’ جنگلات ، وائلڈ لائف اورماحولیات سے متعلقہ قوانین‘، چیف جسٹس نے آن لائن ورکشاپ کا ای افتتاح کیا

 جموں//جموں وکشمیر ہائی کورٹ کی چیف جسٹس ، جسٹس گیتا متل نے جموںوکشمیر محکمہ جنگلات اور جموںوکشمیر جوڈیشل اکیڈیمی کی جانب سے منعقدہ ’’جنگلات ، وائیلڈ لائف اور ماحولیات سے متعلقہ قوانین‘‘ کے عنوان پر آن لائین ورکشاپ کا جسٹس سنجے دھر ، پرنسپل چیف کنزرویٹرس  فارسٹس جے اینڈ کے ڈاکٹر موہت گیرا ، چیف کنزویٹر فارسٹس سینٹرل ٹی۔ربی کمار اور محکمہ جنگلات کے دیگر اعلیٰ افسران کی موجودگی میں ای۔ اِفتتاح کیا۔جنگلات ، وائیلڈ لائف اور ماحولیات سے متعلقہ قوانین پر سہ روزہ آن لائین ماڈیول چیف جسٹس اور محکمہ جنگلات کی پہل پر مرتب کیا گیا جس میںملک بھر کے جنگلات و ماحولیاتی قوانین کے ماہرین اور جموںکشمیر محکمہ جنگلات کے عملی تعاون سے تیار کیا گیا۔آن لائین ورکشاپ جموںوکشمیر جوڈیشل اکیڈیمی کے اشتراک سے جوڈیشل افسران ، تلنگانہ کے ٹرینی جوڈیشل افسران اور جموں،کشمیر و لداخ

ٹیلی ریڈیولوجی سے 1ہزار مستحقین مستفید

 جموں//لیفٹیننٹ گورنر گریش چندر مرمو کی جانب سے 24؍جون 2020ء کو جموں وکشمیر میں ٹیلی ریڈیولوجی کا اِفتتاح کرنے کے بعد پہلے ہفتے کے دوران زائد اَز ا1000مریضوں کو یہ سہولیت فراہم کی گئی۔اِس پہل کے تحت ڈوڈہ ، رِیاسی ، رام بن ،پونچھ ، کپواڑہ اوربانڈی پورہ کے دُور دَراز اور دُشوار گزار علاقوں میں نامزد مراکز پر مریضوں کو ایکسرے اور سٹی سکین رِپورٹ مقررہ مدت کے اندر فراہم کئے گئے۔ٹیلی ریڈیولوجی سہولیت قومی صحت مشن کے مفت قومی تشخیصی پہل کے تحت جموںوکشمیر یونین ٹریٹری کے نامزد طبی اِداروں میں فراہم کی جارہی ہے اور اِبتدائی مرحلے میں دیہی اور دُور دراز اور دُشوار علاقوں پر توجہ مرکوز کی جارہی ہے۔اِس پہل سے دیہی علاقوں میں بود و باش رکھنے والے لوگوں کو راحت ملی اور اُنہیں درست تشخیص جدید ترین ٹیکنالوجی اور تشخیصی آلات کو بروئے کار لا کر کی گئی۔ اس پہل سے دیہی اور دُشوار علاقوں کے مریضوں ک

تازہ ترین