ملک میں کورونا وائرس کے فعال کیسوں اور اموات کی تعداد میں اضافہ

نئی دہلی// ملک کی کچھ ریاستوں میں کورونا وائرس (کووڈ۔19) کے انفیکشن میں گزشتہ کچھ دنوں سے اچانک آئی شدت کے درمیان فعال کیسز میں اضافہ جاری ہے اور اس وبا سے مرنے والوں کی تعداد پھر 100 سے تجاوز کر گئی۔ مسلسل تین دنوں تک کورونا وائرس سے مرنے والے افراد کی تعداد 100 سے کم درج کی گئی لیکن گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران اس وبا سے 113 افراد کی موت ہوئی ہے۔ اس دوران صحتیاب ہونے والوں کی تعداد کم رہنے سے فعال کیسز میں 2906 کااضافہ ہوا ہے۔ دریں اثنا ملک میں اب تک ایک کروڑ 80 لاکھ پانچ ہزار 503 افراد کو کوروناکے ٹیکے لگائے جا چکے ہیں۔ مرکزی وزارت صحت کی جانب سے جاری اعداد و شمار کے مطابق گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس کے 16،838 نئے کیسز سامنے آئے ہیں ، جس سے متاثرہ افراد کی تعداد ایک کروڑ 11 لاکھ 73 ہزار سے زائد ہو گئی ہے۔ گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 13،819 مریض صحتیاب ہوئے ہیں ، جس سے اب

چیک بائونس کے 35لاکھ کیس زیر التوا

نئی دلی //سپریم کورٹ نے کہا ہے کہ چیک بائونس ہونے کے 35لاکھ کیس زیر التوا ہیں۔عدالت نے مرکزی سرکار کو مشورہ دیا ہے کہ وہ ان کیسوں کو مقررہ وقت پر ختم کرنے کیلئے اضافی عدالتیں قیام عمل میں لائیں۔چیف جسٹس ایس اے بوبدے کی سربراہی میں قائم کئے گئے پانچ ججوں کی بینچ نے کہا ہے کہ مرکزی سرکار کو آرٹیکل 247کے تحت حق حاصل ہے کہ چیکوں کی بے عزتی کرنے کے معاملات کو حل کرنے کیلئے این آئی ایکٹ (negotable act) کے تحت اضافی عدالتیں قائم کریں۔ پانچ ججوں کی بیچ میں جسٹس ایل نگیشور رائو، بی آر گوائی، ائے ایس بوننا اور ایس رویندر بٹ نے کہا ’’ این آئی ایکٹ  کے تحت کیسوں کی تعداد میں اضافہ ’’حیرت انگیز ‘‘ہے۔ عدالت نے مرکزی سرکار سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا ’’ آپ مزید عدالتیں قائم کرنے کیلئے نیا قانون بھی بناسکتے ہیں کہ کیسوں کا نپٹارہ مقررہ وقت پر حل کیا