مہنگائی کا بھوت بے لگام کیوں؟

ریاستی عوام کے لئے کمر توڑ مہنگائی میں کوئی کمی آنے کی بجائے ہر گزرتے دن کے ساتھ اس میں شدت وحدت پیدا ہورہی ہے۔ ظاہر ہے غریب عوام کی قوت خرید کمزور سے کمزور تر ہو نے کا مطلب اس کے سوا کچھ نہیں کہ ان کیلئے زندگی اجیرن ہو۔اس وقت بازاروں کا حال یہ ہے کہ ساگ سبزی سے لے کرگز ر اوقات کے لئے درکار دیگر اشیاء تک کی قیمتیں واقعتاً آسمان کو چھو رہی ہیں۔ اس بیچ جب کبھی سرکاری نرخ نا موں کی شکل میں خوردنی چیزوں کے جو نرخ مشتہر کئے جاتے ہیں ان کی وقعت ردی کا غذ سے زیادہ نہیں ہوتی کیونکہ خرید وفروخت میں عملاًان کی طرف ادنیٰ سی بھی توجہ نہیں کی جا تی۔ دوکاندار تو دوکاندار ، خریدار بھی یہ قبل ازوقت جا ن رہے ہوتے ہیں کہ کسی چیز کی جو قیمت ریٹ لسٹ پر دی گئی ہے اس کا بیچنے یا خریدنے میں قطعاًکو ئی عمل دخل نہیں۔ کاروباری معاملات میںآج کل یہی حال عیاں وبیاں انداز میں ہر جگہ دکھا ئی دے رہا ہے۔ ایک طرف گر

تازہ ترین