بصیر خان کی عوامی رابطہ مہم

 سرینگر//لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر بصیر احمد خان نے چاڈورہ میں عوام تک رسائی کے پروگرام کے دوران درجنوں عوامی وفود اورافراد سے ملے جنہوں نے انہیں اپنی مانگوں اور مسائل سے آگاہ کیا۔ضلع کے دورے کے دوران مشیر نے چاڈورہ بلاک میں ایم جی نریگا کے تحت جاری کاموں کا معائنہ کیا او رمتعلقہ افسروں کو کام کی رفتار میں سرعت لاکر بروقت مکمل کرنے کے لئے کہا۔ عوام تک رسائی کے پروگرام کے دوران مشیر موصوف سے متعدد وفود ملے جنہوںنے اپنی مانگیں اور مسائل سے ان کے گوش گزار کئے۔عوام تک رسائی کے پروگرام کے دوران مشیر نے متعلقہ افسران کو زیر تعمیر پروجیکٹوں کی رفتار میں سرعت لانے اور مقامی آبادی کے ساتھ قریبی رابطہ قائم رکھنے کی ہدایت دی تاکہ ان کی شکایات کا ازالہ فوری طور یقینی بنایا جاسکے۔اس موقع پر ڈپٹی کمشنر بڈگام شہباز احمد مرزا ، ناظم دیہی ترقی کشمیر قاضی سرور دیگر متعلقین کے علاوہ مختلف محکموں کے ض

شکایات کا ازالہ کرنے کیلئے طریقہ کار مستحکم

سرینگر//عوام کی جانکاری کیلئے کہا گیا ہے کہ لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر راجیو رائے بھٹناگر نے عوام کے جائز مسائل کا مقررہ مدت کے اندر ازالہ کرنے کے لئے شکایتی ازالہ میکانز م کو مستحکم بنایا ہے ۔ عوا م سے کہا گیا ہے کہ وہ صحت ، طبی تعلیم ، تعمیراتِ عامہ ، جل شکتی ( صحت عامہ، آبپاشی و فلڈکنٹرول)، ٹرانسپورٹ ، پشو و بھیڑ پالن اور حفاظتی معاملات کے محکموں سے متعلق شکایات فون نمبرات صوبہ کشمیر کے لئے 01942506499  اور جموں صوبہ کے لئے01912542363سومو ار سے جمعہ تک صبح10بجے شام 5 بجے تک درج کراسکتے ہیں۔لوگوں کو مزید جانکاری دی گئی کہ وہ اپنی شکایات بذریعہ سوشل میڈیا ویٹس ایپ نمبر +919419670631 اور ٹویٹر ہینڈ ل@AdvisorBJKGovt. کے ٹویٹر پر بھی بھیج سکتے ہیں ۔ لوگوں کو مزید کہا ہے کہ اپنی شکایات اور مسائل بذریعہ ای میل advisorbgrievancecell@gmail.com.  پر بھیج سکتے ہیں۔واضح رہے کہ یہ قدم عوا

کچ نمبل چھترگل رابطہ سڑک کھنڈرات میں تبدیل

گاندربل//ضلع گاندربل میں چھوٹی بڑی بیشتر رابطہ سڑکیں کھنڈرات میں تبدیل ہوگئی ہیں۔ کچ نمبل سے چھتر گل 2 کلومیٹر رابطہ سڑک جگہ جگہ اکھڑ جانے سے ناقابل آمدورفت ہے۔ مقامی آبادی کے مطابق برسوںسے اس رابطہ سڑک کی مرمت نہیں کی گئی ہے ۔سڑک سے  میکڈم مکمل طور پر اکھڑ چکا ہے جس کے نتیجے میں سڑک پر بڑے بڑے کھڈ بن چکے ہیں اور اب اس پر سفر کرنا وبال جان بنا ہوا ہے۔مقامی شہری منظور احمد نے بتایا ــ’’سڑک اس قدر خستہ ہے کہ ہماری ذاتی گاڑیوں کو ہفتہ میں ایک مرتبہ ورکشاپ لینا پڑتاہے ‘‘۔پی ایم جی ایس وائی کے چیف انجینئررئوف احمد نے کہا کہ اس سلسلے میں مکمل پروجیکٹ رپورٹ اعلیٰ حکام کو روانہ کی گئی ہے‘‘۔  

نوپورہ بارہمولہ میں آگ، رہائشی مکان خاکستر

بارہمولہ//نوپورہ واگورہ بارہمولہ میں آگ کی ایک ہولناک واردات کے دوران ایک رہائشی مکان مکمل طور خاکستر ہوا جبکہ لاکھوں روپئے کی مالیت  کا ساز و سامان راکھ کے ڈھیر میں تبدیل ہوا ۔ میران گنڈ نوپورہ واگورہ بارہمولہ میں بدھ کو اُس وقت افراتفری کا ماحول پھیل گیا جب سید نثار احمد بخاری ولد مرحوم سید غیاث الدین کے دو منزلہ ر ہائشی مکان سے اچانک آگ نمودار ہوئی جس نے دیکھتے ہی دیکھتے مکان کو اپنی  لپیٹ میں لے لیا جس کے نتیجے میں مکان میں موجود لاکھوں روپے مالیت کا ساز و سامان خاکستر ہوا ۔اس دوران فائر اینڈ ایمر جنسی سروس کے اہلکاروں نے پولیس و عام لوگوں کی مدد سے آگ پر قابو پا لیا اور آگ کو مزید پھیلنے سے روکا۔  

سیکریٹری جل شکتی نے رنگل واٹر سپلائی سکیم کا معائنہ کیا

 سرینگر//سیکرٹری جل شکتی محکمہ نے واٹر سپلائی سکیم رنگل کا معائنہ کیا اور مل شاہی باغ میں سندھ ایکسٹینشن نہر میں پڑے شگاف کی مرمت کے کام کا معائنہ کیا ۔ اُن کے ہمراہ چیف انجینئر آبپاشی و فلڈ کنٹرول کشمیر اور چیف انجینئر جل شکتی محکمہ کے علاوہ ان محکموں کے دیگر اعلیٰ انجینئر تھے۔ سیکریٹری نے رنگیل میں 30 ایم جی ڈی اور 10 ایم جی ڈی فلٹریشن پلانٹوں کا معائنہ کیا اور متعلقہ حکام کو دونوں پلانٹوں پر پانی کے اعلیٰ معیار کو قائم رکھنے کیلئے کہا ۔ سیکرٹری نے مل شاہی باغ میں سندھ ایکسٹینشن نہر کا بھی معائینہ کیا جس میں شگاف پڑا تھا اور اس کی مرمت کے کام کا جائزہ لیا ۔ انہوں نے چیف انجینئر آبپاشی و فلڈ کنٹرول کو مرمت کے کام میں سرعت لا کر نہر کی فوری بحالی یقینی بنانے کی ہدایت دی ۔ دریں اثنا سیکریٹری نے چیف انجینئر کو پانی کی ترسیل کی صلاحیت میں توسیع کیلئے عارضی طور اضافی پایپیں بچھانے ک

سیلف ہیلپ گروپوں کوختم کرنے کا فیصلہ

 نیشنل کانفرنس کااحتجاج سرینگر//نیشنل کانفرنس کے ترجمان عمران نبی ڈار نے جموں و کشمیرمیں سیلف ہیلپ گروپ اسکیم کو ختم کرنے کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ یہ اقدام ایک ایسے وقت میں کیا گیا جب حکومت مزید نوجوانوں کو ملازمت کے مواقع فراہم کرنے کا دعویٰ کررہی ہے اور اس کے برعکس حکومت 17 سالہ پرانی اسکیم کو ختم کرکے 4500 کے قریب انجینئروں کو دروازہ دکھا رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ اقدام اس وقت اٹھایا جا رہا ہے جب کورونا وائرس نے نجی شعبے میں ہزاروں ملازمتیں ختم کردی ہیں۔ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ اس اقدام سے تقریبا 4500 انجینئر بے روزگار ہوجائیں گے۔اس اسکیم کو جموں وکشمیر کی حکومت نے 2003 میں شروع کیا تھا اور سرکاری محکموں ، کارپوریشنوں اور خود مختار اداروں میں رائج تھی۔عمران نبی ڈار نے کہا کہ سیلف ہیلف گروپ سکیم کو ختم کرنے سے حکومت نے نہ صرف 4500انجینئروں کو بے روزگار کردیا ہے بل

آبی ذخائرپر 45دنوں میں قبضہ ہٹایا جائے: صوبائی کمشنر کشمیر

سرینگر// صوبائی کمشنر کشمیر نے ضلع ترقیاتی کمشنروں کو ہدایت دی کہ آبی ذخائر پر غیر قانونی قبضہ کو ہٹانے اور ان میں گندگی ڈالنے کے عمل پر قدغن لگاے۔ ڈویژنل کمشنر کشمیر پی کے پولے کی سربراہی میں ہوکر سر،ولر اور کرنچون چندہارا کے آبی زخائر کو تحفظ فراہم کرنے والے افسران کی منعقدہ میٹنگ ہوئی،جس کے دوران صوبائی کمشنر نے آبی ذخائر کی نشاندہی،اراضی منتقلی، دیوار بندی، تجاوزات کو ہٹانے اور اس میں ٹھوس فضلہ ڈالنے پر قدغن کا جائزہ لیا۔ متعلقہ ضلع ترقیاتی کمشنروں کو ہدایت دی کہ وہ45دنوں کے اندر تمام غیر قانونی قبضے کو ہٹائے جبکہ لوگوں کو بھی آبی ذخائر کے،زرعی سرگرمیوں کے استعمال کرنے پر روک لگا دی جائے۔انہوں نے ڈپٹی کمشنروں کو ہدایت دی کہ ان افراد کے خلاف سخت کاروائی کریں اور کیسوں کا اندراج کریںجو بار بار اس قسم کی غیر قانونی حرکات میں ملوث ہوں۔پی کے پولے نے متعلقین کو ہدایت دی کہ وہ کمیٹیوں

جہلم کے کنارے آباد کنبے

سرینگر//’ اپنی پارٹی‘ کے صدر سعید محمد الطاف بخاری نے کہا ہے کہ کشمیر میں دریائے جہلم کے باشندوں کے خلاف انتظامیہ کی جانب سے شروع کی گئی غیر منصوبہ بند بے دخلی مہم قانون کے منافی ہے اور حکومت کوبے گھر ہونے والے کنبوں کی بازآبادکاری کے لئے مناسب منصوبے کو یقینی بنانا چاہئے۔ایک بیان میں بخاری نے کہاکہ انتظامیہ پانپور میں سیر باغ ۔سیم پورہ سے ٹیکن واڑی۔ پنزی نارہ نزدیک شادی پورہ سمبل تک دریائے جہلم کے کنارے رہنے والے کنبوں کو متبادل جگہ پر مناسب بازآبادکاری کے لئے کوئی سروے کئے بغیراندھا دھند نوٹس جاری کر رہی ہے ۔انہوں نے کہاکہ جہلم کے مکینوں کواس طرح زبردستی بے دخل کرنا قانون کے خلاف ہوگا اور متاثرہ کنبے خصوصا سرینگر شہر کی میونسپل حدود میں رہائش پزیر  افراد کے لئے قطعی ناقابل قبول ہوگا جن کے پاس کوئی زمین نہیں ۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ انتظامیہ کو فوری طور پر ان غریب ا

کڑکتی دھوپ میں بھی بھاری پسی گر آئی

 بانہال //محمد تسکین// جموں سرینگر شاہراہ پر بھاری پسی گر آنے کے بعد ٹریفک کی دو طرفہ آمد و رفت بند ہوگئی۔یہ واقعہ مہاڑ رام بن کے مقام پر پیش آیا جب پانچ بجے کڑکتی دھوپ میں بھی ایک بھاری پسی گر آئی اور گاڑیاں در ماندہ ہو گئیں۔شاہراہ کے بند ہونے کی وجہ سے تین سو کے قریب گاڑیاں رام بن علاقے میں درماندہ ہیں اور شاہراہ کے بند ہونے کے بعد ناشری اور جواہرٹنل کے آر پار ٹریفک کو روک دیا گیا ۔ ادہمپور، رام بن اور بانہال کے سیکٹر میں فورلین شاہراہ کا کام جاری ہے اور کشادگی کے کام کی وجہ سے متعدد مقامات پر پسیوں اور پتھروں کا شاہراہ پر گر آنا اور شاہراہ کا بند ہونا پچھلے کئی سال سے معمول بنا ہوا ہے۔ ڈی ایس پی ٹریفک رام بن اجے آنند نے کشمیر عظمی کو بتایا کہ مہاڑ کے مقام پرجمعرات کی شام پانچ بجے گر آئی ۔بھاری پسی کو صاف کرنے کا کام فورلین تعمیراتی کمپنی کی مشینری نے شروع کیا ہے اور شاہ

خواتین میں صنعت کاری کے کلچر کوفروغ دیا جائے:سامون

 سری نگر//  سکولی تعلیم اور سکل یولپمنٹ کے پرنسپل سیکرٹری ڈاکٹر اصغر حسن سامون نے کہاہے کہ بااختیار خواتین اپنی آمدن کا بڑا حصہ بچوں کی صحت و تعلیم پر صر ف کرتی ہے جس سے صحت مند اور تعلیم یافتہ نوجوانوں کی پرداخت میں کافی مدد ملتی ہے ۔اُنہوںنے اِن خیالات کا اِظہار گورنمنٹ پالی تکنیک برائے خواتین سری نگر کی جانب سے جے اینڈ کے اینٹری پرینیور شپ ڈیولپمنٹ انسٹی چیوٹ (جے کے آئی ای ڈی)کے اشتراک سے منعقد کئے گئے’’ لڑکیوں کے لئے صنعت کاری ایک وسیلہ روزگار ‘‘کے عنوان سے ایک ویب نار کا اِفتتاح کرنے کے دوران کیا۔افسروں کو مزید سکیموں اور کورسوں کو ترتیب دینے کی ہدایت دیتے ہوئے پرنسپل سیکرٹری نے کہا کہ ان سے خواہشمند خواتین صنعت کار وں کی حوصلہ افزائی ہوگی اور وہ نہ صرف مقامی سطح پر بلکہ بین الاقوامی سطح پر بھی مظاہرہ کر پائیں گی۔انہوں نے کہا کہ جموںوکشمیر میں خ

ایل جی کی لن ترانیاںبے بنیاد : اکبرلون

سرینگر// نیشنل کانفرنس نے کہا ہے کہ جموں و کشمیر میں گذشتہ 70 برسوں کے دوران ترقیاتی منظرنامے سے متعلق لیفٹیننٹ گورنر کی لن ترانیوں کی کوئی بنیاد نہیں اور تاریخی حقائق اُن کے دعوئوں سے میل نہیں کھاتے ۔ان باتوں کا اظہار پارٹی کے رکن پارلیمان  محمد اکبر لون نے اپنے ایک بیان میں کیا جس میں موصوف نے کہا کہ گذشتہ70برسوں میں جموں وکشمیر کو کیا ملا اس کا محاسبہ کیا جانا چاہئے۔انہوں نے کہا کہ جموں وکشمیر نے گذشتہ70سال سے بہت کچھ حاصل کیا تھا لیکن بھاجپا نے جمہوریت اور آئین کا گھلاگھنوٹ کو اس تاریخی ریاست کو اندھیروں میں دھکیلنے میں کوئی کسر باقی نہیں رکھی۔ اگر لیفٹنٹ گورنر نے آزادی کے بعد کی جموں وکشمیر کی تھوڑی سی بھی تاریخ کا مطالعہ کیا ہوتا تو وہ اس طرح کے لاعملی پر مبنی دعوے نہیں کرتے۔ اُن کا کہنا تھا کہ ان دعوئوں کو ہلکے میں نہیں لیا جانا چاہئے، یہ افسانہ نگاری اور جھوٹا پروپیگنڈا

مزید خبرں

سونہ مرگ میں پھر چہل پہل کنگن//غلام نبی رینہ//لاک ڈاؤن میں نرمی کے ساتھ ہی سیاحتی مقام سونہ مرگ کو عام لوگوں کے لئے کھول دیا گیاہے ۔ کشمیر عظمیٰ کو ملی تفصیلات کے مطابق عالمگیر وباء کورونا وائرس کی روکتھام کیلئے ضلع انتظامیہ گاندربل نے سونہ مرگ جانے پر پابندیاں عائد کی تھیں اور گگن گیر سے آگے بغیر سرکاری ملازمین اور دکانداروں کے علاوہ کسی کو بھی آگے جانے کی اجازت نہیں تھی جس کے نتیجے میں جھلستی گرمی سے راحت پانے کے لئے مقامی سیلانی مایوس ہوکر گگن گیر سے ہی واپس لوٹ جاتے تھے، تاہم گذشتہ روز سے اب گگن گیر کے پولیس ناکہ پوسٹ پر کسی بھی گاڑی کو روکا نہیں جارہا ہے جس کے بعد جھلستی گرمی سے راحت پانے کے لئے سرینگر، گاندربل کے علاوہ دیگر علاقوں کے لوگ سونہ مرگ کے دلفریب پہاڑوں سے لطف اندوز ہورہے ہیں۔   اس دوران بیوپار منڈل سونہ مرگ کے صدر شبیر احمد لون نے یہاں آنے والے مقامی

پانپور میں کارتیز رفتار ڈمپر کے نیچے آئی

پانپور//سرینگر جموں شاہراہ پر پانپور کے نزدیک ایک کارتیز رفتار ڈمپر کے نیچے آئی جس کے نتیجے میں گاڑی میں سوار4افراد شدید زخمی ہوئے جن میں سے بعد میں 2 نوجوان چل بسے جبکہ دو شدید زخمی ہیں جنکی حالت نازک ہے۔ جمعرات کی سہ پہر دوپہر ایک تیز رفتار ڈمپر(ٹپر) زیر نمبرJKO3F 8232 پتھر لے کر شاہراہ پر جا رہا تھا جس دوران مزکورہ گاڑی کا ڈارئیور کنٹرول کھو جانے کے نتیجے میں گالندر پانپور کراسنگ پرمخالف سمیت سے آرہی ایک کار زیر نمبر JK11A-332پر گر آیا جس کے نتیجے میں گاڑی میں سوار 4افراد اس کے نیچے دب گئے  ۔عین شاہدین نے بتایا کہ  ٹپرانتہائی تیز رفتاری کے ساتھ چل رہا تھاجس کے نتیجے میں کار ڈمپر کے نیچے آنے کے نتیجے میں مکمل طور تباہ ہوئی  اور گاڑی میںموجود 4افراد شدید زخمی ہوئے اور پتھروں سے بھری گاڑی ہونے کے نتیجے میں کوئی بھی یہاں انہیں باہر نہیں نکال سکا ۔واقعے کے فوراً بعد یہ

آ ر پار گولہ باری

کپوارہ //شمالی ضلع کپوارہ کے کرناہ سیکٹرمیں آر پار گولہ باری کے نتیجے میں زخمی شہری جمعرات کی صبح صورہ میڈیکل انسٹچوٹ میں زخمو ں کی تاب نالاکر اپنی زندگی کی جنگ ہار گیا ۔گزشتہ ہفتہ جمعہ کے روز حد متارکہ پر کرناہ سیکٹر میں ہند وپاک افواج کے درمیان جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کے دوران طرفین کے درمیان شدید گولہ باری ہوئی تھی جس کے نتیجے میں کرناہ کے باغ بیلا میں گولہ گرنے کی وجہ سے ایک خاتون سمیت چھ شہری زخمی ہوئے تھے جبکہ ایک زخمی بعد میں چل بسا تھا۔دیگر زخمیوں میںمعمر شہری محمد یعقوب میر ولد برکت اللہ میر ساکن باغ بیلا زخمو ں کی تاب نالاکر جمعرات کی صبح دم تو ڑ بیٹھا ۔        

پاکستانی زیر انتظام کشمیر کے میڈیکل کالج

نئی دہلی// انڈین میڈیکل کونسل (آئی ایم سی) نے کہا ہے کہ پاکستانی زیر انتظام کشمیر میں قائم طبی کالجوں سے حاصل کی جانے والی طبی تعلیمی اسناد کو تسلیم نہیں کیا جائے گا اور ایسی اسناد رکھنے والے لوگوں کو بھارت میں میڈیکل پریکٹس کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔قبل ازیں سال گزشتہ ماہ مئی میں یونیورسٹی گرانٹس کمیشن (یو جی سی) نے ایک ایڈوائزری جاری کر کے طلبا سے کہا تھا کہ وہ پاکستانی زیر انتظام کشمیر کے تعلیمی اداروں میں داخلہ نہ لیں کیونکہ حکومت ہند انہیں تسلیم نہیں کرتی ہے۔یو جی سی کی ایڈوائزری کے بعد رواں برس ماہ جون میں آل انڈیا کونسل برائے تکنیکی ایجوکیشن کی طرف سے جاری ایک پبلک نوٹس میں جموں و کشمیر اور لداخ یونین ٹریٹری کے طلبا کو ہدایت دی گئی تھی کہ وہ پاکستانی کشمیر کے تعلیمی اداروں بشمول یونیورسٹیوں، میڈیکل کالجوں اورتکنیکی تعلیمی اداروں میں داخلہ لینے سے گریز کریں کیونکہ یہ تعلیمی

فورسز انسپکٹر کی خود کشی کی کوشش

سرینگر// نیم فوجی دستے سی آر پی ایف سے وابستہ ایک انسپکٹر نے اپنی سروس رائفل کا استعمال کرتے ہوئے خود پر گولی چلائی جس کے نتیجے میں فورسز افسر شدید زخمی ہوا ۔ یہ واقعہ شیر گڑ ھی سر ینگر میںپیش آیا۔یہاں تعینات 141بٹالین سی آر پی ایف سے وابستہ انسپکٹر ایم دامودر نے نامعلوم وجوہات کی بناء پر اپنی سروس رائفل کا استعمال کرتے ہوئے خود کشی کی کوشش کرتے ہوئے خود پر گولی چلائی جس کے نتیجے میں وہ شدید زخمی ہوا جس کو فوری طور پر ایس ایم ایچ ایس ہسپتال پہنچایا گیا جہاں اس کی حالت نازک بنی ہوئی ہے ۔ اس ضمن میں پولیس نے کیس درج کرکے معاملے کی چھان بین شروع کردی ہے ۔   

باغات کالونی سربل بڈن رفیع آباد بجلی سپلائی سے محروم | لوگوں کو مشکلات کا سامنا ، گورنر انتظامیہ سے مداخلت کی اپیل

ؓ بارہمولہ//رفیع آبادبارہمولہ کا باغات کالونی سربل بڈن علاقہ ابھی تک بجلی سپلائی سے محروم ہیںجس کے نتیجے میں مقامی لوگوں کو دور جدید میں بھی سخت مشکلات کا سامنا ہے ۔ مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ باغات کالونی سربل بڈن جوکہ ایک نئی بستی ہے جس میں دس کے قریب رہائشی مکانات قائم ہیں لیکن وہ ابھی تک برقی روسے محروم ہیں ۔ ایک مقامی شہری محمد اقبال نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ اگر چہ وہ پہلے بڈن گائوں میں ہی رہائش پذیر تھے جس کے بعد کئی کنبے تین سال قبل یہاں منتقل ہوگئے لیکن محکمہ بجلی استعمال کئے بغیر ہی بلیں ارساںکر رہا ہے۔انہوں نے کہا ہے کہ اگر چہ محکمہ نے کئی علاقوں میں نئے بجلی کھمبے اور ترسیلی لائنیں نصب کی ہیں تاہم انہیںنظرانداز کیا گیا ہے۔ انہوں نے گورنر انتظامیہ  سے مطالبہ کیاکہ انہیںبجلی سپلائی فراہم کرنے کیلئے اقدامات کئے جائیں ۔ پی ڈی ڈی کے سپرانٹنڈنٹ انجینئرشمالی کشمیر منیر احمد

ہسپتال نئی عمارت میں منتقل کرنے میں تاخیر | کرالہ پورہ کپوارہ کے لوگ انتظامیہ سے برہم

کپوارہ//کرالہ پورہ کپوارہ میں قائم سب ضلع اسپتال کو نئی عمارت میں منتقل کرنے میں تا خیر کے خلاف مقامی لوگو ں نے سخت نارا ضگی کا اظہارکیا ہے۔20سال قبل پرائمری ہیلتھ سنٹر کرالہ پورہ کا درجہ بڑھا کر اُسے سب ضلع اسپتال میں تبدیل کیا گیا لیکن ابھی تک یہ ہسپتال پرانی عمارت میں ہی قائم ہے ۔مقامی لوگو ں کے مطابق ہیلتھ سنٹرچند کمرو ں پر مشتمل تھا تاہم رہی سہی کسر 2010میں آئے تباہ کن سیلاب نے پوری کر دی ۔ہسپتالی عمارت کا ایک حصہ سیلاب کی نذر ہو گیا ۔مقامی لوگو ں کے مطابق گزشتہ 10برسو ں کے دوران جگہ کی عدم دستیابی کی وجہ سے مریض در در کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور ہوگئے ۔مقامی لوگو ں کے مطابق اس وقت اسپتال میں ڈاکٹرو ں کی ایک اچھی خاصی تعداد موجود ہے لیکن جگہ کی عدم دستیابی کی وجہ سے ایک ہی کمرے میں دو ڈاکٹر مریضوں کا علاج کرتے ہیں ۔ سب ضلع اسپتال کادرجہملنے کے بعد بھی اسپتال میں جدید مشینری نصب نہی

واکورہ طبی مرکز میں بنیادی سہولیات کا فقدان

گاندربل//واکورہ گاندربل میں قائم پرائمری ہیلتھ سنٹرمیں طبی سہولیات کے فقدان کی وجہ سے ہزاروں نفوس پر مشتمل آبادی میںسخت ناراضگی پائی جارہی ہے۔واکورہ، گزہامہ، واسکورہ،بٹہ وینہ،ڈب نارائن باغ،ززنہ،بادام پورہ،سمیت دیگر علاقوں میں واکورہ تحصیل ہیڈ کوارٹر کی حیثیت رکھتا ہے جہاں 60کی دہائی میں پرائمری ہیلتھ سنٹر قائم کیا گیا تھا تاہم یہ طبی مرکزمحکمہ صحت کی عدم توجہی اور لاپرواہی کی وجہ سے تباہی کا منظر پیش کررہا ہے۔اس طبی مرکز میںنہ بنیادی سہولیات کا فقدان ہے۔مقامی آبادی کے مطابق ہسپتال میں نصب الٹرا سونوگرافی کی مشین اور ایکسرے پلانٹ کئی مہینوں سے بیکارہیں اور لوگوں کو گاندربل یاسرینگر کا رخ کرنا پڑتا ہے ۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ وہ برسوں سے اس کا درجہ بڑھانے کی مانگ کررہے ہیں ۔اس سلسلے میں چیف میڈیکل آفیسر گاندربل ڈاکٹر معراج الدین نے کشمیر عظمیٰ کو بتایاکہ طبی عملہ کی کمی کو دور کرتے

مامر کنگن میں ناصاف پانی کی فراہمی سے لوگ پریشان

کنگن//مامرکنگن میں ناصاف پانی سپلائی ہونے کی وجہ سے لوگ تشویش میں مبتلا ہیں۔ مامر کنگن کے لوگوں نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ علاقے میں دس برس قبل ایک فلٹریشن پلانٹ تعمیر کیا گیا جس کے بعد مامر کنگن کے لوگوں سے کہا گیا تھا کہ ان کو اسی فلٹریشن پلانٹ سے پینے کا صاف پانی فراہم کیا جائے گا۔ ایک مقامی شہری ثناء اللہ نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ ابھی تک مامر کو اس فلٹریشن پلانٹ سے پینے کا صاف پانی فراہم نہیں کیا جارہا ہے۔انہوں نے بتایا کہ معمولی بارشوں کی وجہ سے ان کے علاقے کوناصاف پانی سپلائی ہوتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ مارچ میں ضلع ترقیاتی کمشنر گاندربل نے جل شکتی محکمہ کے افسران کے ہمراہ فلٹریشن پلانٹ کا معائنہ کیا اور لوگوں کو یقین دلایا کہ مامر علاقے کو اسی فلٹریشن پلانٹ سے پینے کا صاف پانی فراہم کیا جائے گا مگر آج تک اس فلٹریشن پلانٹ سے وہ وعدہ وفا نہیں ہوا۔  

تازہ ترین