خوبصورتی سے مالا مال ریاسی

ریاسی//ضلع ریاسی کے دور دراز علاقہ جات میں کئی ایک خوبصورت جگہیں ہیں تاہم یہ علاقے محکمہ سیاحت کی نظروں سے اوجھل ہیں۔سب ڈویڑن مہور کے درجنوں مقامات جن میں لپری ٹاپ،اچنی،سنگڑی،سونا بگا،دیول مرگ،انسی ٹاپ،تھائی مرگ، اڑیتل، نکن ٹاپ،آگشی،لیون گلی وغیرہ سیروتفریح کے لحاظ سے اعلیٰ درجہ رکھتے ہیں۔اگرچہ گول گلابگڑھ کو قدرت نے اپنے حسن جمال سے نوازا ہے اور گول گلابگڑھ کی حسین پہاڑیاں اپنی مثال خود بیان کرتی ہیں لیکن اس علاقہ کی طرف کبھی بھی کسی حکومت کی جانب سے اس علاقہ کو سیاحتی نقشے پر لانے کیلئے توجہ نہیں دی۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ بدقسمتی کی بات تو یہ ہے کہ ریاسی  کے دور دراز علاقہ جات میں سڑک کی سہولت نہ ہونے کی وجہ سے یہ علاقہ جات پچھڑے ہوئے ہیں اور ان مقامات کی خوبصورتی کی کوئی قیمت نہیں ہے۔علاقہ میں درجنوں ایسے خوبصورت مقامات ہیں جہاں پر دور دور سے سیاح ا?سکتے ہیں لیکن سڑک کی سہو

ایجوکیشنل ٹرسٹ کیخلاف بدعنوانی اور اراضی پر ناجائز قبضہ کے الزامات

جموں// سنٹرل بیور آف انوسٹی گیشن (سی بی آئی) نے منگل کی صبح جموں و کشمیر کے سابق وزیر اور ڈوگرہ سوابھیمان سنگٹھن کے بانی چودھری لال سنگھ کی ضلع کٹھوعہ میں واقع رہائش گاہوں سمیت متعدد جگہوں پر چھاپے ڈالے۔سرکاری ذرائع نے بتایا کہ سی بی آئی نے منگل کی صبح قریب سات بجے سابق وزیر چودھری لال سنگھ کی کٹھوعہ کے وارڈ نمبر دو اور راج باغ میں واقع رہائش گاہوں پر چھاپے ڈالے۔ سابق  وزیر کی کٹھوعہ رہائش گاہ پر سی بی آئی کی ٹیم تین گاڑیوں میں پہنچ گئی تاہم ان چھاپوں میں جموں و کشمیر پولیس شامل نہیں تھی۔ذرائع نے بتایا کہ سی بی آئی نے لال سنگھ کی رہائش گاہوں کے علاوہ دوسری متعدد جگہوں پر بھی چھاپے ڈالے اور کچھ چیزیں بالخصوص کاغذات اپنی تحویل میں لے لئے۔ سی بی آئی نے 25 جنوری کو چودھری لال سنگھ کے زیر انتظام ایک ایجوکیشنل ٹرسٹ کے خلاف بدعنوانی اور اراضی پر ناجائز قبضہ کرنے کے الزامات کی تحقیق

کٹھوعہ میں سابق وزیر لال سنگھ کے گھر پر سی بی آئی کا چھاپہ

سرینگر//سینٹرل بیورو آف انوسٹی گیشن(سی بی آئی ) نے منگل کو کٹھوعہ میں سابق وزیر چودھری لال سنگھ کے گھر پر چھاپہ مارا۔ حکام کے مطابق سی بی آئی کی چھاپہ مار کارروائی آج صبح سویرے عمل میں آئی۔ سی بی آئی لال سنگھ کی سربراہی میں چلنے والے ایک تعلیمی ٹرسٹ کو لیکر رشوت ستانی معاملے کی تحقیقات کررہی ہے۔یہ کیس گذشتہ برس ماہ جون میں درج ہوا تھا۔ لال سنگھ نے 2018میںبھارتیہ جنتا پارٹی سے علیحدگی اختیار کرنے کے بعد ڈوگرہ سوابھیمان سنگٹھن نامی تنظیم کی بنیاد ڈالی ۔  

سی آر پی ایف اہلکار کا سخت ترین اقدام | اہلیہ کوہلاک کرنے کے بعد خود کو بھی گولی ماردی

جموں//ایک دلخراش واقعہ میں جموں ضلع کے گھروٹا علاقے میں آپسی ناخوشگوار تعلقات کی وجہ سے سی آر پی ایف کے ایک اہلکار نے اپنی اہلیہ کو گولی مار کر خود کوبھی ہلاک کردیا۔اس واقعہ میں اسکی اہلیہ کی بہن اور اور اسکی بیٹی زخمی ہوئیں۔ایس ڈی پی او اکھنور اجے شرما نے بتایا کہ 166بٹالین سے وابستہ سی آر پی ایف اہلکارمدن سنگھ چب جو ڈی آئی جی سی آر پی ایف کے ساتھ بطور پرسنل سیکورٹی آفیسر (پی ایس او) تعینات تھااوروہ بن تالاب میں گروپ سنٹر سے منسلک تھا،نے اپنی اہلیہ کو ہلاک کرنے کے بعد اپنی زندگی کا بھی خاتمہ کردیا۔ انہوں نے بتایا’’اس جوڑے کے آپسی تعلقات ناخوشگوار تھے اور اختلافات کے سبب اس کی اہلیہ اپنی بہن کے گھر چلی گئی‘‘۔پولیس افسر نے بتایا’’سی آر پی ایف اہلکار سول کپڑوں میں ایک کے رائفل کے ساتھ بہن کے گھر گیا اور اس نے اپنی اہلیہ دیپتی رانی کو گولی مار ک

جواہر ٹنل سے برآمد اسلحہ سانبہ میں ڈرون سے گرایاگیا:ڈی جی پی

جموں//جموں وکشمیر پولیس سربراہ دلباغ سنگھ نے کہاہے کہ کولگام میں سیکورٹی فورسز کے ذریعہ برآمد کئے گئے اسلحہ کو پاکستان نے ڈرون کے ذریعہ سانبہ سیکٹر میں گرایا تھا۔پولیس سربراہ نے کہا’’زمینی مشاہدے سے پتہ چلتا ہے کہ پاکستان نے اس سرنگ کا استعمال شدت پسندوں کو بھیجنے کے لئے کیا ہے، اسلحہ اور گولہ بارود کی بازیابی سے متعلق تحقیقات سے انکشاف ہوا ہے کہ یہ ہتھیار پاکستان کے ذریعہ سانبہ سیکٹر میں ڈرون کے ذریعہ استعمال کئے گئے‘‘۔دلباغ سنگھ سانبہ گئے ہوئے تھے جہاں انہوں نے بی ایس ایف کے ذریعہ حال ہی میں دریافت کی گئی سرنگ کا معائنہ کیا۔ انہوں نے دریائے بسنتر کے قریب وجے پور میں سیکورٹی انتظامات کا بھی جائزہ لیا جبکہ انہوں نے مقامی پولیس عہدیداروں سے بات چیت کی۔صورتحال کا جائزہ لینے کے بعد ڈی جی پی نے کہا’’پاکستان سے اس طرف دراندازی کی سہولت کے لئے سرنگ کھودی

جموں میں 16513 مثبت معاملات

جموں//جموں صوبہ میں 8577فعال مثبت کیسوں کے ساتھ مجموعی طور پر 16513 مثبت معاملات رپورٹ ہوئے ہیں اور ایک 4سالہ لڑکے سمیت کووڈ 19 وبا پھیلنے کے بعدسے اب تک 143 افراد کی موت ہوگئی ہے۔انتظامیہ کی جانب سے بے ترتیب اور ٹارگٹ سیمپلنگ شروع کرنے کے بعد صوبہ میں مثبت معاملات میں اضافہ ہوا۔زیادہ تر مثبت کیس جموں کے ضلع سے سامنے آئے ہیں جہاں اب تک 7947 افراد وائرس سے متاثر ہوئے۔ اس کے بعد ادھم پور میں 1398 ، راجوری 1364 ، اور کٹھوعہ میں 1285 معاملات ہیں۔ضلع سانبہ میں 1037 ، رام بن 794 ، ڈوڈہ 732 ، پونچھ 821 ، ریاسی 570  اور کشتواڑ میں 565 کیس رپورٹ ہوئے۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ ضلع رام بن کو ریڈ زون میں رکھاگیاہے جبکہ ڈوڈہ اور کشتواڑ اضلاع گرین زون میں ہیں۔سنیچر کے روز صوبہ بھر میں چھ اموات ہوئیں جن میں سے چار کا تعلق ضلع جموں سے ہے۔علاوہ ازیں جموں میں 250 مثبت معاملات ریکارڈ ہوئے جو گزشتہ روز کے

اُدھمپور میں گاڑی کھائی میں جاگری،خاتون اور نوزائد بچہ سمیت 3از جان

سرینگر//ضلع اُدھمپور میں ہفتہ کو ایک گاڑی سڑک سے لڑھک کر گہری کھائی میں جاگری جس کے نتیجے میں تین افراد جاں بحق جبکہ پانچ زخمی ہوگئے۔مرنے والوں میں ایک 26سالہ خاتون اور اس کا نو زائد بچہ بھی شامل ہے۔  یہ حادثہ دھانس گاوں میں پیش آیا اور باور کیا جاتا ہے کہ گاڑی ایک موڑ پر ڈرائیور کے قابو سے باہر ہوگئی جو حادثے کا سبب بنا۔ اطلاعات کے مطابق یہ گاڑی چنانی سے آرہی تھی۔ اس حادثے میں پانچ افراد زخمی بھی ہوئے ہیں جنہیں اسپتال پہنچایا گیا ہے۔ جاں بحق افراد میںشانو دیوی، اُس کا نوزائد بچہ اور ایک50سالہ شہری شامل ہیں۔  

شرما کا جموں میں عوامی دربار ،عوامی مسائل سے آگاہ

جموں//لفٹینٹ گورنر کے مشیر کے کے شرما نے آج عوامی رابطہ پروگرام منعقد کیا جس میں زائد 100 لوگ اُن سے ملے جن میں 22 وفود اور 38  افراد بھی شامل تھے جنہوں نے انہیں اپنے مسائل سے آگاہ کیا ۔ آل جموں و کشمیر ساکھشر بھارت مشن ، ٹریڈر فیڈریشن وئیر ہاوس ، لداخ میں تعینات +2 لیکچراروں کی ایسوسی ایشن ، بھارتیہ سکھشا سمتی کمیٹی جے اینڈ کے ، جے اینڈ کے کالج ٹیچرز ایسوسی ایشن کے وفود اُن سے ملے۔ اس کے علاوہ مختلف اضلاع بشمول کٹھوعہ ، راجوری ، ریاسی ، ڈوڈہ ، سانبہ ، کشتواڑ ، ادھمپور سے آئے وفود بھی مشیر سے ملے اور انہیں سڑک رابطہ سہولت ، پانی اور بجلی کی سپلائی ، جے ڈی اے سے متعلق معاملات ، تبادلوں ، امداد ، معاوضہ اور واجبات کی واگذاری ، گلی کوچوں اور نکاسِ آب نظام سے متعلق دیگر مسائل اور مانگیں پیش کیں ۔ مشیر نے عوامی اہمیت کے حامل چند مسائل کے ازالہ کیلئے موقعہ پر ہی متعلقہ حکام کو ہدای

چیف سکریٹری نے جن ابھیان کیلئے جاری تیاریوں کا جائزہ لیا

جموں//چیف سیکرٹری بی وی آر سبھرامنیم نے جمعرات کو جَن ابھیان کیلئے جاری تیاریوں کا جائزہ سیکرٹریوں کی کمیٹی میٹنگ کی صدارت کرنے کے دوران لیا۔دوران میٹنگ بتایا گیا کہ 20 روزہ طویل جَن ابھیان بیک ٹو وِلیج پروگرام سے قبل 10ستمبر کو شروع ہو رہا ہے اور اس کا مقصد سرکاری مشینری کو فعال اور متحرک بنایا جاسکے جو کام کاج کووِڈ کے سبب سست روی کا شکارہوا ہے۔چیف سیکرٹری نے انتظامی سیکرٹریوں کو فیلڈ اہلکاروں کو مختلف عوامی رسائی سرگرمیوں سے متعلق پوری جانکاری دینے کے لئے کیا۔ اُنہوں نے کہا کہ 14ویں مالی کمیشن ضلع پلان او رسٹیٹ پلان کے تحت اِلتوا ٔمیں پڑے کاموں کو فوری طور شروع کرنے کے لئے کوششیں کی جانی چاہئیں۔ اِس کے علاوہ تکمیل کے مختلف مراحل میں مختلف جاری کاموں میں سرعت لائی جانی چاہئے ۔ اِنتظامی سیکرٹریوں کو اپنے افسروں کو فیلڈ کاموں کے لئے ڈیوٹی روسٹر کے مطابق تعینا ت کرنے کے لئے کہا، تاکہ ع

کے اے ایس افسران کی سینارٹی کا معاملہ

جموں//جموں وکشمیر حکومت نے 2004 سے 2008 کے بیچوں کے 97 کے اے ایس افسران ، جن میں سے 38 سبکدوش ہوچکے ہیں ، کو ہدایت کی ہے کہ وہ جموں اور سرینگر سے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ اپنی سماعت کے لئے کمیٹی کے سامنے حاضر ہوں۔38 ریٹائرڈ افسران سمیت 97  نے اپنے اعتراضات داخل کردیئے ہیں۔اس سلسلے میں محکمہ عمومی انتظامی کی طرف سے ایک نوٹیفکیشن جاری کیاگیاہے جس کے مطابق ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ ذاتی طور پران کے اے ایس افسران کی سماعت ہوگی جنہوں نے سینارٹی لسٹ کے حوالے سے اعتراضات جمع کروائے ہیں۔یہ کمیٹی جموں وکشمیر ایڈمنسٹریٹو سروس کے ممبروں کی سنیارٹی لسٹ کے حوالے سے موصول ہونے والے اعتراضات کے ازالے کے لئے تشکیل دی گئی تھی ، جو یکم جنوری 2004 سے یکم دسمبر 2008 کے دوران جموں و کشمیر انتظامی خدمات کے ٹائم اسکیل پرمقرر ہوئے۔کمیٹی نے فیصلہ کیا ہے کہ 97 افسران کو ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ ذاتی طور پر

بیک ٹو ولیج کا تیسرا مرحلہ | ہرپنچایت کیلئے 10 لاکھ روپے کی منظوری

جموں//محکمہ عمومی انتظامی نے جموں وکشمیر میں تیسرے مرحلے کے تحت بیک ٹو ولیج کے کاموں پر عمل درا?مد کے لئے ہر پنچایت کو 10 لاکھ روپے کی گرانٹ کی منظوری دی۔جی ڈی اے کی جانب سے 2 اکتوبر سے 12 اکتوبر 2020 ء  تک شروع ہونے والے مجوزہ بیک ٹو ولیج پروگرام کے پیش نظر جاری کردہ حکم میں لکھا گیا ہے ’’ان پنچایتوں میں کھیلوں کی کٹوں کی خریداری کے لئے خاص طور پر 2000 روپے رکھے جائیں گے‘‘۔جی اے ڈی نے تمام ضلع افسران کو ہدایت کی ہے کہ وہ اپنی پوسٹنگ کی جگہ پر موجود رہیں تاکہ متعلقہ اضلاع کے ڈپٹی کمشنرز کو لوگوں کی شکایات کو دور کرنے کے لئے مدد مل سکے۔محکمہ کے جاری کردہ حکم میں کہا گیا ہے ’’بیک ٹوولیج تیسرے مرحلے کے پروگرام کے دوران میڈیکل ایمرجنسی کے بغیر کسی بھی طرح کی چھٹی کی منظوری نہیں دی جائے گی‘‘۔اس کے علاوہ تمام انتظامی سکریٹریوں کو ہدایت کی

رگھوناتھ ، رامیشور اور پنج بختر مندروں میں حاضری دی

جموں//لفٹینٹ گورنر گورنر منوج سنہا نے رگھوناتھ ، رامیشور اور پنج بختر مندروں میں حاضری دی اور وہاں شردھالوؤں کیلئے دستیاب سہولیات کا جائیزہ لیا ۔ انہوں نے مندروں میں حاضری دی اور جموں کشمیر یو ٹی کیلئے امن ، ترقی اور خوشحالی کیلئے پرارتھنا کی ۔ لفٹینٹ گورنر نے تاریخی رگھوناتھ بازار اور ریذیڈنسی روڈ علاقے کا پیدل دورہ کر کے مقامی لوگوں ، دکانداروں ، تاجر انجمنوں کے عہدیداران بشمول رگھوناتھ بازار ایسوسی ایشن اور کنک منڈی ایسوسی ایشن کے عہدیداران کے ساتھ تبادلہ خیال کیا ۔ انہوں نے کووِڈ 19 وباء کے سبب لوگوں اور تاجر طبقے کو درپیش مشکلات کے بارے میں جانکاری حاصل کی ۔ لوگوں کی آراء کو ایک جوابدہ اور فعال انتظامیہ کیلئے لازمی قرار دیتے ہوئے لفٹینٹ گورنر نے لوگوں کو آگے آ کر اپنے مسائل اور شکایات پیش کرنے اور انتظامیہ کی کارکردگی سے متعلق باقاعدگی سے اپنی رائے پیش کر کے ترقیاتی عمل میں فع

جگتی ٹاؤن شپ میں کشمیری پنڈتوں کے مسائل سنے

جموں//لفٹینٹ گورنر منوج سنہا نے جگتی ٹاؤن شپ کے دورے کے دوران کہا کہ معاشرے کے ہر طبقے کی فلاح و بہبود اور جموں کشمیر کے عوام کے حقوق کا تحفظ یو ٹی حکومت کی اولین ترجیح ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جموں کشمیر میں ترقی کا نیا باب شروع کرنے کیلئے موجودہ حکومت یکساں اور کلہم ترقی کے ایجنڈا پر کام کر رہی ہے ۔ جگتی ٹاؤن شپ کے رہایش پذیر لوگوں نے لفٹینٹ گورنر کو کشمیری پنڈت طبقے کی فلاح و بہبود سے متعلق مختلف معاملات کے بارے میں جانکاری دی جن میں کشمیری پنڈتوں کی مستقل باز آباد کاری ، امدادی رقم میں اضافہ ، کشمیری پنڈتوں کو صنعتکاری اور تجارت اور کشمیر میں اُن کی املاک کو ہوئے نقصان کے معاوضے کے طور پر مالی پیکیج کی مانگ کی ۔ انہوں نے کشمیر میں اُن کی املاک کی بازیافت کی بھی مانگ کی ۔ جگتی ٹاؤن شپ میں رہ رہے لوگوں نے لفٹینٹ گورنر کو مانگوں کی ایک یاداشت پیش کرتے ہوئے مختلف اہمیت کے حامل مسائل اُ

نقلی ادویات سے 11بچوں کی موت کا معاملہ

جموں//قومی انسانی حقوق کمیشن (این ایچ آر سی) نے پیر کے روز جموں و کشمیر انتظامیہ کو دسمبر2019 کے دوران اور امسال جنوری میں ادھم پور ضلع میںغیر موزون دوائیاں کھانے کی وجہ سے فوت ہونے والے 11 بچوں کے اہل خانہ کو معاوضے کے لئے  وجہ بتائو نوٹس جاری کیا ہے۔چیف سکریٹری سے چار ہفتوں کے اندر وضاحت دینے کیلئے کہا ہے۔نوٹس میںکہا گیا ہے کہ کمیشن ہر بچے کے لواحقین کو تین لاکھ روپے معاوضے کی ادائیگی کی سفارش کیوں نہیں کرے گا۔جموں کے سماجی کارکن سوکیش سی کھجوریہ کی جانب سے کی جانے والی شکایت کا جائزہ لیتے ہوئے NHRC نے’مجرم عہدیداروں‘ کے خلاف بھی کارروائی کی ایک رپورٹ طلب کی ، جس کی وجہ سے اس طرح کی غفلت ہوئی ہے۔کھجوریہ نے اپنی درخواست میں ضلع کی تحصیل رام نگر کے مختلف علاقوں میں غفلت برتنے والے سرکاری اہلکاروں کے خلاف کارروائی اور متاثرہ کنبوں کیلئے معاوضہ طلب کیا ہے جو اپنے بچوں ک

ایس ایچ او اکھنور سمیت6اہلکار کورونا مثبت ظاہر،پولیس سٹیشن بند

سرینگر//جموں صوبے کے پولیس حکام نے ہفتہ کو پولیس سٹیشن اکھنور اُس وقت بند کرنے کے احکامات صادر کئے جب مذکورہ تھانے کے سٹیشن ہاوس آفیسر (ایس ایچ او) سمیت6اہلکار کورونا وائرس میں مبتلاءپائے گئے۔  سب ڈویژنل پولیس آفیسر اکھنور اجے شرما کا حوالہ دیتے ہوئے نیوز ایجنسی کے این او نے لکھا کہ اکھنور پولیس سٹیشن اور پلن والا پولیس پوسٹ کواگلے احکامات تک بند کیا گیا ہے۔ اکھنور پولیس سٹیشن میں تعینات ایس ایچ او سمیت چھ اہلکار اور پلن والا پوسٹ میں تعینات تین اہلکاروں کے کورونا ٹیسٹ رپورٹ گذشتہ روز مثبت ظاہر ہوئے تھے۔

نوجوان نسل سماج کا قیمتی اثاثہ:الطاف بخاری

جموں//پردیش یوتھ کانگریس کمیٹی کے سابق ریاستی صدر اور آل انڈیا کانگریس کمیٹی ممبر پرنو شگوترہ نے جمعہ کواپنے دیگر حمایتوں سمیت ’اپنی پارٹی‘ میں شمولیت اختیار کر لی۔گاندھی نگر میں منعقدہ تقریب کے دوران صدرسعید محمد الطاف بخاری  نے سابق وزیر محمد دلاور میر، سابق صوبائی صدر جموں منجیت سنگھ، جنرل سیکریٹری وکرم ملہوترہ، سابق ایم ایل اے شعیب لون کے ہمراہ پرنو شگوترہ ودیگر لیڈران کا اپنی پارٹی میں خیر مقدم کیا۔الطاف بخاری نے نئے شامل ہونے والوں کا خیر مقدم کرتے ہوئے اُمید ظاہر کی کہ وہ زمینی سطح پر پارٹی کو مضبوط بنائیں گے۔ انہوں نے کہا’’اپنی پارٹی کونوجوان نسل کی قدر ہے اور وہ اِنہیں سماج کا قیمتی اثاثہ سمجھتی ہے، وہ مجموعی طور جموں وکشمیرمیں سماج کو متحد کرنے اور اختلافات کو دور کرنے میں فعال کردار اداکرسکتے ہیں‘‘۔انہوں نے اُمیدظاہر کی کہ نوجوان یون

جموں میں بھاجپا او بی سی مورچہ لیڈران اپنی پارٹی میں شامل

جموں//بھارتیہ جنتا پارٹی پارٹی او بی سی مورچہ سے وابستہ متعدد لیڈران نے جموں وکشمیر اپنی پارٹی میں شمولیت اختیار کر لی ہے۔ بھاجپا اوبی سی مورچہ نیشنل ایگزیکٹیو جگدیش راج پانڈے نے کہاکہ بی جے پی نے او بی سی طبقہ کو نظر انداز کیا ، جوبھی وعدے کئے گئے تھے وہ پورے نہ کئے گئے جس سے طبقہ میں سخت مایوسی ہے۔ اپنی پارٹی دیگر پسماندہ طبقہ جات کے لئے ایک اُمید نظر آئی ہے لہٰذا انہوں نے فیصلہ کیا کہ وہ بی جے سے کنارہ کشی کر لیں جس نے بیس سالوں سے صرف وعدے کئے۔ الطاف بخاری نے اِ ن لیڈران کا خیر مقدم کیا اور یقین دلایاکہ اُن کی جماعت ہرممکن کوشش کریگی کہ اوبی سی طبقہ کے جائز مطالبات حل کرائے جائیں۔ اس موقع پر محمد دلاور میر، جنرل سیکریٹری وجے بقایہ، وکرم ملہوترہ، صوبائی صدر منجیت سنگھ، سعید اصغر علی اور خواتین ونگ صوبائی صدر نمرتہ شرما، بودھ راج بھگت اور شنکر سنگھ چب موجود تھے۔ پارٹی جوائن کرنے وال

جامع مسجد روزہ بل چرار شریف میں تقریب منعقد

ترال /سید اعجاز /چرار شریف میں ’روزہ بل کی اہمیت‘(Significance of Rozaebal) پر تحریر کی گئی تصنیف اجراء کی گئی۔ نماز جمعہ کے بعد جامع مسجد روزہ بل چرار شریف میں ایک مختصر تقریب منعقد ہوئی۔ تقریب میں چرارشرف میں واقع علمدار کشمیر شیخ نور الدین نورانی ؒ کے آستان عالیہ سے متعلق تفصیلی تحقیق اور علمدار کشمیر ؒکی خواتین شاگردوں کی درس وتدریس پر مذکورہ کتاب مبنی ہے۔رسم اجرائی کی تقریب پر موجود مقررین نے مصنف جی این ادفر کی حوصلہ افزائی کرتے ہوئے کتاب کو تحقیقی کام کا ایک نادر نمونہ قرار دیتے ہوئے مصنف کو داد تحسین پیش کیاہے۔  

جعلی تقرری کامعاملہ

جموں// محکمہ پائور ڈیولپمنٹ محکمہ میں جونیئر انجینئرز کے جعلی تقرری کے احکامات کے ایک معاملے میں کرائم برانچ جموں کی ایک ٹیم نے جعلی تقرری کے احکامات کی جعلسازی کے سلسلے میں میسرز لال دیال سائبر کیفے کچی چھاونی ، جموں میں چھاپے مارے اور تلاشی لی۔ تلاشیاں سٹی جج ، جے ایم آئی سی جموں کی عدالت کے حکم کے تحت کی گئی۔ تلاشی کے دوران مذکورہ سائبر کیفے سے ایک ہارڈ ڈسک ضبط کی گئی ہے۔  سپرنٹنڈنگ انجینئر او اینڈ ایم سرکل جے کے پی ٹی سی ایم جموں نے اکشے کمار چودھری ولد رشپال سنگھ ساکن پلوڑا، جموںکے خلاف جے ای کی حیثیت سے جعلی تقرری آرڈر کی بنا پر ایک تحریری شکایت درج کی تھی ، جس نے محکمہ میں 9 ماہ خدمات انجام دیں اور 02 ماہ تک تنخواہ حاصل کی۔ شکایت موصول ہونے پر کرائم برانچ جموں نے معاملہ درج کرلیا اور باریک بینی سے تفتیش کا عمل جاری کردیا۔ تحقیقات کے دوران یہ ثابت ہوا ہے کہ ایک دنیش چندر ا

جموں میں سکھ طبقہ کا احتجاج اور نعرے بازی

جموں// سکھ طبقہ نے نے پنجابی زبان کو یونین ٹریٹری کی سرکاری زبانوں کی فہرست میں شامل نہ کئے جانے کے خلاف جموں میں شدید احتجاج کیا۔ سکھ تنظیموں بشمول سٹیٹ گوردوارہ پربندھک بورڈ اور جموں ڈسٹرک پربندھک کمیٹی کے عہدیدارسڑکوں پر جمع ہوئے اور احتجاجی مظاہرے کئے جس کے دوران: 'تانا شاہی نہیں چلے گی، پنجابی بھاشا لاگو کرو، لے کر رہیں گے اپنا حق، فرقہ پرستی نہیں چلے گی' نعرے لگائے گئے۔ سٹیٹ گوردوارہ پربندھک بورڈ کے چیئرمین ترلوچن سنگھ وزیر نے نامہ نگاروں کو بتایا: 'مرکزی کابینہ نے 5زبانوں کو جموں و کشمیر کی سرکاری زبان کا درجہ دیا ہے،پنجابی کو باہر رکھا گیا ہے'۔انہوں نے کہا: 'جموں و کشمیر میں مہاراجہ رنجیت سنگھ کے دور حکومت سے پنجابی لاگو ہے، مہاراجہ ہری سنگھ نے اس کو سرکاری زبان بنایا تھا۔ میں اپنے امتحانی پرچے پنجابی میں لکھتا تھا۔ 1981 تک ہم نے امتحانی پرچے پنجابی میں لکھے