سورہ حجرات کی چند آیات اور معاشرہ سازی...قسط تیسری

فرمانبرداری کا فقدان:  موجودہ دور کا انسان علی الخصوص ایک مسلمان ایسا لگتا ہے کہ وہ پوری دنیا کو تابع فرمان دیکھنا چاہتاہے اور کسی کے تابع رہنا اسے گوارا نہیں ہے۔ یہی وجہ ہے کہ ہر کوئی فرمانروائی چاہتا ہے اور فرمانبرداری کسی کو راس نہیں آتی۔افسری کے دلدادہ سب ہیں، ماتحتی کو ہر ایرا غیرا بھی کثرِ شان تصور کرتا ہے۔جسے کھٹیا پر بیٹھنے کی سد ھ نہیں وہ کھڈ پینچ (مکھیا ) بنا پھرتا ہے۔اسی لئے لیڈروں کی بھرمار ہے اور پیرو کاروںکے سلسلے میں قحط الرجال ۔ہر ایک دوسرے شخص کا باغی ہے۔ کوئی کسی کو ماننے اور سننے کے لئے آمادہ ہی نہیں۔ہر ایک اپنی ہی رائے کو پورے عالم پر مسلط کرنے کے فراق میں ہے۔ ایسا لگتا ہے کہ جیسا تابعداری اور فرمانبرداری کا مادہ ہی کسی آسیب نے آدم زاد سے اچک لیا ہو۔خودسری اور خود خواہی کا راج ہے، ایثار گری اور ہمدردی کا کوئی پوچھنے والا ہی نہیں۔ اجتماعی مصالح کی کسے فک

کتاب و سنت کے حوالے سے مسائل کا حل

منشیات کی خوفناک وباء نجات کیلئے انفرادی اوراجتماعی جد وجہد کی ضرورت سوال:۔ہمارے معاشرے میں منشیات کی مختلف قسمیں بہت تیزی سے رائج ہو رہی ہیں ۔نوجوان بہت تیزی کے ساتھ منشیات کاعادی ہوتے جا رہے ہیں ۔ شریف اور معزز خاندانوں کے بچے اس میں بُری طرح پھنس رہے ہیں ۔شراب اور دوسری منشیات کا پھیلائو بہت زیادہ ہے ۔شراب خانوں کے باہر  شراب لینے والوں کی لائینںلگی ہوتی ہیں۔ کہیں پر خفیہ اور کہیں پر کھلم کھلاشراب ، چرس اور دوسری منشیات کی فروختگی کا سلسلہ چل رہا ہے ۔ یہاںجموں میں حال زیادہ ہی بُرا ہے ۔ برائے مہربانی تفصیل کے ساتھ منشیات کے متعلق قران اور حدیث کے مطابق روشنی ڈالیں۔میں میڈیکل شعبہ سے وابستہ ایک ڈاکٹر ہوں میرے سامنے بہت شرمناک اور افسوسناک واقعات ہیں۔ ڈاکٹر نجیب اشرف۔۔۔۔۔۔۔جموں جواب :۔اللہ نے انسان کو جن مخصوص اور اہم نعمتوں سے نوازا ہے اُن میں ایک خاص اور ممتاز ن

تازہ ترین