی کے دوران دولہے کے دوستوں اور رشتہ داروں کی جانب سے کیا گیا ہے۔پولیس تھانہ بٹہ مالو میں آئی پی سی کی دفعہ 188 کے تحت ایف آئی آر زیر نمبر 138 آف 2020 درج کی گئی ہے۔ معاملے کی تحقیقات جاری ہے۔ پولیس نے لوگوں سے

مزید خبرں

حضرت شیخ حمزہ مخدوم ؒ کا عرس،ایام متبرکہ شروع ساگر کی زائرین کیلئے مناسب انتظامات کی اپیل    سرینگر//نیشنل کانفرنس نے عرس مبارک حضرت محبوب العالم شیخ حمزہ مخدوم ؒ کے سلسلے میں زائرین اور عقیدت مندوں کیلئے خاطر خواہ اور مناسب انتظامات رکھنے کی اپیل کی ہے۔ پارٹی کے جنرل سکریٹری علی محمد ساگر نے انتظامیہ سے عرس کے ایام متبرکہ ،جو کل یعنی 11صفر مطابق 29ستمبر سے شروع ہوگئے ہیں ،کے دوران زائرین کیلئے معقول اور مناسب انتظامات، خصوصاً بجلی،پینے کا پانی، صحت و صفائی اور ٹرانسپورٹ ، میسر رکھنے کی اپیل کی تاکہ عقیدت مندوں کسی بھی قسم کی مشکلات پیش نہ آئے۔ انہوں نے کہا کہ اہل وادی کو اس درگاہ کے ساتھ صدیوں سے والہانہ عقیدت رہی ہے اور ہمیشہ یہاں عقیدت مندوں کا تانتا بندھا رہتا ہے۔ ساگر نے انتظامیہ کو تاکید کہ وہ ماضی کی طرح اس درگاہِ عالیہ پر وہ تمام انتظامات رکھیں جو حسب قدی

کشمیری پنڈت سنگھرش سمتی کی بھوک ہڑتال کا 9واں دن

سرینگر//کشمیری پنڈت سنگھرش سمتی کی مطالبات منوانے کے حق میں بھوک ہڑتال کل بھی جاری رہی۔بتادیں کہ کے سمتی کے اراکین 20ستمبر سے گنیش مندر گنپت یار حبہ کدل میں اپنے کئی مطالبات کو لے کر بھوک ہڑتال پر ہیں۔بھوک ہڑتال پر بیٹھے سنگھرش سمتی کے صدر سنجے کمار ٹکو کی حالت کل متغیر ہوئی ،ان کا بلڈ پریشر کم ہوگیا ہے جبکہ وہ جسمانی طور کافی کمزور ہوئے ہیں ۔اس دوران سمتی کے باقی ممبران کے ساتھ سندیپ کول نے بھی بھوک ہڑتال شروع کی ہے ۔ سنگھرش سمتی نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ گذشتہ192گھنٹوں سے ہڑتال پر بیٹھے ارکین کے پاس انتظامیہ کا کوئی اہلکار نہیں آیا ۔بیان میں کہا گیا ہے کہ جب تک ان کے مطالبات پورے نہیں ہونگے ،بھوک ہڑتال جاری رہے گی ۔سنجے کمار ٹکو نے کہا کہ ان کے مطالبات جائز ہیں تاہم انتظامیہ سوئی ہوئی ہے اور کشمیری پنڈتوں کی زندگی کے ساتھ کھیل رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہائی کورٹ کی طرف سے جاری کی گئی

ویب آف سائنس امریکہ کے اشتراک سے کشمیر یونیورسٹی کے

سرینگر// کشمیر یونیورسٹی کے بائیو ریسورس شعبہ نے کل ویب آف سائنس امریکہ کے اشتراک سے یک روزہ آن لائین ورکشاپ منعقد کیا ۔اس ورکشاپ میں ملک کے کئی اداروں جن میں کشمیر یونیورسٹی ،سنٹرل یونیورسٹی ،سکاسٹ ،اسلامک یونیورسٹی ،علی گڈھ مسلم یونیورسٹی ،کلسٹر یونیورسٹی ،سکمز ،جی ایم سی ،این آئی ٹی ،آئی سی ایس ایس آر نئی دلی کے ہیڈ آف ڈیپارٹمنٹوں،فیکلٹی ممبران ،سکالروں اور کالج پروفیسروں نے شرکت کی ۔ڈین ریسرچ کشمیر یونیورسٹی پروفیسر داکٹر شکیل احمد رومشو نے ورکشاپ کا افتتاح کیا ۔ اپنے کلیدی خطاب میں انہوں نے بتایا کہ تحقیق کے فوائد پیشہ ورانہ ترقی سے آگے بھی تفصیلی تحقیق کے ذریعے پائے جاتے ہیں ، محققین تنقیدی سوچ کی مہارت کو بھی ترقی دیتے ہیں ۔شعبہ بائیو رس کے کارڈی نیٹرڈاکٹر منظور احمد میر نے ورکشاپ میں شرکت کرنے پر تمام شرکاء کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ علمی اور تحقیقی سرگرمیوں کو برقرار ر

اضافی کرایہ وصولنے کے باوجودگاڑیوں میں بھیڑ

سرینگر// وادی میں پبلک ٹرانسپورٹ کی سرگرمیوں کو اگرچہ بحال کردیا گیا تاہم شہر سرینگر میںبیشترٹرانسپورٹروں کی جانب سے ہیلتھ ایڈوائزری کو بالائے طاق رکھا جارہا ہے جس کے نتیجے میں کوروناوائرس تیزی کے ساتھ پھیل جانے کا امکان بڑھ گیا ہے ۔ کووڈ19کے چلتے سرکار کی جانب سے پبلک ٹرانسپورٹ کی سرگرمیوں کو کئی شراط پر بحال کیا گیا ہے جن میں مسافر گاڑیوں، سومو اور دیگر گاڑیوں میں سماجی دوری برقرارکھنے کے ساتھ ساتھ مسافروں کیلئے ماسک کا استعمال بھی لازمی بنایا گیا ہے ۔ سرکار نے اگرچہ ٹرانسپورٹروں سے کہا ہے کہ وہ مسافر کرایہ میں 30فیصدی اضافہ کے ساتھ گاڑیوں میں کم مسافروں کوسوار کریںتاہم ٹرانسپورٹروں نے ایک طرف 30فیصدی کرایہ میں اضافہ تو کردیا گیا ہے لیکن اس کے ساتھ ہی مسافروں کو گاڑیوں میں کھچا کھچ لادا جارہا ہے ۔شہر سرینگر کے کئی روٹوں پر میٹا دار سواریوں سے کچھا کھچ بھرے ہوتے ہیں اور اکثر و بیشتر ک

مزید خبرں

علی محمد ساگر کا  اظہار تشکر سرینگر// نیشنل کانفرنس کے جنرل سیکریٹری علی محمد ساگرنے اُنے تمام حضرات کا ذاتی طور پر اظہار تشکر ادا کیا جنہوں نے ان کے بہنوئی خواجہ غلام نبی گنائی آف اردو باذار فتح کدل کے انتقال پر تعزیت کی اور مرحوم کی تجہیز و تکفین اور نماز جنازہ فاتحہ خوانی اور ایصال ثواب کی مجلس میں شرکت کی۔انہوں نے نیشنل کانفرنس کے صدرڈاکٹر فاروق نائب صدر عمر عبداللہ ، معاون جنرل سیکریٹری ڈاکٹر شیخ مصطفی کمال و تما م پارٹی لیڈران، ضلع صدر بلاک صدور و محلہ صدور صاحبان یوتھ اور خواتین ونگ کے عہدیداران کا بھی شکریہ ادا کیا۔ الحاج پیرزادہ سید محمد شفع قریشی الحاج سید محمد حسین قادری، نعت خوان رفیق احمد زرگر خصوصاََ سید صاحبزادہ مجتبیٰ جنہوں نے مرحوم کی ناز جنازہ پڑھائی اور الحاج طاہر احمد رفیقی جنہوں نے اجتماعی فاتحہ خوانی کی پیشوائی کی اس کے ساتھ ساتھ علاقہ اردو بازار ، شاہ م

حیدپورہ اور بمنہ بائی پاس پر کراسنگ بند | ٹرانسپورٹر اورمسافرپریشان ، حکام سے مداخلت کی اپیل

سرینگر //حیدرپورہ سمیت شہر کے متعدد روٹوں پر ٹریفک کیلئے کراسنگ بند ہونے کے نتیجے میں مسافروں کو مشکلات کا سامنا ہے، جبکہ گاڑیوں کی آمد ورفت میں سخت دقتیں پیش آرہی ہیں۔ مقامی لوگوں نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ حید پورہ بائی پاس کراسنگ کو بند رکھا گیا ہے جس کے نتیجے میںمسافروں کو کراسنگ کیلئے پیر باغ جانا پڑھ رہا ہے جس سے نہ صرف ان کا وقت ضایع ہوتا ہے بلکہ ٹریفک جامنگ کا سلسلہ بھی رہتا ہے ۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ اگر بائی پاس پر سگنل لائٹ نصب ہیں اور وہاں پر محکمہ کے اہلکار بھی تعینات رہتے ہیں ،تو اس کے باوجود بھی وہاں کراسنگ کو بند رکھنے کا کوئی جواز نہیں ہے ۔ مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ  5اگست 2019 کے بعد شہر میں بندشیں ہٹنے کا نام ہی نہیں لے رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جموں وکشمیر کی خصوصی پوزیشن کے خاتمہ کے بعد حکام نے ممکنہ احتجاجی مظاہروں کے پیش نظر شہر کو سیل کر دیا تھا اور لوگ

آبی ذخیرہ باباڈیمب کا وجود خطرے میں | آلودہ پانی سے اُٹھنے والی بدبو سے آبادی پریشان

سرینگر//سی این آئی/شہرسرینگر کا مشہور آبی ذخیرہ ’’باباڈیمب‘‘تباہی کے دہانے پر پہنچ چکا ہے ، جہاں اب اس کا پانی زہر الودہ بن گیا ہے، وہیں اس آبی زخیرہ کے ایک بڑے حصے پر خود غرض عناصر نے قبضہ کرکے اس کو زرعی اراضی میں تبدیل کردیا ہے اور اس پر سبزیاں اُگائی جارہی ہیں ۔ نہرکابیشترحصہ اب دلدل میں تبدیل ہوچکا ہے ۔یہ خوبصورت دریاء تیزی کے ساتھ کچرے کے مرکز میں تبدیل ہوتاجارہا ہے ،ایک وقت وہ تھا جب لوگ اس دریاء کا پانی پینے کیلئے استعمال میں لاتے تھے لیکن اب اس کا پانی اس قدر آلودہ ہوچکا ہے کہ پانی چھونے سے بھی کئی طرح کی بیماریاں لگنے کا احتمال رہتا ہے ۔ اس چھوٹے سے دریاء میں شہر سرینگر کی ڈرینوں سے نکلنے والا گندہ پانی بشمول گندگی وغلاظت اس جھیل میں چلے جانے سے وہ ایک دلدل کی شکل اختیارکررہی ہے ۔مقامی لوگ کہتے ہیں کہ گندگی اوربدبو کی وجہ سے دریاء کے قریب ٹھہرنابھی

شہر خاص میں آوارہ کتوں کا راج | نائد کدل ،مخدوم منڈو سمیت دیگر علاقوں میں لوگ پریشان

سرینگر//شہر خاص کے متعدد علاقوںمیں آوارہ کتوں کی موجودگی سے عام شہریوں کیلئے شام کے بعد گھروں سے باہر نکلنا دشوار بن گیا ہے ۔شہر کے رعناواری، خانیار، نوہٹہ،راجوری کدل، بہوری کدل،مہاراج گنج، عالی کدل، نائد کدل، مخدوم منڈو ، کلاش پورہ زینہ کدل، گوجوارہ، حول ، حاکہ بازار، دیوی آنگن ہاری پربت و دیگر علاقوںمیں آوارہ کتوں کی ہڑبونگ سے لوگوں میں خوف و ہراس پھیل گیا ہے ۔ مقامی لوگوں کے مطابق کتوں کی تعداد اس قدر بڑھ گئی ہے کہ لوگ سڑکوں پر چلنے میں خوف محسوس کررہے ہیں ۔ لوگوں کے مطابق شام کے بعد انہوں نے اپنے گھروں سے باہر نکلنا ہی چھوڑ دیا ہے، اگر مجبوری کے وقت کوئی شہر ی کسی کام کے سلسلے میں گھر سے باہر نکلتا ہے تو اس کے پیچھے درجن بھر آوارہ کتوں لگ جاتے ہیں ۔ان علاقوں کے مکینوں کا کہنا ہے کہ آوارہ کتوں کی تعداد اس قدر بڑھ گئی ہے کہ ایک ایک دروازے کے باہر چار چار کتے کھڑے رہتے ہیں ۔ نائد

شاہ آباد سعیدہ کدل کے لوگ محکمہ تعمیرات عامہ سے نالاں | 2برس قبل ڈرنیج کی تعمیر کیلئے کھودی گئی سڑکیں مرمت کی منتظر

 سرینگر //شاہ آباد سعیدہ کدل میںڈرنیج کیلئے کھودی گئی سڑکیں ابھی بھی مرمت کی منتظر ہیں، تاہم حکام اس جانب کوئی بھی دھیان نہیں دے رہی ہے ۔ سال 2018میں امرت اسکیم کے تحت جھیل ڈل میں گندے پانی کی نکاسی کیلئے ڈرنیج کی تعمیر کیلئے کھودی گئی سڑکیں ابھی بھی مرمت کی منتظر ہیں اور یہ سڑکیں  اب لوگوں کیلئے درد سر بنی ہوئی ہیں۔ مقامی لوگوں نے بتایا کہ محکمہ یو ای ای ڈی نے ڈرنیج کیلئے کھودی گئی سڑک کی مرمت نہیں کی اور نہ ہی محکمہ آر اینڈ بی نے سڑک پر میگڈیم بچھانے کیلئے کوئی اقدام اٹھایا ہے۔ شاہ آباد میں رہنے والے ہلال احمد نے بتایا کہ سڑک کی خستہ حالت کے نتیجے میں لوگوں کو پریشانی کا سامنا ہے ۔ہلال احمد نے بتایا کہ سڑک پر بزرگوں اور بچوں کا چلنا مشکل ہوگیا ہے جبکہ آنے والے موسم سرما میں یہ سڑک لوگوں کیلئے مزید مشکلات پیدا کرسکتی ہے۔ ہلال نے مزید بتایا کہ جب بھی محکمہ یو ای ای ڈی سے

بصیر خان کل عوامی شکایات سنیں گے

سرینگر//لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر بصیر احمد خان 29 ستمبر یعنی منگل کو صبح 10بجے سرینگر میں عوامی شکایات کی شنوائی کریں گئے ۔وہ منگل کو صبح کے وقت لیفٹیننٹ گورنرس شکایتی سیل چرچ لین سونہ وار سرینگر میں موجود رہیں گئے ۔ عوامی وَفود اور اَفراد جو اپنی شکایات و مانگیں حکومت کی نوٹس میں لانا چاہتے ہیں وہ  مذکورہ جگہ اور وقت پر مشیر سے مل سکتے ہیں ۔مشیر سے مذکورہ جگہ سے ملنے والے لوگوں سے استدعا کی گئی ہے کہ وہ کویڈ۔ 19 وَبا کے پیش نظر صحت رہنما خطوط اور پروٹوکال پر عمل پیرا رہیںاور وفود میں تین سے زیادہ اَفراد نہ ہوں۔  

مزید 2432مسافروں کی آمد | 16 پروازیں کے ذریعے سرینگر پہنچے

سرینگر//کویڈ 19کے سبب بیروان ممالک اور ریاست میں درماندہ ہوئے افراد کی گھر واپسی کا سلسلہ جاری ہے اور اتوار کو مزید 2432مسافر وںکو لے کر16 پروازیں سرینگر کے ہوائی اَڈے پر اتریں ہیں۔ جموں وکشمیر یونین ٹریٹری میں گھریلو پروازو ں کے دوبارہ شروع ہونے کے 126 واں دِن 3,908مسافروں کو لے کر اتوارکو 27پروازیں جموں اور سرینگرکے ہوائی اڈے پر اتریں۔ان میں سے 2432مسافروں کو لے کر16 پروازیں سرینگر کے ہوائی اَڈے پر اتریں ہیںاور اس طرح ابھی تک سرینگر ائیر پورٹ پر کل1,795گھریلو پروازیںاُتریں ہیں ۔ ہوائی اَڈے پر اُترتے ہی تمام مسافروں کا کویڈ۔19ٹیسٹ کیا گیا ۔حکومت نے ہوائی پروازوں کے ذریعے یوٹی میں وارِد ہونے والے تمام مسافروں کی آمد سکریننگ نمونے لینے اور قرنطین مراکز کی طرف لے جانے کے لئے معقول ٹرانسپورٹ اِنتظامات کئے گئے ہیں۔      

ہارٹیکلچر گریجویٹوں کا پریس کالونی میں احتجاج | نوکریوں کی فراہمی کا مطالبہ ،ایل جی سے مداخلت کی اپیل

سرینگر// جموں و کشمیر ہارٹیکلچر گریجویٹس نے ہفتے کو یہاں پریس کالونی میں اپنے مطالبات خاص کر نوکریوں کی فراہمی کے لئے احتجاج درج کیا۔احتجاجی 'ہمیں انصاف چاہئے' کے نعرے لگا رہے تھے۔ انہوں نے پلے کارڈس بھی اٹھا رکھے تھے جن پر بھی انصاف کی فراہمی کے لئے نعرے درج تھے۔اس موقع پر ایک احتجاجی ہارٹیکلچر گریجویٹ نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ ہماری آج تک کبھی کوئی ریکروٹمنٹ نہیں ہوئی ہے۔انہوں نے کہاکہ 'حکومت نے سال 2007 میں یہ ڈگریاں شروع کی ہیں ہم نے ہارٹیکلچر میں پی ایچ ڈی کیا ہے لیکن آج تک ہماری کبھی بھی ریکروٹمنٹ نہیں ہوئی ہے'۔موصوف نے کہا کہ حد یہ ہے کہ ارباب اقتدار ہم سے کہتے ہیں کہ ڈگریاں کیوں کیں۔انہوں نے کہاکہ ہم جب افسروں کے پاس جاتے ہیں تو وہ ہمیں تجارت کرنے کا مشورہ دیتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اب جو ریکروٹمنٹ ہو رہی ہے اس میں بھی ہارٹیکلچر کے لئے کوئی پوسٹ نہیں ہے۔احتجاجی

اردو کونسل کی طرف سے آن لائن تحریری اردو مضمون نگاری مقابلہ | شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے طلاب کوانعامات سے نوازا گیا

سرینگر//اردو کو جموں کشمیر کی روح قرار دیتے ہوئے ماہرین تعلیم ،صحافیوں اور ادب نوازوں نے کہا کہ مرکزی زیر انتظام والے اس علاقے میں80فیصد آبادی اردو زبان بولتی ہے،جو کہ مختلف خطوں کے لوگوں کے درمیان پل کی حیثیت کام کرتی ہے۔سرینگر میں جموں کشمیر اردو کونسل کی طرف سے آن لائن تحریری اردو مضمون نگاری ’’ اردو زبان ہماری ضرورت‘‘مقابلے میں شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے طلاب کو انعامات اور اعزازات سے نوازا گیا۔تقریب پر پرنسپل سیکریٹری اسکول ایجوکیشن و سِکل ڈیولپمنٹ ڈاکٹر اصغر حسن سامون مہمانِ خصوصی تھے جبکہ دیگر مہمانوں میں روزنامہ سرینگر ٹائمز کے ایڈیٹر اور معروف کارٹونسٹ بشیر احمد بشیر، پروفیسر نذیر احمد ملک، وحشی سید، جی این وار اورجوائنٹ ڈائریکڑ ایجوکیشن عابد حسین شامل تھے۔ اردوکونسل کے صدر ڈاکٹر جاوید اقبال نے صداری خطبے کے دوران اردو زبان کے ماضی ،حال اور م

پائین شہرکے کئی علاقوں میں پانی کی قلت | محکمہ جل شکتی کے خلاف لوگوں میں غم و غصہ

سرینگر// پائین شہر کے کئی علاقوں میں پانی کی شدیدت قلت نے لوگوں کو سخت پریشان کردیا ہے۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ پانی صبح و شام چند گھنٹوں تک رہتا ہے تاہم دن بھر پانی کی سپلائی بند رکھی جاتی ہے جس کے باعث لوگوں کو شدید پریشانی لاحق ہوتی ہے ۔ پائین شہر کے علاقے خانیار، نائو پورہ، رعناواری ، نوہٹہ ، رنگر سٹاپ، حول ، بہوری کدل، عالی کدل اور صراف کدل علاقوںمیں پینے کے پانی کی شدید قلت سے لوگوں کو شدید دشواریاں پیش آرہی ہے ۔ لوگوںنے کہا کہ محکمہ جل شکتی کی جانب سے صبح اور شام کو چند گھنٹوں تک پانی رہتا ہے اور پھر پانی کی سپلائی کو دن بھر کیلئے منقطع رکھا جاتا ہے جس کے باعث لوگ پریشان ہوجاتے ہیں ۔ لوگوں نے کہا کہ پانی کی کمی کا مسئلہ امسال بڑ ھ گیا ہے جبکہ گزشتہ برسوں پانی کی اس قدر قلت نہیں پائی جاتی تھی ۔ لوگوں نے کہا کہ محکمہ کے متعلقہ ذمہ داروں سے اگرچہ اس بارے میں کئی بار بات کی گئی تاہم پا

شمالی کشمیر سے سرینگر آنے والے مسافر پریشان | بٹہ ما لو بس اڈے کو دوبار بحال کر نے کا مطا لبہ

سرینگر//شمالی کشمیر کے لاکھوں عوام بشمول ٹرانسپورٹروں نے ایک مر تبہ پھر تاریخی اورقدیم ترین بٹہ مالوبس اڈے کو دوبار بحال کر نے کا مطا لبہ کیا ہے ۔3سا ل قبل پی ڈی پی بھا جپا حکومت کی طرف سے بٹہ مالو کے جنرل بس سٹینڈ کو پارم پورہ منتقل کرنے کے منصو بہ کے خلاف شمالی کشمیر کے کپواڑہ، ہندواڑہ ، لولاب، اوڑی ، بارہمولہ سوپور اور دیگر قصبہ جات کے علاوہ وسطی ضلع بڈ گام اور گا ندربل کے لوگوں نے مخالفت کرتے ہوئے کہا تھاکہ اس اقدام سے لوگوں کو مشکلات کا ہی سامنا کرنا پڑے گا اور مسافروں پر سخت بوجھ پڑے گا ۔ ٹرانسپورٹروں کے ساتھ ساتھ شمالی کشمیرسے تعلق رکھنے والے اْن لاکھوں مسافسروں بشمول ملازمین ،تاجروں ،طلاب اورمریضوں وغیرہ میں سخت ناراضگی پائی جاتی ہے جوکم کرایہ ہونے کی وجہ سے عمومی طوربسوں اورمیٹاڈاروںمیں ہی سفرکیاکرتے تھے۔سرکاری دفاترمیں تعینات ایسے ملازموں،پرائیویٹ نوکری کرنے والوں،طلبائوطالبا

غیر قانونی تعمیرات کے خلاف لائوڈا کی مہم | حبک ،سعدہ کدل،نشاط اور رعناواری متعدد ڈھانچے منہدم

سرینگر// جھیل ڈل اور اسکے گرد و نواح میں ناجائز تعمیرات کے خلاف مہم کو جاری رکھتے ہوئے لیکس اینڈ واٹر ویز ڈیولپمنٹ اتھارٹی نے کل حبک ،سعدہ کدل،نشاط اور رعناواری علاقوں میں متعدد ڈھانچوں کو منہدم کیا ۔لائوڈا نے غیر قانونی طور تعمیر کرنے والے افراد کے خلاف کیس درج کرائے ۔لائوڈا کے بیان کے مطابق کچھ خود غرض عناصر نے کورونا بحران اور لاک ڈائون کا ناجائز فایداٹھا کر غیر قانونی طور تعمیرات کھڑے کئے ہیں ۔بیان کے مطابق غیر قانونی طور ڈھانچے تعمیر کرنے والوں کے خلاف سختی سے نمٹا جائے گا اور انہدامی کارروائی جاری رہے گی ۔لاوڈا نے ٹپرمالکان اور تعمیراتی میٹریل لے جانے والی گاڑیوں کے مالکان کو متنبہ کیا ہے کہ وہڈل اور نگین جھیلوں اور اس کے مضافاتی علاقوں میں بغیر اجازت تعمیراتی میٹریل لے جانے سے باز آجائیں ۔