تازہ ترین

نظر بندی کیخلاف میاں قیوم کی عرضی خارج

 جموں//جموںوکشمیر ہائی کورٹ نے آج پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت جموں وکشمیر بار ایسو سی ایشن کے صدر میاں قیوم کی حراست کے خلاف درخواست کو خارج کیا۔جسٹس علی محمد ماگرے اور جسٹس ونود چٹرجی پر مشتمل ہائی کورٹ کے ڈویژنل بنچ نے خیال ظاہر کیا کہ ایڈوکیٹ جنرل کے مطابق ایف آئی آر میں درج قیدی کے خلاف درج مبینہ سرگرمیاں اس نوعیت کی نہیں ہے کہ اگر ایک بار سرزد ہوں تو اس سے ماضی کی غلطی سمجھا جائے ۔کورٹ نے کہا کہ ایڈو کیٹ جنرل نے مزیدکہا ہے کہ ایف آئی آر اور حراست کی وجوہات  قیدی کے علاحدگی پسند نظریہ سے متعلق ہے جس کی اُنہوں نے دہائیوں سے پرداخت کی ہے ۔کورٹ نے مزید مشاہدہ کیا کہ ایڈ وکیٹ جنرل نے کہا ہے کہ قیدی نے جس نظریہ کی پرداخت کی ہے کو اسے وقت تک محدو د نہیں سمجھا جاسکتا نہ اسے گئے وقتوں کا خیال یا تازہ نظریہ کہہ سکتے ہیں۔ایسا تب تک ممکن نہیں ہے جب تک کہ متعلقہ شخص اپنے برتائو اور ا

اننت ناگ میں کووِڈ۔19کی روکتھام

  جموں//لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر بصیر احمد خان نے سول سیکرٹریٹ جموںمیں اننت ناگ ضلع میں کووِڈ۔19 کو مزید پھیلائو پر روک لگانے کے لئے جاری اِقدامات کا جائزہ لینے کے لئے میٹنگ منعقد کی۔میٹنگ میں ڈپٹی کمشنر اننت ناگ ، ایس ایس پی اننت ناگ ، اے ڈی سی ، اے سی ڈی، کووِڈ۔19 نوڈل اَفسران اور دیگر ضلع افسران نے بذریعہ وڈیو کانفرنس شر کت کی۔مشیر موصوف نے اَفسران کو حکومت ہند اور لیفٹیننٹ گورنر کی انتظامیہ کی جانب سے جاری رہنما خطوط پر من و عن عمل کرنے کی ہدایت دی۔ انہوں نے اس سلسلے میں کنٹین منٹ زونوں پر خصوصی توجہ مرکوز کرنے کی بھی ہدایت دی ۔اُنہوں نے ڈپٹی کمشنر کو ریڈ زون علاقوں کے لئے اضافی خصوصی ٹیمیں تشکیل دینے کے لئے کہاتاکہ ان علاقوں میں لاک ڈاون اقدامات کی خلاف ورزی کے امکانات پر روک لگائی جاسکے ۔اُنہوں نے ڈپٹی کمشنر اور ایس ایس پی کو ریڈ زون اور بفر زون علاقوںکا اچانک معائنہ کرنے کے ل

۔10ماہ گزرنے کے باوجود رپورٹ کارڈ خوش کن نہیں: عمر عبداللہ

سرینگر// جموں وکشمیر میں 4جی موبائل انٹرنیٹ خدمات کو بحال نہ کرنے پر حکومت کو ہدف تنقید بناتے ہوئے نیشنل کانفرنس کے نائب صدر و سابق وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ نے کہا ہے کہ جب مرکزی حکومت ملی ٹنسی اور دیگر ملک دشمن سرگرمیوں کیلئے پاکستان کو مورد الزام ٹھہراتی ہے تو پھر یونین ٹیریٹری کے لوگوں کو کس بات کی سزا دی جارہی ہے۔عمر عبداللہ، جو اس وقت دلی میں ہیں، نے ایک ٹویٹ میں کہا: 'مرکز اس سب کیلئے پاکستان کو قصوروار قرار دیتا ہے تو پھر اس کی سزا جموں و کشمیر کے لوگوں کو کیوں دی جاتی ہے جبکہ ان کے ہاتھوں میں کچھ بھی نہیں ہے اور نہ ہی وہ اس کے ذمہ دار ہیں'۔انہوں نے اپنے ایک اور ٹویٹ میں کہا: 'یہاں زمینی سطح پر ترقیاتی کاموں کی کوئی سرگرمیاں نہیں ہورہی ہیں اور نہ یہ یہاں کوئی جمہوری نظام ہے جموں وکشمیر حکومت بگڑتی ہوئی سیکورٹی صورتحال کو تسلیم کررہی ہے۔ 5 اگست سے 10 ماہ گذر جانے کے باج

پولیس کے 33 ڈپٹی سپرانٹندنٹوں کے تبادلے اورتعیناتی

سرینگر//محکمہ پولیس نے13 ڈپٹی سپر انٹنڈنٹوں کے تبادلے کے احکامات جاری کئے گئے ہیںجبکہ 20ڈی ایس پی کی تعیناتی عمل میں لائی ہے۔ احکامات کے مطابق آرمڈ پولیس 7ویں بٹالین کے ڈی ایس پی ظفر اقبال نواز کو تبدیل کرکے ڈی ایس پی پونچھ،جبکہ امام صاحب شوپیاں کے ڈپٹی سپر انٹنڈنٹ پولیس توصیف احمد کو تبدیل کرکے ایس ائو برائے ڈی آئی جی کے عہدے پر تقرر ی عمل میں لائی گئی۔ڈی ایس پی ،سی آئی ڈی ہیڈ کواٹرس سجاد احمد کو تبدیل کرکے ڈی ایس پی حاجن  کے عہدے پر تبدیل کیا گیا۔ ڈی ایس پی (ڈی اے آر) ڈوڈہ  منصور ایازکو تبدیل کرکے ڈی ای پی چاڈورہ،جبکہ ڈی ایس پی(ڈی اے آر) پونچھ شیزان بٹ کو تبدیل کرکے ڈی ایس پی امام صاحب شوپیاں تعینات کیا گیا۔ پولیس ہیڈ کواٹر کی طرف سے جاری احکامات کے مطابق ایس ائو ٹو ڈی آئی جی شوکت علی کو تبدیل کرکے ڈی ایس پی (ڈی اے آر) ڈوڈہ کے عہدے پر تعینات کیا گیا۔ ڈی ایس پی چاڈورہ

مرکز 5اگست 2019کے بعد تمام فیصلے واپس لیں: کمال

سرینگر// نیشنل کانفرنس کے معاون جنرل سیکریٹری ڈاکٹر شیخ مصطفیٰ کمال نے کہا ہے کہ مرکزی حکومت نے 5اگست کے بعد غیردانشمندانہ اقدامات سے جموں وکشمیر کو غیر یقینیت کی نذر کردیا ہے اور یہاں جمہوریت کو روندے کا سلسلہ آج تک برابر جاری ہے۔ انہوں نے کہا کہ نئی دلی گزشتہ10ماہ سے جموں و کشمیر کے عوام کے جذبات، احساسات اور امنگوں کو مسلسل نظرانداز کرہی ہے اور یکطرفہ فیصلے تھوپ کر جمہوریت کی بیخ کنی کررہی ہے۔ انہوںنے کہاکہ جموں وکشمیر سے متعلق مرکزی حکومت کے فیصلوں کی ناکامی کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ 10ماہ گزر جانے کے باوجود بھی یہاں4جی انٹرنیٹ کی بحالی نہیں کی جارہی ہے، 10ماہ گزر جانے کے باوجود بھی متعدد سیاسی لیڈران گھروں اور جیلوں میں نظربند ہیں، گزشتہ 10ماہ کے دوران سیکورٹی صورتحال بد سے بدتر ہوتی جارہی ہے، گزشتہ10ماہ سے تعمیر و ترقی کا کہیں نام و نشان نہیں،گذشتہ10ماہ سے ایک بھی ن

کورونا وائرس ؛ بھارت میں جاریIسی ایم آر کا سروے

 سرینگر // پورے بھارت میں جاری انڈین کونسل آف میڈیکل ریسرج(ICMR)کے سروے کے دوران جمعرات کو جنوبی کشمیر کے پلوامہ ضلع میں ماہرین کی خصوصی ٹیم نے 384افراد سے خون کے نمونے حاصل کئے ہیں۔ بھارت کے 60اضلاع میں تین سطحوں پر منعقد ہونے والے سروے میں پلوامہ کو سب سے ’’کم خطرے والے زمرے ‘‘میں رکھا گیا ہے۔ سروے کے دوران یہاں 10دیہات کے 400افراد کے خون کے نمونے حاصل کئے جائیں گے۔ سروے مکمل ہونے کے بعد نہ صرف بھارت میں سماجی سطح پر کورونا وائرس کی منتقلی کے بارے میں جانکاری حاصل ہوگی بلکہ لاک ڈائون پر فیصلہ لینے میں بھی مدد ملے گی۔ آئی ایم سی آر نے کشمیر صوبے میں سب سے کم خطرے کے زمرے میں آنے والے اضلاع میں پلوامہ کو شامل کیا ہے اور ضلع کے 10دیہات میں 400لوگوں کے نمونے حاصل کئے جائیں گے۔ گورنمنٹ میڈیکل کالج سرینگر میں شعبہ کمیونٹی میڈیسن کے سربراہ اور آئی سی ایم آ

طوفانی ہوائیں؛ گنہ ون کنگن میںخوف و دہشت

 کنگن// گنڈ کنگن کے چیچی پتی گنی ون میں اُس وقت خوف و دہشت کا ماحول پھیل گیا اور لوگ گھروں کو چھوڑ کر محفوظ مقامات کی طرف بھاگنے لگے جب مقامی بستی کے نزدیک جنگل سے گزر رہی 220KVآلسٹینگ لداخ ٹرانسمشن لائن تیز ہواؤں کی وجہ سے درخت کے ساتھ ٹکرا کر زمین پر گر گئی اور آگ کے شعلے بلند ہوگئے ۔مقامی لوگوں کے مطابق جب انہوں نے اس خوفناک منظر کو دیکھا تو وہ گھروں کو چھوڑ کر محفوظ مقامات کی طرف بھاگنے لگے۔ ایک مقامی شہری مختار احمد نے بتایا کہ مطلع ابرآلود ہونے کی وجہ سے وہ گھروںمیںہی بیٹھے تھے کہ اس دوران شام پانچ بجے کے قریب تیز ہواؤں کا سلسلہ شروع ہوگیا اور چند منٹوں کے بعد ہی باہر سے زور دار آوازیں سنائی دینے لگیں اورلوگ گھروں سے باہر آئے۔جب لوگوں نے دیکھا کہ ترسیلی لائن درخت کے ساتھ ٹکرا نے کے ساتھ ہی آگ کے شعلے بھڑکنے لگے اوربجلی  بھی گئی تو وہ گھروں کو چھوڑکر بھاگنے لگے۔

ڈنگڈارہ کریری میں پینے کے پانی کی قلت

بارہمولہ//ضلع بارہمولہ کے ڈنگڈارہ کریری علاقے میںپینے کے صاف پانی کی عدم دستیابی کے سبب مقامی آبادی کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ مقامی لوگوں نے محکمہ جل شکتی پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ اُنہیں گزشتہ کئی ہفتوں سے گندہ پانی پینے پر مجبور کیا جارہا ہے ۔ ایک مقامی شہری سجاد احمد نے کشمیرعظمیٰ کو بتایا کہ متعلقہ محکمہ پینے کا صاف پانی فراہم کرنے میں بری طرح سے ناکام ہوچکا ہے کیونکہ علاقے میں جو پانی سپلائی کیا جاتا ہے وہ ناصاف ہوتا ہے ۔انہوں نے بتایا کہ اگر چہ لوگوں نے کئی مرتبہ متعلقہ محکمہ کو اس بارے میں مطلع کیا تھا تاہم اس کی طرف کوئی توجہ نہیں دی گئی جس کے باعث لوگ صاف پانی کی ایک ایک بوندکیلئے ترس رہے ہیں ۔ لوگوںنے متعلقہ محکمہ کے اعلیٰ افسران سے مطالبہ کیا کہ علاقے میں جلد از جلد پینے کا صاف پانی فراہم کرنے کیلئے اقدامات کئے جائیں۔ اس سلسلے میں محکمہ جل شکتی کے اسسٹنٹ ا

کشمیر ورلڈ فلم فیسٹول ملتوی

سرینگر//کشمیر ورلڈ فیسٹول منیجمنٹ کمپنی نے کووڈ19کے پیش نظر کشمیر میں مجوزہ فلم فسٹول کو ملتوی کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور اس ضمن میں اگلی تاریخ کا اعلان بعد میں کیا جائے گا ۔یہ فیسٹول 10 جون 2020 سے شروع ہونا تھا۔ یہ فیصلہ کے ڈبلیو ایف ایف کے 'ایڈوائزری بورڈ' کے ممبروں سے مشاورت کے بعد لیا گیا ہے۔ اب تک اس ضمن میں 4میلے منعقد کئے گئے ہ

مزید خبرں

نالہ میں3سالہ بچہ غرقآب،وانگت کنگن میں کہرام غلام نبی رینہ   کنگن//وانگت کنگن میں 3سالہ بچہ غرقآب ہونے سے کہرام مچ گیا۔پہل نار وانگت کنگن میں 3سالہ عرفان احمد کھٹانہ ولد شوکت احمد کھٹانہ ساکن پہل نار وانگت کنگن گھر کے نزدیک نالہ میں گر کر غرقآب ہوگیا ۔ اطلاع ملتے ہی مقامی لوگ اور کنگن پولیس فوری طور پر جائے حادثہ پر پہنچے تاہم نالہ میں پانی کے تیز بہاؤ کی وجہ سے لاش کو برآمد کرنے میں دشواریاں پیش آئیں۔ ذرائع سے معلوم ہوا کہ بعد میں ایس ڈی آر ایف کی ٹیم کو طلب کیا گیا اور قریب آٹھ گھنٹے کے بعد وانگت پل کے نزدیک لاش برآمدکی گئی۔ بچے کی لاش جب گھر لائی گئی تو علاقہ میں رقعت آمیز مناظر دیکھے گئے اور ہر ایک آنکھ اشک بار تھی۔    ہتمولہ کپوارہ میں سڑک حادثہ میںسرپنچ لقمۂ اجل  اشرف چراغ    کپوارہ//ہتمولہ کپوارہ میں سڑک ک

قاضی گنڈ میں تاریخی چشمہ تباہی کے دہانے پر | مقامی لوگوں کا حکام پر غفلت شعاری کا الزام

اننت ناگ//قاضی گنڈمیں واقع پانزت ناگ چشمہ حکام کی عدم توجہی کے سبب تباہی کے دہانے پر پہنچ گیا ہے۔قاضی گنڈ سے محض2کلومیٹر دور اس چشمے میں گندگی کے ڈھیر جمع ہیں ۔اس چشمہ سے 35گائوں کو پینے کا پانی فراہم ہوتا ہے ۔ اس قدرتی چشمہ میںمچھلیوں کی ایک خاصی تعداد موجود ہے ۔چشمہ میں کشمیری مچھلی کے علاوہ ٹراوٹ بھی پائی جاتی ہے جس کے لئے محکمہ مچھلی پالن نے یہاں ایک سیل سنٹر بھی قائم کیا ہے ۔گل محمد گنائی نامی ایک مقامی شہری نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ گذشتہ کئی سالوں سے چشمہ میں گندگی جمع ہورہی ہے اورآلودگی میں تیزی سے اضافہ کے سبب پانی کی سطح میں کافی حد تک کمی واقع ہوئی ہے۔انہوں نے بتایا کہ مقامی لوگ ہرسال چشمہ کی صفائی خود ہی عمل میں لاتے ہیں ۔ایک اور شہری نے کہاکہ وہ عرصہ درا زسے پانزت ناگ کو محکمہ سیاحت کی تحویل میں دینے کا مطالبہ کر رہے ہیں تاکہ اسکی کھوئی ہوئی شان کو بحال کیا جاسکے ۔ ناظم

دارالعلوم رحیمہ کی امدادی سرگرمیاں جاری | 2600کنبوں میں راشن کٹ اوردرماندہ طلبہ کو نقد ی فراہم ،اسکول قرنطین کیلئے وقف

بانڈی پورہ//کووِڈ 19کی عالمگیر وباء کی وجہ سے لاک ڈائون کے نفاذ کے دوران دارالعلوم رحیمہ نے ضرورت مند اور مفلوک الحال کنبوں میں بلالحاظ مذہب وملت سینکڑوں کھانے کے کِٹ ،اور ماسک تقسیم کرنے کے علاوہ بیرون جموں کشمیر درماندہ طلبہ کو واپس گھر پہنچے میں نقدی رقم فراہم کی ۔ایک بیان کے مطابق دارالعلوم رحیمیہ کی ریلیف سیل نے موجودہ وبائی صورتحال میں 2600 مفلوک الحال کنبوں میں راشن کِٹ تقسیم کئے جبکہ عید کے موقعہ پر بھی335کٹ تقسیم کئے گئے ۔ریلیف سیل نے مختلف اسپتالوں میں عام لوگوں میں6500ماسک تقسیم کئے۔بیرون جموں کشمیر درماندہ95طلبہ کو نقدامدادفراہم کرکے گھر پہنچنے میں مدد کی گئی ۔بیان کے مطابق اس کے علاوہ دارالعلوم رحیمیہ کی سرپرستی میں چل رہے فیض عام اسکول کو بانڈی پورہ میںقرنطین مرکز میں تبدیل کیاگیا۔ ریلیف سیل نے وادی میں لاک ڈائون کے روزاول سے ہی امدادی سرگرمیوں کو شروع کیا۔بانڈی پورہ میں

پینے کے پانی کی عدم دستیابی | وائل گاندربل کی آبادی مشکلات سے دوچار

گاندربل//وائل گاندربل میں پینے کے صاف پانی کی عدم فراہمی کی بدولت آبادی کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔مقامی لوگوں نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ ہزاروں نفوس پر مشتمل آبادی کو جل شکتی محکمہ کی جانب سے پچھلے ایک ماہ سے صبح آٹھ بجے پانی کی سپلائی منقطع کردی جاتی ہے اور بعد دوپہر تین بجے بحال کردی جاتی ہے ۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ محکمہ کے اس طرز عمل سے انہیں سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔انہوں نے کہا کہ اگرچہ متعلقہ محکمہ کے ملازمین کو اس پریشانی سے آگاہ کیا گیا لیکن ایک ماہ گزرنے کے باوجود بھی معاملہ جوں کا توںہے۔انہوں نے چوبیس گھنٹے بلا خل پانی سپلائی فراہم کرنے کا مطالبہ کیا۔  

ریگی پورہ کے لاپتہ طالب علم کی لاش بر آمد | ہمارا بیٹا قتل کیا گیا ہے،لواحقین کا احتجاج

کپوارہ//ریگی پورہ کپوارہ کے 22سالہ لاپتہ نوجوان کی لاش کو پولیس نے وگہ بل کاری ہامہ سے بر آمد کیا۔لاش کا پو سٹ مارٹم کرنے کے بعد اُسے لواحقین کے سپرد کیا گیا۔پولیس کا کہنا ہے کہ 22سالہ فا ضل احمد میر ساکنہ ریگی پورہ کپوارہ22مئی کو اپنے گھر سے نکل کر لاپتہ ہوگیا جس کے بعد ان کے اہل خانہ نے پولیس تھانہ میں ایک گمشدگی رپورٹ درج کرائی ۔پولیس کے مطابق عید کے روز ان کی لاش کو وگہ بل کاری ہامہ سے بر آمد کیا گیا ۔پولیس نے اس سلسلے میںاُس کے 3ساتھیوںاعجاز احمد میر ،اشفاق احمد ملک اور سہیل دھوبی کو حراست میں لیکر ان سے پوچھ تاچھ شروع کی ۔پولیس نے معاملہ کی نسبت ایک کیس زیر یف آئی آر نمبر 118/2020درج کر کے تحقیقات شروع کی ۔اس دوران مہلوک طالب علم کے لو احقین نے ریگی پورہ میں احتجاج کرتے ہوئے بتایا کہ وہ بی سی اے کی ڈگری کررہا تھا اور ایک ماہ قبل کورونا وائرس کے خوف سے گھر لوٹا تھا۔انہوں نے کہ

اونتی پورہ اور کولگام میں خشخاش کی فصل تباہ

اونتی پورہ+کولگام//منشیات مخالف مہم کے دوران اونتی پورہ اور کولگام پولیس نے محکمہ ایکسائز کے افسران کے ہمراہ کھریو،ہاری پاریگام اور بدرو یاری پورہ کے علاقے میں 69کنال اراضی پر پھیلی خشخاش کی فصل کو تباہ کیا۔ پولیس اسٹیشن کھریو کے شار شالی علاقے میں ڈی وائی ایس پی کے ہمراہ ایس ایچ او پولیس تھانہ کھریو اور محکمہ ایکسائز کے افسران نے 30کنال اراضی پر پھیلی خشخاش کی فصل کو تباہ کیا ۔پولیس تھانہ اونتی پورہ کے ہاری پاریگام علاقے میںایس ڈی پی اونتی پورہ کے ہمراہ ایس ایچ او اونتی پورہ اور محکمہ ایکسائز کے افسران نے 5کنال اراضی پر پھیلی خشخاش کی کاشت کو تباہ کیا ۔ایس ایس پی اونتی پورہ طاہر سلیم نے کشمیر عظمیٰ کوبتایا کہ انہوں نے محکمہ مال اور ایکسائز محکمہ کے ساتھ مل کرگذشتہ چند روز کے دوران رینز پورہ،گلزار پورہ،بیگ پورہ،ٹکنہ،ریشی پورہ،پنجگام،امیر آباد،نئی بھگ،وین پانپور،چرسو،شار شالی کھریواورہ

ویلگام میں آشا ورکروں میں حفاظتی کٹ فراہم

کپوارہ// میڈیکل بلاک ویلگام رامحال میں محکمہ صحت کی جانب سے بلاک میں کام کر رہی آشا ورکروں میں حفاظتی کٹ فراہم کئے۔بلاک میڈیکل آفیسر ویلگام ڈاکٹر فرید شاہین نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ بلاک میں 62 آشا ورکر کام کر رہی ہیں اور گزشتہ دو مہینوں کے دوران انہوں نے کوروناوائرس کی روکھتام کے لئے محکمہ کے ساتھ دن رات کام کیا اور محکمہ نے ان کی حفاظت کے لئے بدھ کو حفاظتی کٹ فراہم کئے تاکہ وہ اس وبائی بیماری پر روکتھام کے دوران محکمہ کو اپنا بھر پور تعاون فراہم کرسکیں۔  

ساتویں جماعت کے طالب علم نے قران حفظ کرلیا | ناروائو بارہمولہ میں خوشی کی لہر

بارہمولہ//اسلامیہ ماڈل اسکول ملہ پورہ شیری ناروائو میں زیرتعلیم ساتویں جماعت کے طالب علم سہیل احمدایتو ولدعبدالحمیدنے قرآن پاک حفظ کرلیا۔9سال کی عمر میں اس بچے نے ادارہ فرقان العلوم نامی دارالعلوم واقع آڈورہ ناروائو روزانہ سہ پہرکوجانا شروع کیاتھا،جہاں وہ قران کریم کویادکیاکرتاتھا۔دن کومروجہ تعلیم کیلئے اسکول جانا اورسہ پہرکو دارالعلوم جاناسہیل احمد کیلئے معمول بن گیاتھا۔تین سال تک اس عمل سے گزرنے کے بعد 12سالہ اس طالب علم نے قران پاک کوحفظ کرلیا اوروہ حافظ قران بن گیا۔چندروز قبل ہی دارالعلوم میں منعقدہ ایک سادہ مگرپُروقار تقریب کے دوران اس دارالعلوم کے مہتمم اوردیگر علماء نے سہیل کی دستاربندی کی اور سند بھی پیش کی ۔یوں یہ بچہ تین سال میں حافظ قران بن گیا۔ادھر اسلامیہ ماڈل اسکول کے اساتذہ کاکہناہے کہ سہیل ایک ہونہار طالب علم ہونے کے ساتھ ساتھ نہایت شریف اورفرمانبردار طالب علم ہے ۔

جی کے کمیونی کیشن کے دو ملازمین کو صدمہ

سرینگر//جی کے کمیونی کیشن سے وابستہ مشتاق احمد شاہ اور محمود احمد کے چچاشبیر احمد شاہ ولد مرحوم غلام احمدشاہ ساکن جبگری پورہ نوہٹہ بدھوار کو انتقال کرگئے۔ کشمیر عظمیٰ کے جملہ اراکین نے غمزدہ کنبے سے تعزیت اور یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کی جنت نشینی کیلئے دعا کی۔خاندانی ذرائع کے مطابق تعزیت صرف تین دن تک رہے گی اور کو ئی اجتماعی فاتحہ خوانی نہیں ہوگی۔   

کووِڈ- 19؛جموں کشمیرمیں سب سے زیادہ ٹیسٹ کئے جاتے ہیں:کنسل

سری نگر// حکومت کے ترجمان روہت کنسل نے دعویٰ کیا ہے کہ پورے ملک  میں کورونا وائرس کے سب سے زیادہ ٹیسٹ جموں و کشمیر میں کئے جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یونین ٹریٹری میں کورونا وائرس کے لئے ہورہے ٹیسٹوں کی شرح ملک کی تمام ریاستوں و یونین ٹریٹریوں سے سب سے زیادہ ہے۔موصوف ترجمان نے کہا کہ ہماری کورونا ٹیسٹ کرنے کی گنجائش کافی بڑھ گئی ہے پہلے ہم روزانہ ایک سو لوگوں کا ٹیسٹ کرتے تھے جبکہ آج آٹھ ہزار لوگوں کا فی دن ٹیسٹ کیا جاتا ہے۔روہت کنسل نے گذشتہ شام جموں میں ایک پریس کانفرنس کے دوران نامہ نگاروں کو بتایا،’’'جموں وکشمیر کی ٹیسٹنگ شرح پورے ملک میں سب سے زیادہ ہے، ہم اس میں سر فہرست ہیں، ہماری ٹیسٹنگ گنجائش کافی بڑھ گئی ہے پہلے ہم روزانہ ایک سو لوگوں کا ٹیسٹ کرتے تھے لیکن آج آٹھ ہزار لوگوں کا ہر روز ٹیسٹ کیا جاتا ہے‘‘۔موصوف ترجمان نے کہا کہ گھریلو ہوائی سف

گوٹلی باغ میں آلودہ پانی فراہم

گاندربل//گاندربل کے کئی علاقوں میں پانی کی عدم دستیابی کے نتیجے میں لوگوں کو مشکلات کا سامنا ہے۔چھانہ ہار گوٹلی باغ اور بابا وائل نامی بستیاں 400 چولہوں پر مشتمل ہیں جن کیلئے 2002 میں جل شکتی محکمہ کی طرف سے بابا وائل میں پانی کے ذخائربنائے گئے جن میںگوٹلی باغ بجلی کنال کا پانی جمع کیا جاتا ہے اوریہی پانی فلٹر کئے بغیر لوگوں کو سپلائی کیا جاتا ہے۔ اٹھارہ سال گزرنے کے باوجود آج تک فلٹریشن پلانٹ تعمیر کرنے کی کوئی کوشش نہیں کی گئی بلکہ حد تو یہ ہے کہ یہ ذخائر بغیر ڈھکن کے ہیں۔مقامی لوگوں کی شکایت ہے کہ ہزاروں کی آبادی مضر صحت پانی استعمال کررہی ہے جس کی وجہ سے علاقہ میں مختلف بیماریاں پھوٹ پڑنے کا خطرہ لاحق رہتا ہے۔مقامی شہری منظور احمد خان نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ’’ ان آبی ذخائر میں مردہ جانوراورگندگی کی موجودگی پر قابو پانے کیلئے ان ذخائر پر کم از کم ڈھکن ہی لگائے جاتے