تازہ ترین

مڈل اسکول بٹارا : 50سے زائد طالب علم اور کمرے 2

ڈوڈہ //ڈوڈہ ضلع کے بیشتر تعلیمی زونوں میں جہاں سرکاری اسکولوں کی عمارتیں خستہ حال ہونے کی وجہ سے ناقابل استعمال بن گئی ہیں وہیں متعدد عمارتوں پر کام عرصہ دراز سے تعطل کا شکارہے جبکہ متعلقہ محکمہ اس طرف کوئی توجہ نہیں دے رہا ہے۔ادھر تعلیمی زون ٹھاٹھری میں سال 2015 میں 18 لاکھ کی لاگت سے گورنمنٹ مڈل اسکول بٹارا کی عمارت کا کام شروع ہوا تاہم پانچ برس کا عرصہ گذر جانے کے بعد بھی تعمیر مکمل نہ ہو سکی اور متعلقہ محکمہ و انجینئرنگ ونگ نے 8.20لاکھ روپے کی بلیں مذکورہ ٹھیکیدار کو واگذار کی ہیں۔نائب سرپنچ جنگلواڑ نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ عمارت کا کام نامکمل ہونے کی وجہ سے اسکول میں زیر تعلیم بچوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ اس معاملہ کو متعدد بار متعلقہ محکمہ کے آفیسران کی نوٹس میں لایا گیا لیکن غیر سنجیدگی کا مظاہرہ دکھایا۔مقامی شہری نیاز احمد تانترے نے کہا کہ پچاس

بغلیہارپروجیکٹ کے عارضی ملازمین 10ماہ سے تنخواہوں سے محروم

بانہال// ضلع رام بن میں چندرکوٹ کے مقام واقع دریائے چناب پر قائم نو سو میگاواٹ کی صلاحیت والے بغلیہار پارو پروجیکٹ میں پچھلے پندرہ سے بیس برسوں سے کام کرنے والے ایک سو سے زائد ملازمین کئی مہینے کی تنخواہوں سے محروم ہیں جس کی وجہ سے ان کی زندگی مشکلات کا باعث بنی ہے۔بغلیہار پارو پروجیکٹ کو مکمل کرنے کے بعد جموں وکشمیر پاور ڈیولپمنٹ کارپوریشن کے حوالے کیا گیا اور پہلے سے ہی تربیت یافتہ عارضی ملازمین بھی کے پرکاش سے JKPDC کے حوالے کیا گیا۔ یہاں تعینات عارضی ملازمین نے کشمیر عظمی کو بتایا کہ اپنی زندگی کے بیش قیمتی پندرہ سال اس پروجیکٹ کو اس توقع پر دیئے تھے کہ آگے چل کر آرام ملے گا لیکن یہاں پچھلے قریب دس مہینے سے ایک سو سے زائد عارضی ملازمین جن میں ٹیکنیشن اور آئی ٹی آئی تربیت یافتہ ملازمین شامل ہیں،تنخواہوں سے محروم ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بغلیہار میں تعینات عارضی ملازمین تن دہی سے اپن

سرینگر جموں شاہراہ| آج صرف درماندہ گاڑیوں کو نکالا جائیگا

بانہال // ٹریفک پولیس ہیڈکوارٹر کی طرف سے جاری ایڈوائزری میں کہا گیا ہے کہ آج 20جنوری بروز بدھ سرینگر جموں شاہراہ پر جموں اور سرینگر سے کسی بھی گاڑی کو چلنے کی اجازت نہیں ہو گی جبکہ 22جنوری بروز جمعہ سڑک کی مرمت کے پیش نظر ٹریفک کو بند رکھا جائے گا۔ ۔بیان میں کہا گیا ہے کہ منگل کو جموں سے سرینگر کی طرف گاڑیوں کو چلنے کی اجازت دی گئی، لیکن ادھمپور سے سرمولی، ناشری اورکیلا موڑ  پر بدترین ٹریفک جام رہا جبکہ مگھر کوٹ میں پسی گر آئی جسے صاف کرنے میں کئی گھنٹے لگ گئے۔ ٹریفک جام اور پسی گرنے کی وجہ سے سینکڑوں کی تعداد میں مسافر ومال بردار گاڑیاں درماندہ ہو کر رہ گئیں اور شام دیر گئے تک، مسافر اور مال بردار گاڑیاں کچھوے کی چال کی مانند سرینگر کی طرف بڑھ رہی تھیں ۔کیلا موڑ رام بن کے نزدیک بیلی برج پر یکطرفہ ٹریفک کی وجہ سے بھی ٹریفک جام ہوا ، اور دونوں طرف سے گاڑیوں کی لمبی لمبی قطاریں ل

اعلان یکطرفہ، ٹریفک دوطرفہ

بانہال // جموں سرینگر شاہراہ پر پیر دوسرے روز بھی وادی سے جموں کی طرف ٹریفک کو یکطرفہ طور پر چلنے کی اجازت دی گئی۔6روز بعد جب اتوار کو بیلی برج پر گاڑیوں کو چلنے کی اجازت دی گئی تھی تب بھی سرینگر سے ہی گاڑیاں چھوڑیں گئیں۔موسم ٹھیک رہنے کی صورت میں آج جموں سے سرینگر کی طرف گاڑیاں چلیں گی۔ کیلا موڑ بیلی برج پر یکطرفہ طور پر ایک ایک کرکے گاڑیوں کو چھوڑنے کے عمل کی وجہ سے کیلا موڑ اور اور جواہر ٹنل کے آر پار ٹریفک جام رہا۔ ٹریفک جام کی وجہ سے سرینگر سے پیر کی صبح نو بجے نکلے مسافروں کو سہ پہر تک قاضی گنڈ اور ٹنل کے درمیان ہی روکا گیا اور جام میں نرمی پانے کے بعدہی مسافر گاڑیوں کوجانے کی اجازت دی گئی۔ مسافروں نے بتایا کہ یکطرفہ ٹریفک کے اعلان کے باوجود مخالف سمت سے ٹریفک چھوڑا گیا اور انہیں5 گھنٹوں تک ٹنل پہنچنے سے پہلے ہی زگ اور اپر منڈا کے آس پاس روک دیا گیا۔ ٹریفک پولیس ذرائع نے کشمیر

ٹرک نالہ بشلڑی میں لڑھک گیا، ڈرائیور لاپتہ

 بانہال// جموں سرینگر شاہراہ پرپیر کے روز شیر بی بی اور رام بن میں پیش آئے سڑک کے دو الگ الگ حادثوں میں ایک شخص زخمی ہوا ہے جبکہ ایک نالہ بشلڑی میں لاپتہ ہوگیا ۔ پہلا حادثہ پیر کی علی الصبح تین  اورچار بجے کے درمیان بانہال کے شیر بی بی علاقے میں اسوقت پیش آیا جب وادی کشمیر سے جموں کی طرف جانے والا ٹرک شاہراہ سے لڑھک کر نالہ بشلڑی میں گر گیا۔ حادثے کی خبر ملتے ہی پولیس ، کیو ار ٹی رامسو اور بانہال والنٹیرس نے بچائو کاروائیوں کا آغاز کیا لیکن نالے میں گرے ٹرک سے ایک زخمی سمت سنگھ ساکن حصار ہریانہ کو نکالا گیا اور گاڑی ڈرائیور سمیت مزید دو افراد کی موجودگی کے بارے میں معلوم ہونے کے بعد بچاؤ کارروائیوں میں شامل ٹیموں نے ناچلانہ تک نالہ بشلڑی کا چپہ چپہ چھان مارا لیکن حادثے کے بعد مبینہ طور پر لاپتہ ہوئے افراد کا کوئی پتہ نہیں چل سکا۔ حادثے کی وجہ سے حواس باختہ زخمی نے بعد میں

بجبہاڑہ کے 2 نوجوان رام بن میں گرفتار

جموں // رام بن میں اننت ناگ کے دو نوجوانوں کو گرفتار کر کے انکے قبضے سے ہتھیار ضبط کرنیکا دعویٰ کیا گیا ہے۔ انسپکٹر جنرل پولیس جموں مکیش سنگھ نے کہا ہے کہ رام بن پولیس نے جموں پولیس کے ہمراہ جنگجوئوں کا ایک نیٹ ورک بے نقاب کر کے دو افراد کی گرفتاری عمل میں لائی۔انہوں نے کہا کہ  جنگجوئوں کء لئے کام کررہے ان دو افراد کی شناخت عمر احمد ملک ولد عبدالاحد ملک اور سہیل احمد ملک ولد محمد یاسین ملک ساکنان سمتھن بجبہاڑہ کے بطور ہوئی ہے۔سنگھ نے کہا’’ تحقیقات کے دوران یہ بات سامنے آئی کہ جنگجوئوں کے یہ دو اعانت کار کشمیر میں پاکستان نشین جیش کے ایک جنگجو عاقب عرف الفا ساکن بڈگام کیلئے کام کررہے تھے، جو وادی سے وجے پور سانبہ میںبین الاقوامی سرحد تک سفر کرنے کے مقصد سے آئے، جہاں انہیں ہتھیار مل گئے، جو ڈرون کے ذریعہ گرائے گئے تھے۔انہوں نے کہا کہ پولیس نے دو اے کے 47رائفلیں، ایک پس

رام بن میں دو عسکریت پسندوں کی اسلحہ سمیت گرفتاری کا دعویٰ

جموں // رام بن پولیس نے اسپیشل آپریشن گروپ (ایس او جی) کے ساتھ مل کردوکشمیر نشین سرگرم کارکنوں کی گرفتاری کے ساتھ عسکریت پسندوں کے ایک ماڈیول کا پردہ چاک کرنے کا دعویٰ کیاہے۔جموں زون کے انسپکٹر جنرل پولیس مکیش سنگھ نے بتایا’’ضلعی پولیس رام بن نے ایس او جی جموں کے ساتھ مشترکہ طور پر وادی کشمیر کے دو کارندوں کو گرفتار کرکے عسکریت پسندوں کے ایک ماڈیول کا پردہ چاک کیا اور ان کے قبضے سے اسلحہ اور گولہ بارود کا بھاری ذخیرہ برآمد کیا "۔گرفتار عسکریت پسندوں کی شناخت عمر احمد ملک ولد عبدل احمد ملک اور سہیل احمد ملک ولد محمد یٰسین ملک ساکنان سمتھن بجبہاڑہ ضلع اننت ناگ کے طور پرہوئی ہے۔ سنگھ نے کہا کہ ’’تفتیش سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ گرفتار شدہ دو ملی ٹنٹ کارکن ایک کشمیر نشین ملی ٹنٹ اور بڈگام سے پاکستانی نشین جیش محمد ہینڈلرعاقب عرف الفا کے کہنے پر خفیہ طور پر کش

ڈوڈہ ضلع کے بیشتر علاقوں میں پینے کے صاف پانی کی قلت

ڈوڈہ //ڈوڈہ ضلع کے بیشتر دیہات میں جہاں منفی درجہ حرارت کی وجہ سے نل منجمد ہو گئے ہیں جس کے نتیجے میں مقامی آبادی کوپینے کے صاف پانی کی قلت کا سامنا کرنا پڑرہا ہے وہیں متعدد علاقوں میں پانی کی سکیمیں عرصہ دراز سے ناکارہ ہوئیں ہیں اور محکمہ جل شکتی کی عدم توجہی سے سینکڑوں نفوس پر مشتمل آبادی کو مشکلات سے دوچار ہونا پڑ رہا ہے۔ ڈوڈہ، گھٹ ،گندنہ ،چرالہ ،فیگسو ،کاہرہ بھٹولی ،بھالہ ،بھدرواہ ، مرمت ،بھاگواہ و بھلیسہ ،بونجواہ سے کئی وفود نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ محکمہ جل شکتی کی عدم توجہی سے انہیں پانی کی کمی کا سامنا ہے۔کاہرہ کی پنچائت بھٹولی میں مقامی لوگوں نے محکمہ کے خلاف احتجاج بلندکرتے شدید نعرہ بازی کی۔ طارق حسین، ثمیہ تبسم و عطیش کمار نے کہا کہ پچیس گھروں پر مشتمل بھٹولی پنچائت میں پینے کے صاف پانی کی قلت سے عورتوں و بچوں کو کوسوں دور جاکر پانی لانا پڑتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پانی کی

آزادی کے بعد پہلی بار گنوڑی کاہرہ کی عوام نے بجلی کا بلب جلایا | ایل جی کی ہدائت پر انتظامیہ نے 15 دنوں میں کام مکمل کیا، عوام میں خوشی کی لہر

ڈوڈہ //ڈوڈہ ضلع کی تحصیل کاہرہ واقع گنوڑی پنچائت ٹانٹا میں آزادی کے بعد سے آج پہلی بار لوگوں نے بجلی کا بلب جلایا۔بیس گھروں کو پر مشتمل آبادی نے بجلی کی فراہمی کے لئے پچھلے کئی دہائیوں سے درد ٹھوکریں کھائیں لیکن معاملہ جوں کا توں رہا۔ گزشتہ برس کے آخری ماہ میں مقامی لوگوں نے لیفٹیننٹ گورنر کے گریونس سیل میں شکائت درج کی جس کے بعد ایل جی انتظامیہ ضلع انتظامیہ پر مذکورہ دیہات میں ہنگامی بنیادوں پر بجلی پہنچانے پر دباؤ بنایا جو کہ آج مکمل ہوا۔ اس دوران ڈپٹی کمشنر ڈوڈہ ڈاکٹر ساگر ڈی ڈوئی فوڈے نے ضلع و سب ڈویڑنل انتظامیہ کے ہمراہ متاثرہ علاقہ کا دورہ کیا اور اپنی موجودگی میں گنوڑی میں بجلی کا بلب جلایا۔میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ڈی سی نے کہا کہ ایل جی و چیف سیکرٹری کی ہدایات پر عمل درآمد کرتے ہوئے انتظامیہ نے ملحقہ دیہات میں بجلی پہنچانے کے لئے تمام تر وسائل کو بروئے کار لایا۔ انہوں نے

گھمبیر مغلاں سے بیروٹ گلی روڈ کی حالت خستہ | عوام کو مشکلات کاسامنا ،محکمہ ٹس سے مس نہیں

منجاکوٹ //تحصیل منجاکوٹ کے گھمبیر مغلاں سے بیروٹ گلی جانے والی روڈ کی حالت انتہائی خراب ہوچکی ہے مگر محکمہ پی ایم جی  ایس وائی کو اس کی کوئی پرواہ تک نہیں ہے۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ آٹھ ماہ قبل بھاری بارش کی وجہ سے روڈ کا ایک حصہ ڈھہ چکا تھا مگر اس کے باوجود محکمہ نے اس طرف کوئی توجہ نہیں کی اور روڈ کی حالت انتہائی خراب ہوچکی ہے اور بڑ ی گاڑیوں کی آمدورفت مکمل طور پر بند ہو چکی ہے  جبکہ چھوٹی گاڑیاں بھی بڑی مشکل سے گزرتی ہیں۔ مقامی لوگوں کا یہ بھی کہنا تھا کہ نہ جانے کب کوئی بڑا حادثہ ہو جائے اور اس کی ساری ذمہ داری محکمہ پی ایم جی ایس وائی اور ضلع انتظامیہ پر عائد کی جائے گی۔مقامی لوگوں کا یہ بھی کہنا تھا کہ کئی مرتبہ متعلقہ محکمہ اور ضلعی انتظامیہ کی نوٹس میں یہ بات لائی گئی کہ روڈ کی جلد سے جلد مرمت کروائی جائے مگر محکمہ نے اس طرف کوئی توجہ کی اور نہ ہی ضلع انتظامیہ نے۔

نہوچ پنچایت میں آدھار کارڈ بنانے کا کیمپ 20 روز سے جاری | سینکڑوں کی تعداد میں بزرگوں،بچوں اور خواتین نے آدھارکارڈ بنائے

مہور//سب ڈویژ ن مہور کی دور دراز پنچایت نہوچ میں گزشتہ 20دن سے آدھار کارڈ بنانے کا کیمپ جاری ہے جس دوران سینکڑوں کی تعداد میں بچوں،بزرگوں اور خواتین نے اپنے اپنے آدھار کارڈ بنوائے۔یہ کیمپ ہائی اسکول نہوچ میں چل رہا ہے جہاں پر نہوچ،دیول،ڈوگا،شبراس،اڑبیس سے لوگ آدھار کارڈ بنانے پہنچے۔واضح رہے کہ کچھ بزرگ لوگ مہور ہیڈکوٹر پر نہیں جاسکتے  تھے اور ان کے ابھی تک آدھار کارڈ نہیں بنے تھے جس کی وجہ سے ان کی پنشن رکی پڑی تھی اور اب جب نہوچ میں آدھار کارڈ بنانے کا کیمپ لگا سب بزرگوں کے کارڈ بنائے گئے۔دیول ڈوگا کے ایک 90 برس بزرگ باج دین نے بھی آدھار کارڈ بنایا۔ انہوں نے بتایا کہ اس سے قبل مہور ہیڈکوٹر پر آدھار کارڈ بنانے کیلئے جانا پڑتا تھا اور وہ بزرگ تھے جس کی وجہ سے وہ ہیڈکوٹر تک نہیں جاسکتے تھے، آج جب نہوچ میں کیمپ لگا، ان کا بھی آدھار کارڈ بن گیا۔محمد رفیق ،جو کہ آدھار کارڈ بن

مزید خبریں

حقوق جنگلات کمیٹی کی تشکیل پر نزاع |  پنچایت اپر سنئی میں متعلقہ سرپنچ کے خلاف ا حتجاج سرنکوٹ// گاؤں سنئی کی پنچایت اپر سنئی میں متعلقہ سرپنچ کے خلاف مقامی لوگوں نے سخت احتجاج کیا جس میں متعلقہ سرپنچ کے خلاف شدید نعرے بازی کی گئی۔ مظاہرین نے بتایا کہ فارسٹ رائٹس ایکٹ کے تحت کمیٹیاںتشکیل دی جا رہی ہیں لیکن پنچایت اپر سنئی میں فارسٹ قانون کی کھلم کھلاخلاف ورزی کی جا رہی ہے۔ انھوں نے متعلقہ سرپنچ پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ مذکورہ سرپنچ نے پنچایت کے لوگوں کو اعتماد میں لیے بغیر ایف آر سی کمیٹی تشکیل دی اور لوگوں کے ساتھ سرپنچ کی طرف سے ناانصافی عمل لائی گئی۔ انھوں نے کہا کہ سرپنچ نے گرام سبھا نہیں کی جس میں لوگوں کو احسن طریقے سے بلایا جاتا ہے اور لوگوں کی رائے لی جاتی ہے لیکن ایسا کچھ بھی نہیں کیا گیا ۔انھوں نے کہاکہ مذکورہ سرپنچ نے کچھ ہی منظورنظر لوگوں کو بلا کر ایک بڑے ط

فاروق خان کا دورۂ ڈوڈہ ، ترقیاتی کاموں کا جائزہ لیا | وفود کے ساتھ تبادلہ خیال،مستحق کامگاروں کے حق میں 18.61لاکھ روپے واگزار

ڈوڈہ//لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر فاروق خان نے ڈوڈہ ضلع کا دورہ کیا اور وہاں جاری ترقیاتی کاموں اور بہبودی سکیموں کا جائزہ لیا۔دوران میٹنگ ضلع ترقیاتی کمشنر نے مشیر کو ضلع زیر تعمیر بڑے پروجیکٹوں میں تفصیل دی اور ساتھ ہی ضلع میں مختلف شعبوں کے تحت درج حصولیابیوں کے بارے میں بھی جانکاری دی۔پی ایم جی ایس وائی کے حصولیابیوں کا جائزہ لینے کے لئے دوران ضلع  ترقیاتی کمشنر نے جانکاری دی کہ ضلع ملک میں زیادہ سے زیادہ سڑک مسافت کی تعمیر و تجدید کے لئے دوسرے درجے پر فائز ہے جس کے لئے مشیر نے ضلع اِنتظامیہ کی انتھک کوششوں کو سراہا۔منریگا ،14ویں مالی کمیشن اور پی ایم اے وائی سے متعلق مشیر کو بتایا گیا کہ ضلع میں صد فیصد حصولیابی گزشتہ سال عمل میں لائی گئی اور گزشتہ برس کی حصولیابی کو مد نظر رکھتے ہوئے امسال 39لاکھ کا ہدف مقرر کیا گیا ہے جس میں 30لاکھ پی ڈی پیدا کئے گئے ہیں۔ انہوںنے کہا کہ پی ایم ا

سرینگر جموں شاہراہ| بیلی برج پر 50فیصد کام مکمل، مزید 2دن لگیں گے

بانہال // رام بن کے کیلا موڑ پل اور اس کیساتھ سڑک کے ایک حصے پر بیلی برج بنانے کا کام شدو مد سے جاری ہے اور بیکن آر گنائزیشن کے مطابق 2روز کے اندر پل کو بنانے کا کام مکمل ہوگا۔ ادھرجموں سرینگر شاہراہ پر چوتھے روز بھی جمعرات کو ٹریفک کی نقل و حرکت معطل رہی۔بیلی برج پر 50فیصد کام مکمل ہوگیا ہے اور پرانے پل پر بیلی برج کو بٹھا دیا گیا ہے ۔ اب اس جگہ پر لوہے کے بنے بیلی برج کے حصے کو بٹھانا ہے جو ڈھہ گیا ہے۔بیکن کے قریب 100 سے زیادہ انجینئر اور مزدور یہاں کام کررہے ہیں۔ بیکن کے ایک سینئر آفیسر، جن کی نگرانی میں شاہراہ کا کام ہورہا ہے، نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’بیلی برج پر50فیصد کام ہوگیا ہے،پرانے پل پر بیلی برج بٹھایا گیا ہے،اب لوہے کے شیٹ ڈالے جا رہے ہیںلیکن تباہ شدہ حصہ پر بیلی پل ابھی نہیں ڈالا گیاہے‘‘۔ انہوں نے کہا’’ ہم24گھنٹے کام کررہے ہیں،اور ہما

مشیر فاروق خان کاجتی میںکسانوں کیساتھ تبادلہ خیال ،شکایات سنیں

  کنڈری نالہ منڈی میں کولڈ سٹوریج سہولیت فراہم کرنے کا یقین دلایا ڈوڈہ//لیفٹیننٹ گورنرکے مشیر فاروق خان نے دریائے وادی چناب (رام بن ، کشتواڑ اور ڈوڈہ )کے سہ روزہ دورے کے دوران جتی میں ایک تبادلہ خیال عوامی شکایتی ازالہ کیمپ کا اِنعقاد کیا۔مقامی سبزیوں کے کاشتکاروں اور عام لوگوں نے دُور دراز کے علاقوں میں عوامی سطح پر ایسے پروگراموں کے اِنعقاد پر ایل جی حکومت کی تعریف کی اور اس موقعہ انہوں نے مشیر کو متعدد مطالبات اور مسائل گوش گزار کئے جن میں مڈل سکول کو ہائی سکول کا درجہ دینے ، اَسار اور جتی میں کھادوں اور ایگرو اَدویات کی سہولیت فراہم کرنے، مقامی رابطہ سڑکوں کی تجدید و مرمت اور پانی کی فراہمی کی سکیمیں وغیرہ شامل ہیں۔مشیر نے عوام سے تبادلہ خیال کرتے ہوئے انہیں یقین دِلایا کہ ان کے معاملات جلد از جلد ازالے کے لئے متعلقہ حلقوں کو بھیجے جائیں گے۔اُنہوں نے عوام کو جانکاری دی کہ

کیلا موڑ رام بن میں بیلی برج پر کام شروع،2دن میں ٹریفک کی بحالی ممکن

بانہال // اتوار کی شام رام بن کے کیلا موڑ پل کے قریب شاہراہ  اور اس کی دیوار ڈھہ جانے سے جموں اور سرینگر کے درمیان زمینی رابطہ تیسرے روز بھی منقطع رہا البتہ بارڈر روڈ آرگنائزیشن نے کیلا موڑ کے مقام پر بیلی برج پر کام شروع کردیا ہے اور اسکے لئے درکار میٹریل کو یہاں پر لانے کی کارروائی شروع کردی ہے۔ پیر کو نیشنل ہائی وے اتھارٹی آف انڈیا اور دیگر عہدیداروں کی میٹنگ کے بعد رابط بحالی کیلئے کیلا موڑ کے مقام پر بیلی برج بنانے کا فیصلہ کیا گیا اور اس کیلئے بی آر او کی مدد طلب کی گئی تھی۔ ڈپٹی کمشنر رام بن ناظم زئی خان نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ نیشنل ہائی وے اتھارٹی کے حکام سے کہا گیا کہ وہ شاہراہ کو پانچ سات روز میں بحال کرکے دیں اور انہوں نے بھاری مشینری اور افراد ی قوت کے ساتھ بحالی کا کام جاری رکھا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس دوران بیلی برج بنانے کے فیصلے کے بعد بارڈر روڈ آرگنائزیشن ح

گو ل اور سنگلدان بازاروںمیں ہر سو پانی ہی پانی

گول//سب ڈویژ ن گول کے سنگلدان اور گو ل مین بازاروں میں نالیوں کی حالت ابتر ہونے کی وجہ سے بارشوں سے سارا کیچڑ اوپر آتا ہے جس وجہ سے لوگوں کو چلنے میں کافی دشواریوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔ گول اور سنگلدان بازار سے گزرنے والی دو لین سڑک گریف حکام کے سپرد ہے ۔ اگر چہ سڑک کی حالت اب بہتر بنائی گئی ہے لیکن نالیوں کی حالت ابتر ہے اس سڑک میں نالیاں نہیں بنائی گئی جس وجہ سے بارشوں کے دوران سارا کیچڑسڑکوں پر اُتر آتا ہے ۔سنگلدان بازار میں اگر چہ سڑک کے ایک کنارے نالی بنائی گئی ہے لیکن اس کو صاف نہیں کیا جاتا ہے جس وجہ سے نالی کچڑے سے بھری ہوئی ہے اور بارشوں کے دوران یہ کچڑا سڑکوں پر اُتر آتا ہے ۔ وہیں گول بس اسٹینڈ سے سلبلہ کی طرف جا رہی سڑک کی حالت نالی کی خستہ حالت کی وجہ سے ابتر ہوئی ہے ۔ ساری گندگی سڑک میں آئی ہے اس طرح سے چند ماہ قبل اس سڑک پر ڈالا گیا میکڈم بھی نیست نابود ہو گیا ہے ۔

رام بن اور بانہال کے رضاکار مسافروں کوراحت پہنچانے میں پیش پیش

بانہال // سرینگر جموں شاہراہ کے بند ہونے کے نتیجے میں مسافروں کو راحت پہنچانے کیلئے بانہال والنٹیزراور QRTرام بن کے رضاکار پیش پیش ہیں اورانہوں نے سرینگر سے ڈوڈہ لیجارہی ایک میت اور جموں سے پلوامہ کشمیرلیجارہی ایک اور میت کوکیلاموڈ کے نزدیک متاثرہ سڑک کے حصے کوپار کرانے میں مدد کرنے کے علاوہ انہیں ایمبولینس گاڑیوں میں بٹھاکر روانہ کیا۔سوموار کوسرینگر سے ڈوڈہ لیجانے والی ایک میت اور اس کے ساتھ افراد کو ان رضاکاروں نے شاہراہ کے متاثرہ حصے کو پار کرایا۔منگلوارکوبھی رام بن کے رضاکاروں پر مشتمل ٹیم اوربانہال والنٹیئرزنے جموں میں فوت ہوئے دربہ گام پلوامہ کے ایک معمر شہری کی میت اوراس کے ساتھ دیگر افراد کو کیلا موڈ کے متاثرہ حصے کو پار کرایا اورانہیں ایمبولینس میں بٹھا کر منزل کی طرف روانہ کیا۔اس طرح کے ہنگامی معاملات سے نمٹنے کیلئے ڈپٹی کمشنررام بن ناظم زئی خان نے ضلع انتظامیہ کو متحرک رکھاہ

زلزلے کے جھٹکے،خطہ چناب میں سینکڑوں مکانات کو جزوی نقصان

ڈوڈہ+بانہال //پیر کی شام خطہ چناب میں ہوئے شدت کے زلزلے کے جھٹکے سے جہاں عوام میں خوف وہراس کا ماحول پیدا ہوا ہے وہیں سینکڑوں تعمیرات کو جزوی نقصان پہنچا ہے۔بھدرواہ، ٹھاٹھری ،کاہرہ ،بھلیسہ ،گندنہ ،بونجواہ سے مقامی لوگوں نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ شدت کے جھٹکے سے کئی رہائشی و غیر رہائشی تعمیرات کو جزوی نقصان پہنچا ہے۔ڈی ڈی سی ممبر کاہرہ معراج الدین ملک نے کہاکہ گذشتہ روز ہوئے 5.1 ریکٹر اسکیل زلزلہ سے کئی تعمیرات کو جزوی نقصان پہنچا ہے۔ انہوں نے انتظامیہ سے متاثرین کو معقول معاوضہ فراہم کرنے و وادی چناب میں زلزلوں کے پیش نظر ٹھوس اقدامات کئے جائیں۔ ادھر ڈپٹی کمشنر ڈوڈہ ڈاکٹر ساگر ڈی ڈوئی فوڈے نے سب ڈویژنل و تحصیل سطح کے آفیسران کو زلزلہ سے ہوئے نقصان کی مکمل رپورٹ طلب کی ہے اور ساتھ ہی لوگوں سے پر سکون رہنے کی اپیل کی ہے۔اس حوالے سے انہوں نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کوئی بڑا نقصان نہیں ہوا

وادی چناب میں زلرلے کے شدید جھٹکے

بانہال // پیر کی شام وادی چناب کے کئی علاقوں میں یکے بعد دیگرے زلزلے کے دو جھٹکے محسوس کئے گئے جس کی وجہ سے خوف و ہراس پھیل گیا اور خوف کے مارے لوگ گھروں سے باہر آئے۔ زلزلے کے ان جھٹکوں سے ابتدائی طور پر آربال،لمبار، نیل اور مالیگام بانہال  میں کئی مکانوں میں دراڑیں پڑنے کی اطلاعات ہیں۔ ڈوڈہ ، کشتواڑ رام بن اور بانہال میں اتوار کی شام ساڑھے سات بجے دوسرے جھٹکے کا دورانیہ قدرے طویل تھا۔ ری ایکٹر سکیل پر زلزلہ کی شدت 5.1ریکارڈ کی گئی اور اسکا مرکز کشتواڑ علاقے  سے 16کلو میٹر دورکوئی جگہ تھی۔زلزلہ کے جھٹکے ہماچل پردیش  کے کانگڑا اور دیگر ملحقہ علاقے مین بھی محسوس کئے گئے۔کشتواڑ کے کئی علاقوں میں بھی مکانوں کو جزوی نقصان ہوا ہے۔  

تازہ ترین