تازہ ترین

جسمانی طورخاص اَفرادکا وفد فاروق خان سے ملاقی

 سری نگر// جسمانی طور معذور اَفراد ایک وفد یہاں سول سیکرٹریٹ میں لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر فاروق خان سے ملا قی ہوااور اُنہیں درپیش مسائل کے ازالہ کے لئے ایک یاداشت پیش کی۔پانچ نفری وفد کی قیادت چیئرمین ہیومنٹی ویلفیئر آرگنائزیشن ہیلپ لائن جاوید احمد ٹاک کرر ہے تھے جنہوں نے جسمانی طور معذور اَفراد کی شکایات اور انہیں درپیش مسائل مشیر کوگوش گذار کئے۔ڈائریکٹر جنرل وومن چائلڈ ڈیولپمنٹ میر طارق علی ، ایگزیکٹیو ڈائریکٹر جے کے ڈ ریل رہیبلی ٹیشن کونسل اشفاق احمد اور دیگر متعلقین اس موقعہ پر موجود تھے۔جاوید احمد ٹاک جو کہ جسمانی طور معذور اَفراد کی فلاح و بہبود کے کار کن ہیں، نے معذوروں کے حقو ق اور پنچایت اکائونٹس اسسٹنٹ اسامیوں کے لئے تعلیم یافتہ معذور افراد کے لئے نشستیں مخصو ص رکھنے کی عمل آوری سے متعلق معاملات اور مانگوں پر ایک مفصل یاد داشت پیش کی۔اس کے علاوہ وفد نے ان اَفراد کے حق می

حکومت صنعتی شعبے کو درپیش مسائل سے باخبر: شرما

سری نگر//لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر کے کے شرما نے کہاہے کہ حکومت مقامی صنعتوں کو جار ی وباء کی وجہ سے درپیش مسائل سے خوب آگاہ ہے اور اِس ضمن میں کوششیں جاری ہیں جن میں حال ہی میں اعلان کئے گئے صنعتوں کے لئے اِقتصادی پیکیج شامل ہے۔مشیر موصوف جموں وکشمیر صوبوں کی صنعتوں کے نمائندگان کے ساتھ بذریعہ ویڈیو کانفرنسنگ تبادلہ خیال کر رہے تھے جس کے دوران لکھن پور ٹول ٹیکس کی منسوخی سے مقامی صنعتوں پر مرتب اثرات کا تجزیہ اور غور و خوض کیا گیا۔میٹنگ میں فائنانشل کمشنرخزانہ ارون مہتا ، کمشنر سیکرٹری صنعت و حرفت منوج کمار دِویدی ، ، ناظمین صنعت وحرفت جموں/کشمیر، جنرل منیجر جے کے سیمنٹ منظور حسین اور دیگر اعلیٰ افسران موجود تھے۔نمائندگان کی پیش کی گئی آرا ٔکی بغو ر سماعت کرتے ہوئے مشیر نے کہا کہ اس ضمن میں کوششیں کی جارہی ہے جن سے صنعتوں کی مشکلات کا ازالہ یقینی بنے گا۔  

انجینئررشید کے ساتھ اہلخانہ کی ویڈیوکانفرنس کے ذریعہ ملاقات

سرینگر/ /اشرف چراغ// نئی دہلی کے تہاڑ جیل میں نظر بند سابق ممبر اسمبلی اور عوامی اتحاد پارٹی کے سربراہ انجینئر رشید کے اہل خانہ نے14ماہ بعد اُن کے ساتھ ویڈیو کانفرنس کے ذریعے ملاقات کی۔ انجینئر رشید کی والدہ اور اُن کے برادر نے14ماہ کے بعد ویڈیو کانفرنس کے دوران ان سے ملاقات کی،جس کے دوران طرفین جذباتی بھی ہوئے۔انجینئر رشید کے برادر خورشید احمد شیخ نے اپنے برادر سے ویڈیو کانفرنس کے ذریعے ملاقات کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ14ماہ کے طویل عرصے کے بعد انہوں نے برادر سے ملاقات کی۔ انجینئر رشیدکو5اگست کو مرکزی حکومت کی جانب سے جموں کشمیر کے آئین کی تخصیص اور تقسیم کے اعلان کے ساتھ ہی دیگر مین اسٹریم لیڈروں کے ہمراہ گرفتار کیا گیا تھا،جس کے بعد اگرچہ گزشتہ ایک برس کے دوران وقفہ وقفہ سے بیشتر لیڈروں کو رہا کیا گیا،تاہم انجینئر رشید بدستور دہلی کے تہاڑ جیل میں نظربند ہے،جبکہ سابق وزیر اعلیٰ محبوب

پنچ وسرپنچ وفد کی ملاقات بصیر خان سے ملاقات

سری نگر// جے کے لوکل باڈیز پنچ سرپنچ ایسو سی ایشن کا ایک وفد صدر مولوی طارق کی قیادت میں لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر بصیر احمد خان سے ملاقی ہوا اور انہیں درپیش مسائل گوش گزار کئے۔مولوی طارق نے انہیں درپیش مسائل کے بارے میں مشیر کو جانکاری دی اور ان کے ازالے کے لئے ان کی ذاتی مداخلت طلب کی ۔ انہوں نے پنچوں اور سرپنچوں کے مشاہرے میں اضافہ کرنے اور ان کے اپنے ہی اضلاع میں رہائشی سہولیات فراہم کرنے کی مانگ پیش کی۔انہوں نے  مطالبہ کیاکہ ترقیاتی کاموں سے قبل اور بعد میں عمل درآمد کے بارے میں بھی انہیں مکمل جانکاری فراہم کی جانی چاہیئے ۔انہوں نے کہا کہ وہ جموںوکشمیر میں جمہوریت کی بنیاد ی سطح پر استحکام کے لئے تن دہی اور لگن سے کام کر رہے ہیں۔ مشیر نے انہیں بغور سنااور انہیں یقین دلایا کہ انہیں حکومت کی جانب سے ہرممکن امداد فراہم کی جائے گی۔ انہوں نے مزیدکہاکہ انہیں متعلقہ ضلع کمشنروں کے سات

ترال میںروز گار سے محروم 52 دکانداروں کا احتجاج

ترال//بس اسٹینڈ ترال میںسرکار کی انہدامی کارروائی سے متاثر ہوئے 52 دکانداروں نے 7ماہ سے ان کی باز آباد کاری کے لئے کوئی بھی قدم نہ اٹھانے کے خلاف زوردار احتجاج کیا ۔احتجاجی دکانداروں نے بتایا کہ وہ بنک کے علاوہ دیگر قسم کے قرضہ جات تلے دب گئے ہیں جس کے نتیجے میں وہ سخت مشکلات کا سامنا کر رہے ہیں ۔جمعہ کی صبح بس اسٹینڈ ترال کے اِن 52دکانداروں نے اپنی باز آباد کاری کے حق میں ترال چوک میں زور دار احتجاج کیا۔متاثرہ دکانداروں نے بتایا کہ مارچ 2020ء میں سرکار نے بس اسٹینڈ ترال میں قائم52دکانوں کوگرانے کے لئے بلڈوزر استعمال کر کے انہیں مکمل طور زمین بوس کیا ۔انہوں نے بتایا کہ انتظامیہ نے اس وقت ان کے ساتھ وعدہ کیا تھا کہ ان کی باز آباد کاری کے لئے ایک بہتر منصوبہ بنایا جائے گا۔احتجاجی دکانداروں نے بتایا کہ7ماہ گزر جانے کے باجوود تاحال اُن کی بحالی کا کوئی بھی قدم نہیں اٹھایا گیا، جس کے نتی

فلو ویکسین کی قیمت غریب لوگوں کی اسطاعت سے باہر

سرینگر//ڈاکٹرس ایسوسی ایشن کشمیر کے صدر ڈاکٹر نثارالحسن نے وادی کشمیرمیں صحت عامہ کے حاکموں پرزوردیا ہے کہ وہ غریب لوگوں کو فلو کاٹیکہ مفت فراہم کریں ۔ایک بیان میں ڈاکٹرس ایسوسی ایشن کے صدر ڈاکٹر نثارالحسن نے کہا کہ اس سے فلو کاٹیکہ لینے میں اضافہ ہوگاا ورقیمتی انسانی جانیں بچ جائیں گی ۔انہوں نے کہا کہ غریب لوگ ٹیکہ نہیں لگاتے،کیوں کہ ویکسین کی قیمت آڑے آتی ہے ۔ایک فلو ویکسین کی قیمت1860روپے ہے ۔ٹیکہ یاویکسین کی زیادہ قمیت کی وجہ سے یہ غریب لوگوں کی پہنچ سے باہر ہے ۔ ڈاکٹر نثار الحسن نے کہا کہ فلوویکسین کی قیمت اِسے غریب عوام کیلئے ناقابل رسائی بناتی ہے۔انہوں نے مزیدکہا کہ ویکسین لینے کی سکت نہ ہونے کی وجہ سے غریب عوام کی جانوں کوخطرہ ہے ۔انہوں نے کہا کہ جن لوگوں نے ٹیکہ نہیں لگایا ہوگا وہ نہ صرف اپنی جانوں سے کھیلتے ہیں بلکہ وہ پورے سماج کی صحت کو دائو پر لگاتے ہیں ۔ڈاکٹرس ایسوسی ای

ہماچل میں کشمیری تاجر کی دکان پر مالک نے جبری قبضہ کیا

سرینگر//ہماچل پردیش کے کلو منالی میں کشمیری تاجر کی دکان پر مالک کمپلکس کے مبینہ جبری طور پر قبضے کی وجہ سے دیگر دکاندار خوف و ہراس میں مبتلا ہوگئے ہیں،جبکہ انہوں نے جموں کشمیر کے لیفٹنٹ گورنر سے اس معاملے میں مداخلت کرکے انصاف فراہم کرنے کی درخواست کی ہے۔کپوارہ سے تعلق رکھنے والے تاجر کی ہماچل پردیش کے کلو منالی کے سٹی ہارٹ کمپلکس میں قائم کشمیری دستکاری کی دکان پر مالک دکان نے قبضہ کیا،جبکہ مالک دکان کا کہنا ہے کہ دکاندار سے پوچھ کر ہی اس کا مال محفوظ مقام پر رکھا گیا۔ کپوارہ کے جہانگیر احمد لون کا کہنا ہے کہ کلو منالی کے سٹی ہارٹ کمپلکس میں اس کی دکان کو مالک دکان نے کسی اور شخص کو دیا ہے۔انہوں نے کہا،’’ مجھے مالک مکان کی جانب سے14ستمبر کو کرایہ کی ادائیگی کیلئے ٹیلی فون کال موصول ہوئی اور میں نے اس سے کہا کہ جب میں وہاں پہنچوں گا تو میں کرایہ ادا کرئوں گا‘‘۔

تعلیمی اداروں میں ضروری سہولیات کی فراہمی

سرینگر// پرنسپل سیکریٹری سکولی تعلیم و سکل ڈیولپمنٹ ڈاکٹر اصغر حسن سامون نے تعلیم کے بنیادی ڈھانچے میں بہتری کے سلسلے میں ضلع کٹھوعہ کے پنچایت نمائندوں اور ممتاز شہریوں سے ایل جی شکایتی سیل پر موصولہ شکایات کا جائزہ لیا۔میٹنگ میں ڈپٹی کمشنر کٹھوعہ اے پی بھگت ، پروجیکٹ ڈائریکٹر سماگراہ شکھشا ارون منہاس اور دیگر افسران ومحکمہ تعلیم کے افسران نے بذریعہ ویڈیو کانفرنسنگ شرکت کی۔ڈاکٹر سامون نے اَفسران کو ہدایت دی کہ وہ سائٹوں کا دورہ کرنے کے بعد اس کی قابلیت سے متعلق ہر شکایات کا جائزہ لیں اور اسی کے مطابق کارروائی کا آغاز کریں۔پرنسپل سیکرٹری نے متعلقہ افسران سے کہا کہ وہ تمام سکولوں میں پینے کے صاف پانی ، بجلی ، باؤنڈری وال ، کھیل  میدان اور دیگر ضروری سہولیات کی فراہمی کو یقینی بنائیں۔ اُنہوں نے ان سے فنڈس کو زیادہ سے زیادہ اسی مقصد کے لئے استعمال کرنے کی تاکید کی۔ انہوں نے ان سے کہ

بابر قادری ٹنگمرگ میں سُپرد خاک

 ٹنگمرگ//معروف ایڈوکیٹ بابر قادری کو جمعرات کو رات دیر گئے اپنے آبائی مقبرہ شیخ پورہ کنزر میں ہزاروں لوگوں کی موجودگی میںسپرد خاک کیا گیا۔موصوف نے 15 ستمبر 1980 کوپیدا ہوئے تھے۔انہوں نے 1994 میں گورنمنٹ ہائی سکول ٹارہامہ سے دسویں جماعت پاس کیا اور1995میں حول سرینگر میں رہائش اختیار کی ۔اُن کے والد انیمل ہسبنڈری محکمہ میں ملازم تھے ۔اس دوران بابرقادری نے کشمیر یونیورسٹی سے ایل ایل بی کی ڈگری حاصل کی اور بحیثیت وکیل اپنے کیرئیر کا آغاز کیا۔مرحوم اپنے پیچھے دو مصوم بیٹیاں شریک حیات، والدین اور دو بھائیوں کو چھوڑ کر گئے۔اُن کے آبائی گھر شیخ پورہ میں جمعہ کو دن بھر تعزیت پرسی کا سلسلہ جاری رہا جس میں ہزاروں لوگوں نے قادری خاندان کے ساتھ تعزیت پرسی کی۔ ادھر بار ایسوسی ایشن ٹنگمرگ نے بابر قادری کی ہلاکت کے خلاف بطور احتجاج عدالت میں کام کاج کا بائیکاٹ کیا اور مرحوم کے گھر جاکر پسماندگ

امشی پورہ شوپیان ہلاکتیں

سرینگر// پی ڈی پی نے شوپیاں فرضی جھڑپ میں ملوثین کے خلاف سخت اور تیزی کے ساتھ کارروائی کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے متاثرہ خاندانوں کو شفاف اور معیاد بند وقت کے دوران ا نصاف فراہم کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ پارٹی ترجمان اور میڈیا صلاح کار سہیل بخاری نے ایک بیان میں کہا کہ ماضی میں بھی ’’تمغوں کے عوض قتل‘‘کے متعدد واقعات کی اصل بنیاد قتل و غارت گری کو فروغ دینے کی پالیسی رہی ہے اور اب موجودہ وقت کی حکومت کو یہ موقع مل گیا ہے کہ انصاف کو یقینی بنانے اور استحکام پیدا کرنے کے لئے شوپیان کے واقعے کو ایک مثال بنادیں۔ انہوں نے کہا،’’فوج اور پولیس کے بیانات کے ساتھ ساتھ حتمی فارنسک رپورٹس سے ، یہ بات بالکل واضح ہے کہ شوپیاں میں جو کچھ ہوا، وہ ایک منصوبہ بند جھڑپ تھی جس میں راجوری کے بے گناہ نوجوان جو مزدوری کرکے روزگار کمانے کے لئے شوپیان آئے تھے، کو قتل کیا گیا او

کپوارہ،ترال اور سوپور میں سڑک حادثات

سرینگر// کپواڑہ میں فوج کی گاڑی کو حادثہ پیش آنے سے ایک شخص ہلاک جبکہ 3 فوجیوں سمیت 7 افراد زخمی ہوگئے جبکہ ستورہ ترال میں ایک نوجوان اپنے ہی ٹریکٹر سے گر کر ہلاک ہوا،اس دوران سوپور میں پولیس کا اسسٹنٹ سب انسپکٹر ٹریفک حادثے میں شدیدزخمی ہوا۔ کپوارہ کے علاقے ناد بیک کے قریب فوج کی ایک گاڑی زیر نمبر (98E-9308) ڈرایئور کے قابو سے باہر ہوکر ایک نالے میں جاگری،جس کے نتیجے میں ایک شخص موقع پر ہی جاں بحق اور 7 دیگر زخمی ہوگئے جن میں تین فوجی اہلکار بھی شامل ہیں۔پولیس نے حادثے میں جانبحق شہری کی شناخت دولت احمد خان ولد اسدالدین خان ظاہر کی ہے۔جبکہ زخمی ہونے والے 4 افراد کی شناخت نوید قاسم خان ، جاوید عالمگیر خان ، اشفاق بشیر خان ساکنان مارسری چوکی بل اور ارشاد بشیر شامل ہے۔ حادثے میں زخمیوں کو سب ضلع اسپتال کرالپورہ منتقل کردیا گیا جہاں ڈاکٹروں نے انہیں اعلیٰ علاج کے لئے ڈسٹرکٹ اسپتال ہندواڑ

کپوارہ کے جنگلات میں بھیانک آگ

کپوارہ// ضلع کپوارہ کے جنگلات میں اچانک نمودار ہوئی جس نے بھیانک رخ اختیار کیا ہے تاہم محکمہ جنگلات کے اہلکار آگ کو بجھانے میںشام دیرگئے تک کامیاب نہیں ہوئے۔ضلع کے کامراج فارسٹ اور لنگیٹ فارسٹ ڈویژن کے 3کمپارٹمنٹوں میں ایک ساتھ آگ لگی جس کے نتیجے میں سر سبز درختو ں کو زبردست نقصان پہنچا ۔ضلع کے کنی بیک ہایہامہ علاقہ کے کمپارٹمنٹ 67میں 4روز قبل آگ نموادر ہوئی جس کے بعد آگ نے بھیانک رخ اختیار کیا اور اب تک کئی دیودار اور کائیرو کے درختوں کو سخت نقصان پہنچا ہے ۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے کہ 4روز گزرنے کے با وجود بھی محکمہ آگ بجھانے میں ناکام نظر آرہا ہے ۔اس دوران لنگیٹ فارسٹ ڈویژن کے کمپارٹمنٹ نمبر25اور31Cمیں بھی آگ لگنے کی خبر مو صول ہوئی ہے ۔معلوم ہوا ہے کہ جمعہ کی صبح سے ان کمپارٹمنٹوں میں آگ نموادر ہوئی اور اب تک ایک بڑے حصہ کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ہے ۔آخری اطلاعات ملنے تک ان جن

پینے کے پانی کی عدم دستیابی

کپوارہ // ترہگام کے قطب آباد گوگلوسہ نامی گائوںمیں پینے کے پانی کی عدم دستیابی کے پیش نظر خواتین نے زور دار احتجاج کیا۔ انہو ں نے فوری طور قطب آ باد گوگلوسہ میں پینے کا پانی فراہم نہیں کیا گیا تو وہ زوردار احتجاجی مہم چھیڑیں گے ۔گائوں کی خواتین جمعہ کو کپوارہ کرالہ پورہ سڑک پر جمع ہوئیں اور جل شکتی محکمہ کے خلاف احتجاج کیاجس کے نتیجے میں سڑک پر گا ڑیو ں کی نقل و حمل کئی گھنٹو ں تک متا ثر رہی ۔احتجاج میں شامل خواتین نے کہا کہ قطب آباد گوگلوسہ کئی دہائیو ں سے پینے کے صاف پانی سے محروم ہے اور دہائیو ں قبل محکمہ جل شکتی نے اس علاقہ کیلئے پینے کے پانی کی سپلائی کرنے والی پائپوں کو بچھایا لیکن لوگو ں کو پینے کا پانی سپلائی نہیں ہوااور نتیجے کے طور لوگ پینے کے صاف پانی کیلئے ترس رہے ہیں ۔احتجاجی خواتین نے کہا کہ گوگلوسہ میں محکمہ نے پینے کا پانی فراہم کرنے کے لئے ایک واٹر ٹینک کو بھی تعمیر