کووڈ رہنماخطوط پر سختی سے عمل کرنے کی چیف سیکریٹری کی اپیل

 سری نگر//چیف سیکرٹری ڈاکٹر ارون کمار مہتا نے ایک میٹنگ کی صدارت کی جس میں کووِڈ۔19 کے بارے میںعوامی ردعمل کا جائزہ لیا گیا اور جموںوکشمیر میں آنے والے کووِڈ لہروں کی روکتھام کی خاطر بیداری پیدا کرنے کے لئے ایک آئی اِی سی مہم شروع کرنے کی ہدایت دی۔چیف سیکرٹری نے کہا کہ یونین ٹیریٹری میں کووِڈ معاملات کی تعداد پندرہ روز کے دوران 130 کے قریب رُک گئی ہے ۔ اُنہوں نے کووِڈ مناسب طرز عمل ( سی اے بی ) کی عدم موجودگی کو اس طرح کے جمود کو بنیادی وجہ قرار دیا۔میٹنگ کو بتایا گیا کہ جموںوکشمیر میں یومیہ بنیا د پر تقریباً 50,000 کووِڈ ٹیسٹ کئے جاتے ہیں ۔ تاہم گزشتہ دو دنوں میں صوبہ جموں میں مثبت معاملات میں اضافہ ہوا ہے کیوں کہ چند اَضلاع سے معاملات میں اضافے کی وجہ سے یہ تشویش کا باعث ہے ۔ مزید یہ کہ کووِڈ مریضوں کے لئے لئے گئے نمونوں کی جینوم تسلسل سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ جموںوکشمیر میں

یوسمرگ میں بصیر خان کا عوامی دربار

  بڈگام// یوسمرگ میں بڈگام ضلع انتظامیہ کی کاوشوں سے لیفٹنٹ گورنر کے مشیر بصیر خان کی صدارت میں ایک عوامی دربار منعقد کیا گیاجس میں یوسمرگ اور دوسرے مضافاتی علاقوں سے تعلق رکھنے والے سینکڑوں لوگوںنے شمولیت کرکے موصوف کو اپنی شکایات اور مختلف نوعیت کے مقامی مسائل کے بارے میں جانکاری دی ۔جے کے این ایس کے مطابق مشیربصیر خان نے عوامی دربار میں شامل لوگوں کو کورونا وائیرس انفیکشین سے بچنے اور دوسروں کو بچانے کے متعلق باخبر کیا اور انھیں عالمی سطح پر جاری کرونا تدابیر پر مکمل طور عمل کرنے کی اپیل کی۔ موصوف نے بتایا کہ کشمیر میں بعض لوگ ماسک پہنے اور احتیاطی عمل اپنانے میں خود غرضی دکھاتے ہے حالانکہ تیسرے دور کی لہر مہلک ثابت ہوسکتی ہے لہذا فوراً تدابیری عمل اپنایا جائیے۔ اس موقعے ہر ضلع انتظامیہ بڈگام سے وابستہ تمام اعلیٰ عہدد اران اور دوسرے محکمانہ سربراہان موصوف کے ہمراہ موجود تھے جنہ

صحت وصفائی کی اہمیت

اونتی پورہ//قومی تعلیمی پالیسی رہنماخطوط اورمرکزی وزارت تعلیم کی ہدایت کے مطابق علمدارمیموریل کالج آف نرسنگ اینڈ میڈیکل ٹیکنالوجی جواسلامک یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی سے منسلک ہے،نے ناگہ بل پکھرپورہ میں ایک بیداری پروگرام کا انعقادکیا۔پروگرام کا مقصد لوگوں کو بنیادی صحت مسائل،صفائی ستھرائی اور کوڑے کرکٹ کو ٹھکانے سے متعلق جانکاری دینا تھا۔پروگرام کالج کی پرنسپل پروفیسر(ڈاکٹر) محمودی ریگو کی کاوش تھی اور اس دوران کالج کے اساتذہ نے طلاب اورمقامی لوگوں کی صحت وصفائی سے متعلق رہبری کی اور انہیں تربیت دی۔پروفیسر ریگو نے پروگرام کے اغراض اورمقاصد بیان کئے ۔کالج کے اساتذہ اور طلبہ نے گائوں میں گھر گھر جاکر لوگوں کو صحت وصفائی کے حوالے سے مفید باتوں سے روشناس کیا۔اس دوران پکھرپورہ کے میڈیکل افسر،گائوں کے سرپنچ اورلمبردار بھی موجودرہے۔  

تقسیمی عناصر کے ارادوں کو ناکام بنانے کی ضرورت: ڈاکٹر فاروق

سرینگر//تقسیمی عناصر کے حربوں سے جموں وکشمیر کو بہت زیادہ نقصان اُٹھانا پڑا ہے اور ضرورت اس بات کی ہے کہ ہم اُن طاقتوں کے ارادوں کو ہر حال میں ناکام بنا دیں جو یہاں کے عوام کو مذہب، علاقائی اور لسانی طور پر تقسیم کرنے پر تلے ہوئے ہیں۔ ان باتوں کا اظہار نیشنل کانفرنس کے صدرڈاکٹر فاروق عبداللہ نے جموں سے آئے ہوئے سیاسی لیڈران اور معزز شہریوں کے وفد سے تبادلہ خیال کرتے ہوئے کیا۔ وفد کی قیادت سابق ایم پی شیخ عبدالرحمن کررہے تھے، وفد میں آئی جی کھجوریہ بھی شامل تھے جبکہ اس موقعے پر این سی لیڈر تنویر صادق بھی موجود تھے۔ایک بیان کے مطابق ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ تینوں خطوں کے عوام کو ایسی طاقتوں سے ہوشیار رہنا چاہئے جو یہاں کے عوام میں تفرقہ ڈالنے پر تلے ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ایسے عناصر کی مذموم سازشوں سے جموں و کشمیر کو پہلے ہی بہت نقصان اُٹھانا پڑا ہے۔ انہوں نے کہاکہ آج بھی نفرت

پاسپورٹ اور سرکاری ملازمت کیلئے حفاظتی ایجنسیوں کی ہری جھنڈی کاحکم

سرینگر//انٹرنیشنل پاسپورٹ اورسرکاری ملازمت کے حصول کیلئے سیکورٹی ایجنسیوں کی کلیرئنس کولازمی قرار دئیے جانے پر سابق وزرائے اعلیٰ محبوبہ مفتی وعمرعبداللہ، اپنی پارٹی صد سیدالطاف بخاری، پی ڈی ایف سربراہ حکیم محمد یاسین اورپیپلزکانفرنس نے سخت ردعمل ظاہر کرتے ہوئے خبردارکیاہے کہ اس طرح کے صوابدیدی فیصلے نوجوانوں کو مزید اجنبیت کی طرف دھکیلیں گے۔کے این ایس کے مطابق پی ڈی پی صدر و سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کا الزام ہے کہ سرکاری نوکری یا پاسپورٹ حاصل کرنے کیلئے کشمیریوں کی سخت جانچ پڑتال کی جا رہی ہے جبکہ جنگجوؤں کی مدد کرنے والے پولیس افسر کو چھوڑ دیا جاتا ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ حکومت کا کشمیریوں کے ساتھ کھیلے جا رہے گندے کھیل اور دوہرے معیار کا برملا ثبوت ہے۔محبوبہ مفتی نے ایک ٹویٹ میں لکھاکہ کشمیریوں کوبے گناہ ثابت ہونے تک مجرم سمجھاجاتاہے ۔انہوں نے کہاکہ چاہے سرکاری ملازمت ہو یا پاسپورٹ

ملازم اپناپروڈنٹ فنڈ یکمشت نہ نکالیں

سرینگر//ایمپلائزپرائوڈنٹ فنڈ آرگنائزیشن نے ملازمین سے تاکید کی ہے کہ وہ اپناپرائوڈنٹ فنڈ یکمشت نہ نکالیں اور ایمپلائزپروائوڈنٹ فنڈ آرگنائزیشن کے فوائد سے مستفید ہوتے رہیں جن میں زیادہ سود،پنشن اورانشورنس سہولیات شامل ہیں۔ایک بیان میں آرگنائزیشن نے کہا کہ 01.11.2019.سے جموں کشمیراور لداخ کو دومرکزی زیرانتظام علاقوں میں تقسیم کئے جانے کے بعد ایمپلائز پرواڈنٹ فنڈ اور متفرقہ ضوابط قانون 1952لاگو ہوگیا۔اس کے بڑے فوائد میں پنشن اورانشورنس(سات لاکھ روپے تک) سہولیات شامل ہیں۔بیان میں کہاگیا ہے کہ اکثر مشاہدے میں آیا ہے کہ ملازمین /ممبران آئے روزنوکریاں تبدیل کرتے رہتے ہیں اوراپنا پروڈنٹ فنڈ پورا نکالتے ہیںجو صحیح نہیں ہے کیوں کہ ان کاحصہ پنشن اور انشورنس کیلئے ختم ہوتا ہے ۔جبکہ ہونا یہ چاہیے تھا کہ وہ اپنے پروڈنٹ فنڈ میں بیلنس کو جمع رہنے دیتے تاکہ انہیں زیادہ سے زیادہ فایدہ مل سکے اور کس

وادی میں ہیموفیلیا مریض فیکٹروں سے محروم

سرینگر //پرویز احمد//کشمیر میں ہیموفیلا بیمار ی سے جوجھ رہے مریض پچھلے کئی ماہ سے انتہائی اہم فیکٹر 7 اورفیکٹر 8کی قلت کی وجہ سے مشکلات کا سامنا کررہے ہیں۔ جموں و کشمیر ہیموفیلیا ایسوسی ایشن کے صدر سعید ماجد نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ میڈیکل سپلائی کارپوریشن پچھلے کئی ماہ سے مریضوں کو مذکورہ فیکٹر فراہم کرنے میں ناکام رہی ہے ۔ایسوسی ایشن کے صدر نے بتایا کہ فیکٹر 7(2گرام),فیکٹر 8کی(Reconbinant 3rd Generation ) ،(Von willi Brand concentrator 2501u) فیکٹر 7(1mg)،فیکٹر 8(with Von Wili Brand 250IU)کا خریدنے کا آرڈر میڈیکل سپلائی کارپوریشن کو دیا تھا لیکن میڈیکل سپلائی کارپوریشن کے اعلیٰ افسران پچھلے 3ماہ سے ٹال مٹول کررہے ہیں۔سعید ماجد نے بتایا ’’ گورنمنٹ میڈیکل کالج نے کارپوریشن کو فیکٹروں کی سپلائی کیلئے کئی خط بھی لکھے ہیںلیکن کارپوریشن کے اعلیٰ افسران نہ تو میڈیکل کالج کو ف

اساتذہ کی صلاحیتوں کو بڑھاوادینے کیلئے پیشہ ورانہ تربیت لازمی:ناظم تعلیم

سرینگر//ڈائریکٹوریٹ آف اسکول ایجوکیشن کشمیراورچنارانٹرنیشنل کے اشتراک سے یہاں اساتذہ کی پیشہ وروانہ ترقی سے متعلق ایک روزہ پروگرام منعقد ہواجس میں گاندربل، بڈگام اور سرینگر کے30اساتذہ نے حصہ لیا۔اس موقعہ پر ڈائریکٹراسکول ایجوکیشن کشمیر،ڈاکٹر تصدق حسین نے کہا کہ اساتذہ کی مسلسل پیشہ ورانہ تربیت سے استاداپنی صلاحیتوں کوبڑھاوادینے کے قابل ہوتے ہیںاوریہ ان کی پیشہ وارانہ ہنروں کیلئے لازمی ہے۔انہوں نے کہا کہ کووِڈ- 19 نے اساتذہ کیلئے کئی مسائل کو جنم دیا ہے اور ایسے پروگرام یقینی طور اساتذہ کو سیکھنے کے عمل میں رکاوٹوں کو دور کرنے میں مدد دیں گے۔ اس موقعہ پر روبینہ مجیدسی ای او،لرننگ ریسورس سینٹر حیدرآباد نے ایک گھنٹے تک پرزنٹیشن دی اورکہا کہ اساتذہ کی مسلسل تربیت اس وقت سیکھنے کے مطلوبہ نتائج حاصل کرنے کیلئے لازمی ہے ۔انہوں نے درس وتدریس کی ٹیکنیکوں سے متعلق تفصیلی بات کی اور اساتذہ کی ط

بارہمولہ میں سابق جنگجوئوں کی پاکستانی نژاد بیو یوں کا دھرنا

بارہمولہ //فیاض بخاری //شمالی قصبہ بارہمولہ میں سوموار کے روز سابق جنگجوئوں کی بیو یوں نے میں وطن واپس اور سفری دساویزات فراہم کرنے کے مطالبے کو لے کر احتجاجی دھرنا دیا ۔ احتجاج کے دوران خواتین نے اپنے بچوں کے ہمراہ لائن آف کنٹرول کو پارنے کرنے کے لئے اوڑی کی طرف مارچ کرنے کی کوشش کی ہے جس کو پولیس نے ناکام بنا دیا ۔ احتجاج میں شامل خواتین نے ہاتھوں میں بنر اُٹھاکر کریاپا پارک باہمولہ سے اپنا احتجاج شروع کیا جو قصبے  کے مین بازار سے گذر کر  خانپورہ پُل  پر پہنچا جہاںسے پولیس نے انہیں روکا۔ انہوں نے گورنر انتظامیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ ہمیں وطن واپس بیجا جائے ۔انہوں نے بتایا گزشتہ پندرہ سال کے دوران ان کے قریبی رشتہ دار یا کچھ ایک والدین انتقال کر گئے اور وہ ان کا آخری دیدار بھی نہیں کر سکے ہیں۔انہوں نے اس احتجاج میں اپنے بچوں کو بھی ساتھ اٹھایا احتجاج میں شامل ایک خاتون

ڈرونوں سمیت کئی چیلنجزکاسامنا:وزارت خارجہ ترجمان

سرینگر // سرحدوں کے قریب ڈورون سرگرمیوں کے بڑھتے معاملات کے بیچ پاکستان پر ایک مرتبہ پھر بھارت میںعسکریت کو بڑھائو ا دینے کا الزام عائد کرتے ہوئے وزارت خارجہ ترجمان نے کہا کہ بھارت کو کئی نئے چیلنجز کا سامنا ہے جس میں ڈرو ن بھی شامل ہے ۔ انہوںنے کہا کہ سرحدوں پر امن کی صورتحال سے پاکستان اب بوکھلاہٹ کا شکار ہو گیا ہے اور جموں کشمیر میں سرگرم جنگجوئوں تک ہتھیار اور دیگر ساز و سامان پہنچانے کیلئے ڈرون کا استعمال کر رہا ہے ۔ سی این آئی کے مطابق ایک معروف نیوز چینل کے ساتھ خصوصی انٹر ویو میں وزرات خارجہ ترجمان اریندم باگچی نے کہا کہ کچھ ممالک ڈیجیٹل ٹکنالوجی کے ذریعے بھارت میں عسکریت پسندی پھیلانے کے لیے کوشاں ہیں۔انہوںنے کہا کہ بھارت کو اس وقت کئی چیلنجز کا سامنا ہے جبکہ موجودہ دور میں ڈیجٹیل ٹیکنالوجی نے ان میںاضافہ کر دیا ہے ۔ پاکستان کا نام نہ لئے بغیر انہوںنے کہا کہ پڑوسی ممالک بھارت

پٹن اور گاندربل کے کئی دیہات میںپینے کے پانی کی قلت

بارہمولہ+گاندربل//ضلع بارہمولہ کے شمالی قصبہ پٹن کے بیشتر دیہات پینے کے صاف پانی سے محروم ہیں جس کے نتیجے میں مقامی آبادی کو سخت مشکلات درپیش ہیں ۔ مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ شدید گرمی کے ان ایام میں بھی پینے کی پانی کی قلت سے لوگوں میں ہا ہا کار مچی ہوئی ہے۔ وانی گام بالا ، ہامرے ، چک جمال اورگنائی پورہ کے علاوہ سنگھ پورہ کے کئی دیہات کے لوگوں نے جل شکتی محکمہ کی غفلت شعاری اور لاپرواہی کا الزام لگاتے ہوئے کہا کہ محکمہ ہذا کے متعلقہ افسران کی عدم توجہی سے پانی کی سپلائی بُری طرح سے متاثر ہوتی ہے جس سے مقامی لوگوں کو زبردست مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔لوگوں کے مطابق جل شکتی محکمہ کی طرف سے اگرچہ کئی سکیموں پرکام شروع کیا گیا تھا لیکن نامعلوم وجوہات کی بنا پر اُس کام کو ادھورا رکھا گیا ہے جس سے ہزاروں نفوس پر مشتمل آبادی کوپینے کا صاف پانی میسر نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ کئی جگہوں پر پ

گنہ ون کنگن میں طبی سہولیات کا فقدان

کنگن//کنگن کے گنہ ون نامی علاقے میں طبی سہولیات کے فقدان کی وجہ سے لوگوں کو کئی مشکلات کا سامنا ہے۔علاقے میں موجود یہ پرائمری ہیلتھ سنٹر صبح دس بجے سے شام چار بجے تک کھلا رہتا ہے جس کے بعد ایک وسیع آبادی کو رات کے دوران علاج ومعالجہ کے لئے دوسرے ہسپتالوں کا رخ کرنا پڑتا ہے۔ مقامی لوگوں نے بتایا کہ اگرچہ سرکار نے گنی ون علاقے میں کروڑوں روپے کی لاگت سے پرائمری ہیلتھ سنٹر قائم کیا تاکہ لوگوں کو مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ مقامی لوگوں نے بتایا کہ چار بجے کے بعد ہسپتال کو بند کیا جاتاہے اور رات کے دوران ایک ایمبولینس ڈرائیور اور ایک چوکیدار موجود ہوتے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ چار بجے کے بعد اگر کوئی بیمار ہوجاتا ہے تو اسے کنگن یا گنڈ ہسپتال لے جانا پڑتا ہے جوکہ ایک پریشان کن مسئلہ ہے ۔ مقامی لوگوں نے گورنر انتظامیہ اور ضلع ترقیاتی کمشنر گاندربل سے مطالبہ کیا کہ پرائمری ہیلتھ سنٹر گنی ون میں

لائیو سٹاک بورڈ کی 32ویں میٹنگ

سرینگر// پرنسپل سیکرٹری پشو و بھیڑ پالن اور ماہی پالن محکمہ نوین کمار چودھری نے اَفسران کو ہدایت دی کہ وہ جموں وکشمیر کے دونوں صوبوں میں کم از کم ایک لیکوفائیڈ نائٹروجن گیس ( ایل این جی ) پلانٹ کی تزئین و آرائش کریں تاکہ یہاں کی مقامی پیداوار بڑھ سکے ۔ اُنہوں نے یہ ہدایات جموں وکشمیر لائیوسٹاک بورڈ کی 32 ویںسٹیٹ عمل آوری ایجنسی ( ایس آئی اے ) کی میٹنگ میں دیں۔میٹنگ میں دونوں صوبوں کے ڈائریکٹران اینمل ہسبنڈری ،ڈی فیکلٹی آف ویٹرنری سائنسزسکاسٹ کشمیر اور جموں ،دونوں صوبوں کے لائیو سٹاک ڈیولپمنٹ بورڈوں کے سی اِی اوز اور محکمہ کئی دیگر اَفسران نے شرکت کی۔جموں کے اَفسران نے بذریعہ ویڈیو کانفرنسنگ میٹنگ میں حصہ لیا۔پرنسپل سیکرٹری نے اَفسران سے کہا کہ وہ ہر سٹیشن پر کم سے کم 10فیصد ایل این ججی محفوظ رکھیں تاکہ کسی بھی قسم کی صورتحال کا سامنا کیا جاسکے ۔ اُنہوں نے زرعی یونیورسٹیوں کے ممبران

نیشنل کانفرنس میں تنظیمی تقرریاں

سرینگر//نیشنل کانفرنس صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے پارٹی سے وابستہ کئی لیڈروں کی مختلف عہدوں پر تقرریوں کو منظوری دی ہے۔موصولہ بیان کے مطابق محمد سلیم آخون کو وسطی زون جبکہ جہانگیر یعقوب وانی کو شمالی زون کا نائب صدر مقرر کیا گیا ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ عرفان گلزار کو نائب صدرضلع اننت ناگ، ڈاکٹر عبدالحمید راتھر کو نائب صدر ضلع بانڈی پورہ، ایڈوکیٹ منیر احمد کو نائب صدر ضلع بارہمولہ، اشتیاق احمد گنائی نائب صدر ضلع کولگام، محمد اشرف لون کو نائب صدر ضلع بڈگام جبکہ اعجاز احمد میر کو جوائنٹ سکریٹری ضلع شوپیان مقرر کیاگیا۔ پارٹی صدرِ ڈاکٹر فاروق عبداللہ، نائب صدر عمر عبداللہ، جنرل سکریٹری علی محمد ساگر، معاون جنرل سکریٹری ڈاکٹر مصطفی کمال ،صوبائی صدر ناصر اسلم وانی، ترجمان عمران نبی ڈار اور صوبائی یوتھ صدر سلمان علی ساگر نے مذکورہ نوجوان لیڈران کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے اُمید ظاہر کی کہ وہ خدمت خل

مزید خبرں

جموں وکشمیر میں صنعتی ترقی   نئی مرکزی شعبے کی سکیم جلد شروع کی جائے گی سری نگر//چیف سیکرٹری ڈاکٹر ارون کمار مہتا نے  مرکزی داخلہ سیکرٹری اور مرکزی سیکرٹر ی روڈ، ٹرانسپورٹ اور ہائی ویز وزارت کے ساتھ میٹنگ میں شرکت کی تاکہ جموں وکشمیرمیں صنعتی ترقی کے لئے نئی مرکزی شعبے کی سکیم کے خدوخال پر تبادلہ خیال کیا جاسکے۔میٹنگ میں صنعت و حرفت کے پرنسپل سیکرٹری بھی موجو دتھے۔بتایاگیا کہ یونین ٹیریٹری صنعتی ترقی کو فروغ دینے کے لئے مرکزی حکومت جلد ہی جموں وکشمیر کے لئے ایک صنعتی سکیم شروع کرے گی۔یہ سکیم ایم ایس ایم ایز اور بڑی صنعتوں دونوں کو فائدہ پہنچانے کے لئے بنائی گئی ہے ۔ یہ نہ صرف نئی سرمایہ کاری کی حوصلہ افزائی کرے گا بلکہ موجودہ صنعتوں کو فروغ دینے میں بھی مدد کرے گا۔نئی سکیم کیپٹل انوسٹمنٹ ، کیپٹل اِنٹرسٹ سبوینشن ، کیپٹل انوسٹمنٹ لون ، پلانٹ اور مشینری کے لئے جی ای

مہم جو سیاحت کافروغ حکومت کا مقصد:سرمدحفیظ

 سری نگر//حکومت نے جموں وکشمیر میں مہم جوسیاحت کی سرگرمیوں کو فروغ دینے کے لئے کئی اِقدامات اُٹھائے ہیں اور محکمہ سیاحت نے پہلے ہی یہاں نئے ٹریکنگ راستوں کی کھوج اور صلاحیت کو اِستعمال کرنے کے لئے کئی سرگرمیاں شروع کی ہیں۔اِن باتوں کا اِظہار سیکرٹری سیاحت و ثقافت محکمہ سرمد حفیظ نے ممبئی سے کام کرنے والے پیشہ ور اَفراد کے ایک گروپ اور مقامی این جی او کی جانب سے کشن سر، گُنگ بل اور دیگر سیاحتی کی صفائی ستھرائی مہم کے لئے جانے والے گروپ کو ہری جھنڈی دِکھا کر روانہ کرتے ہوئے کیا۔اِس موقعہ پر ناظم سیاحت کشمیر ڈاکٹر جی این اِیتو ، ڈپٹی ڈائریکٹر سیاحت ڈاکٹر احسان الحق چشتی ، محکمہ کے دیگر اعلیٰ افسران اور رضاکاروں کی بڑی تعداد بھی موجود تھی۔اِس موقعہ پرخطاب کرتے ہوئے سیکرٹری سیاحت نے جموںوکشمیر میں سیاحت کی سرگرمیوں کے وسیع امکانات پر روشنی ڈالی اورکہاکہ اِس سال مہم جو سیاحت کو ترجیح دی

اجس پل کی تعمیر میں سرعت لانے کا مطالبہ

بانڈی پورہ//اجس کی آبادی نے ضلع انتظامیہ بانڈی پورہ پرالزام عائد کیا ہے کہ وہ سرینگربانڈی پورہ سڑک پر اجس کے مقام پر پل کی تعمیر کو مکمل کرانے میں دلچسی نہیں لے رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ پل گزشتہ آٹھ ماہ سے زیرتعمیر ہے اور اس وجہ سے سرینگر اور بانڈی وپرہ کے درمیان سفر کرنے والوں کو شدید مشکلات درپیش ہیں۔مقامی لوگوں نے ضلع انتظامیہ سے اپیل کی کہ وہ اس پل کی تعمیر میں سرعت لائیں۔  

بودی بگ پٹن کا پل برسوں سے تشنہ تکمیل

بارہمولہ // سنگھ پورہ پٹن کے بودی بگ علاقہ میں نالہ فیروزپورہ پر محکمہ آر اینڈ بی کی جانب سے تعمیر کئے جارہے پل کا کام کئی برسوں سے تشنہ تکمیل ہے جس کے نتےجے مےں ہزاروں نفوس پر مشتمل آبادی کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ مقامی لوگوں کا کہناہے کہ لمبے عرصے سے اس پل کی تعمیر کام رکا ہوا ہے جس سے کثیر آبادی کو مشکلات درپیش آرہے ہیں۔ ان کاکہنا ہے کہ اگر چہ پل کا نوے فیصد کام مکمل ہواہے لیکن کچھ لوگ اب اس پل کو مکمل کرنے میں رکاوٹ ڈالتے ہیں۔جس سے یہ کام تشنہ تکمیل ہے۔ سجاد احمد نامی اےک مقامی شہری نے بتاےا ہے کہ پُل نہ ہونے کی وجہ سے ےہاں کی بےس ہزار آبادی کو سخت مشکلات درپےش ہےں ۔ انہوں نے کہا کہ اگر چہ لوگوں نے کئی بار متعلقہ محکمہ کو اس معاملے مےں مطلع کےا تھا لےکن بدقسمتی سے اس کی طرف کوئی دھےان نہےں دےا جارہا ہے ۔ اس سلسلے مےں تحصیلدار سنگھ پورہ سید صلاح الدین نے کہاکہ پُل کے سا

کرناہ کا سرکاری شعبہ صحت ہی بیمار

 سرینگر // دور دراز علاقوں میں مریضوں کو طبی سہولیات فراہم کرنے کے دعوﺅں کے باوجود اکثر علاقوں میں ماہر ڈاکٹروں کی عدم دستیابی ایک سنگین مسئلہ بنی ہوئی ہے۔ کرناہ سب ضلع ہسپتال میں ماہر ڈاکٹروں کی کمی کے نتیجے میںمریضوں کو کپوارہ اور سرینگر کے ہسپتالوں کا رخ کرنا پڑ رہا ہے۔اس وقت کرناہ کے کئی ہیلتھ سینٹرایسے ہیں جہاں اَلو بول رہے ہیںان سینٹر وں میں ان سینٹروں کے ساتھ منسلک مریضوں کو معمولی ادویات بھی حاصل کرنے کیلئے ٹنگڈار آنا پڑتا ہے۔ معلوم رہے کہ اس وقت پورے بلاک میں 27ڈاکٹروں کی اسامیاں ہیں جس میں سے 15اسامیاں خالی پڑی ہیں۔پورے ہیلتھ بلاک کی حالت ایسی ہے کہ کل 137پیرا میڈیکل سٹاف کی اسامیاں یہاں منظور ہیں ،لیکن ان میں 70 اسامیوں پر عملہ ہی تعینات نہیں ہے۔ہیلتھ بلاک کرناہ کی حالت ایسی ہے کہ وہاں موجود ملازمین پہلے سے ہی پریشانی میں مبتلا ہیں کیونکہ انہیں کام کا اضافی بوجھ پڑ رہا

تباہ کن سیلاب میں گمشدہ افراد کی بازیابی

سرینگر// نیشنل کانفرنس صدر اور ممبر پارلیمنٹ ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے گاندربل کے وائیل ، نونر، گوٹلی باغ اوراس کے ساتھ ساتھ بجبہاڑہ، ترال ، خمریال، لولاب اور کرگل میں بادل پھٹنے کے نتیجے میں ہوئے جان و مال کے نقصان پر گہرے رنج و غم کااطہار کرتے ہوئے متاثرہ کنبوںکے ساتھ دلی اظہار یکجہتی کیا۔ انہوںنے کہاکہ ان ناگہانی آفات کے نتیجے میں جہاں قیمتی جانوں کی اتلاف ہوا،وہیں املاک اورفصلوں کی بھی تباہی ہوئی ۔انہوں نے سوگواروں کے ساتھ تعزیت کی اور جن کی املاک، رہائشی مکانات اور خریف فصلوں کو نقصان پہنچا، کے متاثرین کے ساتھ اظہار ہمدردی کیا۔ انہوںنے متعلقہ انتظامیہ سے کہاکہ وہ متاثرین کی فوری بازآبادکاری میں اپنا رول اداکریں اور ہنگامی بنیادوں پر ان کی مدد کی جائے۔ ڈاکٹر فاروق نے انتظامیہ خصوصاً کشتواڑ دچھن میں گزشتہ دنوںکے تباہ کن بادل سے گمشدہ افراد کی فوری بازیابی کیلئے انتظامیہ کو سرعت لانے کی

تازہ ترین