تازہ ترین

اندرپرستھ اپولو، سرگنگا رام سمیت14اسپتال کووڈ مراکز میں تبدیل

نئی دہلی// دہلی کی حکومت نے جان لیوا عالمی وبا کورونا وائرس’کووڈ19‘ سے بچاو¿ کی کوششوں کے طور پر قومی راجدھانی کے 14 اسپتال جن میں اندرپرستھ اپولو اور سر گنگارام اسپتال بھی ہیں ، کو مکمل طور پر کووڈ -19 اسپتال میں تبدیل کرنے کا اعلان کیا ہے۔ ان اسپتالوں میں صرف کوروناوائرس سے متاثر مریضوں کا علاج کیا جائے گا۔ دیگر امراض میں مبتلا مریضوں کا اب ان اسپتالوں میں علاج معالجہ نہیں ہو سکے گا۔ اس کے علاوہ حکومت نے 115 پرائیویٹ اسپتالوں کو ہدایت دی ہے کہ وہ کورونا مریضوں کے لئے مزید بستروں کو محفوظ رکھے۔ حکومت نے 101 پرائیویٹ اسپتالوں کو بھی ہدایت دی ہے کہ وہ کوروناوائرس کا علاج شروع کرے اور اسپتال کی وارڈ صلاحیت کا 60 فیصد کورونا مریضوں کے لئے مختص کرے۔ اسی کے ساتھ ہی 19 پرائیویٹ اسپتالوں سے 80 فیصد اور 82 فیصد آئی سی یو بیڈ کورونا مریضوں کے لئے محفوظ رکھنے کو کہا گ

ملک میں کورونا وائرس کے تقریبا 1.62 لاکھ نئے کیس ، 879 ہلاکتیں

نئی دہلی // ملک میں کورونا وائرس (کووڈ۔19) کی وبا کا پھیلنا بدستور جاری ہے اورگذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک کے مختلف حصوں میں تقریبا 1.62 لاکھ نئے کیس درج ہوئے ہیں۔ منگل کی صبح مرکزی وزارت صحت کی جانب سے جاری تازہ ترین اعداد و شمار کے مطابق گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک میں 161736 نئے کیس رپورٹ ہوئے جس سے ملک میں کورونا متاثرین کی مجموعی تعداد ایک کروڑ 36 لاکھ 89 ہزار 453 ہوگئی۔  

برازیل کو پیچھے چھوڑ کر بھارت دوسرے نمبر پر

نئی دہلی/یو این آئی/کورونا وائرس متاثرین کی تعداد میںبھارت برازیل کو پیچھے چھوڑ کردوسرے نمبر پر آگیا ہے۔ پیر کو ملک میں مزید ایک لاکھ 68ہزار 912افراد وائرس سے متاثر ہوئے اور اسطرح متاثرین کی مجموعی تعداد ایک کروڑ 25لاکھ 27ہزار 717تک پہنچ گئی ہے جبکہ اس دوران 904افراد وائرس سے فوت ہوگئے۔ صحت کی مرکزی وزارت کی جانب پیر کی صبح جاری اعداد و شمار کے مطابق ، ملک میں ایک لاکھ 68ہزار 912 نئے معاملات سامنے آئے ہیںاس کے ساتھ ہی متاثرہ افراد کی تعداد  بڑھ ایک کروڑ 35 لاکھ 27 ہزار 717 ہوگئی ہے۔ اسی دوران75ہزار 86 مریض صحت مند بھی ہوئے ہیں، جن کے ساتھ  اب تک 12156529 مریض صحت مند ہوچکے ہیں۔ سرگرم معاملات 92ہزار922  کے اضافے سے 1201009 ہو گئے ہیں۔ اسی  دوران  904 مریضوں کی موت کے ساتھ اس مرض سے اموات کی تعداد 170179 ہوگئی ہے۔مہاراشٹرا کورونا کے فعال معاملوں کے لحاظ سے سرف

ممتا کے دور اقتدار میں سماج کا ہر طبقہ پریشان

 کلکتہ //وزیر اعظم نریندر مودی نے ندیا ضلع کے کلیانی میں ایک اور ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ممتا بنرجی کے دور اقتدار میں سماج کا ہر طبقہ پریشان ہے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی کے اقتدار میں آتے ہی ہر ایک کسان کے اکائونٹ میں 18ہزار روپے ڈالے جائیں گے۔مودی نے کہا کہ دیدی نے بلدیاتی انتخابات ملتوی کرکے تولا بازی کے دروازے کھول دئے ہیں۔ مودی نے کہا کہ ہم بغیر کسی تولابازی  کے ’’ ہر گھر میں جل ‘‘پر کام کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ دس سالوں میں ممتا بنرجی کے دور اقتدار میں سیاسی مفادات کیلئے قتل کیا گیا، ٹولہ بازوں کو فائدہ پہنچانے کیلئے بنگال کے عوام کو لوٹا گیا۔سنڈیکٹ کو طاقت ور بنانے کیلئے بنگال کے عوام کو دھوکہ دیا گیاہے۔یہ ممتا بنرجی کا رپورٹ کارڈ۔وزیر اعظم نے کہا کہ دیدی جیسے لوگوں کی وجہ سے ، شیاما پرساد مکھرجی کیخواب پورے نہیں ہوسکے۔انہوں نے کہ

کوچ بہار جیسے واقعات کی دھمکی افسوسناک:ممتا بنرجی

کلکتہ //مغربی بنگال کی وزیرا علیٰ ممتا بنرجی نے کوچ بہار جیسی مزید ہلاکت کی دھمکی دینے والے بیان پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ کوئی بھی سیاسی لیڈر اس طرح کے قتل عام کی دھمکی کیسے دے سکتا ہے۔بنگال بی جے پی کے صدر دلیپ گھوش نے کہا کہ سیتل کوچی جیسے مزید واقعات ہونے چاہئیں اور ہلاکتیں مزید ہونی چاہئیں۔ ممتا بنرجی نے کہا کہ اس طرح کے سیاسی بیانات پر پابندی عاید ہونی چاہئے۔خیال رہے کہ سنیچر کو کوچ بہار میں پولنگ کے دوران مرکزی فورسیس کی فائرنگ میں چارافراد کی موت ہوگئی تھی۔مرکزی فورسیس اور الیکشن کمیشن نے کہا تھا کہ مرکزی فورسیس نے مجبوری میں فائرنگ کی ہے کیوں کہ بھیڑ ہتھیا ر اور سرکاری املاک کو نقصان پہنچانے کی کوشش کررہی تھی۔ممتا بنرجی نے آج ندیا ضلع میں ایک ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ کچھ سیاسی لیڈران سیتل کوچی جیسے واقعات کی دوبارہ دھمکی دے رہے ہیں اور بول رہے ہیں کہ مزید ہلاک

ناگا تنظیموں کیساتھ جنگ بندی معاہدہ کی مدت میں توسیع

نئی دہلی// حکومت اور مختلف ناگا تنظیموں کے مابین جنگ بندی کے معاہدہ کی مدت میں ایک برس کے لئے توسیع کردی گئی ہے۔حکومت اور ناگا تنظیموں کے نمائندوں کے مابین پیر کو اس سے متعلق معاہدہ پر دستخط کئے گئے۔حکومت اور نیشنل سوشلسٹ کونسل آف ناگالینڈ (این ایس سی این /این کے)، نیشنل سوشلسٹ کونسل آف ناگالینڈ رفارمیشن (این ایس سی این /آر) اور نیشنل سوشلسٹ کونسل آف ناگالینڈ /کے کھانگو (این ایس سی این /کے کھانگو) کے مابین گزشتہ ایک برس سے جنگ بندی نافذ ہے۔اب اس جنگ بندی معاہدہ کی مدت میں ایک برس کی توسیع کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس سے این ایس سی این  /این کے اور این ایس سی این /آر کے ساتھ جنگ بندی معاہدہ آئندہ 28 اپریل سے 27اپریل 2022اور این ایس سی این /کے کھانگو کے ساتھ آئندہ 18 اپریل سے 17اپریل 2022تک نافذ رہے گا۔  

تازہ ترین