تازہ ترین

ملک کے فیصلہ ساز اداروں میں مسلم نمائندگی

شہریت ترمیمی قانون اور قومی آبادیاتی رجسٹر معاملہ پر شدید تنقید کی زد میں آنے کے بعد موجودہ مرکزی حکومت مسلسل یہ کہہ رہی ہے کہ اس ملک میں سبھی طبقوں و فرقوں کو یکساں حقوق حاصل ہیں اور کسی کے حقوق غصب نہیں کئے جائیں گے ۔گزشتہ دنوں ہی پارلیمنٹ میں ایک بیان میں وزارت داخلہ نے پھر ایک بار یقین دلایا کہ وزیر اعظم نریندر مودی کی سربراہی والی بی جے پی حکومت سب کا ساتھ ،سب کا وکاس کے اصول پر کاربند ہے اور مذہب کے نام پر کسی کے ساتھ امتیاز نہیں کیاجائے گا بلکہ اقلیتوں کو بھی مکمل تحفظ فراہم کرنے کے علاوہ انہیں ترقی کے سفر میں یکساں مواقع فراہم کئے جائیں گے تاہم حکومتی دعوئوں اور دلائل سے قطع نظر ملک کی اقلیتوں کی جو صورتحال ابھر کر سامنے آرہی ہے ،وہ قطعی حوصلہ افزاء نہیں ہے بلکہ اگر یوں کہیں کہ وہ صورتحال مایوس کن اور پریشان کن ہے تو بیجا نہ ہوگا۔ مذہب اور مسلم اقلیت کے نام پر سیاست کرکے