دفاعِ ارد و کی اشد ضرورت ہے !

  ارود برصغیر ہند وپاک کی واحد زبان ہے جودرۂ خیبر سے چاٹگام اور میانمار سے قلات تک مروج ہے ۔ عرب دنیا اور لندن ، امر یکہ اور پورپ میں بھی اس کے چرچے ہورہے ہیں ۔ یہ ہر معنی میں ایک مقبول عام مخلوط زبان ہے جس کی اپنی ا یک مخصوص شریں تہذیب ہے۔ اگرچہ اس زبان کے حروف تہجی سے لے کر جملوں کی بناوٹ ، تذکیر وتانیث اور واحد جمع تک اپنے منفرد اصول ہیں ، بایں ہمہ عربی ، فارسی اور پراکتوں نے اس کے کاکل سنوار نے میں اپنا کلیدی کردار ادا کیا۔ عربی زبان کی خوشبوئیں  براستہ سندھ گجرات اس عوامی زبان میں جذب ہوئیں اور فارسی کی لذتوں کے باوصف شمالی ہند تک پھیل کر اردو کے دامن ِارتقاء وسیع ترکر گئیں۔ یہ دونوں زبانیں اس نئی نویلی بولی کو گنگا جمنا کے دوآبے میں لے گئیں توایک نئی شاندار لسانی تہذیب کا جنم ہو ا ۔ آگے دلی مسلم حکمرانوں کی قلمرو میں آگئی تو اردو عربی ، فارسی اور پراکرتی بولیوں کے ح

تازہ ترین