معیشت اور عوامی صحت…توازن برقرار رکھیں

کورونا وائرس کے پھیلائو میں فی الحال بتدریج اضافہ ہورہا ہے اور مستقبل قریب میں اس وباء سے خلاصی کی کوئی اُمید نظر نہیں آرہی ہے ۔گوکہ اس بات سے انکار نہیں کیاجاسکتا ہے کہ دنیا بھر کے ساتھ ساتھ ہمارے ملک اور جموںوکشمیر میں بھی حکومتی سطح پر اس وباء سے نمٹنے کی کوششیں جاری رہیں تاہم فی الحال نتائج کوئی اطمینان بخش نہیں ہیں۔اب تو یہ بات تقریباً طے ہوچکی ہے کہ اس وائرس کا ویکسین تیار ہونے میں اگر جلدی بھی ہوئی تو اس سال کے اختتام سے قبل نہیں آئے گاجبکہ دوسری جانب انسانی جسم میں وبائی عفونت کی تشخیص کیلئے جو انٹی باڈی ٹیسٹ کٹس منگوائے گئے ہیں،ان کے معیار پر عالمی سطح پر سوالات اٹھنے لگے ہیں اور خودعالمی ادارہ صحت سے لیکر امریکہ نے بھی متعدد خدشات کا اظہار کیا ۔جہاں تک ہمارے ملک کا تعلق ہے تو گوکہ یہاں بھی یہ کٹس ریاستوں اور مرکزی زیر انتظام علاقوں کوحکومت کی طرف سے سپلائی کئے گئے تھے تاہم

تازہ ترین