تازہ ترین

جموں میں تعلیمی اداروں کی جزوی بحالی | دسویں اور بارہویں جماعت کے طلاب کیلئے تدریسی عمل بحال

جموں// کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے کئی مہینوں تک بند رہنے کے بعد پیر کو جموں بھر میں 10 ویں اور 12 ویں جماعت کے طلباء کے لیے نئے سرکاری رہنما خطوط کے مطابق اسکول کھولے گئے۔  تاہم دونوں کلاسوں کے لیے نجی اور سرکاری دونوں اسکولوں میں حاضری کم تھی لیکن آنے والے دنوں میں اس میں اضافے کی توقع ہے۔تمام تعلیمی ادارے بشمول یونیورسٹیاں اور کالج کوویڈ 19 کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے 18 اپریل کو آف لائن کلاسوں کے لیے بند کئے گئے تھے۔ بہت سے اعلیٰ تعلیمی اداروں نے اس مہینے کے شروع میں ٹیکہ کاری شدہ طلباء کے لیے کام کرنا شروع کر دیا ہے۔شکھشا نکیتن ہائیر سیکنڈری سکول کے پرنسپل رمیشور مینگی نے بتایا کہ 10 ویں اور 12 ویں کلاس کے تقریباً 3ہزار داخل طلباء میں سے 20 فیصد نے پہلے دن سکول آئے۔انہوں نے بتایا "ہمیں 60 فیصد طلباء کے والدین سے رضامندی ملی ہے اور ہم پرامید ہیں کہ آنے والے

جموں ضلع میں 10 لاکھ افراد کو پہلی خوراک دی گئی | کچی آبادیوں، روہنگیا بستیوں میں بھی ٹیکہ کاری شروع

جموں //ضلع جموں نے 18 سال سے زیادہ عمر کے لوگوں میں 10 لاکھ خوراکیں دینے کا ہدف عبور کیا۔محکمہ صحت کے ایک عہدیدار نے کہا"ہم نے جموں ضلع میں پہلی خوراک میں 18 سال سے زیادہ عمر کے لوگوں کو 10 لاکھ ویکسی نیشن پار کر دی ہیں۔ جبکہ ہمارا ہدف پہلی خوراک میں 11.60 لاکھ ہے‘‘۔عہدیدار نے بتایا کہ "ضلع میں 5 لاکھ سے زائد لوگوں کو دوسری خوراکیں دی گئی ہیں۔"ضلع جموں میں کل ویکسی نیشن 15 لاکھ ہے۔عہدیدار نے کہا " 18 سال سے کم عمر کے بچوں کی ویکسینیشن کے حوالے سے حکومت ہند کی طرف سے کوئی ہدایت نہیں ہے ، اس پر محکمہ صحت کی متعدد میٹنگوں میں بحث ہو رہی ہے اور یہ پائپ لائن میں ہے"۔عہدیدار نے بتایا کہ 18 سال سے کم عمر کے بچوں کے لیے ویکسی نیشن 12 سال سے 18 سال تک شروع ہو سکتی ہے۔ عہدیدار نے کہا "کچھ ممالک میں بچوں کی ویکسی نیشن کے مضر اثرات تھے اسی وجہ سے ہم نے انت

جموں میں جل جیون مشن کے نفاذ پر ایک روزہ ورکشاپ کا انعقاد | حکومت شہریوں کو بنیادی سہولیات کی فراہمی کیلئے پُر عزم

جموں //جل شکتی ڈیپارٹمنٹ نے کنونشن سنٹر جموں میں جل جیون مشن ( جے جے ایم ) کے نفاذ پر ایک روزہ ورکشاپ کا اہتمام کیا ۔ مشیر ڈائریکٹر جے جے ایم ، جے اینڈ کے ڈاکٹر سید عابد رشید شاہ نے اس ورکشاپ کے وسیع نقشوں پر روشنی ڈالی ۔ چیف سیکرٹری نے اس موقعہ پر خطاب کرتے ہوئے مکمل شفاف اور جوابدہ انداز میں کام کرنے کی ضرورت پر زور دیا تا کہ مشن کے تحت مقرر کردہ اہداف مکمل ہو ں ۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ جموں و کشمیر کے لوگوں کو ہر بنیادی سہولت فراہم کرنے کا حکومت کا پختہ عزم ہے اور جل جیون مشن کا آغاز اس سمت میں ایک قدم ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کوششیں جاری ہیں کہ 15 اگست 2022 تک ہر گھر میں نل سے پانی کی سہولت پہنچائی جائے ۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ یہ ورکشاپ ایک عظیم مشن کے پرکشش اور مہتواکانکشی مشن کے کامیاب نفاذ کیلئے تمام سٹیک ہولڈرز کی کوششوں کو پورا کرے گی ۔ چیف سیکرٹری نے انجینئرز سے کہا کہ وہ مق