ایس آر ٹی سی سے رضاکارانہ طور مستعفی ہونے والے ملازمین کا احتجاج

جموں// جموں وکشمیر سٹیٹ روڈ ٹرانسپورٹ کارپوریشن کے رضاکارانہ طور پر مستعفی ہونے والے ملازموں نے بدھ کو یہاں اپنے مطالبات کو لے کر احتجاج درج کیا۔احتجاجی آل جموں و کشمیر ایس آر ٹی سی ایسوسی ایشن کے بینر تلے جمع ہوئے تھے اور اپنے مطالبات کے حق میں جم کر نعرہ بازی کر رہے تھے۔اس موقع پر ایک احتجاجی ملازم نے نامہ نگاروں کو بتایا’’ ہم آج یہاں انتظامیہ اور سٹیٹ ٹرانسپورٹ کارپویشن کے اعلیٰ حکام کے خلاف احتجاج درج کر رہے ہیں‘‘۔انہوں نے کہا ’’ سرکار ہمارے ساتھ کئے گئے وعدوں کو پورا کرنے میں ناکام ہوئی ہے اور ہم گذشتہ تین برسوں سے لگاتار اپنے مطالبات کے لئے احتجاج کر رہے ہیں لیکن کوئی ہماری بات نہیںسن رہا ہے‘‘۔موصوف نے کہا کہ یونین ٹریٹری بن جانے کے بعد ہم امید کرتے تھے کہ اب ہمارے مطالبات کو پورا کیا جائے گا لیکن آج بھی سرکار میں کوئی ہماری بات

دوسرے مرحلے کے ضمنی پنچایتی چنائو

 سرینگر//سٹیٹ الیکشن کمشنر کے کے شرما نے کہا کہ دوسرے مرحلے کے خالی پنچ اور سرپنچ ضمنی اِنتخابات 2020 میں بالترتیب 65.54فیصد اور 52.24فیصد ووٹران نے اپنے رائے حق دہی کا اِستعمال کیا ہے۔ایس ای سی سے کہا کہ خالی پنچ نشستوں کے لئے 343حلقہ ہائے اِنتخابات میں ضمنی اِنتخابات منعقد ہوئے  جن میں صوبہ کشمیر کے 317 اور صوبہ جموں کے 26 نشستیں شامل ہیں۔52757اہل رائے دہندگان میں سے 34578 ووٹران نے دوسرے مرحلے کے پنچ اِنتخابات میںحصہ لیاجن میں 17987مرد اور 16591خواتین ووٹران شامل ہیں۔اُنہوں نے کہا کہ ووٹنگ صبح 7 بجے سے شروع ہوئی اور دوپہر2بجے ختم ہوئی۔ جموں صوبہ میں 79.25 فیصد اور کشمیر صوبہ63.92 فیصد ووٹران نے دوسرے مرحلے کے پنچ ضمنی اِنتخابات میں ووٹ ڈالیں۔خالی سرپنچ اِنتخابات میں 83حلقہ ہائے انتخابات میں دوسرے مرحلے کے دوران 52.25فیصد ووٹران نے حصہ لیا جن میں سے 62 صوبہ کشمیر اور 21صوبہ

خودانحصار بھارت کی تعمیر

جموں//لیفٹیننٹ گورنر کے مشیربصیر احمد خان نے بورڈ آف ٹریڈ کی اعلیٰ سطحی میٹنگ میں ورچیول شرکت کی ۔میٹنگ کا انعقادبھارت کے درآمداتی مقابلہ آرائی میں اضافہ کرنے کے لائحہ عمل مرتب کرنے ، درآمداتی انحصار کو کم کرنے ، دیگر ممالک کے ساتھ متوازن تجارت کو ترقی دے کر آتمانر بھر بھارت کی تعمیر کر نا ہے۔ ویڈیو کانفرنس میٹنگ میں حکومت ہند کے وزیر برائے صنعت و حرفت پیوش گوئیل ، حکومت ہند کے وزیر مملکت برائے صنعت و حرفت ہردیپ سنگھ پوری ،  جی او آئی سی ای او  نیتی آیوگ ، آربی آئی نائب گورنر اور دیگر اعلیٰ  افسران نے شرکت کی۔دوران اجلاس مشیر بصیر خا ن نے یوٹی حکومت کی جانب سے اختیار کی جارہی پالیسیوں کے بارے میں میٹنگ کو جانکاری دی جو معاشرے کے ہر طبقے کے لئے سود مند ثابت ہوں گی۔اُنہوں نے کہا کہ یوٹی حکومت سرمایہ کاروں اور تجارتی انجمنوں کو پلیٹ فارم فراہم کر رہی ہیں جس سے صنعت

میڈیکل کالج جموں میں ’ورلڈ ایڈز ڈے‘ منایا گیا

 جموں// دنیا بھر کے ساتھ ساتھ گورنمنٹ میڈیکل کالج جموں میں بھی منگل کے روز’ورلڈ ایڈز ڈے‘ منایا گیا جہاں موقع کی مناسبت سے ایک سائیکل ریلی اور عطیہ خون کے ایک کیمپ کا انعقاد کیا گیا۔اس موقع پر فائنانشل کمشنر ہیلتھ اتل ڈلو نے نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ایڈز کے مرض میں مبتلا مریضوں کے ساتھ کوئی امتیازی سلوک روا نہیں رکھا جانا چاہئے۔انہوں نے کہا کہ امسال کورونا کی وجہ سے اس مناسبت سے کوئی بڑی تقریب منعقد نہیں ہوسکی تاہم یہاں ایک سائیکل ریلی اور خون کے عطیہ کا ایک کیمپ منعقد کیا گیا۔موصوف نے کہا کہ اس بیماری کے بارے میں جانکاری حاصل کرنے کی اشد ضرورت ہے۔ایک سائیکل باز نے بتایا کہ اس بیماری میں مبتلا مریضوں کی حوصلہ افزائی کرنے کی ضرورت ہے تاکہ وہ اس جان لیوا مرض کا مقابلہ کر سکیں۔انہوں نے کہا ’’ہم اس مرض کا علاج نہیں کر سکتے ہیں لیکن جانکاری عام کر کے ا

سرما کے پیش نظر کورونا کیسز میں اضافے کا امکان: اتل ڈلو

جموں// محکمہ صحت و طبی تعلیم کے فائنانشل کمشنر اتل ڈلو نے کہا کہ جموں و کشمیر میں موسم سرما کے پیش نظر کورونا وائرس کے کیسز میں اضافہ ہو سکتا ہے۔انہوں نے لوگوں سے ایس او پیز پر سختی سے عمل کرنے کی اپیل کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ حکومتی مشینری کسی بھی صورتحال سے نمٹنے کے لئے تیار ہے۔اتل ڈلو نے منگل کے روز یہاں ایک تقریب کے حاشیے پر نامہ نگاروں کو بتایا،’’موسم سرما شروع ہو گیا ہے۔ سرما میں مختلف وائرسز بہت تنگ کرتے ہیں۔ کورونا وائرس کے کیسز میں اضافے کا خطرہ ہے۔ لیکن ہم کسی بھی صورتحال سے نمٹنے کے لئے تیار ہیں‘‘۔ان کا مزید کہنا تھا،’’جہاں تک ہمارے ہسپتالوں اور ڈاکٹروں کا سوال ہے وہ کسی بھی صورتحال سے نمٹنے کے لئے تیار ہیں۔ لیکن لوگوں کی ذمہ داری ہے کہ وہ ایس او پیز پر سختی سے عمل کریں۔ ماسک کا استعمال کریں، صفائی اور سماجی دوری کا خاصا خیال رکھیں‘&ls

پردھان منتری آواس یوجنا گرامین، ایم جی نریگا اورپنچایت گھر

جموں//لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر بصیر احمد خان نے پردھان منتری آواس یوجنا گرامین، ایم جی نریگا اور پنچایت گھروں پر جائزہ لینے کے لئے منعقدہ میٹنگ کی صدارت کی۔مشیر نے ایم جی نریگا ،پی ایم اے وائی( جی) کاطبعی اورمالی جائزہ لیا ۔ اِس کے علاوہ میٹنگ میں دیگر محکمہ جاتی معاملات پر غور و خوض ہوا۔ اُنہوں نے حکام کو اِن سکیموں کی عمل آوری سے متعلق تمام اَضلاع میں درج حصوصولیابیوں پر نگرانی کرنے اور اِس ضمن میں رِپورٹ پیش کرنے کے لئے کہا۔کمشنر سیکرٹری دیہی ترقی و پنچایتی راج نے اِس موقعہ پر یونین ٹریٹری میں جاری مختلف سکیموں سے درج حصولیابیوں سے متعلق پرزنٹیشن پیش کی۔اُنہوں نے ایم جی نریگا ،پی ایم اے وائی کے تحت کاموں کی پیش رفت سے متعلق ضلع او رپنچایت وار اعداد و شمار پیش کئے ۔اُنہوں نے مختلف اَضلاع میں پنچایت گھروں پر ہوئے کام کی بھی تفصیل دی۔  

جنگلات کے حقوق کے قانون کانفاذ

جموں//جموں کشمیرمیں جنگلات کے حقوق سے متعلق قانون2006کے نفاذ کیلئے یوٹی،ضلع اور سب ضلع سطح کی تین کمیٹیاں جنرل ایڈ منسٹریشن ڈیپارٹمنٹ نے تشکیل دی۔جنرل ایڈمنسٹریشن ڈیپارٹمنٹ کے حکم کے مطابق یوٹی سطح کی کمیٹی میں محکمہ مال کے انتظامی سیکریٹری ،محکمہ جنگلات وماحولیات کے انتظامی سیکریٹری،محکمہ دیہی ترقی  وپنچایتی راج کے انتظامی سیکریٹری،قبائیلی امور کے انتظامی سیکریٹری ،پرنسپل چیف کنزرویٹر فاریسٹ ،درجہ فہرست قبائیل کی مشاورتی کونسل کے تین ممبر جنہیں قبائلی مشاورتی کونسل کے چیئرمین نامزد کریں گے،اورجہاں قبائلی مشاورتی کونسل نہ ہو،وہاں حکومت تین قبائلی ممبران کو نامزد کرے گی ،اورکمشنرقبائلی بہبود ممبر ہوں گے۔کمیٹی جنگلات کے حقوق تسلیم کرنے اورانہیں تفویض کرنے سے متعلق معیار کاتعین اورنگرانی کرے گی اوراس کے علاوہ یو ٹی کے جنگلات کے حقوق تسلیم کرنے ،جانچ اور تفویض کرنے کے عمل کی نگرانی کر

روشنی ایکٹ کے تحت منتقل اراضی کا معاملہ

جموں //انتظامیہ نے کٹھوعہ میں روشی ایکٹ کے تحت کئے گئے انتقال اراضی کے 225معاملات کو رد کردیا ہے ۔ سرحدی ضلع میں ایک سابق وزیر مملکت پریم ساگر عزیز سمیت1825افراد کے نام 9802کنال اراضی منتقل کی گئی تھی۔ ڈپٹی کمشنر کٹھوعہ او پی بھگت نے کہا ’’ 310انتقال اراضی میں سے ہم نے 225غیر قانونی اندراجات کو منسوخ کردیا ہے اور آنے والے دنوں میں ہم محکمہ مال کے تمام ریوینو ریکارڈ کو ٹھیک کریں گے‘‘۔سابق وزیر مملکت سمیت 1825میں 9802کنال اراضی منتقل کی گئی ہے۔بسوہلی سے تعلق رکھنے والے سا بق وزیر مملکت پریم ساگر عزیز کے نام پلاہی نامی گائوں میں روشنی ایکٹ کے تحت 16کنال عارضی منتقل کی گئی اور اس کی تصدیق ڈیویژنل کمشنر کی ویب سائٹ پر موجود ہے۔ ڈیویژنل کمشنر جموں نے کٹھوعہ سے تعلق رکھنے والے 644افراد کے نام وئب سائٹ پر اپلوڈ کئے ہیں۔ ادھر جموں ضلع کے منڈل علاقے میں 659افراد نے 10922

کانگریس کے دورہنماایک دوسرے کے مدمقابل

جموں //کانگریس کے دوسینئر لیڈران ڈی ڈی سی انتخابات ایک دوسرے کے خلاف لڑیں گے اور دونوں ایک ہی پارٹی سے تعلق رکھنے کے بائوجود بھی ایک دوسرے سے زیادہ ووٹ حاصل کرنے کی کوشش کریں گے۔ ان میںسرنکوٹ کے سابق ایم ایل اے چودھری اکرم اور پردیش یوتھ کانفرنس کے سابق صدر شہنواز احمد شامل ہے اِن دونوں کے گاندھی خاندان سے قریبی تعلقات ہیں۔کانگریس کے یہ دونوں لیڈران سرنکوٹ اولڈ’ بی‘ حلقہ سے لڑیں گے جہاں اکرم کانگریس پارٹی کے مینڈیٹ اور شہنواز بطور آزاد اُمیدوار انتخابات میں کھڑے ہوئے ہیں۔ اس حلقہ انتخاب جہاں دو کانگریس لیڈران ایک دوسرے کے خلاف لڑ رہے ہیں ، میں ووٹنگ منگل کو ہوگی اور یہاں دونوں کے درمیان سخت مقابلہ ہونے کی اُمید ہے۔ بختیار احمد نامی ایک ووٹر نے بتایا ’’ چاہئے شہنواز جیتے یا چاہئے اکرم لیکن کانگریس پارٹی کے دو سینئر لیڈران میں دراڈ سامنے آگئی ہے‘‘۔

۔1947 سے پہلے کا ریکارڈ ؔ بٹھنڈی اور سنجواں جنگلاتی اراضی نہیں

جموں// ریٹائرڈ ڈپٹی کمشنر اور ممتاز پنجابی مصنف خالد حسین نے 1947 کے محکمہ مال ریکارڈ کے حوالے سے انکشاف کیا ہے کہ مہاراجہ کے زمانے میں بٹھنڈی اور سنجواں جنگلات کی زمین نہیں تھی۔انہوں نے کہا کہ بٹھنڈی اور سنجواں میں جنگل کی کوئی سرزمین نہیں تھی جبکہ ایک پرانے ریکارڈکے کاغذات میں اس کا نام ’ملکا سرکار دولت  مادر‘بتایا گیا تھا۔پرانے ریکارڈ کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا’’اس زمین کی تعریف ’واریال‘ (آبپاشی زمین) اور ’واریال ڈوم‘ (غیر آبپاشی زمین)، بنجر قدیم (سب سے قدیم ناقابل زراعت اراضی) کے طور پر کی گئی تھی، سنجواں گاؤں کا تعلق 1947 سے قبل جموں و کشمیر کے قدیم ترین پٹوارخانوں میں ہوتا تھا اور بٹھنڈی سنجواں پٹوار کے گائوں ڈونگیاں کا حصہ تھا،تب بٹھنڈی گائوں نہیں تھا‘‘۔انہوں نے کہا’’یہ اراضی مقامی گجروں کے قبضے

مشن یوتھ جموں کشمیراورممبئی اسٹاک ایکس چینج کے مابین معاہدہ | مرکزی زیرانتظام علاقہ کے نوجوانوں کو مالی جانکاری اور تربیت فراہم کی جائے گی

جموں//بمبئی سٹاک ایکسچینج اورجموں وکشمیر کے مابین حال ہی میں طے شدہ معاہدے کے بعد آج بی ایس ای انسٹی چیوٹ کے چیئرمین امریش دتہ اور سی ای او مشن یوتھ اور ڈائریکٹر جے اینڈ کے سکل ڈیولپمنٹ مشن ڈاکٹر سیّد عابد رشید شاہ نے  ایک میٹنگ کی مشترکہ طور صدارت کرتے ہوئے مختلف سکل ڈیولپمنٹ ٹریننگ کورسوں کی عمل آوری پر غور و خوض کیا جو بینکنگ فائنانشل انشورنس بی ایف ایس آئی سیکٹر کی جانب سے جموںوکشمیر میں شروع کئے جارہے ہیں ۔واضح رہے کہ معاہدوں پر دستخط کرنے کے بعد جموںوکشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر نے پروگرام کی فوری عمل آوری کی ہدایات جاری کی ہیں تاکہ جموںوکشمیر کے نوجوانوں کے لئے روزگار کے مواقع فراہم کئے جاسکیں۔ بی ایس ای انسٹی چیوٹ کے نمائندگان ، جے اینڈ کے مشن یوتھ اور جے اینڈ سکل ڈیولپمنٹ مشن کے ملازمین نے میٹنگ میں شرکت کی ۔ اس کے دوران اُمید واروں کے انتخاب اور ٹریننگ کورسوں کی کامیاب عم

گپکار الائنس سے جڑی جماعتیں بھاجپا سے خوفزدہ:شاہنوازحسین | بھارتیہ جنتاپارٹی جموں کشمیرکے لوگوں کی خوشحالی اور بہبودی کی متمنی

چوکی بل (کپوارہ)// دفعہ370کو دنیا کی کوئی طاقت  دوبارہ بحال نہیں کرسکتی اور جو لوگ اُس کوبحال کرنے کاوعدہ کرتے ہیں وہ سراب ہے۔ان باتوں کااظہار بھارتیہ جنتاپارٹی کے قومی ترجمان سید شاہنوازحسین نے ریڈی چوکی بل کپوارہ میں ایک عوامی جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے بندوق اُٹھانے والے نوجوانوں کو بندوق چھوڑ کر قلم ہاتھ میں اُٹھانے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ جنگجو کی عمر دس سال سے کم ہوتی ہے۔ انہو ں نے کہا کہ لوگ ’گپکار گینگ ‘ سے ہو شیار رہیں، کیونکہ گپکار الائنس سے جڑی سیاسی پارٹیا ں بی جے پی سے خوف ذدہ ہیں اور اس لئے ملکر بی جے پی کے خلاف الیکشن میں حصہ لیا۔انہو ںنے کہا کہ گپکار گینگ والو ں نے ہمیشہ اپنے رشتہ دارو ں کی بھلائی کے لئے کام کیا اور اگر کشمیر کے لوگو ں کی بھلائی کے لئے کام کیا  ہوتا، تو آج یہ لوگ بھی کشمیر میں کھل کر گھومتے ۔انہو ں نے کہا ہندوستان ایک سو

مواصلاتی رابطوں کے ڈھانچے کی تنصیب

جموں//انتظامی کونسل نے جموں کشمیر کمیونی کیشن و کنیکٹوٹی انفراسٹریکچر پالیسی ( جے کے سی سی آئی پی ) منظور کی ۔ جموں کشمیر میں زیر زمین ( آپٹیکل فائیبر ) یا موبائیل ٹاوروں کی تنصیب میں مزید آسانی لانے کیلئے نئی پالیسی میں آر او ڈبلیو کی گنجائش موجود رکھی گئی ہے جس سے سنگل ونڈو نظام کے تحت مقررہ مدت اور فوری اجازت نامے فراہم کئے جائیں گے ۔لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا کی صدارت میں منعقد ہوئی میٹنگ میں نئی پالیسی کے تحت دو سالہ اجازت نامے بنیادی ڈھانچہ بشمول آپٹیکل فائیبر کیبل نیٹ ورک /زیر زمین ٹیلی گراف بنیادی ڈھانچہ اور کھلی زمین پر ٹیلی گراف بنیادی ڈھانچہ نصب کرنے کیلئے جاری کئے جائیں گے ۔ اجازت ناموں کی فراہمی میں مزید آسانی برتنے کیلئے پالیسی کے تحت جموں کشمیر ای گورننس ایجنسی ایک سال کی مدت کے اندر آن لائین پورٹل تیار کرے گی ۔ چالو ہونے کے بعد پورٹل پر مختلف درخواستوں پر آن لائین

سانبہ میں407افراد3161 کنال اراضی پر قابض

جموں میں 48کنال سرکاری اراضی سابق ایم ایل سی اور تاجر و دیگران کے زیر تصرف    جموں// سابق ممبر اسمبلی کے بیٹے ،سابق چیئرمین قانون ساز کونسل کے دو فرزندان ،معروف کاروباری افراد سمیت 407 ایسے لوگ شامل ہیں جنہوںنے سانبہ ضلع میں روشنی ایکٹ کے تحت 3161 کنال اور 6.5 مرلہ اراضی پر قبضہ کررکھاہے ۔وہیں ضلع جموں کے سنجواں علاقے میں سابق ایم ایل سی اور پی ڈی پی کے رہنما نے سرکاری اراضی پر قبضہ کیاہوا ہے۔ڈپٹی کمشنر سانبہ کے اعدادوشمارکے مطابق روشنی ایکٹ کے تحت 407 کے قریب افراد نے فائدہ اٹھایاجن میں سیاستدان، کاروباری شخصیات، سابق ممبران قانون ساز، ریٹائرڈ آرمی اہلکار، کسان اور دیگر شامل ہیں۔ان لوگوں کو سانبہ ضلع کے سانبہ ، وجے پور، گگوال، رام گڑھ، راج پورہ اور بڑی براہمناں کی6 تحصیلوں میں 3161 کنال اور 6.5 مرلہ پر فائدہ دیا گیا ہے۔روشنی سکیم سے فائدہ اٹھانے والوں میں نمایاں نام

ترنگے کی توہین کرنے والوں کولگام دینی چاہیے:انوراگ ٹھاکر

 جموں// مرکزی وزیر مملکت برائے خزانہ انوراگ ٹھاکر نے کہا ہے کہ وادی کشمیر میں جس طرح پتھر بازی بند ہوئی ہے اسی طرح ان لوگوں کو بھی لگام لگنی چاہئے جو ترنگے کی توہین کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ میں مودی سرکار کا مشکور ہوں کہ جس نے دفعہ 370 کو ختم کرکے 70 برسوں سے انتظار کرنے والے لوگوں کو پہلی بار ووٹ ڈالنے کا موقع فراہم کیا۔موصوف وزیر نے ان باتوں کا اظہار ہفتے کے روز یہاں میڈیا کے ساتھ  بات کرتے ہوئے کیا۔ وہ یہاں پارٹی کی طرف سے انتخابات کے انچارج ہیں اور یہیں خیمہ زن ہیں۔انہوں نے کہا،’’میں مودی سرکار کا شکر گذار ہوں کہ جس نے دفعہ 370 اور 35 اے ختم کیا اور 70 برسوں سے انتظار کرنے والے لوگوں کو اپنا حق دیا‘‘۔ان کا کہنا تھا کہ میں ان لوگوں کو مبارک باد دے رہا ہوں جو آج پہلی بار ووٹ ڈال رہے ہیں۔پی ڈی پی کے یوتھ لیڈر وحید الرحمان پرہ کی این آئی اے کے ہاتھوں

مہاجرکشمیری پنڈتوں کے پولنگ سٹیشن سنسان

جموں// جموں میں کشمیری پنڈتوں کیلئے قائم کئے گئے پولنگ مراکز ویران نظر آئے اور جہاں جموں میں صرف 32رائے دہندگان نے ووٹ دیاوہیں اودھمپور میں محض 4لوگ ووٹ دینے آئے۔سب سے زیادہ ووٹ پہلگام حلقہ کیلئے پڑے جن کی تعداد 15 ہے۔ کشمیر میں پہلے مرحلے میں کل 25 ڈی ڈی سی حلقوں میں سے جموں اور اودھم پور اضلاع کے 15 ڈی ڈی سی حلقوں کے لئے کشمیری پنڈتوں کے لئے پولنگ اسٹیشن قائم کئے گئے ۔جموں کے وومن کالج گاندھی نگر میںپولنگ اسٹیشن قائم کیا گیا تھا تاہم یہاں صرف 32 ووٹ پڑے اور صرف 4ووٹ اودھمپور میں ڈالے گئے ، یعنی کل 36 کشمیری پنڈتوں نے حق رائے دہی کا استعمال کیا۔ ریلیف کمشنر ٹی کے بٹ نے کشمیرعظمیٰ کو بتایا’’رفیع آباد حلقہ کیلئے11 ووٹ، پہلگام کے لئے 15، ضلع کولگام کے ڈی ایچ پورہ کے لئے 3 اور خان صاحب ڈی ڈی سی حلقہ کے لئے 3 ووٹ ڈالے گئے ‘‘۔انہوں نے مزید کہا’’ضلع اود

۔ 36 سرپنچ اور 768 پنچ بلامقابلہ منتخب: الیکشن کمشنر

جموں// ریاستی الیکشن کمشنرجموں و کشمیر کے کے شرما نے کہا کہ جموں و کشمیر میں 36 سرپنچ اور 768 پنچ بلامقابلہ منتخب ہوئے ہیں جبکہ ضلع ترقیاتی کونسل کے انتخابات میں کوئی بھی امیدوار بلا مقابلہ فتح حاصل نہیں کرپایا۔انہوں نے مزید کہا کہ 368 پنچ حلقوں پر سنیچر یعنی آج ضمنی انتخابات ہوں گے جن کیلئے کل 852 امیدوار میدان میں ہیں جن میں 635 مرد اور 217 خواتین شامل ہیں۔انہوںنے بتایاکہ ووٹنگ صبح 7 بجے شروع ہوگی اور یہ سہ پہر 2 بجے تک ختم ہوگی۔انہوں نے بتایا’’43 ڈی ڈی سی حلقوں میں انتخابات ہوں گے جس میں 296 امیدوار میدان میں ہیں جن میں 207 مرد اور 89 خواتین شامل ہیں‘‘۔پہلے مرحلے میں (28 نومبر) سرپنچ کی ضمنی انتخابات ہونے کے بارے میں انہوں نے کہا’’27 سرپنچ حلقوں کے لئے انتخاب لڑنے والے 279 امیدواروں میں 203 مرد اور 76خواتین ہیں‘‘۔انہوں نے کہا کہ کل 36

انتظامی کونسل کی 850 میگاواٹ رتل پن بجلی پروجیکٹ کو منظوری

جموں//جموں کشمیر انتظامی کونسل نے یہاں منعقدہ میٹنگ میں ایک اہم فیصلے کے تحت 850 رتل پن بجلی پروجیکٹ کو منظور کیا جو این ایچ پی سی اور جے کے ایس پی ڈی سی مشترکہ طور تعمیر کریں گے۔ جے کے پی ڈی سی اور این ایچ پی سی کے اشتراک سے ایک نئی مشترکہ کمپنی جموں پن بجلی پاور کارپوریشن لمٹیڈ قائم کی جا رہی ہیں،جو 53 کروڑ روپے کی مالیت کا رتل پاور پروجیکٹ تعمیر کرے گی ۔ جے کے پی ڈی سی کا کمپنی میں حصہ 776.44 کروڑ روپے مقرر کیا گیا ہے جو حکومت ہند بطور گرانٹ فراہم کرے گی ۔ آج جو فیصلے لئے گئے ان کے تحت پروجیکٹ پر کام فوری طور شروع کیا جائے گا۔ پروجیکٹ کیلئے تمام اجازت نامے حاصل کئے گئے ہیں اور یہ پروجیکٹ 36 ماہ کے اندر مکمل ہونے کی توقع ہے ۔ پروجیکٹ سے جموں کشمیر کو ترقیاتی اور مالی فوائد حاصل ہوں گے اور مقامی نوجوانوں کیلئے روز گار کے مواقعے بھی پیدا ہوں گے ۔ جموں کشمیر میں 20 ہزار میگاواٹ  پ

نوجوانوں کی بااختیاری اور پائیدار روزگار

 مالی خواندگی کو عام کرنے کیلئے بی ایس ای کے ساتھ معاہدے پر دستخط  جموں//بی ایس ای ایشیا کے سب سے پرانے ایکسچینج مشن یوتھ جموں وکشمیر کے ساتھ 4معاہدوں پر دستخط کئے تاکہ یونین ٹریٹری میں مالی خواندگی ، معاشی ترقی اور پائیدار روزگار کی حوصلہ افزائی یقینی بنائی جاسکے۔معاہدوں پر دستخط بی ایس ای کے نمائندوں اور سی ای او مشن یوتھ ڈاکٹرسیّد عابد رشید شاہ نے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا کی موجودگی میں کئے ۔واضح رہے مشن یوتھ کے تحت حکومت جموںوکشمیر مختلف شعبوں میں روزگار کے مواقع پیدا کرنے کے لئے ہنر میں خامیاں کم کرنے اور ایک موافق ماحول پیدا کرنے کے لئے متواتر کام کر رہی ہے ۔ اس موقعہ پر لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ جموںوکشمیر حکومت بی ایس ای کے مابین اشتراک سے جموںوکشمیر کے لوگ بالخصوص نوجوان اور خواتین مستفید ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نوجوانوں کو بااختیار بنانے اور پائیدارروزگار کی ح

جموں یونیورسٹی گورو نانک چیئر اورخصوصی مقصد وہیکل فائونڈیشن کا اِفتتاح

 جموں// لیفٹیننٹ گورنر منوج سِنہ،جو جموں یونیورسٹی کے چانسلر بھی ہیں، نے گورونانک چیئر اور جموں یونیورسٹی کے خصوصی مقصد وہیکل فائونڈیشن بلڈنگ کا اِفتتاح کیا۔ اِس موقعہ پر جموں یونیورسٹی کے وائس چانسلر منوج کمار دھر بھی موجود تھے۔لیفٹیننٹ گورنر نے اِس موقعہ پر کہا کہ حال ہی میں جب بھارت کے پارلیمان نے جموں وکشمیر سرکاری زبان بل2020 یوٹی حکومت کی درخواست پر منظور کی۔ حکومت ہند نے جموں وکشمیر میں پنجابی زبان کے فروغ اور ترقی دینے کی بھی اِجازت دی اوراِس ضمن میں آج ایک اہم قدم اُٹھایا گیا ۔اُنہوں نے مزید کہا کہ یوٹی حکومت جموںوکشمیر میں پنجابی زبان کے فروغ اور ترقی دینے کی وعدہ بند ہے اور یقین دلایا کہ حکومت اس سلسلے میں ہر ممکن کوشش کرے گی۔اُنہوں نے مزید کہا کہ پہاڑی اور گوجری زبانوں کے لئے چیئرس کا قیام عنقریب عمل میں لایا جائے گاتاکہ جموں وکشمیر میں علاقائی زبانوں کو ترقی دی جاسکے

تازہ ترین