ملک کا نام تبدیل کرنے کی عرضی کی سماعت سے سپریم کورٹ کا انکار

نئی دہلی//سپریم کورٹ نے بدھ کے روز ملک کے انگریزی نام 'انڈیا ' کو تبدیل کرکے 'ہندوستان' یا 'بھارت' کرنے کی درخواست پر غور کرنے سے انکار کردیا اور درخواست گزار سے حکومت کے سامنے اپنی بات پیش کرنے کو کہا۔ چیف جسٹس شرد اروند بوبڑے ، جسٹس اے ایس بوپنا اور جسٹس ریشیکیش رائے پر مشتمل ڈویڑن بنچ نے درخواست گزار کی جانب سے پیش وکیل اشون ویشیے کی دلائل سننے کے بعد درخواست گزار سے کہا کہ وہ اپنا میمورنڈم حکومت کو پیش کریں۔ سماعت کے آغاز پر ، وکیل نے استدلال کیا کہ انڈیا کا نام یونانی لفظ 'انڈیکا' سے نکلا ہے۔ اس پر چیف جسٹس نے کہا کہ درخواست گزار یہاں کیوں آئے ہیں؟ آئین میں ملک کا نام بھارت ہی ہے۔ جسٹس بوبڑے نے کہا ، ”یہ ہمارے آئین کے شروع میں ہی لکھا گیا ہے ، 'انڈیا دیٹ از بھارت ‘ (انڈیا جو بھارت ہے)۔" آپ کے ساتھ مسئلہ کیا ہے؟ "

کورونا متاثرین میں ریکارڈ 8909 کا اضافہ،ملک میں مجموعی تعداد2,07,615

نئی دہلی// ملک میں کوورونا وائرس کا قہر انتہائی تیزی سے بڑھ رہا ہے اور گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران سب سے زیادہ 8909 نئے کیس درج کئے جانے کے بعد متاثرین کی مجموعی تعداد دو لاکھ سے متجاوز کر گئی۔ صحت اور خاندانی بہبود کی مرکزی وزارت کی جانب سے بدھ کو جاری تازہ ترین اعداد و شمار کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران متاثرین کی تعداد بڑھ کر 2,07,615ہو گئی۔ اس دوران 217 لوگوں کی موت کے بعد ہلاکتوں کی مجموعی تعداد 5815 ہو گئی۔ ملک میں اب تک کل 100303 لوگ صحت مند بھی ہو چکے ہیں اور فعال کیسوں کی تعداد بڑھ کر 101497 ہو گئی ہے۔ مہاراشٹر اس وبا سے ملک میں سب سے زیادہ متاثر ہوا ہے۔ ریاست میں گزشتہ 24 گھنٹوں میں 2287 نئے کیسز سامنے آئے ہیں اور 103 افراد کی موت ہوئی ہے جس کے ساتھ ہی ریاست میں اس وباسے متاثر ہونے والے افراد کی مجموعی تعداد بڑھ کر 72،300 اور اس جان لیوا وائرس سے مرنے والوں کی تعداد

ملک میں کورونا متاثرین کی تعداد 2لاکھ سے متجاوز،6ہزار کے قریب ہلاکتیں

نئی دہلی// بھارت میں کورونا وائرس سے متاثرین کے کیسوں کی تعداد 2لاکھ پہنچ گئی ہے۔15روز قبل بھارت میں  کورونا  سے متاثرین کی تعداد ایک لاکھ تک پہنچ گئی تھی اور 15روز میں یہ تعداد دوگنی ہوگئی ہے۔پچھلے 3روز میں لگاتار 8ہزار سے زائد کیسوں کا ہر روز اضافہ ہورہا ہے۔سرکاری اعداوشمار کے مطابق منگل صبح 8بجے تک ملک میں متاثرین کی تعداد 2لاکھ سے تھوڑی کم تھی لیکن دن میں  یہ تعداد 2سے تجاوز کر گئی۔منگلم کی سبح تک تعداد 1.99 لاکھ  پہنچ گئی اور اس دوران وائرس سے مرنے والوں کی تعداد 5598 ہو گئی ہے ۔جبکہ ملک میں سرگرم کیسوں کی تعداد بھی تقریباً ایک لاکھ کے قریب پہنچ گئی ہے۔صحت اور خاندانی بہبود کی مرکزی وزارت کی جانب سے جاری اعداد و شمار کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں میں 8171 نئے کیسز سامنے آئے ہیں جس سے متاثرین کی تعداد بڑھ کر 198706 ہو گئی۔ اس دوران 204 افراد کی موت کے بعد ہلاکتوں کی

مغل شاہراہ کھولنے کیلئے سرکاری احکامات کا انتظار

سرنکوٹ //اگرچہ ملک بھر میں لاک ڈائون میں نرمی کرکے بین ضلع اور بین الریاستی ٹرانسپورٹ کو چلنے کی اجازت دی جارہی ہے تاہم خطہ پیر پنچال کو وادی کشمیر سے ملانے والی مغل شاہراہ کو کھولنے کیئے ابھی تک کوئی فیصلہ نہیں لیاگیاہے۔پچھلے لگ بھگ سات ماہ سے بند پڑی اس شاہراہ پر ٹریفک کی بحالی کیلئے حکام کی سطح پر تذبذب پایاجارہاہے اور برف ہٹانے کاکام دوبارہ شروع کئے جانے کے باوجود متعلقہ ایگزیکٹو انجینئرسے کہاگیاہے کہ وہ ایک دن کاکام چھوڑ کر بقیہ برف ہٹادیں۔شاہراہ کی بحالی پر جب ایگزیکٹو انجینئر مغل روڈ لیاقت چوہدری سے رابطہ کیاگیاتو انہوں نے بتایاکہ مشینری متحرک ہے اور کام چل رہاہے۔انہوں نے بتایاکہ ڈپٹی کمشنر سے ان کی بات ہوئی اور انہوں نے بتایاہے کہ ایک دن کاکام چھوڑ کر باقی برف صاف کردی جائے۔انہوں نے کہاکہ حکام اگر اجاز ت دیں گے تو وہ ایک دن میں روڈ کھول دیں گے۔ڈپٹی کمشنر پونچھ راہل یادو نے رابط

خود کفیل ہندوستان کیلئے سب کا تعاون ضروری | کورونا کے خلاف لڑائی میں معیشت کا استحکام پہلی ترجیح:مودی

نئی دہلی// وزیر اعظم نریندر مودی نے ملک کے سامنے 'خود انحصار ہندوستان' کا خاکہ پیش کرتے ہوئے کہاکہ ہندوستان کو تیز رفتار ترقی کی راہ پر واپس لانے اور خود انحصار ہندوستان کی تعمیر کے لئے پانچ چیزیں بہت اہم ہیں، جن میں خود ارادی،شمولیت، سرمایہ کاری ، بنیادی ڈھانچہ اور جدت طرازی شامل ہے ۔مسٹر مودی نے کل انڈسٹری بورڈ- سی آئی آئی کے 125 ویں سالانہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ "مجھے بہت اعتماد ہے کہ ہندوستان ایک بار پھر ترقی کی راہ پر واپس لوٹے گا۔ تیزی سے ترقی کی راہ پر ہندوستان کو واپس لانے اور خود انحصار ہندوستان کی تعمیر کے لئے پانچ چیزیں ضروری ہیں۔ آج ہندوستان پر دنیا بھر کا اعتماد بڑھاہے اور ہندوستانی صنعت کو اس سے فائدہ اٹھانا چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ خود انحصار ہندوستان کا مطلب روزگار پیدا کرنا اور اعتماد پیدا کرنا ہے تاکہ عالمی سپلائی سلسلے میں ہندوستان کا حصہ مستحکم ہ

حکومت اعلانات کے بجائے صحیح طریقے اپنائے:کانگریس

نئی دہلی // کانگریس نے کہا ہے کہ کم سے کم امدادی قیمت (ایم ایس پی) کے اعلان سے کسان کو کوئی فائدہ نہیں ہوگا لیکن اس کے لئے ، فصلوں کی خریداری ضروری ہے اور حکومت جو اقدامات اٹھا رہی ہے ، اس سے دس برسوں تک بھی کسانوں کی آمدنی دوگنا نہیں ہونے والی ہے ۔ کانگریس کے رہنما سنیل جاکھڑ نے منگل کو یہاں پریس کانفرنس میں کہا کہ ایم ایس پی کے اعلان سے نہیں ہوگا ، اس کا فائدہ تب ہوگا جب کسان کی فصل کی خرید کی جائے گی۔ کسانوں کو فصل کا فائدہ تبھی ملے گا جب مارکیٹ سے فصلوں کی براہ راست خریداری ہوگی ، لیکن یہ نظام بہار جیسی ریاستوں میں کہیں بھی تیار نہیں ہوا ہے اور نہ ہی کسان کی خریداری کا کوئی بازار ہے ، تو کسان اپنی فصل کہاں فروخت کرے گا۔ مسٹر جاکھڑ نے کہا کہ ایم ایس پی میں اضافہ کے لئے حکومت کا اعلان اچھا لگتا ہے ، لیکن کسان کو واقعی ان اعلانات کا فائدہ نہیں ملتا ہے ۔ کسان کی آمدنی کو دوگنا کرنے کے

انڈیا کا نام تبدیل کرکے بھارت کرنے سے متعلق عرضی کی سماعت آج

نئی دہلی//ملک کا انگریزی نام‘انڈیا’کو تبدیل کر کے ‘بھارت’یا‘ہندوستان’کرنے سے متعلق ایک درخواست پر سپریم کورٹ میں منگل کو بھی سماعت نہیں ہوسکی۔اب اس پر بدھ کو غور کیا جائے گا۔معاملے کی سماعت آج پہلے سے متعین تھی،لیکن چیف جسٹس شرد اروند بوبڑے کی عدم موجودگی کی وجہ سے اسے کل تک کے لئے ملتوی کردیا گیا۔سپریم کورٹ ویب سائٹ پر اپلوڈ کی گئی ایک نوٹس کے مطابق،جسٹس بوبڑے کی غیرحاضری کے سبب ان کی صدارت والی تین رکنی بنچ کے سامنے آج درج تمام معاملوں کی سماعت ملتوی کی گئی ہے ۔اب ان معاملوں کی سماعت کل یعنی 3 جون کو ہوگی۔ان میں نمہ نامی شخص کی وہ درخواست بھی شامل ہے جس میں ملک کانام انڈیا کے بدلے بھارت یا ہندوستان کرنے کے لئے آئین کے آرٹیکل 1 میں ترمیم کی ہدایت کا مطالبہ کیا گیا ہے ۔قابل ذکر ہے کہ متعلقہ درخواست پر سماعت 29 مئی کو نہیں ہوسکی تھی،کیونکہ چیف جسٹس

رافیل کی فراہمی میں کورونا رکاوٹ نہیں | راج ناتھ کی فرانسیسی ہم منصب کے ساتھ بات چیت

نئی دہلی //وزیر دفاع راجناتھ سنگھ نے آج فرانسیسی وزیر دفاع فلورنس پارلے سے فون پر گفتگو کی اور دونوں وزرائے دفاع نے دفاع کے شعبے میں باہمی تعاون کو مستحکم کرنے پر اتفاق کیا۔گفتگو کے دوران فرانسیسی وزیر دفاع نے کہا کہ کورونا کے چیلنج کے باوجود رافیل لڑاکا طیاروں کی فراہمی میں کوئی رکاوٹ نہیں ہوگی۔مسٹر سنگھ اور محترمہ پارلے نے کورونا کی وبا کے ساتھ ساتھ باہمی اہمیت کے متعدد امور اور علاقائی سلامتی کے امور پر تبادلہ خیال کیا۔ انہوں نے دونوں ممالک کے مابین دفاعی شعبے میں دوطرفہ تعاون بڑھانے پر بھی اتفاق کیا۔ دونوں وزرا دفاع نے ہندوستان اور فرانس کی مسلح افواج کی جانب سے کورونا کی وبا سے نمٹنے میں تعاون کے لئے کی جارہی کوششوں کو سراہا۔ بات چیت میں ، فرانس نے رافیل لڑاکا طیاروں کی بروقت فراہمی کے عزم کا اعادہ کیا اور کہا کہ کورونا کی وبا کے چیلنج کے باوجود ، ہوائی جہاز کی فراہمی میں کوئی خلل

تازہ ترین