تازہ ترین

سونہ مرگ کی پہاڑیاں برف کی ہلکی پرت سے ڈھک گئیں

سرینگر //  منگل کی صبح سرینگر اور جموں کے کچھ ایک علاقوں میںہلکی بارشیں ہوئیں جبکہ سونہ مرگ کے پہاڑوں پر برف کی ہلکی پرت بچھ گئی۔ محکمہ موسمیات نے اگلے چوبیس گھنٹوں کے دوران وادی کے کچھ ایک علاقوں میں گرچ چمک کے ساتھ بارشیں ہونے کا امکان ظاہر کیا ہے ۔ منگل کی صبح شہرسرینگراوربیشترقصبہ جات میں بارشوں ہوئیں جس سے درجہ حرارت میں معمولی گراوٹ دیکھنے کو ملی۔ اس دوران صوبہ جموں کے کئی علاقوں میں بھی دوران شب بارشیں ہونے سے درجہ حرارات میں کمی واقعہ ہوئی ہے ۔ غلام نبی رینہ کے مطابق سیاحتی مقام سونہ مرگ کے پہاڑوں پر تازہ لیکن ہلکی برفباری ہوئی کنگن، گنڈ کلن گگن گیر، سونہ مرگ، زوجیلا میں موسلادھار بارشوں کا سلسلہ صبح تک جاری رہا۔ سونہ مرگ کے پہاڑوں پر ہلکی برفباری ہوئی جس کی وجہ سے شدید گرمی سے راحت کا احساس ہوگیا۔محکمہ موسمیات کے علاقائی ڈائریکٹر سونم لوٹس نے کہا کہ وادی میں اگلے چوبیس گھ

بڈگام ڈی سی آفس سے تیندوے کو پکڑا گیا، داچھی گام منتقل

 سرینگر//12دن کی طویل تلاشی کارروائی کے بعد بڈگام میں ’ مشتبہ آدم خور‘ تیندوا پکڑا گیا ۔اسکے چائوںکے نشانات اور نقل و حرکت اس بات کا اشارہ کرتے ہیں کہ یہ وہی تیندو تھا جس نے اومپورہ میں4سالہ بچی کو جاں بحق کیا تھا۔اومپورہ ہاؤسنگ کالونی میں بچیکو تیندوے نے 3 جون کومکان کے صحن سے اٹھایا تھا اور اگلے دن اس کی لاش قریبی جنگل کی نرسری میں ملی تھی۔ تیندوے کو ڈی سی آفس بڈگام کے احاطے میں منگل کی صبح پکڑا گیا۔چیف وائلڈ لائف وارڈن کشمیر ، راشد نقاش نے بتایا کہ تیندوے کی موجودگی کے بعد یہاں عملے کو تعینات کیا گیا تھا۔نقاش نے بتایا کہ صبح تیندوے کو پکڑنے کے بعد ، تازہ نمونے ڈی این اے سیمپلنگ کے لئے بھیجے جارہے ہیں جو پہلے سے ہی سائٹ سے لئے گئے تھے۔چیف وائلڈ لائف وارڈن نے مزید بتایا کہ تیندوے کو داچھی گام لیجایا جائے گا ۔

ہندوپاک جنگ بندی | اوڑی میں 30برس بعد سیاحتی مقام پر چہل پہل

اوڑی//اوڑی میں واقع رستم نامبلہ کے نزدیک سیاحتی مقام کی خوبصورتی سے لطف اندوز ہونے کیلئے تیس سال کے بعد لوگ کسی خوف کے بغیرسیر کرنے کیلئے آتے ہیں۔یہ سیاحتی مقام ہمیشہ ہند وپاک گولہ باری کی زد میں آتا تھا لیکن جنگ بندی معاہدے کے بعداب سیلانیوں نے پھر سے یہاں کا رخ کرنا شروع کردیا ہے۔ایک مقامی باشندے جاوید احمد میرنے بتایا کہ نامبلہ علاقے رستم کے قریب زبردست سیاحتی مقام ہے جہاں سیلانی محظوظ ہوسکتے ہیں ۔ انہوں نے اعلی حکام سے گزارش کی کہ اس جگہ کو وسعت دی جائے تا کہ لوگ زیادہ سے زیادہ آسکیں۔ میر نے کہا کہ اگر جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی نہیں ہوئی تو یہاں ترقی اور خوشحالی دیکھنے کو ملے گی۔مقامی لوگوں نے ناظم سیاحت سے اپیل کی ہے کہ یہاں رہائش اوردیگر سہولیات کیلئے بندوبست کیا جائے ۔  

جموں وکشمیر ترقی اور خوشحالی کی طرف گامزن:ایل جی

 سری نگر//ممبر پارلیمنٹ ( راجیہ سبھا ) بی ایل ورما نے یہاں راج بھون میں لیفٹیننٹ گورنر منوج سِنہا سے ملاقات کی۔بی ایل ورما نے لیفٹیننٹ گورنر سے جموںوکشمیر یوٹی کے موجودہ ترقیاتی منظر نامے کے بارے میں اپنے خیالا ت کا اِظہارکیا اور عوامی اہمیت کے حامل امور پر تبادلہ خیا ل بھی کیا۔لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ جموںوکشمیریوٹی ترقی اور خوشحالی کے ایک نئے دور کی طرف گامزن ہو رہا ہے۔اُنہوں نے مزیدکہا کہ یوٹی حکومت جموںوکشمیر کے عوام کی سماجی و اِقتصادی ترقی اور بااِختیار بنانے کے لئے متعدد اِصلاحی اِقدامات اُٹھارہی ہے۔  

بصیر خان سے وفوداور افراد کی ملاقات

سرینگر //لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر بصیر احمد خان سے سول سیکرٹریٹ سرینگر میں متعدد وفود اور افراد نے ملاقات کی اور انہیں درپیش مسائل اور مشکلات سے آگاہ کیا ۔ جموں کشمیر انٹر پرنیور شپ ڈیولپمنٹ انسٹی چیوٹ ایمپلایز ایسوسی ایشن ( جے کے ای ڈی آئی ای ڈبلیو اے ) کے ایک وفد نے مشیر سے ملاقات کی اور انسٹی چیوٹ کے کام اور دیگر امور سے متعلق متعدد امور اٹھائے ۔ جے کے سیمنٹ لمٹیڈ کے ایک وفد نے بھی مشیر سے ملاقات کی اور خدمت کے امور کو دوبارہ رجسٹر کرنے کے اپنے مطالبات کی پیش کش کی ۔ محکمہ رورل ڈیولپمنٹ کے ملازمین کے ایک وفد نے مشیر کو مختلف پریشانیوں سے آگاہ کیا اور ان کے فوری ازالے کا مطالبہ کیا ۔اسی طرح ایک اور وفد نے اپنے علاقے میں عوامی اہمیت کے حامل متعدد امور اٹھائے اور اس سلسلے میں مشیر سے مداخلت کا مطالبہ کیا ۔ اسی طرح متعدد افراد نے بھی مشیر سے ملاقات کی اور مختلف امور سے متعلق انفرادی مع

یوٹی میں 50ہزار سے زائد اسامیاں خالی: ساگر

 سرینگر/ /نیشنل کانفرنس کے جنرل سیکریٹری علی محمد ساگر نے کہا ہے کہ  جموںوکشمیر میں اس وقت50ہزار سے زائد خالی اسامیاں پڑی ہیں۔ گذشتہ 3برسوں سے ان بھرتیوں کو سریع الرفتاری سے پُر کرنے کے اعلانات تو کئے جاتے ہیں لیکن علمی طور پر کوئی قدم نہیں اُٹھایا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت نے پارلیمنٹ میں اس بات کا اعتراف بھی کیا ہے کہ گذشتہ3برسوں سے بے روزگاری حد سے تجاوز کرگئی ہے لیکن اس کا سدباب کرنے کیلئے کوئی اقدام نہیں اُٹھایا جارہا ہے۔ ساگر نے کہا کہ حد سے زیادہ مہنگائی اور کساد بازاری نے بھی یہاں کے عوام کی کمر توڑ کر رکھ دی ہے۔ پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتیں آسمان چھو رہی ہیں جس کا براہ راست اثر عام آدمی پر پڑرہا ہے۔ ساگر نے کہاکہ جموں وکشمیر کا ہر ایک شعبہ اس وقت تنزلی کا شکار ہے جبکہ حکمران اور اعلیٰ عہدوں پر فائز لوگ تعمیر و ترقی اور امن و امان کے بڑے بڑے دعوے کررہے ہیں

غیرمقامی افسروں سے متعلق تبصرہ پرشہری کو جیل بھیجے کا معاملہ

بے ضررتبصرہ پر کیس دائر کرنابلا جواز:مسعودی سرینگر//نیشنل کانفرنس کے رکن پارلیمان ریٹائرڈ جسٹس حسنین مسعودی نے صفاپورہ کے سجاداحمد ریشی نامی شہری ،جس نے غیرمقامی افسروں کے متعلق تبصرہ کیاتھا،کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے پر برہمی کااظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ انہیں لیفٹینٹ گورنرکے مشیر ،جو ایک مقا می ہے،سے کافی توقعات تھیںاورایسی توقعات کسی غیرمقامی افسر سے نہیں کی جاسکتی۔ایک بیان میں مسعودی نے کے این ایس کو بتایا کہ ایساتبصرہ کرنے پرایک غیرمقامی افسر نے اعتراض کیااور نفرت انگیزی کے طور اُس کے خلاف’’دشمنی کو فروغ‘‘دینے کا ایک کیس دائر کیاگیا۔ متاثرہ کواگرچہ عدالت نے ضمانت پررہا کردیالیکن اس کے خلاف مزید کیس دائر کئے گئے اور پولیس تھانہ میں اس کی اسیری کوطول دیاگیا۔بیان میں مسعودی نے سجاد رشید کے خلاف متواترکیس رجسٹر کرنے کو ردکرتے ہوئے کہا کہ ان کے بے ضررتبصرہ

’تباہیوں میں خوراک کاتحفظ،کشمیریونیورسٹی میں ویب نار

 سرینگر//’’تباہیوں میںخوراک کاتحفظ ‘‘موضوع پر کشمیریونیورسٹی میں ایک ویبنار کا انعقاد ہوا۔یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسرطلعت احمد نے یک روزہ ویبنارکے افتتاحی سیشن کی صدار ت کی۔اپنے صدارتی خطبے میں انہوں نے تباہیوں کے دوران متاثرہ آبادیوں کو محفوظ خوراک اور پانی پہنچانے کی ضرورت پرزور دیا۔انہوں نے کہا کہ تباہیوں کے دوران خوراک اور پانی جو محفوظ ہو ،آبادیوں کو بہم پہنچانے میں ناکامی بچائو کارروائیوں کو مشکل بنا سکتا ہے۔انہوں نے سماجی سطح پر تباہیوں کے دوران خوراک اور پانی کو محفوظ طور ہینڈل کرنے سے متعلق بیداری پیدا کرنے کوکہا۔انہوں نے کہا کہ محفوظ خوراک اور پانی تباہیوں کے دوران نہایت ہی اہم ہے کیوں کہ غیرمحفوظ خوراک اور پانی سے بیماریاں پیدا ہونے کااحتمال ہوگا ۔اس موقعہ پرNIDMکے ایگزیکیٹوڈائریکٹر ایم کے بندل نے تباہیوں کامقابلہ کرنے کیلئے قبل ہی تیاریاں

سنٹرل یونیورسٹی کشمیر کے شعبہ نباتات کاآن لائن درس

گاندربل// جموں و کشمیر اپنے پودوں کی تنوع کے لئے مشہور ہے اور پودوں کی سائنسز کے مختلف شعبوں میں تحقیق کی بہت گنجائش ہے۔ان باتوں کااظہار سینٹرل یونیورسٹی کشمیر کے وائس چانسلر پروفیسر معراج الدین میر نے یونیورسٹی کے شعبہ نباتا ت کے اہتمام سے منعقدہ ’’پودوں کے وسائل کے پائیداراستعمال میں نسل انسانی کا کردار ‘‘موضوع پر آن لائن درس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ یہ درس طلبا اور اساتذہ کے ممبروں کے لئے ایک بہت بڑی کامیابی کا کام کرے گا۔مہمان اسپیکر پروفیسر اے کے جین نے نسلی نباتات کا ایک تفصیلی جائزہ پیش کیا اور پودوں کے وسائل کے پائیدار استعمال میں اس کے کردار پر زور دیا۔ انہوں نے پودوں کے ساتھ انسانوں کے تعلقات اور عالمی استحکام کے لئے حیاتیاتی اور ثقافتی تنوع کی اہمیت کو اجاگر کیا۔ پروفیسر جین نے اپنے خطاب میں بتایا کہ یہ سائنس کی قدیم شاخ ہے اور

حج بیت اللہ کا اہتمام ،محدودتعداد میں عازمین کواجازت

سرینگر//جمعیت اہلحدیث کے صدر غلام محمد بٹ المدنی نے سعودی حکومت کے اُس فیصلے کاخیرمقدم کیا ہے جس کے تحت اس سال عازمین کی محدود تعدادکو ہی حج بیت اللہ کافریضہ انجام دینے کی اجازت دی جائے گی۔سرینگر میں ذرائع ابلاغ کے کئی نمائندوں کے ساتھ بات کرتے ہوئے جمعیت اہلحدیث کے صدرنے کہا کہ اس وقت جہاں پوری دنیا کورونا بیماری کے سامنے احتیاطی تدابیر کرنے میں محوو مصروف ہے اور ہر ملک اپنی بساط بھر کو ششوں میں لگا ہے اور اس ضمن میں دنیا کے کئی ملکوںنے باہر سے آنے اور ملک سے باہر جانے پر پابندیاں بھی عائد کی ہوئی ہیں جوکہ وقت کا تقاضا ہے اس دوران مملکت سعودی عرب نے شعائر حج جیسے عظیم اسلامی رکن کو عملی جامہ پہنانے کے لئے محدود تعداد میں احتیاطی تدابیر پر عمل پیرا ہوتے ہوئے حج بیت اللہ کا اہتمام کرنے نہایت حکیمانہ اقدام اٹھایا ہے جس سے مملکت سعودی عرب کے لئے عالم اسلام کے اطراف و اکناف سے سراہنا کی ج

بونیار اوڑی کا دودرن نامی گائوں بنیادی سولہات سے محروم

اوڑی//بونیار سے قریب 15کلو میٹر دورپہاڑی پر واقع دودرن نامی گائوں بنیادی سہولیات سے مکمل طور محروم ہے جس کی وجہ سے گائوں میں رہنے والے لوگوں کو طرح طرح کے مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔یہ گائوں قریب دو ہزار آبادی پر مشتمل ہے ۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ گائوں میں کوئی راشن گھاٹ ہے نہ طبی مرکز،مواصلاتی نظام بھی نہیںجبکہ مڈل سکول بھی کئی سالوں سے چھت کے بغیرہے۔آبادی کا کہنا ہے کہ انہیں بیک ٹو ولیج میں بھی نظر انداز کیا گیا۔گائوں کے نمبردار عبدالرضاق شیخ نے بتایا کہ گائوں میں راشن گھاٹ نہ ہونے کی وجہ سے انہیں قریب سات کلو میٹر دور ترکانجن جاکر راشن حاصل کرنا پڑتا ہے ۔گائوں میں طبی سہولیت دستیاب نہ ہونے کی وجہ سے مریضوں کو قریب 15 کلو میٹر دور پرائمری ہیلتھ سنٹر بونیار کا رخ کرنا پڑتا ہے۔ شیخ نے بتایا کہ موسم سرماں میں یہاں دس فٹ کے قریب برف جمع ہوتی ہے اور گائوں کا سڑک رابطہ کئی مہینوں تک بن

بانڈی پورہ،بڈگام اور پلوامہ اضلاع میں کووِڈ- 19کی صورتحال بہتر

بڈگام//بڈگام ،پلوامہ اور بانڈی پورہ اضلاع میں کووِڈ- 19مثبت معاملوں کی شرح میں بتدریج نمایاں کمی ہورہی ہے اورصحتیاب ہونے والے مریضوں کی تعداد میں بھی اضافہ ہوا ہے۔ان باتوں کی جانکاری ان اضلاع کے ڈپٹی کمشنروں نے منگلوار کو میڈیا بریفنگ کے دوران ذرائع ابلاغ کے نمائندوں کو دی۔ضلع ترقیاتی کمشنر بڈگام شہباز احمد مرزا نے تفصیلات دیتے ہوئے کہا کہ اپریل 2021 سے اَب تک ضلع میں 13,662 مثبت معاملات سامنے آئے ہیں ۔اُنہوں نے کہا کہ اِن میں سے 12,685مریض صحتیا ب ہوچکے ہیں اور اَب ضلع میں صرف 999 مثبت معاملات ہیں۔اُنہوں نے کہا کہ کووِڈ مثبت معاملات کی صحتیابی کی شرح 93.55 فیصد ہو گئی ہے اور مثبت شرح بتدریج کمی واقع ہو ئی ہے ۔اُنہوں نے مزید کہا کہ گزشتہ ہفتے کی صورتحال کو مد نظر رکھتے ہوئے مثبت شرح 4 سے 4.3 فیصد کے مابین رہی ، اَب گزشتہ دو دِنوں سے یہ کم ہوچکی ہے اور فی الحال یہ 2.3فیصد ہے۔ضلع ترقیات

سیلاب کے تدارک کے پروگرام کی تحقیقات کا مطالبہ

سرینگر//اپنی پارٹی نے کشمیر صوبہ میں فلڈ مینجمنٹ پروگرام کے تحت ہوئے کاموں کے نتائج پر گہری تشویش ظاہر کرتے کہا ہے کہ اس سے متعلقہ انتظامی محکمہ اور ایگزیکٹیو ایجنسی کی اہلیت اور اعتباریت پر سوالیہ نشان لگتا ہے۔ ایک  بیان میںپارٹی ترجمان نے کہا ہے کہ 2014کی سیلابی تباہی کے بعد ایک نجی کمپنی کو ڈریجنگ اور اِس سے منسلک دیگر کئی کام الاٹ کئے گئے جن کے ابھی تک کوئی بہتر نتائج نہیں نکلے ہیں۔ترجمان کے مطابق ’’ زمینی صورتحال مایوس کن ہے اور اعلیٰ حکام اور نجی فرم کے درمیان ساز باز کی اطلاعات ہیں، جس کو دریا جہلم اور ولر جھیل سے ڈریجنگ کے لئے FMP-Iکے تحت399کروڑ روپے الاٹ کئے گئے ہیں تاہم زمینی سطح پر جوکام ہونا چاہئے تھا ، وہ نہیں کیاگیا جس سے خزانہ عامرہ کو بھاری نقصان ہوا ہے‘‘۔انہوں نے کہاکہ فلڈ مینجمنٹ پروگرام کے تحت دریا جہلم سے ڈریجنگ کا کام بھی صرف تنازعات کا

اوڑی میں ایس ڈی ایم کی کرسی دو ماہ سے خالی

اوڑی//اوڑی میں ایس ڈی ایم کی کرسی دو ماہ سے خالی پڑی ہے جس کے خلاف درجنوں سرپنچوں اور پنچوں نے احتجاج کیا۔احتجاجی پنچایتی اراکین نے کہا کہ گزشتہ دو ماہ قبل سابق ایس ڈی ایم ریاض احمد ملک کا یہاں سے تبادلہ کیا گیا مگر متبادل یہاں نہیں بھیجا گیا۔سرپنچ گھرکوٹ شبیر احمد نائک نے بتایا کہ ایس ڈی ایم نہ ہونے کی وجہ سے اوڑی کا تمام نظام ٹھپ ہو کر رہ گیا ہے اور زمینی سطح پر کوئی کام نہیں ہو رہا ہے۔انہوں نے بتایا کہ تحصیلدار اوڑی بھی اکثر اوقات دفتر سے غیر حاضر ہوتے ہیں جسکی وجہ سے پہاڑی اسناد اور دیگر ضروری دستاویزات بنانے میں اوڑی کے لوگوں کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔احتجاجی سرپنچوں نے بتایا کہ اگر حکام نے جلد از جلد اوڑی میں ایس ڈی ایم تعینات نہیں کیا تو وہ مستعفی ہو جائیں گے۔  

مزید خبرں

کووِڈ- 19کی وجہ سے نوجوانوں میں تنائو  اسلامک یونیورسٹی کے نرسنگ کالج میں ویبنار اونتی پورہ//’’کووِڈ- 19کی وجہ سے نوجوانوں میں تنائو کاتدارک‘‘ موضوع پر اسلامک یونیورسٹی کے علمدار میموریل نرسنگ ومیڈیکل ٹیکنالوجی کالج میں یک روزہ ویبنار کااہتمام کیا گیا۔ اس موقعہ پرعلمدار میموریل نرسنگ ومیڈیکل ٹیکنالوجی کالج کی پرنسپل ڈاکٹر محمودہ ریگو نے کنبے کے افراد اور اساتذہ پرزوردیا کہ وہ نوجوانوں میں تنائو کے محرکات جوان کی صحت،رویہ ،خیالات اور احساسات کو متاثر کرتے ہیں ،کی متواتر باضابطہ نگرانی کریں تاکہ تنائو کے محرکات کو کسی حدتک کم کیا جائے اوراس طرح نوجوانو ں کے صحت مندطرززندگی کی راہ کسی حدتک ہموارکی جائے۔معروف ماہر نفسیات وسیم ککرونے عالمگیر وباء کے نوجوانوں پر نفسیاتی اثرات کواُجاگر کیا اور اِس تنائو کو قابو کرنے کی حکمت عملی بھی بیان کی۔ ویبنار میں کال

تازہ ترین