تازہ ترین

پچھلے چند ہفتوں کے دوران 12اموات | رام بن میں نوجوانوں میں ہی نہیں معمر افراد میں بھی خودکشی کا رجحان

را م بن //پچھلے جمعہ کو ضلع کے بٹوت بونباری علاقے میں ایک معمر خاتون نے مبینہ طور پر خودکشی کرلی جبکہ چند روز قبل گلی نیرا گائوں کی 22سالہ لڑکی نے بھی مبینہ طور پر خودکشی کرکے اپنی زندگی کا خاتمہ کردیاجس سے ایک بار پھر رام بن میں خودکشیوں کا معاملہ زبان زدہ عام ہے۔62سالہ خاتون کی نعش اس کے گھر کے نزدیک درخت سے لٹکتے ہوئے پائی گئی جس پر پولیس نے تحقیقات شروع کردی ہیں لیکن ایک پولیس افسر کاکہناہے کہ یہ معاملہ خودکشی کا ہی لگتاہے۔اسی طرح سے22 سالہ لڑکی کی نعش بھی گھر کے قریب درخت کے ساتھ لٹکی ہوئی ملی۔یہ دونوں واقعات ضلع میں خود کشی سے ہورہی اموات کا تسلسل ہیں اور خودکشی کے بڑھتے رجحان پر ہر شخص پریشان ہے ۔ضلع میں گذ شتہ کچھ دنوں سے نو جوان لڑ کوں اور لڑ کیوں میں خو د کشی کا رجحان دیکھاگیاہے لیکن تشویشناک بات یہ ہے کہ کچھ معمر افراد بھی سخت قدم اٹھارہے ہیں۔خودکشی کے بڑ ھتے رجحان پر گہر ی

رام بن۔ بانہال سیکٹر میں فورلین شاہراہ کا کام تیسرے روز بھی بند

بانہال //جموں سرینگر قومی شاہراہ پررام بن۔ بانہال سیکٹر میں فورلین شاہراہ کی تعمیرکا کام مسلسل تیسرے روز بھی ٹھیکیداروں کی ہڑتال کی وجہ سے بند رہا۔ تعمیراتی کمپنی ہندوستان کنسٹریکشن کمپنی اور اس کی ایک ذیلی کمپنی آشا پورہ روڈ وئز کی طرف سے 2 درجن سے زائدمقامی ٹھیکیداروں کی لگ بھگ 50 کروڑ رپے کی رقم واگذار کرنے میں ناکامی کے خلاف درجنوں ٹھیکیداروں کی ہڑتال اور احتجاج جاری ہے ۔سنیچر کے روز ٹھیکیداروں نے بانہال اور رامسو میں تعمیراتی کمپنیوں کے خلاف احتجاجی مظاہرے کئے۔ اگرچہHCC کی طرف سے تعمیری کام کیلئے لائی گئی ایک اورذیلی کمپنی CPPPL یا چودھری پاور پروجیکٹس پرائیویٹ لمیٹیڈنے رام بن بانہال سیکٹر میں بقایا دار ٹھیکیداروں کی طرف سے بند کئے گئے تعمیراتی کام کو دوبارہ شروع کرنے کی کوشش کی، تاہم اس دوران رامسو میں زبردست ہنگامہ آرائی ہوئی اورٹھیکیداروں و CPPPL  کے ایک اعلیٰ عہدیدار نا

جموں سرینگر فور لین شاہراہ کے رام بن۔ بانہال سیکٹر پر کام بند

بانہال // رام بن۔ بانہال سیکٹر میں کام کررہے ٹھیکیداروں کی کروڑوں روپے کی رقم ادا نہ کئے جانے پر فورلین شاہراہ کاکام بند کردیاگیاہے ۔ ہندوستان کنسٹریکشن کمپنی اور اس کی ایک سب لیٹ کمپنی آشا پورہ کی طرف سے فورلین شاہراہ کا کام کرنے والے 2 درجن سے زائد ٹھیکیداروں کی کروڑوں روپے کی رقم واگزار کرنے میں ناکامی پراس وقت تک کام بند رکھنے کا فیصلہ لیاہے جب تک کہ یہ رقم ادانہ ہوجائے ۔ اس فیصلہ سے بدھ سے شاہراہ کے رام بن بانہال سیکٹر میں تعمیراتی کام ایکبار پھر ٹھپ ہو کر رہ گیا ہے۔ ٹھیکیداروں کی بقایا رقومات کی ادائیگی کیلئے بدھ کے روز بانہال میں ٹھیکیداروں کی کوآرڈی نیشن کمیٹی بھی تشکیل دی گئی ہے جس کا سربراہ سرپنچ الیاس بانہالی کو مقرر کیا گیا ہے۔ واضح رہے کہ جون کے پہلے ہفتے میں ایچ سی سی اور آشا پورہ کمپنی کے بقایا دار ٹھیکیداروں نے احتجاج کیا تھا اور بعد میں ایس ایس پی رام بن حسیب الرحمن

ٹھاٹھری گندوہ شاہراہ پر حادثہ

ڈوڈہ //ٹھاٹھری کلہوتران شاہراہ پر پیش آئے سڑک حادثہ میں 2 افراد لقمہ اجل و 4 زخمی ہوئے جبکہ 2 لاپتہ ہیں۔جمعرات کوٹھاٹھری سے بلگراں جارہی ایک کروزر گاڑی زیر نمبری JK17-8952 حجام پورہ کے نزدیک ڈرائیور کے قابو سے باہر ہوکر 300 فٹ نیچے دریا کے کنارے جاگری جس کے نتیجے میں موقعہ پر ہی 2 افراد ہلاک و 4زخمی ہوگئے۔ اس حادثہ کے فوراً بعد مقامی لوگ، پولیس و سیکورٹی فورسز کے اہلکار جائے وقوعہ پر پہنچے اور بچاؤ کارروائی شروع کی۔اس دوران حادثہ کا شکار ہوئے سبھی افراد کو سب ضلع ہسپتال ٹھاٹھری منتقل کیا گیا جہاں پر ڈاکٹروں نے 2 افراد کو مردہ قرار دیا جن کی شناخت اوتم سنگھ (28) ساکنہ ناگنی و سنیل کمار ساکنہ بلگراں کے طور پر ہوئی ہے جبکہ دلیپ سنگھ (26)ساکنہ مچھی پال، چندر سنگھ (29)ساکنہ بلگراں ،بچن سنگھ (25)و اندرا دیوی (22)ساکنہ بلگراں کو ابتدائی علاج کے بعد گورنمنٹ میڈیکل کالج ڈوڈہ منتقل کیا گیا۔ ذر

ڈوڈہ میں آن لائن کے بجائے ریڈیو کلاسز، طلبا خوش، اساتذہ مطمئن

جموں// جموں و کشمیر کے ضلع ڈوڈہ میں اساتذہ آن لائن کلاسز کے بجائے ریڈیو کلاسز دے کر علم کی شمع کو فروزاں رکھے ہوئے ہیں تاکہ طلبا کے تعلیمی مستقبل پر کورونا وبا کی تاریکی سایہ فگن نہ ہوسکے۔ طلبا کا کہنا ہے کہ ریڈیو کلاسز، آن لائن کلاسز سے زیادہ موثر اور مفید ہیں کیونکہ ٹوجی موبائل انٹرنیٹ کے چلتے آن لائن لیکچرز صاف سنائی ہی نہیں دے رہے تھے۔  آل انڈیا ریڈیو بھدرواہ پر روزانہ صبح ساڑھے نو بجے سے ساڑھے دس بجے تک ایک تعلیمی پروگرام نشر کیا جاتا ہے جس میں اساتذہ اپنے اپنے مضمون کو پڑھاتے ہیں۔

رام بن میں کمسن بچی ملبے تلے دب کر لقمہ ٔاجل

رام بن //رام بن میں ایک کمسن بچی پسی کے ملبے تلے دب کر لقمہ اجل بن گئی ۔یہ واقعہ تحصیل راج گڑھ کے گولی دھرا برالا کمیت علاقے میں منگل کی صبح پیش آیا۔پولیس ذرائع نے بتایاکہ 7سالہ آفرینہ بانو دختر محمد شمیم پریہار ساکن کمیت حال برالا کمیت تحصیل راج گڑھ جنگل میں مویشیوں کے ساتھ تھی جس دوران وہ ایک پسی کی زدمیں آکر ملبے میں دب گئی۔اطلاع ملتے ہی پولیس چوکی راج گڑھ سے ایک ٹیم موقعہ پر پہنچی اور بچی کی نعش کو ملبے سے باہر نکالا۔ پولیس ذرائع نے بتایاکہ یہ واقعہ اس وقت پیش آیا جب لہار سنگھ اور ودیا رام پسران دیوراج ساکنان برالا اپنے دیگرساتھیوں کے ہمراہ کائل کے ایک درخت کو آرے سے کاٹ رہے تھے اور درخت کاٹنے کے دوران یہ پسی گرآئی۔پولیس نے نعش کاپوسٹ مارٹم کرانے کے بعد اسے آخری رسومات کی ادائیگی کیلئے لواحقین کے حوالے کردیا۔ایس ایچ او سنیل شرما نے واقعہ کی تصدیق کرتے ہوئے بتایاکہ اس سلسلے م

۔1850میگاواٹ والا سا ولہ کو ٹ پر وجیکٹ تا خیر کا شکا ر

رام بن //ضلع رام بن میں دریا ئے چنا ب پر بغلیہار پن بجلی سے بھی زیادہ صلاحیت والے 1850میگا واٹ سا ولہ کوٹ ہا ئیڈرو الیکٹرک پرو جیکٹ پر کام متواتر جمود کاشکار ہے ۔ حالانکہ مر کزی وزارت برائے جنگلات و ما حولیات کی جا نب سے ابھی ہر ی جھنڈی نہیں ملی ہے، تا ہم اس پر وجیکٹ کی را بطہ سڑکو ں، پلوں اور ٹنلوں پر کا م پچھلے کئی سا ل سے سست رفتا ری سے جا ری ہے۔ریا ستی پولو شن کنٹرول بورڈ اور ضلع انتظا میہ کے ا فسروں نے پر وجیکٹ کی زد میں آ نے والے شہریوں کے ساتھ تبا دلہ خیال کر نے کے لئے اب تک کئی مشترکہ اجلا س بھی منعقد کئے گئے، جن میں متا ثرین کی نقل مکا نی اور دوسری جگہوں پر با ز آ با د کاری کے حوالے سے تما م متبادل زیر غور لائے گئے تاہم ہر کام میں تاخیر کی جارہی ہے۔غرض ہر کام کچھوے کی چال کے مطابق ہورہاہے جس سے منصوبہ کی تعمیر پر لاگت کا تخمینہ بڑ ھ جانے کا امکان ہے جس کا ا ثر آئندہ بر سوں

تحصیلدار کھڑی نے1200سے زائد اقامتی اسناد اجراء کیں

بانہال // سب ڈویژن بانہال کی تحصیل کھڑی میں تحصیلدار کھڑی کی طرف سے مختلف علاقوں میں محکمہ مال کے درجن بھر کیمپ منعقد کرکے بارہ سو سے زائد اقامتی اسناد اجراء کی ہیں۔ اسی سلسلے کی ایک کڑی کے تحت تحصیلدار کھڑی اشوک کمار نے بلاک چیئرمین کھڑی سجاد احمد ، پنچایتی نمائندوں اور محکمہ مال کے ماتحت عملے کے ہمراہ مڈل سکول منڈکباس کھڑی میں ایک کیمپ کا انعقاد کیا اور اس موقع پر ہی لوگوں کی دہلیز پر 240 اقامتی اسناد اجراء کئے ۔ تحصیلدار کھڑی اشوک کمار کی طرف سے تحصیل کھڑی کے دورداز کے علاقوں میں جاکر ابتک 1224 اقامتی اسناد اجرا ء کئے گئے ہیں اور یہ سلسلہ جاری ہے۔ اس موقع پر مقامی پڑھے لکھے نوجوانوں نے گھر کی دہلیز پر اس اہم سند کو جاری کرنے کیلئے تحصیلدار کھڑی کا شکریہ ادا کرتے ہوئے عوام کی بہبودی کیلئے ان کی طرف سے کئے گئے کاموں کی سراہنا کی اور گزشتہ روز ان کے خلاف ایک معاملے کو بلاوجہ طول دینے و

ڈوڈہ میں دلدوز سڑک حادثہ،3 بچوں سمیت5کی موت

سرینگر//ضلع ڈوڈہ میں جمعہ کی صبح سڑک کے ایک دلدوذ حادثے میں تین بچوں سمیت پانچ افراد کی موت واقع ہوگئی۔ یہ حادثہ اُس وقت پیش آیا جب گول سے ٹھاٹھری جارہی ایک گاڑی سڑک سے لڑھک کر رگی نالے میں جاگری۔ ایس ایچ او ڈوڈہ منیر خان کے مطابق گاڑی میں سوار ڈرائیور سمیت پانچ افراد موقع پر ہی جاں بحق ہوگئے۔ گاڑی کے ڈرائیور کی شناخت محمد آصف ولد غلام علی ساکن دیدا، گول کے طور ہوئی ہے جبکہ تسلیمہ بیگم زوجہ شہنواز ساکن ٹھاٹھری نامی خاتون بھی مرنے والوں میں شامل ہے۔  

پاڈر کشتواڑ میں المناک حادثہ

کشتواڑ//ضلع کشتواڑ کے سب ڈویژن پاڈر میں ہفتے میں پیش آنے والے دوسرے سڑک حادثہ میں ایک ہی خاندان کے 6 افراد لقمہ اجل بن گئے ہیں۔یہ حادثہ جمعرات کی صبح10بجکر 30منٹ پرگلاب گڑھ سے 7کلومیڑدور گڑھ ماسو سڑک پر پیش آیا۔گاڑی 100فٹ نیچے جاکر دریا چناب میں گر گئی۔دریا میں پانی کا بہائو کافی تیزہے جسکے سبب بچاو کارروائیوں میں مشکلات آرہی ہیں اور لاشوں کا بھی کوئی سراغ نہیں ملا ہے۔ جائے حادثہ سے گاڑی کے پرزے اور سواریوں کے کچھ کپڑے ملے ہیں۔حادثہ کی خبر ملتے ہی پولیس، ریڈکراس، مقامی لوگ و رضاکار تنظیمیں جائے حادثہ پر پہنچی لیکن آخری اطلاعات ملنے تک گاڑی و کسی بھی افراد کو نہیں نکالا جاسکا۔ انکی تلاش جاری ہے۔جس سڑک پر حادثہ پیچ آیا ہے ، اس کی حالت کافی خستہ ہے اور ابھی تک اس پرمیکڈم نہیں ڈالا گیا ہے۔ ایس ڈی پی او پاڈر پردیپ سین نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ ایک نجی آلٹو گاڑی کو حادثہ پیش آیا ، جس

کشتواڑ میں گاڑی دریا میں جاگری،6افرادلاپتہ

سرینگر//ضلع کشتواڑ میں جمعرات کو ایک دلدوز سڑک حادثے کے بعد اُس وقت چھ افراد لاپتہ ہوگئے جب اُن کو لیجارہی ایک گاڑی دریا میں جاگری۔ یہ حادثہ پاڈر روڑ پر بھوت نالہ کے قریب پیش آیا۔ حکام کے مطابق فوج اور پولیس کے اہلکارجائے حادثہ پر پہنچ گئے ہیں اور لاپتہ افراد کی تلاش شروع کی گئی ہے۔  

کشتواڑ میں دردناک حادثہ

 کشتواڑ//کشتواڑ سے 45کلو میٹر دور واقع سنگھ پورہ علاقے میں پیش آئے ایک دلدوزحادثے میں ایک دوشیزہ کی نالے میں بہہ کرموت ہوگئی جس کو 10روز کے بعد دلہن کا لباس پہننا تھاجبکہ اس کی بھابھی کو مقامی لوگوں نے بچالیا ۔کل بعد دوپہرسنگھ پورہ کے آری گام علاقہ میں جواں سالہ لڑکی و اسکی بھابھی اس وقت نالہ پار کرتے ہوئے بہہ گئیں جب وہ جنگل سے واپس اپنے گھر کی طرف آرہی تھیں۔دوشیزہ کی اسکی بھابھی کو لوگوں نے بچانے کی کوشش کی لیکن وہ پانی کے تیز بہائو میں بہہ گئیں۔بعد میں مقامی لوگ ، پولیس ، ایس ڈی آر ایف و ریڈ کراس ٹیموں نے بچائوکارروائی شروع کی اوردیر شام آپریشن ملتوی کرنے کے بعد صبح پھر سے بچائو کارروائی شروع کی گئی جس دوران 8بجے صبح دوشیزہ کی نعش جائے حادثہ سے 800میٹر دور سے برآمد ہوئی ۔اس کی شناخت سونو دیوی دختر دیوراج کے طور ہوئی ہے ۔لڑکی کے رشتہ داروں نے بتایا کہ 10 روز بعد اسکی شادی

لاک ڈائون کی خلاف ورزی | بھاجپا کارکنان کے خلاف کیس درج

بانہال //بانہا ل میں لاک ڈائون کی خلاف ورزی کرنے پر پولیس نے بھاجپا کارکنان کے خلاف  کیس درج کیاہے ۔کئی بھاجپا ارکان جن میں منڈل صدر اور ضلع جنرل سیکریٹری بھی شامل ہیں ، کے خلاف زیر سیکشن 188انڈین پینل کوڈ کے تحت بانہال پولیس تھانہ میں کیس درج کیاگیاہے ۔پولیس کے ایک افسر نے بتایاکہ بھاجپا کارکنان کی طرف سے گگتھال ڈولگام میں ایک عوامی اجتماع منعقد کیاگیاجو لاک ڈائون کے سلسلے میں جاری کئے گئے امتناعی احکامات کی خلاف ورزی ہے۔واضح رہے کہ ضلع میں کورونا وائرس سے متاثرین کی تعدادلگ بھگ 200ہے جن میں سے 40کے قریب مریض صحت یاب ہوئے ہیں ۔  

۔36 پنچایتوں پرمشتمل میڈیکل بلاک منجاکوٹ میں بنیادی ڈھانچہ نہ طبی عملہ | 12میں سے 11میڈیکل افسران کی کرسیاں خالی ،الٹراسائونڈ مشین 4سال سے خراب ،مریض در بدر

منجاکوٹ//راجوری پونچھ کے دیگر علاقوں کی طرح میڈیکل بلاک منجاکوٹ میں بھی محکمہ صحت کا جنازہ نکلاہواہے جہاں طبی خدمات کی فراہمی کا اندازہ اس حقیقت سے ہوتاہے کہ میڈیکل افسران کی 12میں سے 11 اسامیاں خالی پڑی ہوئی ہیں اور صرف ایک ہی اسامی پر ڈاکٹر تعینات ہے۔منجاکوٹ میں 4 پرائمری ہیلتھ سنٹر اور 43سب سنٹر ہیں جن کیلئے محکمہ صحت کی طرف سے میڈیکل افسران کی 12 اسامیوں کو منظوری دی گئی ہے تاہم حیران کن اور افسوسناک بات یہ ہے کہ ان میں سے صرف 1 اسامی پر ڈاکٹر تعینات ہے اورباقی11 خالی پڑی ہیں۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ منجاکوٹ بلاک ایک سرحدی علاقہ ہے جہاں لوگوں کو ہندوپاک افواج کے درمیان پائی جارہی کشیدگی کی وجہ سے خوف لاحق رہتاہے اور ساتھ ہی انہیں دیگر کئی طرح کے مسائل کاسامنا بھی کرناپڑتاہے۔ مقامی سطح پر علاج کی کوئی سہولت میسر نہ ہونے کی وجہ سے مریضوں کو علاج کیلئے دربدر ہوناپڑتاہے اور وہ کبھی ضلع ہس

بروقت علاج نہ ملنے کاشاخسانہ | کرالہ پورہ کپوارہ کی دردزہ میں مبتلاء خاتون فوت

کپوارہ//کپوارہ میں دردزہ میں مبتلاء ایک خاتون بروقت علاج نہ ملنے کی وجہ سے دم توڑ بیٹھی ۔اطلاعات کے مطابق جمعہ کے روزپنجواہ رامحال کی دردزہ میں مبتلاء حفیظہ زوجہ عاشق حسین میرکوسب ضلع اسپتال کرالہ پورہ میں داخل کیا گیاجہاں ڈاکٹروں نے ملاحظہ کرنے کے بعداُسے کپوارہ منتقل کیا۔لواحقین نے الزام لگایا کہ کپوارہ اسپتال میں اس کا علاج کرنے کے بجائے اُسے ضلع اسپتال ہندوارہ منتقل کیا۔حفیظہ کے خاوندکے مطابق ہندوراہ اسپتال میں بھی اس کا علاج نہیں کیاگیاجس کے بعد اُس نے اُسے ایک نجی کلنک پر لیاجہاں ڈاکٹرنے اُسے ضلع اسپتال بارہمولہ منتقل کرنے کی صلاح دی ۔عاشق حسین کے مطابق بارہ مولہ اسپتال میںجونہی دردزہ میں مبتلاء حاملہ کوداخل کیاگیا تووہاں ڈاکٹروں نے ابتدائی علاج کے دوران کئی ٹیسٹ کئے،لیکن اس دوران دردزہ میں مبتلاء خاتون دم توڑ بیٹھی۔لواحقین کے مطابق کرالہ پورہ سے کپوارہ،کپوارہ سے ہندوارہ اور ہندو

بروقت علاج نہ ملنے کاشاخسانہ | کرالہ پورہ کپوارہ کی دردزہ میں مبتلاء خاتون فوت

کپوارہ//کپوارہ میں دردزہ میں مبتلاء ایک خاتون بروقت علاج نہ ملنے کی وجہ سے دم توڑ بیٹھی ۔اطلاعات کے مطابق جمعہ کے روزپنجواہ رامحال کی دردزہ میں مبتلاء حفیظہ زوجہ عاشق حسین میرکوسب ضلع اسپتال کرالہ پورہ میں داخل کیا گیاجہاں ڈاکٹروں نے ملاحظہ کرنے کے بعداُسے کپوارہ منتقل کیا۔لواحقین نے الزام لگایا کہ کپوارہ اسپتال میں اس کا علاج کرنے کے بجائے اُسے ضلع اسپتال ہندوارہ منتقل کیا۔حفیظہ کے خاوندکے مطابق ہندوراہ اسپتال میں بھی اس کا علاج نہیں کیاگیاجس کے بعد اُس نے اُسے ایک نجی کلنک پر لیاجہاں ڈاکٹرنے اُسے ضلع اسپتال بارہمولہ منتقل کرنے کی صلاح دی ۔عاشق حسین کے مطابق بارہ مولہ اسپتال میںجونہی دردزہ میں مبتلاء حاملہ کوداخل کیاگیا تووہاں ڈاکٹروں نے ابتدائی علاج کے دوران کئی ٹیسٹ کئے،لیکن اس دوران دردزہ میں مبتلاء خاتون دم توڑ بیٹھی۔لواحقین کے مطابق کرالہ پورہ سے کپوارہ،کپوارہ سے ہندوارہ اور ہندو

جموں کشمیر بینک بانہال سربمہر

بانہال //رام بن میں کووڈ۔19 کے مزید 21افراد کے نمونے مثبت آئے ہیں جس کے ساتھ ہی ضلع میں مریضوں کی کل تعداد193 تک پہنچ گئی ہے۔ان میں سے 37 مریض صحت یاب ہوچکے ہیں جبکہ 156 کا مختلف ہسپتالوں میں علاج چل رہاہے ۔ جمعہ کے روز پچھلے 24 گھنٹوں سے ضلع میں مثبت آئے اکیس افراد میں سے ایک مثبت شخص جموں و کشمیر بنک بانہال میں درجہ چہارم کا ملازم بتایا جاتا ہے اور اس سے نہ صرف بانہال میں خوف وہراس کا ماحول پیدا ہوا ہے بلکہ انتظامیہ نے جموں و کشمیر بنک برانچ بانہال کو سربمہر کیا اور ملازمین کو گھریلو قرنطینہ میں بھیج دیا گیا ۔اس مثبت آئے بنک اہلکار کی اہلیہ حاملہ ہے اور اسی سلسلے میں یہ ٹیسٹ 08 جون کو کئے گئے تھے اور نتیجے میں بنک ملازم مثبت آیا جبکہ اسکی حاملہ اہلیہ اور اس کے والدین کے نمونے منفی آئے ہیں۔ 

فورلین شاہراہ تعمیر:کروڑوں روپے کی رقم واگذار نہ کرنے کا شاخسانہ

بانہال// بانہال اور رامسو سیکٹر میں فورلین شاہراہ کی تعمیراتی کمپنی ہندوستان کنسٹریکشن لمیٹیڈ کی سانجھی دار کمپنی آشا پورہ کی طرف سے رقومات ادا کئے بغیر ہی یہاں سے مشینری نکال کر لیجانے کی کوشش ٹھیکیداروں اور پیٹرول پمپ مالکان نے ناکام بنا دی اور اسے اپنی تحویل میں لے لیا۔ بدھ کوپروجیکٹ منیجر سے کی گئی میٹنگ میں کمپنی نے مزید پانچ روز کی مہلت مانگی ہے۔تعمیراتی کمپنی آشا پورہ کیلئے رامسو اور بانہال کے درمیان فورلین شاہراہ کی شاہراہ کی تعمیر کرنے والے ٹھیکیداروں کے ایک وفد نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ آشا پورہ کمپنی اور ہندوستان کنسٹریکشن لمیٹیڈکے ذمہ  35 سے چالیس کروڑ روپے کی رقم واجب الادا ہے اور منگل کی شام آشا پورہ کمپنی نے بقایا داروں کی رقم ادا کیے بغیر ہی بانہال سے اپنی مشینری نکال لی لیکن کئی ٹھیکیداروں اور پیٹرول پمپ مالکان نے کمپنی کی قریب دس مشینوں اور گاڑیوں کو رامسو س

جموں سرینگر شاہراہ کی کشادگی میں ماحولیاتی ضوابط بالائے طاق

رام بن //گزشتہ ہفتے حکام کی طرف سے ماحولیات کا دن منایاگیا اور لوگوں کو یہ درس دیاگیاکہ وہ نہ صرف اپنے اردگرد کے ماحول کو صاف ستھرارکھیں بلکہ زیادہ سے زیادہ شجرکاری بھی کریں تاہم تعمیراتی پروجیکٹوں کے دوران ماحولیات کوکس قدر تباہ کیاجارہاہے ،اس پر کسی نے سوچنے کی بھی زحمت گوارہ نہیں کی۔ نیشنل ہائی وے اتھارٹی آف انڈ یا کی جانب سے جموں سرینگر شاہراہ نا شری سے بانہال تک چارگلیا ریوں پر مشتمل بنانے کیلئے تعمیر کاکام جاری ہے ، تاہم اس تعمیر میں تمام اصولوں اور ضابطوں کو با لائے طاق رکھا گیاہے۔ضلع انتظامیہ اور متعلقہ حکام کی خاموشی کافائدہ اٹھاکر ہا ئی وے ا تھار ٹی آ ف انڈ یا اور ٹھیکیداروں  نے پورے ماحول کو پراگندہ کردیاہے۔مقامی لوگوں کے مطابق ماحو لیات کو سب مل کر نا قابل تلافی نقصان سے دوچار کر رہے ہیں اورحکام نے سب کچھ دیکھنے کے باوجود آنکھیں بند کررکھی ہیں۔لوگوں کا الزام ہے کہ ہ

گندوہ میں طبی نظام مفلوج ،الٹرا ساؤنڈنہ ای سی جی

ڈوڈہ //ڈوڈہ ضلع کے دور افتادہ علاقوں میں محکمہ صحت میں بنیادی ڈھانچہ کی کمی کے باعث عوام گونا گوں مشکلات سے دوچار ہے۔ سب ضلع ہسپتالوں و گاؤں سطح پر قائم طبی مراکز میں ڈاکٹروں و نیم طبی عملہ کی قلت و دیگر بنیادی سہولیات کی عدم موجودگی سے غریب و پسماندہ طبقہ کے لوگ زیادہ متاثر ہوتے ہیں۔ ڈوڈہ ضلع کے دور دراز علاقہ گندوہ بھلیسہ ڈیرھ لاکھ آبادی پر ایک سب ضلع ہسپتال،چار پرائمری ہیلتھ سینٹر و 26سب سینٹر موجود ہیں تاہم ڈاکٹروں و نیم طبی عملہ کی خالی پڑی اسامیوں و الٹرا ساؤنڈ ،ایکسرے و ای سی جی کا بھی کوئی معقول انتظام نہیں ہے جس کے نتیجے میں عوام کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔گندوہ ہسپتال میں بی ایم او سمیت صرف 3ڈاکٹر موجود ہیں جبکہ 4مستقل ڈاکٹروں، 6میڈیکل آفیسروں و این ایچ ایم میں چار میڈیکل آفیسروں سمیت کل 14 ڈاکٹروں کی آسامیاں خالی پڑی ہیں جس میں ماہر خواتین، ماہر اطفال، آرتھو