تازہ ترین

تربیت میں کوتاہی اجتماعی نقصان

بلا شبہ اولاد والدین کیلئے ایک عظیم نعمت، قیمتی سرمایہ اور مستقبل میں قوم کے معمار ہوتے ہیں۔ اگر ان کی حفاظت کی جائے، خیر وبھلائی اور اخلاق حسنہ سے آراستہ کیا جائے، اچھی تعلیم وتربیت سے ہمکنار کیا جا ئے تو وہ فرشتہ صفت انسان بن سکتے ہیںکیونکہ بچپن کی تربیت پتھر کی لکیرکی طرح ہوتی ہے۔ اگر انہیں نظر انداز کیا جائے اور جانوروں کی طرح صرف ان کی جسما نی ساخت وپرداخت کی فکر کی جائے تو وہ  والدین کیلئے دردِ سر،سماج کے لئے ایک ناسور اورقوم کیلئے خسارہ بن سکتے ہیں۔ والدین پر اولاد کے جو حقوق عائد ہوتے ہیں ان میں سب سے اہم اور مقدم حق اْن کی تعلیم وتربیت ہے۔یہاں یہ بات بھی ملحوظ خاطر رہے کہ اولاد کی تعلیم و تربیت میں کوتاہی آخرت میں مواخذہ کاسبب بن سکتی ہے ۔ ’’ اپنے آپ کو اور اپنے اہل وعیال کو جہنم کی آگ سے بچاؤ‘‘القرآن ۔ جہنم سے بچنے کی فکر جس طرح خود کو ک

لاک ڈائون اورتعلیم قرآن

بچے فطرت پر پیدا ہوتے ہیں اور فطرتِ انسانی کے بہترین امین ثابت ہوتے ہیں۔ حضرت ابوہریرہ ؓ روایت کرتے ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ’’ہر پیدا ہونے والا بچہ فطرت پر پیدا ہوتا ہے ، پس اس کے والدین اسے یہودی یا نصرانی یا مجوسی بنا دیتے ہیں‘‘۔ ( بخاری) بچے اللہ تعالیٰ کا عطیہ اور عظیم نعمتوں میں سے ایک نعمت اورگھروں کی رونق ہیں اس کے ساتھ ساتھ ہمارے معاشرے کے معمار اورقوم کا وجود ہیں۔انسانیت کا مستقبل بچوں سے وابستہ ہے ، بچے ہی گھر والوں کیلئے آنکھوں کی ٹھنڈک کاباعث بنتے ہے۔ بچے کی پیدائش کے ساتھ ہی گھر میں خوشیوں کا سماں بندھ جاتا ہے۔ گھر میں بچے کی آمد زندگی کی آمد کا پیش خیمہ ثابت ہوتا ہے۔ زندگی خوبصورت ہے لیکن اس کا خوبصورت ترین حصہ بچپن ہے ۔بچپن کی تعلیم و تربیت کے اثرات ایسے دیر پا اورمضبوط ہوتے ہیں جیسے پتھر پہ نشانات۔۔۔۔ نہ ختم ہونے والے

تازہ ترین