تازہ ترین

رام بن میں گاڑی حادثے کاشکار

رام بن//جمعرات کی شام کنا بتی کے نزدیک پیش آئے ایک سڑک حادثے میں 5روز کے بچے سمیت 2افراد لقمہ اجل بن گئے جبکہ7دیگر زخمی ہوئے ۔پولیس نے بتایا کہ پاور ہاؤس چندرکوٹ سے راج گڑھ جانے والی عارضی نمبر والی ایک نئی ایکو کار ڈرائیور کے قابو سے باہر ہوگئی اور نیچے اسی سڑک پر پلٹے کھاکر گری جس کے نتیجے میں ایک شیر خوار سمیت دو افراد ہلاک ہوگئے جبکہ7 افراد شدید زخمی ہوئے۔حادثے کے فوری بعد قریبی علاقوں کے مقامی افراداورپولیس اہلکارموقعہ پر پہنچے اور تمام افراد کو علاج کیلئے ضلع ہسپتال رام بن پہنچایا جہاں طبی امداد کے بعد 6 زخمیوں کو گورنمنٹ میڈیکل کالج وہسپتال جموں منتقل کیا گیا ۔پولیس نے زخمیوں کی شناخت حلیمہ بیگم (35) اہلیہ مظفر حسین بٹ، فردوس احمد (28) ولد نبی بٹ، رستم علی (50) ولد شیر محمد، رمیش کمار (32) ولد دلبیر سنگھ، حفیظ بیگم (45)اہلیہ شیر علی، مصطفی احمد (40) ولد لال دین اور ظفر احمد( 19

بانہال میں ریچھ اور گول میں تیندوے کے حملوں میں دوشہری زخمی

بانہال+گول // بانہال کے نزدیک ناگام پنچایت میں بدھ کی صبح ریچھ کے ایک حملے میں ایک شخص شدید زخمی ہوا جسے بانہال کے سب ضلع ہسپتال میں داخل کیا گیا ہے۔ محکمہ وائلڈ لائف کے مطابق رحمت اللہ خان 55 ولد کبیر خان ساکنہ ہالیمیدان پنچایت ناگام بدھ کی صبح اپنے گھر کے باہر کام کررہا تھا کہ اچانک ایک ریچھ اس پر حملہ آور ہوا جس کی وجہ سے رحمت اللہ خان کو سر اور جسم کے دوسرے حصوں پر شدید زخمی آئے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ مقامی لوگوں کے شور شرابے کے بعد ریچھ نے رحمت اللہ خان کو خون میں لت پت وہاں ہی چھوڑ دیا اور وہاں سے نکل بھاگا۔ انہوں نے کہا کہ واقعہ کی اطلاع ملتے ہی محکمہ وائلڈ لائف بانہال کی ایک ٹیم انچارج کنٹرول روم بانہال نجم الدین کی قیادت میں موقعہ پر واردات پر پہنچ گئی اور تب تک مقامی لوگوں نے زخمی کو فوری طور پر ایمرجنسی ہسپتال بانہال منتقل کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ جنگلی حیات نے اس بارے

دھوکہ دہی سے جیولر سے پیسے اینٹ لئے گئے | پولیس کی فوری کارروائی ،3افراد گرفتار،رقومات برآمد

کشتواڑ//کشتواڑ میں دھوکہ دہی سے ایک جیولر سے لاکھوں روپے اینٹ لینے والے کو پولیس نے گرفتار کرکے اس کی تحویل سے پیسے برآمد کرلئے ۔پولیس کے مطابق ساجد علی زرگر (جیولور) ولد محمد اسحق زرگر ساکن ہڈیال کشتواڑ کے ذریعہ پولیس اسٹیشن کشتواڑ میں تحریری شکایت موصول ہوئی جس میں یہ الزام لگایا گیا تھا کہ 22-10- 2020 کو کسی نامعلوم شخص کے ذریعہ شکایت کنندہ سے ٹیلیفون پر رابطہ کیا گیا اورشکایت کنندہ کو سستے نرخوں پر سونا فروخت کرنے پر آمادہ کیا۔ اس کے مطابق ملزم کے ذریعہ درابشالہ میں5لاکھ روپے لانے کو کہا گیاجہاں پہنچنے پر اسے کسی جگہ منتقل ہونے کو کہا گیا۔ ملزمان کے دھوکے کو پاتے ہوئے شکایت کنندہ نے کشتواڑ کی طرف واپس جانے کی کوشش کی تاہم راستے میں اسے مجرمانہ ارادے سے زبردستی روک لیا گیا اور سنگین نتائج کی دھمکی دی گئی ۔ملزم نے محنت کی کمائی کی رقم چھین کر لوٹ لی اور موقعہ سے فرار ہوگیا۔اس شکایت

رام بن میں ماحولیاتی نظام تباہی کے دہانے پر | قومی شاہراہ پر کھدائی سے اٹھنے والی دھول تشویشنا ک

رام بن//جموں سرینگر قومی شاہراہ پر زمین کی کھدائی اور نقل و حمل کے راستوں سے نکلنے والی دھول ماحولیاتی نظام کیلئے تباہی کا سبب بن رہی ہے ۔ ناشری سے جواہر ٹنل تک را م بن تک زیادہ تر جگہوں پر فضائی آلودگی نظرآتی ہے۔ماحولیاتی ماہرین اور ضلع ہسپتال کے ڈاکٹروں نے بتایا کہ اڑنے والی دھول ضلع میں آلودگی کا ایک خطرناک ذریعہ بن چکی ہے اور یہ شاہراہ پر آلودگی کا سب سے بڑا ذریعہ ہے۔ماہرین اور ڈاکٹروں نے کہا کہ سڑک کی دھول تباہ کن ثابت ہوگی۔ان کا کہنا تھا کہ مٹی کی کھدائی ہونے کی وجہ سے دھول اٹھ رہی ہے جس سے سانس کی بیماری کا خطرہ ہے۔تعمیراتی مقامات پر پانی چھڑکنے سے سڑک کی دھول کو نہیں روکا جاسکتا اور نہ ہی سڑک پختہ ہے کہ اس سے دھول صاف ہوسکے ۔شاہراہ پر اپنی ڈیوٹی سرانجام دینے والے ٹریفک پولیس افسر نے کہاکہ ٹریفک پولیس کے اہلکار ایک دن کے لئے وردی استعمال کرسکتے ہیںکیونکہ دھول بہت زیادہ ہے۔ ج

شاہراہ پر بدترین ٹریفک جام

بانہال // جموں سرینگر شاہراہ پرمنگل کی صبح بانہال کے ناچلانہ علاقے میں گر آئی ایک چھوٹی پسی کی وجہ سے شاہراہ پر گاڑیوں کی آمدورفت کم از کم 5گھنٹوں تک بند رہنے کے بعد دوبارہ بحال کی گئی ۔ وادی کشمیر کی طرف بحال کیا گیا ٹریفک ڈگڈول اور شیر بی بی کے درمیان ٹریفک جام کی وجہ سے سست رفتاری کے ساتھ آگے بڑھ رہا تھا۔ ٹریفک ذرائع نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ بانہال سے 11کلومیٹر دور ناچلانہ کے مقام پر منگل کی صبح گر آئی پسی انتہائی معمولی نوعیت کی تھی لیکن وقت پر اطلاعات فراہم کرنے کے باوجود بھی فورلین شاہراہ کی تعمیراتی ایجنسی نیشنل ہائی وے اتھارٹی آف انڈیا نے بہت تاخیر سے کام لیا اور منگل کی صبح ساڑھے دس بجے شاہراہ کھولنے کیلئے تعمیراتی کمپنی کی مشینری بھیج دی گئی۔ انہوں نے کہا کہ بلاوجہ سے5 گھنٹوں کی تاخیر کی وجہ سے گاڑیوں کی لمبی لمبی قطاریں شاہراہ پر لگ گئیں اور مسافروں کو وقت پر اپنی اپن

تمباکو ایکٹ کی خلاف ورزی پر انتظامیہ کارویہ سخت

ڈوڈہ //ڈپٹی کمشنر ڈوڈہ نے تحصیل،بلاک و نیابت سطح پر تمباکو کنٹرول کمیٹی کا قیام عمل میں لایا جس میں قصبوں میں تحصیلدار، ایس ایچ او و ایگزیکٹو آفیسر پر مشتمل تین رکنی کمیٹی ہو گی وہیں دیہی علاقوں میں بی ڈی او، پرنسپل،ہیڈ ماسٹر، نائب تحصیلدار و انچارج چوکی آفیسر ممبر رہیں گے۔تمباکو کنٹرول کمیٹی نے انفورسمنٹ ایکٹ کے تحت جہاں اپنے دائرے اختیار علاقوں میں سگریٹ و تمباکو سے جڑے دیگر مواد کی خریدوفرخت کا پرمٹ چیک کرنا ہے وہیں 18 سال سے کم عمر والے بچوں کو سگریٹ و تمباکو فراہم کرنے و تعلیمی اداروں کے سو گز کے فاصلے پر اس قسم کا کاروبار کرنے والے افراد کے خلاف سیکشن 4،6و 25 اور سیکشن 21،22 23و 24 کے تحت کارروائی کرنے کی مجاز ہو گی۔کمیٹی نے ہر پندرہ دن میں اپنی رپورٹ ڈپٹی کمشنر کے دفتر میں پیش کرنا ہو گی۔

ڈسٹرکٹ ڈیولپمنٹ کونسل چیئرمین کے انتخابات

بانہال// حکومت کی طرف سے ضلع ترقیاتی چیئرمین کے انتخابات کیلئے جاری اعلان کے خلاف ضلع رام بن کے بلاک چیئرمینوں نے سخت ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایک طرف سے حکومت عام لوگوں کو یہ باور کرانے کی کوشش کررہی ہے کہ اختیارات کو بنیادی سطح پر منتقل کیا جارہا ہے وہیں دوسری طرف زمینی حقائق اس کے برعکس ہیں اور ڈسٹرکٹ ڈیولپمنٹ کونسل کے انتخابات کیلئے قواعد وضوابط کو بالائے طاق رکھ کر سرکار کی طرف سے من مانی کی جارہی ہے۔ بلاک چیئرمین رامسو شفیق احمد کٹوچ نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ ضلع رام بن کے تمام بلاک کونسل چیئرمین حکومت کے اس اقدام کے خلاف ہیں جس میں پنچایت راج اور بلاک چیئرمینوں کو ایک طرف کرکے عام لوگوں کو انتخابات میں حصہ لینے کا نیا شگوفہ ڈالا گیا ہے جس سے دیہی علاقوں میں عوام کو پنچایتی راج کے تئیں پہلے ہی سے پائے جارہے اختلافات اور بے دلی میں مزید وسعت آئے گی۔ انہوں نے کہا کہ ی

گاگرہ کلی مستی ،ہزاروں کی آبادی بنیادی مسائل سے دوچار

گول//جہاں ایک طرف سے مرکزی سرکار یہ دعویٰ کر رہی ہے کہ 200والے آبادی کے گائوں کوبھی سڑک کے ذریعہ شہر کے ساتھ جوڑا جا رہاہے لیکن زمینی سطح پر کچھ ایسے بھی علاقے ہیں جہاں ہزاروں کی آبادی کیلئے بھی ابھی تک سڑک کی بنیادی سہولیات فراہم نہیں کی گئی۔ ضلع رام بن کے سب ڈویژن گول سے تعلق رکھنے والی پنچایت گاگرہ کلی مستا جو چار گائوں ،ہارہ ، کلی مستا ، گاگرہ اور گنڈی پر مشتمل ہے اورہزاروں آبادی پر مشتمل یہ گائوں بنیادی سہولیات سے محروم ہیں ۔ 20سال قبل جمن گاگرہ گیارہ کلو میٹر لمبی سڑک پر پی ایم جی ایس وائی کی جانب سے تعمیری کام شروع ہوا تھا لیکن یہ کام دودہائیوں کے با وجود پائیہ تکمیل تک نہیں پہنچا ۔ سڑک کی ابھی تک صرف زمینی کٹائی ہوئی ہے ۔11 کلو میٹر سڑک میں کئی جگہوں پر پل آتے ہیں جن میں ہارہ ، گوڈری کلی مستا ، کلی مستا اور گاگرہ شامل ہیں لیکن ابھی تک اس سڑک کی کٹائی صرف کلی مستا کے آخری س

فورلین شاہراہ کشادگی

بانہال// پہلے سے اعلان شدہ شیڈول کے مطابق جمعہ کے روز جموں سرینگر شاہراہ پر ٹریفک بند رہا ۔واضح رہے کہ پچھلے جمعہ کو بھی شاہراہ کو ٹریفک کیلئے بند رکھاگیاتھااور اس بات کا فیصلہ لیاگیاہے کہ ہر جمعہ کو فورلین شاہراہ کی کشادگی کاکام کیاجائے گا۔ اعلان شدہ شیڈول کے مطابق فورلین شاہراہ کی کشادگی کے کام کے پیش نظر جمعہ کے روز جموں سرینگر شاہراہ پرگاڑیوں کی آمدورفت کیلئے بند رہی اور بھاری ٹریفک اور ٹریفک جام کی وجہ سے ہمیشہ مصروف  رہنے والی شاہراہ سنسان نظرآئی۔ اڑتے گردوغبار کے بیچ بانہال، کھڑی، رامسو، مکرکوٹ، اکڑال پوگل پرستان،ڈگڈول، بیٹری چشمہ، گام، رام بن، چندرکوٹ اور بٹوت و دیگر علاقوں میں مسافروں کو پیدل سفر کرتے دیکھاگیا جنہیں سخت مشکلات کاسامناکرناپڑا۔ ٹریفک پولیس  نے بتایا کہ موسم اور شاہراہ کی بہتر صورتحال کے پیش نظر آج یعنی سنیچر کو جموں سرینگر  شاہراہ پر مسافر بردا

بانہال کی گمشدہ خاتون کی نعش برآمد

بانہال // بانہال کے بنکوٹ علاقے سے تعلق رکھنے والی ایک لاپتہ خاتون کی نعش جمعہ کی صبح بانہال کے چملواس علاقے میں شاہراہ کے اوپری علاقے میں پائی گئی ۔ مصرعہ بیگم عمر 38 سال زوجہ ارشاد احمد میر ساکنہ بنکوٹ بانہال اس مہینے کے آخری ہفتے میں کھڑی میں اپنی بہن کے گھر سے اپنے گھر بنکوٹ بانہال لوٹ آنے کے دوران لاپتہ ہوگئی تھی اور اس سلسلے میں پولیس سٹیشن بانہال میں گمشدگی کا ایک معاملہ بھی درج کیا گیا تھا۔ بتایا جاتا ہے کہ دو بچوں کی ماں اس خاتون کا دماغی توازن ٹھیک نہیں تھا۔ ایس ایچ او بانہال نعیم الحق متو نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ نعش جمعہ کی صبح چملواس علاقے میں گھاس کاٹنے والوں نے دیکھ لی اور پولیس کو مطلع کیا۔ انہوں نے کہا کہ مکمل طور سے گل سڑک گئی تھی اور اس کی شناخت گمشدہ خاتون مصرعہ بیگم کے طور کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ پولیس اور بانہال والنٹیئرز کے رضاکاروں نے نعش کو بانہال ہسپتال من

ڈوڈہ میں مسافر ٹیکسی کھائی میں جاگری،ڈرائیور سمیت3لقمہ اجل،8زخمی

سرینگر//ضلع ڈوڈہ میں جمعہ کو تین افراد جاں بحق اور آٹھ اُس وقت زخمی ہوگئے جب وہ ٹیکسی جس میں وہ سوار تھے مرمت علاقے میں سڑک سے لڑھک کر گہری کھائی میں جاگری۔ اطلاعات کے مطابق یہ مسافر ٹیکسی بھدرواہ سے دیدنی جارہی تھی جب وہ لڑھک کر300میٹر گہری کھائی میں جاگری۔ ایس ایس پی ڈوڈہ ممتاز احمد کے مطابق پولیس اور مقامی لوگوں نے ٹیکسی میں سوار سبھی افراد کو گورنمنٹ میڈیکل کالیج ڈوڈہ پہنچایا جہاں ڈاکٹروں نے تین کو مردہ قرار دیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ آٹھ زخمیوں میں 3کمسن بھی شامل ہیں اور اُن کا علاج جاری ہے۔  مہلوکین کی شناختتارا منی ولد پریم سنگھ ساکن ہاومبل مرمت، اشتیاق احمد ولد محمد اکرم ساکن دیدنی مرمت اور ڈرائیور جہانگیر حسین ولد سعد اللہ ساکن دیدنی مرمت کے طور ہوئی ہے۔

محکمہ مال نے گول داچھن میں کیمپ لگایا | 70مستحقین میں اقامتی اسناد تقسیم

گول//ضلع ترقیاتی کمشنر رام بن کی ہدایت پر سب ڈویژن گول کی داچھن پنچایت میں محکمہ مال نے لوگوں کے مشکلات کو ازالہ کرنے اور موقعہ پر ڈومیسائل اسناد تقسیم کرنے کی خاطر ایک کیمپ کا انعقاد کیا جس میں 70سے زائد مستحقین میں اسناد تقسیم کیں ۔ اس موقعہ پر نائب تحصیلدارگول جاوید اقبال شان نے لوگوں کے مسائل سنے اور لوگوں میں ڈومیسائل سرٹیفکیٹ تقسیم کیں ۔ کیمپ کے دوران مقامی نائب سرپنچ غلام جیلانی کے علاوہ معزز شہری بھی موجود تھے ۔ لوگوں نے محکمہ مال کی جانب سے لگائے گئے کیمپ کو کافی سراہا اور مطالبہ کیا کہ اس طرح کے کیمپ مزید یہاں علاقوں میں لگائے جائیں تا کہ ڈومیسائل اسناد کے ساتھ ساتھ دوسری اسناد جاری ہوں اور ان کے مسائل بھی حل ہوں ۔  

گول میں سڑکوں کی تعمیر | کئی اراضی مالکان برسوں سے معاوضے سے محروم

گول//سب ڈویژن گول میں ایسی درجنوں سڑکیں ہیں جن کے مالکان اراضی کو ابھی تک معاوضہ نہیں ملا ہے ۔ ان کی فائلیں بیس بیس برسوں سے ایسے ہی پڑی ہیں تاہم پی ایم جی ایس وائی کی سڑکوں کی زد میں آنیوالی اراضی کا معاضہ دیاگیاہے ۔البتہ تعمیرات عامہ کے تحت بننے والی سڑکوں کا معاوضہ التواکاشکار ہے۔ان سڑکوں میں گول تتا پانی روڈ، سنگلدان اشمار بڑا کنڈ روڈ وغیرہ شامل ہیں ۔ گزشتہ ماہ ضلع ترقیاتی کمشنر رام بن نے اس بات کا اظہار کیا تھا کہ پورے ضلع میں بہت ساری ایسی سڑکیں ہیں جن کا معاوضہ اراضی مالکان کو نہیں ملا ہے جس کے لئے کروڑوں روپے بنتے ہیں اور اس سلسلے میں مرکزی سرکار کو بھی مطلع کیا گیاہے ۔ اگر گول تتا پانی روڈ کی بات کریں تو جو گول کا سب سے پرانی لنک روڈ ہے اور اس کی تعمیر 1999ء میںشروع ہوئی لیکن بیس سال گزرنے کے با وجود لوگوں کو ابھی تک کوئی معاوضہ نہیں ملا ۔ ہر سال مارچ مہینے میں لوگ انتظار کرت

بانہال کی میونسپل پارک کی تجدید و مرمت التواکاشکار | ٹراما ہسپتال کو جلد از جلد مکمل کیاجائے: صدر بیوپارمنڈل

بانہال // پیر کے روز میرا قصبہ میری شان کے سلسلے میں لیفٹنٹ گورنر کے مشیر فاروق خان نے بانہال کا دورہ کیا تھا اور اس موقعہ پر بیوپار منڈل بانہال کے صدر شمس الدین راہی نے بانہال کو درپیش کئی مسائل کو اجاگر کیا اور انہیں فورء طور پر حل کرنے کی امید ظاہر کی۔ شمس الدین راہی نے کہا کہ قصبہ میں شاہراہ کے برلب گندی نالیوں اور گندگی اور غلاظت کی طرف میونسپل کمیٹی بانہال کی طرف سے کوئی توجہ نہیں دی جا رہی ہے اور وزیر اعظم کی صفائی کی مہم یہاں دم توڑ چکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ زائد از پندرہ سال پہلے اگ کی ایک واردات میں خاکستر ہوئے میونسپل کمیٹی بانہال کے شاپنگ کمپلیکس کو ابھی تک تعمیر نہیں کیا گیا اور اس کی تعمیر سے کئی بیروز گاروں اور میونسپل کمیٹی کو فائدہ حاصل ہوتا۔ انہوں نے کہا کہ دور دراز کے علاقوں سے قصبہ بانہال کا رخ کرنے کیلئے روزانہ ہزاروں کی تعدا میں لوگ آتے جاتے ہیں مگر قصبہ بانہال میں

شاہراہ پر بھاری ٹریفک رواں دواں | جگہ جگہ ٹریفک جام سے مسافروں کو مشکلات

رام بن//جموں سرینگر قومی شاہراہ کے ناشری رام بن اور رام بن بانہال کے درمیان گاڑیوں کی آمدورفت آہستہ آہستہ منزل کی طرف بڑھ رہی ہے اور توقع ہے کہ ایسی صورتحال آدھی رات تک جاری رہے گی کیونکہ جموں اور اودھم پور سے وادی کشمیر کے لئے پیر کو دو دن بعد بھاری ٹریفک کی اجازت دی گئی۔تاہم ٹریفک پولیس کی جانب سے طے شدہ وقت کے ساتھ شاہراہ پر جمعہ کے علاوہ دونوں اطراف سے ہلکی موٹر گاڑیاں چلانے کی اجازت ہے۔ناشری اور بانہال کے مابین شاہراہ کی  چوڑائی اور کھدائی کا کام مختلف مقامات پر جاری ہے جس سے بھی پریشانی کاسامناکرناپڑرہاہے ۔ایک ٹرک ڈرائیور کرنیل سنگھ نے بتایا کہ مختلف مقامات پر کھدائی کے کام کی وجہ سے سڑک کو نقصان پہنچا ہے اور سڑک کی چوڑائی کم ہونے سے ٹریفک جام ہوتاجارہاہے۔فور لین پروجیکٹ کا جاری کام مسافروں کے لئے اذیت کا باعث بن گیا کیونکہ ادھم پور سے چنینی ناشری ٹول پوسٹ، ناشری سے رام

کووڈ19منفی رپورٹ کاتقاضابدستور جاری | شیطان نالہ کا چیک پوسٹ مسافروں کے لئے باعث پریشانی

بانہال // عالمی وبا کورونا وائرس کے پھوٹ پڑنے اور جموں وکشمیر میں لاک ڈائون کے نفاذ کے ساتھ ہی جموں سرینگر شاہراہ پر بانہال کے شیطان نالہ علاقے میں مسافروں کی چیکنگ کیلئے ضلع انتظامیہ رام بن کی طرف سے ایک انتظامی چیک پوسٹ کا قیام عمل میں لایا گیا تھاجواحتیاطی تدابیر کے ساتھ سفری اجازت کے باوجود مسافروں کیلئے وبال جان بنا ہوا ہے اور حکام اسے جواہر ٹنل کے دونوں اطراف مسلسل ریڈ زون کے زمرے میں ہونے کی وجہ قرار دیتے ہیں۔شاہراہ پر سفر کرنے والے کئی مسافروں نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ مرحلہ وار طریقے سے لاک ڈائون ہٹائے جانے اور شاہراہ پر کووڈ شرائط کے مطابق سفر کرنے کی سرکاری اجازت کے باوجود شیطان نالہ پر چیکنگ کے جاری سلسلے سے عام مسافر تنگ آئے ہیں اور یہاں ابھی بھی کووڈ منفی رپورٹ کا تقاضا کیا جاتا ہے اور وادی کشمیر سے جموں جانے والے مسافروں کو واپس بھی لوٹنے پر مجبور کیا جاتا ہے۔ انہوں نے

رام بن و ملحقہ علاقوں میں 3 ہفتوں سے پانی کا بحران

رام بن//ضلع ہیڈ کوارٹررام بن اور اس کے ملحقہ علاقوں کے رہائشی تین ہفتوں سے پینے کے پانی کے بحران کا شکار ہیں کیونکہ پی ایچ ای کے عارضی ملازمین اپنی خدمات کو باقاعدہ بنانے کے مطالبے پر ہڑتال پر ہیں۔محکمہ پی ایچ ای (جل شکتی) رام بن، میترا، پرنوت ،سیری اور دیگر علاقوں کے صارفین کو پانی کی فراہمی کی بحالی میں ناکام ہوچکا ہے اور وہ اپنی ذمہ داری کو سنجیدگی سے نہیں لے رہاجس کی وجہ سے صارفین بلا وجہ پریشانیوں اور بحرانوں کا شکار ہیں۔گاؤں سیری کے مکینوں نے الزام لگایا کہ اس علاقے کو پچھلے چھ ماہ سے زیادہ عرصہ سے پانی کی عدم فراہمی کا سامنا ہے اور مقامی عہدیدارمتبادل انتظامات کرکے یا رجسٹرڈ صارفین کو پانی کی فراہمی کی کے لئے باقاعدہ ملازمین کی تقرری کرکے پریشانیوں کو کم کرنے کی زحمت گوارا نہیں کررہے ۔انہوں نے الزام لگایا کہ یہ ملازمین علاقے کے رجسٹرڈ صارفین کو پینے کا پانی فراہم کرنے میں بری طر

وی ڈی سی ممبران 2 برس سے اجرت سے محروم | بقایاجات کی ادائیگی و سبھی کمیٹیوں کو اجرت فراہم کرنے کا مطالبہ

ڈوڈہ //وی ڈی سی یونین ضلع ڈوڈہ نے لیفٹیننٹ گورنر انتظامیہ سے بقایاجات کی ادائیگی کو یقینی بنانے و 2006 کے بعد سے قائم کمیٹی ممبران کو ماہانہ اجرت فراہم کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ضلع صدر وی ڈی سی یونین جگدیو سنگھ ٹھاکر نے حکومت پر وی ڈی سی ممبران کے ساتھ سوتیلے پن کا مظاہرہ کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ سرکار ان کے ساتھ کئے گئے وعدوں کو وفا کرنے میں ناکام ثابت ہوئی ہے۔انہوں نے کہا کہ انتخابی ریلیوں کے دوران مختلف سیاسی جماعتوں نے وی ڈی سی ممبران کو مالی طور مضبوط بنانے کے دعوے کئے تھے لیکن تاحال کوئی مثبت نتائج سامنے نہیں آئے۔انہوں نے کہا کہ 2018 سے وی ڈی سی ممبران تنخواہوں سے محروم ہیں جبکہ 2006 کے بعد قائم کی گئی کمیٹیوں میں شامل ممبران تنخواہ کے بغیر اپنی ڈیوٹی انجام دے رہے ہیں۔انہوں نے لیفٹیننٹ گورنر سے مطالبہ کیا کہ وی ڈی سی ممبران کے ساتھ انصاف کیا جائے اور ان کی دیرینہ مانگ کو

بھدرواہ ہسپتال میں بیداری کیمپ منعقد | بیٹیوں کے حقوق ، جائیداد میں حصہ داری اور گھر یلو تشد پر روشنی ڈالی گئی

بھدرواہ// ڈسٹرکٹ لیگل سروس اتھارٹی کی جانب سے بھدرواہ ہسپتال میں حمل گرانے کی برائی اور بیٹیوں کی اہمیت کے موضو ع پر ایک روزہ بیداری کیمپ منعقد کیا گیا جس میں بلاک میڈیکل افسر ڈاکٹر عبدا لحمید زرگر مہمان خصوصی تھے جبکہ ڈاکٹر ورشا کوتوال ، ڈاکٹر ورشا شرما ، ڈاکٹر مونیز ، ڈاکٹر سندیپ شرما نے بھی اس موقعہ پر شرکت کی ۔اس دوران ایڈووکیٹ محمد ماجد ملک ریسورس پرسن تھے جنہوں نے موضوع پر قانونی لحاظ سے تفصیلی روشنی ڈالی ۔ اپنے خطاب میں ایڈووکیٹ محمد ماجد ملک نے کہا کہ 1961میں ہی بیٹیوں کی حفاظت کے لئے سخت قانون  تشکیل دیئے گئے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم ایک ایسے سماج میں رہتے ہیں جہاں لڑکوں کو زیادہ اہمیت دی جاتی ہے اور لڑکیوں کو بوجھ مانا جاتا ہے لیکن حقیقت یہ ہے کہ بیٹیاں کسی سے کم نہ ہیں اور جہاں بیٹیوں نے ملک کی آزادی میں اہم کردار ادا کیا ہے اور آزادی کے بعد بیٹیاں اور لڑکیاں زندگی کے

گول:کھارپورہ وانی محلہ میں پانی کی شدید قلت | تعمیرات کے دوران پائپیں اکھاڑ دی گئیں ،محکمہ خاموش

گول//آئے روز گول سب ڈویژن میں پانی کی قلت رونما ہو رئی ہے جس وجہ سے لوگوں کو کافی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔تاہم محکمہ نے دعویٰ کیا ہے کہ جلد پانی کی مشکلات کو دورکیاجائے گا ۔ گول سب ڈویژن صدر مقام کے کھار پورہ وانی محلہ میں پانی کی شدید قلت پائی جا رہی ہے ۔ قریباً چھ ماہ سے لوگ اس مصیبت کا سامنا کر رہے ہیں ۔ مقامی لوگوں نے کشمیر عظمیٰ کے ساتھ بات کرتے ہوئے کہا کہ پانی کی پائپیں کئی جگہوں پر تعمیرات کے دوران لوگوں نے توڑ دیں جس وجہ سے پانی کی شدید قلت ہوئی ہے۔ان کاکہناتھاکہ اس سلسلے میں یہاں تعینات لائن مین کو بھی مطلع کیاگیاجبکہ جے ای کو بھی بتایاگیالیکن کوئی نتیجہ بر آمد نہ ہو سکا ۔مقامی لوگوں نے مزید کہا کہ پانی جو ایک ایک بوند آ رہا ہے وہ نا قابل استعمال ہے اور اس میں مٹی ملی ہوئی ہوتی ہے جس کو کھانے اور پینے کے استعمال میں نہیں لایاجاسکتا۔اس سلسلے میں کشمیر عظمیٰ نے اے