تازہ ترین

فداؔ راجوری

24؍ جون2020کو اس جہانِ فانی سے رُخصت ہونے والے فداؔ راجوری اردو، کشمیری اور پہاڑی کے ایک اچھے اور سچے شاعر و ادیب تھے۔ میں اُن سے زندگی میں باالمشافہ ملاقات نہ کرسکا لیکن اُن کی تخلیقات کے ذریعے زمانہ طالب علمی سے ہی اُن سے متعارف رہا ہوں۔ میں1977تا1979علی گڑھ مسلم یونیورسٹی میں زیر تعلیم تھا اور اُن دنوں وہاں سے ابوالکلام قاسمی(جو بعد میں داڑھی منڈاتے ہی پروفیسر بھی ہوگئے) نے ایک خوبصورت سا ادبی رسالہ ’’الفاظ‘‘ نکالنا شروع کردیا تھا۔ اس میں علی گڑھ سے تعلق رکھنے والے شعراء کا خاص طور سے اور دہلی وغیرہ والوں کا کلام بھی ترجیحی طور پر چھپتا رہتا تھا۔ جموں و کشمیر سے تعلق رکھنے والے جن دوچار شعراء کو اُس میں جگہ ملتی رہتی تھی اُن میں حامدیؔ کاشمیری کے ساتھ ساتھ شہبازؔ راجوروی اور اُن کے برادر اصغر فداؔ راجوروی بھی شامل تھے۔ لیکن حیرانی کی بات ہے کہ بعد میں