تازہ ترین

وحشی سعید کے افسانوں کے ترجمے کی انگریزی کتاب

ادبی رشتہ جب دائمی رشتے میں بدل جاتا ہےتو جو صورت پیدا ہوتی ہے اسے وحشی ـ۔ظہیر کے نام سے جانتے ہیں۔اس کا مطلب یہ ہوتا ہے کہ ایسی باتیں جنہیں صیغۂ راز میں رکھنا ہوتی ہیں وہ بھی ایک دوسرے پر منکشف ہو جاتی ہیں۔وحشی سعید شدید خواہش رکھتے تھے کہ اُن کے چنندہ افسانے انگریزی میں منتقل ہوںتاکہ زیادہ سے زیادہ افراد تک اُن کے خیالات اور تجربات کی رسائی ممکن ہوسکے اور ممکن ہے کہ کچھ لوگ اِس کا اثر بھی لیں اور سبق بھی۔یہ الگ بحث ہے کہ افسانے سبق لینے کے لئے لکھے جاتے ہیں یا محض سیر و تفریح اور تفنن طبع کے لئے۔بہرکیف اُنہوں نے ایک دو ترجمے کروائے جس سے اُنہیں اطمینان نہیں ہوا۔اپنی دختر کو دکھایا ،وہ بھی مطمئن نہیں ہوئیں۔بیٹی نے کہا کہ لائیے!میں ترجمہ کرتی ہوں۔اُن کا ترجمہ کیا ہوا ایک پورا افسانہ میرے پاس ہے۔یہ ترجمہ ظاہر ہے کہ پہلے سےکافی بہتر تھا اور مناسب بھی۔پہلی بار یہ انکشاف ہوا کہ بی بی انگر