امشی پورہ شوپیان فرضی جھڑپ:ثبوتوں کو ضائع کرنیکی کوشش کی گئی

سرینگر// شوپیاں کے امشی پورہ زینہ پورہ گائوں میں گزشتہ برس جون میں ہوئی فرضی جھڑپ کے حوالے سے پولیس نے اپنی چارج شیٹ میں کہا ہے کہ فوجی کیپٹن اور دیگر ملزم شہریوںنے ثبوتوں کو ضائع کرنے کی کوشش کی،جبکہ اس اسلحہ کو حاصل کرنے کے بارے میں کوئی معلومات فراہم نہیں کی،جو 3مہلوک نوجوانوں سے برآمد کرنے کا دعویٰ کیا گیا تھا۔ چیف جوڈیشل مجسٹریٹ کی عدالت میں پیش کئے گئے فرد جرم میں بتایا گیا ہے کہ کیپٹن بھوپندر سنگھ نے فرضی مقابلہ ہونے کے بارے میں اپنے اعلی افسران اور پولیس کو اسلحہ کی بازیابی کے بارے میںغلط معلومات فراہم کی تھیں۔یہ معاملہ 18 جولائی 2020 میں شوپیاں کے امشی پورہ میں ہونے وا لی جھڑپ سے متعلق ہے جس میں 3 نوجوانوں کو ہلاک کرکے جنگجوقرار دیا گیا تھا۔ بعد ازاں ، سوشل میڈیا پر یہ اطلاعات سامنے آنے کے بعد کہ یہ تینوں نوجوان بے گناہ ہیں، فوج نے کورٹ آف نکوائری کا حکم دیا۔چارج شیٹ میں کہ

۔24گھنٹوں میں کوئی اموات نہیں

 سرینگر // 20جنوری کے بعد دوسری مرتبہ اتوار کو جموں و کشمیر میں 24گھنٹوں کے دوران کوئی بھی متاثرہ شخص فوت نہیں ہوا ہے۔ اس طرح وائرس سے مرنے والوں کی تعداد متواتر طور پر 1929بنی ہوئی ہے۔ ان میں 719جموں جبکہ 1210 کشمیر میں فوت ہوئے ہیں۔ جموں و کشمیر میںکورونا وائرس کی تشخیص کیلئے 17ہزار  477 تشخیصی ٹیسٹ ہوئے جن میں 73 افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں اور اسطرح متاثرین کی مجموعی تعداد1لاکھ  24 ہزار 19 ہوگئی ہے۔ ان میں 51 ہزار 421  جموں جبکہ 72ہزار 598 کشمیر سے تعلق رکھتے ہیں۔ نئے 73  معاملات میں 31جموں جبکہ 42 کشمیر سے تعلق رکھتے ہیں۔ کشمیر کے 42 متا ثرین میں  13ضلع سرینگر،  3 بارہمولہ، 7بڈگام، 3 پلوامہ، 2 کپوارہ، 5 اننت ناگ، 2 بانڈی پورہ، 5گاندربل، 0 کولگام اور 2 شوپیان سے تعلق رکھتے ہیں۔  جموں صوبے کے 31متاثرین میں 29ضلع جموں جبکہ 1ادھمپور  اور ای

۔4سرکاری اسپتالوں میں جزوی کام کاج بحال

  سرینگر //23مارچ کو کشمیر کے25سرکاری اسپتالوں میں معمول کے کام کاج پر روک لگانے کے 9ماہ بعد سرکار نے 4سرکاری اسپتالوں میں معمول کا کام کاج بحال کرنے کی ہدایت جاری کی لیکن 2 بڑے اسپتالوں میں انتظامیہ کی عدم دلچسپی اور ٹیکینکل خرابیوں کی وجہ سے علاج و معالجہ اور جراحیوں کا عمل مکمل طور پربحال نہیں ہوا  ہے۔ 19دستمبر کو کمشنر سیکریٹری صحت و طبی تعلیم نے ایک میٹنگ کے دوران کشمیر کے 4بڑے اسپتالوں جی وی سی بمنہ ، ضلع اسپتال گاندربل ، ضلع اسپتال پلوامہ اور ضلع اسپتال شوپیان میںکام بحال کرنے کی ہدایات دیں لیکن ضلع اسپتال گاندربل اور جی وی سی بمنہ میں علاج و معالجہ کا عمل مکمل طور پر بحال نہ ہوسکا ۔ ضلع اسپتال گاندربل میں تعینات ایک ڈاکٹر نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’ ابھی صرف معمولی نویت کی جراحیاں انجام دی جارہی ہیں لیکن بڑی جراحیاں شروع ہونا ابھی باقی ہیں‘&lsquo

ایک ہی راحت کیلئے ایک سے زیادہ عرضیاں دیناٹھیک نہیں :عدالت

 سرینگر//عدالت عالیہ نے ایک ہی راحت کیلئے عرضی گزار کی طرف سے ایک سے زیادہ عرضیاں دینے کونامنطور کیا ہے۔ایک طالب علم کی دوعرضیوں جن میں ایک طالب علم کے حق میں قرضے کی رقم واگزار کرنے کیلئے ہدایات جاری کرنے کی استدعاکی گئی تھی، کو خارج کرتے ہوئے جسٹس سنجے دھر پر مشتمل بنچ نے کہا کہ عرضی گزارنے اس سے قبل کی ایک عرضی پر قرضے کی رقم واگزار کرنے کی ہدایات حاصل کرنے میں ناکامی پر اسی طرح کی راحت کیلئے دوسری عرضی داخل کی تھی۔عدالت نے کہا کہ اس معاملے پر عرضی گزار کو بھاری جرمانہ اداکرناپڑتالیکن عدالت نے اس عرضی گزار کے طالب علم ہونے کی وجہ سے لچک کا مظاہر ہ کیاتاہم عرضی گزار کو تنبیہ کیا کہ وہ مستقبل میں ایسے معاملات میں ہوشیار رہے۔دونوں عرضیوں میں عرضی گزار کے حق میں قرضہ واگزار کرنے کی استدعا کی گئی تھی۔عدالت نے کہا کہ درحقیقت  دونوں عرضیوں میں جس راحت کی استدعا کی گئی ہے وہ یکساں

دیوسر میں نقلی پولیس آفیسر پولیس کے ہتھے چڑھ گیا

اننت ناگ//دیوسر پولیس نے روپے بٹورنے والے ایک نقلی پولیس آفیسر کو گرفتار کیا ۔گل محمد شان ولد عبدالکریم شان ساکن کیلم کی طرف سے پولیس میں تحریری شکایت درج کی گئی کہ ایک شخص، جس نے خود کو پولیس کا ایک آفیسر جتلایا، اس کے پاس آیا اور بیٹے کی رہائی کے عوض ایک لاکھ روپے کا تقاضا کیا۔شکایت میں بتایا گیا کہ اس نے 5ہزار روپے پیشگی ادائیگی کے طور پر دیئے اور کیس بند کرنے کو کہا۔ تاہم معاملہ جوں کا توں رہا ، جس کے مجبوراً اسے پولیس کا سہارا لینا پڑا۔پولیس نے شکایت کا فوری نوٹس لیتے ہوئے معاملے کی نسبت کیس زیر نمبر05/2021  زیر دفعہ420آئی پی سی درج کیا ۔پولیس نے بعد میں خود کو نقلی پولیس آفیسر جتلانے والے عمر بشیر ڈار ولد بشیر احمد ڈار ساکن برازلو کولگام کو حراست میں لیا جس نے پوچھ گچھ کے دوران اعتراف جرم کیا ۔  

اوڑی کی بالائی سڑکیں 20روز سے بند

اوڑی/ اوڑی کے کئی دیہات کی رابطہ سڑکیں گزشتہ 20 روز قبل ہوئی برفباری کے بعد گاڑیوں کی آمد رفت کے لئے بند پڑی ہیں۔مقامی لوگوں کے مطابق 5 اور 6 جنوری کو ہونے والی برفباری کے بعد چرنڈہ،بٹگراں، ہتھلنگا ،چوٹالی، لاجڈی،گگرہل، جبڈی، کورالی، دارا کوجن وغیرہ کی رابطہ سڑکیں گاڑیوں کی آمد رفت کے لئے بند ہو گئیںلیکن 20 روز گزرنے کے باوجود بھی محکمہ پی ایم جی ایس وائی نے ان سڑکوں کوگاڑیوں کی آمد رفت کیلئے بحال نہیں کیا ۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ رابطہ سڑکیں بند ہونے کی وجہ سے انہیں سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ لوگوں نے بتایا کہ مریضوں کو چار پائی پر اٹھا کر کئی کلو میٹر سفر طے کر کے اسپتال پہنچایا جارہاہے اور غذائی اجناس دیگر سامان بھی کئی کلو میٹر کندھو ںپر اٹھا کر گھر لے جانا پڑرہا ہے۔ہتھلنگا اور چوٹالی کے لوگوں نے بتایا کہ شدید سردی کی وجہ سے سڑک پر جمع برف جم گئی ہے جسے صاف کرنے کے لئے چ

شالہ بگ گاندربل میں صف ماتم

گاندربل //گاندربل کے مضافاتی علاقہ شالہ بگ میں ایک المناک واقعہ میں بھائی بہن حرکت قلب بند ہونے سے فوت ہوئے۔ایک گھنٹے کے دوران دونوں کا جنازہ ادا کیا گیا۔ یہ دل دہلانے والا واقعہ شالہ بگ گاندربل میں پیش آیا۔55 سالہ عبدالصمد کھانڈے ولد غلام احمد کئی برسوں سے دل کے عارضہ میں مبتلا تھا اور ایک ہفتہ سے میڈیکل انسٹیچوٹ صورہ میں زیر علاج تھا۔ اتوار کو دن کے ایک بجے وہ دل کا دورہ پڑنے سے فوت ہوا۔ ان کی میت اپنے آبائی گھر شالہ بگ لائی گئی اور یہاں اسکی تدفین اور آخری رسومات کی ادائیگی کا آغاز کیا گیا۔اسی دوران بھائی کی جدائی کا صدمہ برداشت نہ کرکے اسکی بہن 45 سالہ راجہ بیگم زوجہ عبدالمجید کھانڈے غش کھاکر گرپڑی۔انہیں فوری طور پر نزدیکی طبی مرکزپیر پورہ لے جایا گیا جہاں سے اسے میڈیکل انسٹیچوٹ صورہ منتقل کیا گیا تاہم اس کی موت راستے میں ہی واقع ہوچکی تھی۔ڈاکٹروں نے بتایا کہ اسکی موت حرکت قلب

ہندوارہ اسپتال میں بیک وقت3بچوںکی پیدائش

 کپوارہ//ضلع اسپتال ہندوارہ میں ایک خاتون نے تین بچوں کو بغیر جراحی کے جنم دیا۔تینوں بچے صحیح سلامت ہیںاور ماں کی حالت بھی ٹھیک ہے۔  معلوم ہوا ہے کہ درد ذہ میں مبتلا  38سالہ عتیقہ بیگم زوجہ محمد صدیق ساکن بڈنمبل کو سنیچروارکو سب ضلع اسپتال کرالہ پورہ میں  دا خل کیا گیا جہا ں سے ڈاکٹروں نے اُسے ہندوارہ ضلع اسپتال منتقل کیا ۔ ضلع اسپتال ہندوارہ میں درد ذہ میں مبتلا خاتون عتیقہ بیگم کو MRD,NO 4092کے تحت دا خل کیا گیااور لیبر روم پہنچایا گیا، جہا ں اُس نے اتوار کی دو پہر کو ایک ساتھ3بچو ں کو جنم دیا ۔عتیقہ پہلے ہی 6بچو ں کی ماں ہے ۔میڈیکل سپرانٹنڈنٹ ضلع اسپتال ہندوارہ ڈاکٹر نثار احمد وانی نے کشمیر عظمیٰ کو بتا یا کہ حاملہ خاتون نے 3بچو ں کو بغیر سر جری جنم دیا اور جنم لینے والے تینو ں بچے صحیح سلامت ہیں ۔ انہوںنے کہاکہ ڈاکٹر رئیس احمد اور ڈاکٹر عارفہ کی نگرانی میں م

برف باری کے سبب سڑکیں بند ہونے کا نتیجہ

 شرپورہ بارہمولہ کی عارضہ قلب میں مبتلا خاتون  پولیس نے کاندھوںپر اسپتال پہنچایا  بارہمولہ //  بارہمولہ پولیس نے دل کی بیماری میںمبتلا ایک25 سالہ خاتون کو رات کے دوران کندھوں پر اُٹھاکر اسپتال پہنچایا ۔ سنیچر کو رات دیر گئے  شر پورہ علاقہ کی رہنے والی ایک پچیس سا لہ خاتون جو کہ دل کی بیماری میں مبتلا ء ہے، نے درد کی شکات کی، تاہم مسلسل برف باری اور پھسلن پیدا ہونے  کی وجہ سے اُسے اسپتال لے جانا ممکن نہیں تھا۔ جس کے بعد اہل خانہ نے پولیس کی مدد طلب کی۔ بعد میں ایس ایس پی بارہمولہ  عبدالقیوم کی ہدایت پر پولیس تھانہ چندوسہ کے اہلکاروں نے ا پنی جانوں کی پرواہ کئے بغیر مدد کے لئے مذکورہ گاؤں پہنچے اور مذکورہ خاتون کو کندھوں پر اٹھا کر قریب دو کلومیٹر دور چندوسہ اسپتال پہنچایا جہا ں اُس کا علاج و معالجہ جاری ہے ۔   اہنگام بیروہ کی میت

کشمیر یونیورسٹی میں پروفیسر ماجد حسین یادگاری خطبے کا انعقاد

 سرینگر//کشمیر یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر طلعت احمد نے اتوار کو پروفیسر ماجد حسین میموریل لیکچر کی صدارت کی۔ آن لائن لیکچر کااہتمام یونیورسٹی کے شعبہ جیوگرافی اینڈ ڈیزاسٹر منیجمنٹ(DGDM)نے مرحوم پروفیسر حسین کی یاد میں کیا اور وہ 1981سے 1987تک شعبہ کے سربراہ، جو اُس وقت ڈیپارٹمنٹ آف جیوگرافی اینڈ ریجنل منیجمنٹ کہلاتاتھا،تھے۔پروفیسر طلعت نے کہاکہ پروفیسر حسین ایک معروف ماہر تعلیم کے علاوہ ایک اچھے انسان تھے اور یادگاری خطبہ ایسی شخصیات کیلئے ایک موزوں خراج عقیدت ہے جن کی دین کے ان مٹ نقوش ہیں۔ انہوںنے کہاکہ ایسے خطبوں سے نوجوان طلاب عظیم لوگوں سے فیض حاصل کرسکتے ہیں جنہوںنے اپنی محنت اور لگن سے اداروں میں کام کیا ۔ پروفیسر طلعت نے کہاکہ ایسی تقاریب سے اپنے پیشرو کے چھوڑے ہوئے میراث کو آگے لے جانے کی قوت ملتی ہے ۔ جے این یو میں سینٹر فار دی سٹیڈی آف ریجنل ڈیولپمنٹ میں جیوگر

ناگہ ناڑی بونیار کا پل تین سال قبل گرگیا

بارہمولہ // ناگہ ناڑی بونیار میں واقع نالے پر ایک پُل گر جانے سے مقامی آبادی کو زبردست مشکلات کا سامنا ہے ۔ مقامی لوگوں نے بتایا کہ ناگہ ناڑی میں واقع ایک نالہ پر قومی شاہراہ سے جوڑنے کیلئے لوگوں کی سہولیت کیلئے ایک چھوٹا پُل بنایا گیا تھا، تاہم وہ تین سال قبل گرکر ٹوٹ گیا،  جس کے نتیجے میں لوگوں کو مشکلات درپیش ہیں اورایک لمبے راستے سے قومی شاہرہ تک پہنچنا پڑتا ہے جس کی وجہ سے اُنہیں کافی دقتوں کا سامنا ہے ۔ انہوںنے کہا ہے کہ اگر چہ انہو ں نے کئی مرتبہ ضلع انتظامیہ کے افسران کو مطلع کیا تھا تاہم اس کی طرف کوئی توجہ نہیں دی گئی ۔ انہوں نے گورنر انتظامیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ ناگہ ناڑی میں لوگوں کی آمد رفت کیلئے ایک پُل تعمیر کیا جائے تاکہ عوام کو درپیش مشکلات  سے راحت مل سکیں۔ 

بملورہ گاندربل کا پل10 برسوں سے تشنہ تکمیل

 گاندربل//گاندربل میں نالہ سندھ پربملورہ کے مقام پر کروڑوں روپے کی لاگت سے پل کی تعمیر شروع کی گئی تاہم دس برس کا عرصہ گزر جانے کے باوجود بھی پل کی تعمیر مکمل نہیں ہوپارہی ہے،جس کی وجہ سے ضلع کے درجنوں علاقوں کو ضلع اسپتال کے علاوہ دیگر علاقوں تک پہنچنے میں مشکلات کا سامنا ہے۔ سال2011 میں عمر عبداللہ کی قیادت والی سابق حکومت نے بملورہ کے مقام پرنالہ سندھ پر پل کی تعمیر کا کام شروع کیا جوابھی تک مکمل نہیں ہوا۔اس کے علاوہ ضلع میں درجنوں تعمیراتی منصوبوں پر برسوں سے کام جاری ہے  لیکن وہ سب مکمل ہونے کا نام نہیں لے رہے ہیں.۔بملورہ میں رہائش پزید درجنوں کنبوں کو نالہ سندھ کے پار قبرستان موجود ہونے کے سبب کنبے میں ہونی والی موت کی میت کو گاڑیوں یا کشتیوں میں لیجاکر تجہیزوتکفین کرنا پڑتی ہے ۔سال 2009میں نئے ضلع اسپتال کی تعمیر دودرہامہ میں کی گئی جس کو مدنظر رکھتے ہوئے سال2011میں نا

رنگل نہر کا وجود محکمہ آبپاشی اور مقامی لوگوں کی لاپرواہی سے خطرے میں

 سرینگر//رنگل ناگہ بل سے درجنوں علاقوں کو سیراب کرنے والی آبپاشی کی نہر جو پندرہ سال قبل قابل استعمال ہوا کرتی تھی ،اس وقت محکمہ آبپاشی کی غفلت شعاری اور مقامی آبادی کی لاپرواہی کی وجہ سے تباہی کے دہانے پر پہنچ چکی ہے۔ہزاروں کنال زرعی اراضی کو سیراب کرنی والی آبپاشی نہر جو ناگہ بل سے ملحقہ رنگل سے شروع ہوکر الہی باغ،رنگہ پورہ،ملہ باغ،سکھ باغ، منڈ ی بل، نالہ امیر خان سمیت دیگر علاقوں سے ہوتے ہوئے آنچار جھیل میں مدغم ہوجاتی ہے۔مقامی لوگوں کے مطابق اس نہر سے جہاں درجنوں علاقوں میں موجود ہزاروں کنال زرعی اراضی سیراب ہوا کرتی تھی بلکہ صرف پندرہ سال قبل اس کا پانی نہ صرف صاف اور شفاف ہوا کرتا تھا بلکہ میٹھا بھی ہوا کرتا تھا۔ جن علاقوں سے یہ نہر گزرتی تھی ،وہاں کے مقامی لوگ اس کو کھانا پکانے اور دھونے کے لئے استعمال کرتے تھے،جبکہ بچے گرمیوں کے موسم میں گرمی کی شدت سے بچنے کے لئے دن

سینٹرل یونیورسٹی کے 14مفت کوچنگ مراکز

 شوپیان//سینٹرل یونیورسٹی کے اسکول آف ایجوکیشن نے جموں کشمیربھرمیں چودہ مفت کوچنگ مراکز قائم کئے ہیں جہاں طلبا ء کو مفت تعلیم فراہم کی جاتی ہے ۔ان کوچنگ کیمپوں میں یونیورسٹی میں زیرتعلیم ٹیچرایجوکیشن شعبہ کے طلاب بچوں کو تعلیم دے رہے ہیں ۔ایسے ہی ایک کیمپ جو سپرنگ ڈیلز ایجوکیشنل انسٹی چیوٹ شوپیان کے اشتراک سے منعقد کیا گیا ہے ،میں پانچویں سے آٹھویں جماعت تک کے طلاب کیلئے مصوری کے مقابلے کا اہتمام کیا گیا۔اسماء خاکی کی قیادت میں زیرتربیت اساتذہ نے اس مقابلے کا اہتمام کیا تھا۔انعاموں کی تقسیم کاری کی تقریب میں اسکول کے پرنسپل جاویداحمد موجودتھے۔انہوں نے اس موقعہ پرکہا کہ مرکزی یونیورسٹی کے زیرتربیت اساتذہ بہترین کام انجام دے رہے ہیں کیوں کہ وہ نہ صرف بچوں کو تعلیم دے رہے ہیں بلکہ ان میں چھپی دیگر صلاحیتوں کو نکھارنے کا کام بھی کررہے ہیں۔اس مقابلے میںپہلی پوزیشن ایم مصورجماعت پنجم،

جموں میں اے ٹی ایم گارڈ کاقتل

 سرینگر///جموں کے نانک نگر علاقے میں اتوار کے روز جموں و کشمیر بینک کے اے ٹی ایم گارڈ کے قتل کے الزام میں ضلع بانڈی پورہ سے تعلق رکھنے والے دو نوجوانوں کے اہل خانہ نے کہا ہے کہ ان کے بیٹے بے قصور ہیں۔ہماری پولیس سے التماس ہے کہ قتل کے معاملے کی تحقیقات ٹھوس شواہد اور ثبوت کی بناء  پر کرنی چاہئے۔پولیس کی جانب سے بنک گارڈ کے قتل کے الزام میں گرفتار وقاص بشیر کے والد بشیر احمد لون نے کہا کہ پولیس کو معاملے کی صحیح اور ٹھوس شواہد اور ثبوت کی بناء  پر قتل کے معاملے کی جانچ پڑتال کرنی چاہئے۔ہمارے بیٹے بے قصور ہیں اور ہم چاہتے ہیں کہ پولیس کو اس معاملے کی مکمل تحقیقات کرنی چاہئے کیونکہ یہ دو طالب علموں کے کیریئر اور زندگی کا معاملہ ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم ہمارے بچوں کو اچھی طرح جانتے ہیں اور یہ ہمارے تصور سے بالاتر ہے کہ وہ قتل کے گھناؤنے جرم کا ارتکاب کریں گے۔انہوں نے مزید کہا

وادی بھر میں یوم جمہوریہ کی فل ڈریس ریہر سل تقاریب منعقد

 جموں//یوم جمہوریہ کے 72ویں یوم پریڈ کی فل ڈریس ریہرسل کی صوبہ کشمیر کے تمام اَضلاع میں کامیابی کے ساتھ اختتام پذیر ہوئی۔سرینگر میں فل ڈریس ریہر سل ایس کے سٹیڈیم میں منعقد ہوئی جہاں صوبائی کمشنر کشمیر پانڈو رانگ کے پولے نے قومی جھنڈ ا لہر ایا اور مارچ پاسٹ پر سلامی لی۔بعد میں صوبائی کمشنر نے کھلی جیپ میں پریڈ کمانڈر بینام توش (SSP IRP 17 BN) اور ایس پی سریندر کمار نائب پریڈ کمانڈر کی قیادت میں پریڈ کا معائینہ کیا۔اس موقعہ پر بی ایس ایف ، سی آر پی ایف ، ایس ایس بی، جے کے اے پی ، آئی آر پی، خواتین دست ، ایس ڈی آر ایف ، فائراینڈ ایمرجنسی سروسز اور ایف پی ایف کے دستوں نے مارچ پاسٹ میں شرکت کی ۔ ان کے ساتھ بی ایس ایف اور جے کے پی کا بینڈ بھی تھا۔تقریب پر جموںوکشمیر کلچرل اکیڈیمی کی جانب سے منعقدہ ثقافتی پروگرام بھی پیش کئے گئے ۔ مردو خواتین فنکاروں نے مہمانوں کو مختلف زبانوںمیں رنگ

کنڈ اور اچھہ بل میں آگ

 اننت ناگ//کولگام ضلع کے کنڈ علاقہ میں آگ کی ایک واردات میں 2رہائشی مکانات خاکستر ہوگئے ۔کانچلو کنڈ میں سنیچر اور اتوار کی درمیانی شب کو گل محمد خان کے رہائشی مکان سے اچانک آگ نمودار ہوئی جس نے آناًفاناََ مکان کو اپنی لپیٹ میں لیا ۔اس بیچ مقامی لوگ و فائرسروس عملہ نے کافی دیر کے بعد آگ پر قابو پالیا تاہم اس بیچ گل محمد خان و مشتاق احمد خان پسران غلام حسن خان کے مکانات خاکستر ہوگئے ہیں۔آگ کی اس واردات میں لاکھوں روپیہ کا مال واسباب تباہ ہوگیا ۔واردات کے سبب دو کنبے کھلے آسمان تلے آگئے ہیں ۔اُدھر اچھ بل میں آگ کی واردات میں روئی کی ایک فیکٹری نذر آتش ہوگئی ہے ۔نذیر احمد ژاگو نامی شہری کی اس فیکٹری سے اتوارکی صبح اچانک آگ نمودار ہوئی ۔اس بیچ فائر سروس عملہ نے آگ پر قابو پالیا تاہم واردات سے لاکھوں روپیہ میں روئی تباہ ہوچکی ہے ۔آگ لگنے کی وجہ شاٹ سرکٹ بتائی جارہی ہے ۔پولیس

برف باری سے پیداشدہ صورتحال

 کپوارہ //ضلع ترقیاتی کمشنر کپوارہ امام الدین نے لولاب میں حالیہ برف باری سے پیدا شدہ صورتحال کا جائزہ لیا ۔انہو ں نے سوگام اور اس کے مضافاتی علاقوں میں سڑکو ں سے برف ہٹانے کے کام کا جائزہ لیا ۔ انہو ں نے سب ضلع اسپتال سوگام کا بھی دورہ کیا ۔اس دوران ٹریڈرس فیڈریشن اور سٹیزنزکونسل ہندوارہ نے ضلع ترقیاتی کمشنر کی ستائش کی اور مانگ کی کہ ہندوارہ قصبہ کا بھی دورہ کر کے لوگو ں کے مسائل کا جائزہ لیا جائے ۔ ترقیاتی کمشنرنے سڑکو ں سے برف ہٹانے کے کام کاج کا جائزہ لیا ۔بعد میں انہو ں نے سب ضلع اسپتال سوگام کا بھی معائنہ کیا اوروہاں مریضوں کو در پیش مسائل سے متعلق جانکاری حاصل کی۔سب ضلع اسپتال سوگام میں انہو ں نے او پی ڈی ،آئی پی ڈی ،لیبر روم اور ایکسرے سیکشن کا بھی معائنہ کیا اور وہا ں مریضوں کو دستیاب سہولیات کی جانکاری حاصل کی ۔انہو ں نے نئی اسپتال عمارت کا بھی معائنہ کیا ۔ضلع ترقیاتی

ڈاکٹر باجوہ آرینز میں پرنسپل کی حیثیت سے شامل

 سرینگر//معروف نرسنگ پروفیسر ڈاکٹر راجندرجیت کور باجوہ نے حال ہی میں آرینزانسٹی ٹیوٹ آف نرسنگ میں پرنسپل کی حیثیت سے شمولیت اختیار کی۔ یہ انسٹی ٹیوٹ 3 سال   اور 2 سال کا اے این ایم کورس پیش کرتا ہے جسے ہندوستانی نرسنگ کونسل (INC) اور پنجاب نرسنگ رجسٹریشن کونسل (PNRC) سے وابستہ منظور کرتے ہیں۔ڈاکٹر باجوہ نے گذشتہ 22 سال کے اپنے تجربے کے دوران کلینیکل شعبے کے ساتھ ساتھ درس و تدریس میں بھی نام کمایا ہے۔ ڈاکٹر باجوہ نے بات کرتے ہوئے کہا ’’میں آرینز انسٹی ٹیوٹ آف نرسنگ میں کام کرنے پر خوش ہوں اور بہت پرجوش ہوں ، طلبا ایک جدید انداز اختیار کر رہے ہیں کیونکہ صحت کی دیکھ بھال کی صنعت دن بدن بدل رہی ہے اور نرسنگ کے بہتر پیشہ ور افراد کے طور پر ابھرنے کیلئے اپنی صلاحیتوں کو چمکانے کی ضرورت ہے‘‘۔آریانز گروپ کے چیئرمین ڈاکٹر انشو کٹیریا نے ان کا خیرمقدم

منشیات مخالف مہم

 سرینگر//پولیس نے سرینگر اور ہندوارہ میں منشیات فروشوں کے خلاف اپنی حالیہ کارروائی میں تین افراد کو گرفتار کیا ہے اور ان کے قبضے سے ممنوعہ مادہ برآمد کیا ہے۔بابا ڈیم میں قائم ایک چیک پوائنٹ پر افسروں نے ایک شخص کو روک لیا جس کی شناخت عاشق حسین کمار ساکن کرالپورہ ننوانی اننت ناگ کے نام سے ہوئی ہے۔ تلاشی کے دوران اہلکار اس کے قبضے سے 170 گرام بھنگ برآمد ہوئی۔ اسے گرفتار کرکے ایم آر گنج تھانہ منتقل کردیا گیا۔اسی مناسبت سے قانون کے متعلقہ دفعات کے تحت ایف آئی آر نمبر 05/2021 درج کیا گیا ہے اور معاملے کی تحقیقات کا آغاز کردیا گیا ہے۔ایک اور کارروائی میںپولیس نے گرلز ریسٹورنٹ نگین کے قریب ایک چیک پوائنٹ پرایک شخص کو روک لیا جس کی شناخت توحید احمد خان ساکن دھوبی گھاٹ حضرتبل کے نام سے ہوئی ہے۔ تلاشی کے دوران اس کے قبضے سے 5 گرام ہیروئن برآمدکیا۔ اسے گرفتار کرکے نگین تھانہ منتقل کرد

تازہ ترین