کانگریس کے 71 سالہ لیڈر احمد پٹیل کا انتقال

نئی دہلی// کانگریس کے سینئر رہنما احمد پٹیل کا بدھ کی صبح ساڑھے تین بجے انتقال ہوگیا۔ انہیں گروگرام کے میدانتا اسپتال میں داخل کرایا گیا تھا جہاں انہوں نے اپنی آخری سانس لی۔ علاج کے دوران ان کے کئی اعضا نے کام کرنا بند کردیا تھا۔ ان کے بیٹے فیصل پٹیل نے ٹویٹر پر اپنے والد کے انتقال کی اطلاع دی۔ فیصل نے لکھا”ایک ساتھ کئی اعضا نے کام کرنا بند کردیا تھا جس کی وجہ سے ان کا انتقال ہوگیا۔ اپنے سبھی خیر خواہوں سے اپیل کرتا ہوں کہ اس وقت کورونا وائرس کے اصولوں پر سختی سے عمل کریں اور سماجی دوری کے سلسلے میں پرعزم رہیں اور کسی بھی اجتماعی انعقاد میں جانے سے بچیں۔“  پٹیل کی عمر71سال تھی اور وہ ایک مہینے پہلے کورونا وائرس سے متاثر ہوئے تھے۔انہیں 15 نومبر کو میدانتا اسپتال کے آئی سی یو میں داخل کرایا گیا تھا۔ سونیا گاندھی کے سیاسی مشیر رہے پٹیل کی پیدائش 21 اگست 19

ہر شخص کو ویکسین فراہم کرنا حکومت کی ترجیح: مودی

نئی دہلی// وزیر اعظم نریندر مودی نے آج کہا کہ حکومت کووڈ ویکسین تیار کرنے کے عمل پر کڑی نگرانی کر رہی ہے اورتمام شہریوں کو اسے آسانی سے میسر کرانا ان کی ترجیح ہے-انہوں نے کہا کہ جس طرح کووڈ کے خلاف مہم میں ہر شخص کی زندگی کو بچانا حکومت کی ترجیح رہی ہے اب بھی اس کا زور ویکسین فراہم کرکے ہر شخص کی جان بچانے پر ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ ویکسین کے منفی اثرات کے بارے میں افواہیں پھیلائی جاسکتی ہیں لہذا سرکاری مشینری اور باقی سب کو مل کر لوگوں کو حقیقی صورتحال سے آگاہ کرنا ہوگا۔مختلف ریاستوں میں کووڈ انفیکشن میں اضافہ کے پیش نظر، مسٹر مودی نے آج ویڈیو کانفرنس کے ذریعہ آٹھ متاثرہ ریاستوں اور مرکزی علاقوں کے وزرائے اعلی سے ایک میٹنگ کی۔ اجلاس میں کووڈ انفیکشن کی صورتحال ، اس سے نمٹنے کے لئے تیاری اور انتظامیہ سے خصوصی تبادلہ خیال کیا گیا۔ نیز لوگوں کو ویکسین کی فراہمی ، تقسیم اور فراہمی جیسے

کوروناکے نئے کیسز میں تیزی تھم گئی ، فعال معاملات میں بھی کمی واقع

نئی دہلی//ملک میں کورونا کیسوں میں تیزی پچھلے کچھ دنوں سے کم ہوگئی ہے اور اس بیماری میں مبتلا افراد کی تعداد میں اضافے نے فعال کیسوں کو کم کیا ہے اور اس کی شرح کم ہوکر پانچ فیصد کے قریب رہ گئی ہے۔پچھلے پانچ دن سے ، کورونا انفیکشن کے 45 ہزار کیس آ رہے تھے ، لیکن منگل کو نئے معاملات میں کمی واقع ہوئی اور یہ تعداد 38 ہزار سے کم رہی۔مرکزی وزارت صحت و خاندانی بہبود کے مطابق ، گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 37،975 نئے کیس سامنے آئے ہیں اور متاثرہ افراد کی تعداد 91.77 لاکھ ہوگئی ہے۔ اس مدت کے دوران ، 42،314 مریض صحت مند ہوگئے ، جس کے نتیجے میں فعال معاملات میں 4819 کی کمی واقع ہوئی ہے اور اس کی تعداد بڑھ کر 4.38 لاکھ ہوگئی ہے۔ اسی عرصے میں ، 480 مزید مریضوں کی ہلاکت کے ساتھ مرنے والوں کی تعداد 1،34،218 ہوگئی ہے۔ملک میں زیر علاج مریضوں کی شرح کم ہوکر 4.78 ہوگئی ہے اور بازیابی کی شرح 93.76 فیصد ہے

کیجریوال کی مرکز سے 1000 اضافی آئی سی یو بستر محفوظ رکھنے کی اپیل

نئی دہلی// دہلی میں کورونا وائرس کا قہر بڑھنے کے درمیان وزیر اعلی اروند کیجریوال نے منگل کے روز مرکزی حکومت سے سرکاری اسپتالوں میں 1000 اضافی آئی سی یو بیڈ محفوظ رکھنے کی اپیل کی ہے۔وزیر اعظم نریندر مودی کے ساتھ ملاقات میں مسٹر کجریوال نے دہلی میں کورونا وائرس کے بڑھنے کے خدشے کے پیش نظر یہ اپیل کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ دارالحکومت میں کورونا وائرس کے معاملے بڑھنے کے پیچھے آلودگی بھی ایک بڑی وجہ ہے۔وزیراعلیٰ کے دفترکے مطابق وزیر اعلی نے پڑوسی ریاستوں میں پرالی جلانے سے ہونے والی آلودگی سے نجات کے لئے وزیر اعظم سے مداخلت کرنے کی اپیل کی۔وزیر اعلی نے کہا کہ دہلی میں کورونا وائرس کی تیسری لہر کے اثرات رہنے تک مرکزی سرکاری اسپتالوں میں اضافی ایک ہزار آئی سی یو بستردہلی کے لیے محفوظ رکھنے کی درخواست کی ہے۔مسٹر مودی عالمی وبا کورونا وائرس سے فی الحال سب سے زیادہ متاثرہ ریاستوں کیرالہ، مغربی

بنگال میں صورت حال قابو میں :ممتا بنرجی

کلکتہ//کلکتہ میں کورونا وائرس کے معاملات کی تعداد ایک لاکھ سے تجاوز کر گئی ہیاورمغربی بنگال میں کورونا وائرس کے 4.6لاکھ کیس آچکے ہیں تاہم آج وزیر اعظم نریندرمودی کے ساتھ ورچوئیل میٹنگ میں ممتا بنرجی نے کہا ہے کہ بنگال میں کورونا وائرس کی صورت حال قابو میں ہے۔وزیرا عظم مودی نے آج آٹھ ریاستوں کے وزرائے اعلی کے ساتھ کورونا کی صورتحال کا جائزہ ورچوئل میٹنگ میں کیا۔ اس میٹنگ میں مرکزی وزیر داخلہ امیت شاہ ، وزیر صحت ہرش وردھن ، نیتی آیوگ (صحت) کے ممبر اور سینٹر کی کوڈ ٹاسک فورس کے چیف وی کے پال موجود تھے۔ مغربی بنگال ، مہاراشٹر ، دہلی ، گجرات ، ہریانہ ، راجستھان ، چھتیس گڑھ اور کیرالہ کے وزرائے اعلی کے ساتھ میٹنگ میں کورونا کی دوسری لہر کو روکنے اور ویکسین کی تقسیم پر بات چیت کی گئی۔ مرکز کے مطابق ان آٹھ ریاستوں میں صورتحال زیادہ خراب ہے۔ریاستی سیکریٹریٹ کے ایک اعلی عہدیدار نے بتایا کہ

۔26نومبر کو کامگاروں کی ملک گیر ہڑتال

نئی دہلی//مرکزی تجارتی انجمنوں نے منگلوار کواُمیدظاہر کی کہ26نومبرکی ملک گیرعام ہڑتال،جس کیلئے تیاریاں زورشور سے جاری ہیں، میں 25کروڑ مزدور شرکت کریں گے۔دس مرکزی ٹریڈ انجمنوں ،انڈین نیشنل ٹریڈیونین کانگریس، ہند مزدور سبھا، سینٹرآف انڈین ٹریڈ یونینز،آل انڈیاٹریڈ یونین سینٹر، ٹریڈیونین کارڈنیشن سینٹر،سیلف ایمپلائیڈوومنزایسوسی ایشن،آل انڈیا سینٹرل کونسل آف ٹریڈ یونینز،لیبر پروگریسیوفیڈریشن اوریونائیٹڈٹریڈیونین کانگریس نے ایک مشترکہ بیان جاری کیا ہے۔مشترکہ پلیٹ فارم میں آزاد فیڈریشنزاورانجمنیں بھی ہیں۔مشترکہ فورم نے بیان میں کہا ،’’26نومبر کی کل ہند ہڑتال کیلئے تیاریاں زوروشور سے جاری ہیں۔ہمیں اُمید ہے کہ اس بار اس ہڑتال میں25کروڑ مزدور حصہ لیں گے۔اس دوران بھارتیہ جنتاپارٹی طرفدار بھارتیہ مزدورسنگھ نے اس بات کو واضح کیاہے کہ وہ اس ہڑتال میں شامل نہیں ہوں گے۔ایک بیان میں من

مودی کے انتخاب کو چیلنج کرنے والی درخواست سپریم کورٹ سے خارج

نئی دہلی// سپریم کورٹ نے منگل کو وزیر اعظم نریندر مودی کے وارانسی میں 2019 کے انتخابات کو چیلینج کرنے والی ایک درخواست کو خارج کردیا۔ چیف جسٹس شرد اروند بوبڈے کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے مودی کے انتخاب کو چیلنج کرنے والے بارڈر سیکورٹی فورس (بی ایس ایف) کے سابق جوان تیج بہادر کی درخواست خارج کردی۔ عدالت عظمی نے گزشتہ بدھ کو اس معاملے میں فیصلہ محفوظ کرلیا تھا۔ گذشتہ سماعت پر درخواست گزار تیج بہادر کے وکیل پردیپ یادو کی طرف سے سماعت ملتوی کرنے کے کافی زور لگایا تھا ، لیکن عدالت عظمیٰ نے ان کے ارادے کو محسوس کرتے ہوئے ایسا کرنے سے انکار کردیا۔ درخواست گزار کے وکیل نے متعدد بار بینچ سے معاملے کی سماعت ملتوی کرنے کی درخواست کی تھی ، لیکن جسٹس بوبڈے نے وکیل کے مقصد کو بخوبی بھانپ لیا ہے اور وکیل سے بار بار جرح کرنے کو کہا تھا۔ جسٹس بوبڈے نے کہا تھا کہ سماعت بار بار موخر نہیں

ملک میں 37975 نئے کورونا وائرس کیس،480اموات

نئی دہلی//مرکزی وزارت صحت اور خاندانی بہبود کے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 37975 نئے کیس سامنے آنے کے بعد ملک میں متاثرہ افراد کی تعداد 91.77 لاکھ تک پہنچ گئی ہے جبکہ مزید 480 مریضوں کی موت کے ساتھ ہی مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر134218 ہوگئی ہے۔  ملک میں 4819 فعال کیس کم ہونے کے بعد اب یہ تعداد گھٹ کر438667 ہوگئی ہے۔  ملک میں گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران دہلی ، کیرالہ ، مہاراشٹرا اور مغربی بنگال میں کورونا وائرس (کوویڈ۔19) سے سب سے زیادہ افراد بازیاب ہوئے ہیں۔ کورونا کی وبا سے سب سے زیادہ دہلی میں7216 افراد، کیرالہ میں5425، مہاراشٹر میں3729 اور مغربی بنگال میں3687 صحتیاب ہوئے ہیں۔  

کورونا کے نئے معاملوں میں اضافہ جاری

 نئی دہلی// ملک میں ایک بار پھر کورونا کیسز بڑھ رہے ہیں اور پچھلے کچھ دنوں سے روزانہ 45 ہزار سے زیادہ نئے کیسز سامنے آرہے ہیں ، حالانکہ اس بیماری کو شکست دینے والے افراد کی تعداد میں بھی اوسطاً اضافہ ہوا ہے ۔ زیر علاج مریضوں کی شرح پانچ فیصد سے کم ہے ۔مرکزی وزارت صحت و خاندانی بہبود کے مطابق ، گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 44،059 نئے کیس سامنے آئے ہیں اور متاثرہ افراد کی تعداد 91.39 لاکھ ہوگئی ہے ۔ 2524 فعال معاملوں میں اضافے کے ساتھ ، یہ تعداد بڑھ کر 4،43،486 ہوگئی ہے ۔ اس عرصے کے دوران ، 41،024 مریض ٹھیک ہوگئے ، جس میں اب کورونا کو شکست دینے والوں کی تعداد 85.62 لاکھ ہے ۔ اسی عرصے میں ، 511 مریضوں کی مزید ہلاکت کے ساتھ ہلاکتوں کی تعداد 1،33،738 ہوگئی ہے ۔ملک میں زیر علاج مریضوں کی شرح کم ہوکر 4.85 اور بازیابی کی شرح 93.68 ہوگئی ہے جبکہ اموات کی شرح 1.46 ہے ۔ مہاراشٹر میں گذشتہ 24 گھن

مسئلہ ٹالنے سے نہیں حل تلاش کرنے سے ختم ہوتا ہے :مودی

نئی دہلی// وزیراعظم نریندر مودی نے آج کہا کہ مسئلہ انہیں ٹالنے سے نہیں بلکہ ان کا حل تلاش کرنے سے سے ختم ہوتا ہے اور ان کی حکومت نے ملک میں برسوں سے زیر التوا پروجیکٹوں کو اسی اصول پر چلتے ہوئے پورا کیا ہے ۔مسٹر مودی نے پیر کو دارالحکومت کے لٹین زون میں وشمبھر دت روڈ پر ارکان پارلیمنٹ کے لئے نئی کثیر منزلہ رہائش گاہوں کا افتتاح کرتے ہوئے کہا،‘‘دہائیوں سے چلے آرہے مسئلوں کو ٹالنے سے نہیں ،ان کا حل تلاش کرنے سے وہ ختم ہوتے ہیں۔صرف ارکان پارلیمنٹ کی رہائش گاہ ہی نہیں بلکہ یہاں دہلی میں ایسے متعداد پروجیکٹ تھے ،جو کئی کئی برسوں سے ادھورے تھے ۔’’اس احاطے میں آٹھ پرانے بنگلوں کو توڑ کر ارکان پارلیمنٹ کے لئے 76 نئی کثیر منزلہ رہائش گاہیں بنائی گئی ہیں۔اس موقع پر لوک سبھا اسپیکر اوم برلا اور کئی دیگر معزز ہستیاں بھی موجود تھیں۔وزیراعظم نے کہا کہ حکومت نے پختہ عزم کے

اگلے سال جون تک مفت راشن دیا جائے گا:ممتا بنرجی

کلکتہ//بانکوڑہ ضلع میں متعدد ترقیاتی پروجیکٹوں کا افتتاح کرتے ہوئے وزیرا علیٰ ممتا بنرجی نے کہاکہ ان کی حکومت نے اگلے سال جون تک مفت میں راشن فراہم کرنے کے بعد فیصلہ کیا ہے اور اگروہ دوبارہ اقتدار میںآئیں تو ‘‘مفت راشن ’’ اسکیم آگے بھی جاری رہے گی ۔ بانکوڑہ میں کھترا سدھو کانو اسٹیڈیم میں ضلع انتظامیہ کے ساتھ اعلیٰ سطحی میٹنگ اور متعدد پروجیکٹ کا افتتاح کیا ۔اس موقع پر وزیرا علیٰ ممتا بنرجی کے علاوہ چیف سکریٹری الاپن بنرجی ، ضلعی مجسٹریٹ ایس ارون پرساد اور ممبر پارلیمنٹ کلیان بینرجی سمیت حکمراں پارٹی کے ارکان اسمبلی بھی موجود تھے ۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے انہوں نے گذشتہ 9سالوں میں ریاستی حکومت کی کامیابیوں پر روشنی ڈالی اور کہا کہ اگلے جون تک مفت راشن فراہم کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ اگر بعد میں وہ اقتدار میں واپس آئیںتو اس میں اضافہ کیا جائے گا۔اس مہینے

چینی حکمت عملی کی حقیقت پر پردہ ڈالنا ممکن نہیں:راہل

نئی دہلی//کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے کہا ہے کہ سرحد پر چین کی حکمت عملی تیاری کی حقیقت کو میڈیا حکمت عملی کے ذریعہ سے پردہ ڈالکر کم نہیں کیا جا سکتا۔مسٹر گاندھی نے ٹویٹ کیا،‘‘ چین کی زمینی سیاست حکمت عملی کی حقیقت کا مقابلہ پی آر کے ذریعہ چلائی جارہی میڈیا حکمت عملی سے ہنیں کیا جا سکتا ہے ۔ یہی عام بات ہندوستانی حکومت کو چلانے والوں کی سمجھ میں نہیں آرہی ہے ۔’’اس کے ساتھ ہی انہوں نے ڈوکلام علاقے میں چینی فوج کے تعمیراتی کام کی ایک سیٹلائٹ تصویر بھی پوسٹ کی ہے اور کہا ہے کہ چین کی یہ حکمت عملی ہندوستان کے لئے ہے اور مضبوط حکمت عملی کے بغیر کام نہیں کیا جاسکتا ۔یواین آئی  

دوسری لہر کے خدشات کی سنگینی کو عوام محسوس کریں

ممبئی//آج 8 ، 9 ماہ بعد کورنا کے خوف و ہراس سے چھٹکارہ پانے اور زندگی کو حسب سابق روزمرہ کے معمولات کے مطابق گزارنے کی ابتداء میں ہی ایک بار پھر سے یہ خطرہ عوام کے سروں پر منڈالنے لگا ہے ، اور ملک میں اس کی دوسری لہر کی آمد کے خدشات نے نہ صرف ریاستی حکومتوں ، حتیٰ کے ملک کی اعلیٰ ترین عدالتِ اعظمیٰ کو بھی اس معاملے میں چوکنا کر دیا ہے ۔ کورونا کی یہ دوسری لہر جو مہاراشٹرا کے وزیر اعلیٰ ادھو ٹھاکرے کے خدشات کے مطابق ایک " سونامی " بھی ہو سکتی ہے ، انھیں سخت محتاط اور صحت عامہ کے تیئں اپنی ذمہ داریوں کے سلسلے میں ایک بار پھر سے غور و فکرکرنے پر مجبور کر دیا ہے ۔ملک کی اعلیٰ ترین عدالت ، سپریم کورٹ نے بھی پیر کو یہ مشاہدہ کیا کہ آنے والے مہینوں میں ملک بھر میں وبائی صورتحال پیدا ہونے کا امکان ہے ، اور ریاستوں کے ساتھ ساتھ مرکز کوویڈ 19 بحران سے نمٹنے کے لیے ایک ببتر اور اچھے طری

مسئلہ ٹالنے سے نہیں حل تلاش کرنے سے ختم ہوتا ہے: مودی

نئی دہلی// وزیراعظم نریندر مودی نے پیر کو کہا کہ مسئلہ ٹالنے سے نہیں بلکہ حل تلاش کرنے سے سے ختم ہوتا ہے اور ان کی حکومت نے ملک میں برسوں سے زیر التوا پروجیکٹوں کو اسی اصول پر چلتے ہوئے پورا کیا ہے۔  مودی نے دارالحکومت کے لٹین زون میں وشمبھر دت روڈ پر ارکان پارلیمنٹ کےلئے نئی کثیر منزلہ رہائش گاہوں کا افتتاح کرتے ہوئے کہا”دہائیوں سے چلے آرہے مسئلوں کو ٹالنے سے نہیں ،ان کا حل تلاش کرنے سے وہ ختم ہوتے ہیں۔صرف ارکان پارلیمنٹ کی رہائش گاہ ہی نہیں بلکہ یہاں دہلی میں ایسے متعداد پروجیکٹ تھے،جو کئی کئی برسوں سے ادھورے تھے۔“ اس احاطے میں آٹھ پرانے بنگلوں کو توڑ کر ارکان پارلیمنٹ کے لئے 76 نئی کثیر منزلہ رہائش گاہیں بنائی گئی ہیں۔اس موقع پر لوک سبھا اسپیکر اوم برلا اور کئی دیگرشخصیات بھی موجود تھیں۔ وزیراعظم نے کہا کہ حکومت نے پختہ عزم کے ساتھ کئی پروجیکٹوں کی تعمیر

ملک میں کورونا وائرس کے متاثرین کی تعداد 91.39 لاکھ

نئی دہلی// ملک میں ایک بار پھر کورونا کیس بڑھ رہے ہیں اور پچھلے کچھ دنوں سے روزانہ 45 ہزار سے زیادہ نئے کیس سامنے آرہے ہیں ، حالانکہ اس بیماری کو شکست دینے والے افراد کی تعداد میں بھی اوسطاً اضافہ ہوا ہے۔ زیر علاج مریضوں کی شرح پانچ فیصد سے کم ہے۔ مرکزی وزارت صحت و خاندانی بہبود کے مطابق ، گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران44059 نئے کیس سامنے آئے ہیں اور متاثرہ افراد کی تعداد 91.39 لاکھ ہوگئی ہے۔  

ملک میں کورونا کے سرگرم معاملات میں پھر کمی واقع

نئی دہلی//ملک میں گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس (کووڈ۔19) کے سرگرم معاملوں میں پھر سے کمی آئی ہے اور سرگرم معاملوں کی شرح کم ہوکر 4.85 فیصد پر آگئی ہے ۔ملک میں گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران سرگرم معاملوں میں 4047 کی کمی آئی ہے جس سے یہ تعداد کم ہوکر 4,39,747 رہ گئی ہے ۔ گزشتہ کچھ دنوں سے سرگرم معاملوں میں مسلسل کم آرہی تھی لیکن جمعہ کو اس تعداد میں 491 کا اضافہ ہوا تھا۔ اس دوران ملک میں کورونا کے معاملے 90.50 لاکھ سے زیادہ ہوگئے ہیں لیکن اطمینان کی بات یہ ہے کہ اس بیماری سے صحتیاب ہونے والوں کی تعداد میں بھی مسلسل اضافہ ہورہا ہے اور صحتیاب ہونے کی شرح بڑھ کر 93.67 فیصد آگئی ہے ۔وزارت صحت وخاندانی فلاح وبہبود کی وزارت کے مطابق گزشتہ چوبیس گھنٹوں میں 46,232 نئے معاملے سامنے آئے اور متاثروں کی تعداد بڑھ کر 90.50 لاکھ سے زیادہ ہوگئی ہے ۔ اس دوران 49,715 مریض صحتیاب ہوئے ہیں

۔2022 میں پارلیمنٹ کا سرمائی اجلاس نئی عمارت میں ہوگا

 نئی دہلی// پارلیمنٹ کی نئی عمارت کا سنگ بنیاد اگلے ماہ ہونے اور آزادی کی 75 ویں سال گرہ کے بعد 2022 کا سرمائی اجلاس کا انعقاد نئی عمارت میں ہونے کا امکان ہے ۔لوک سبھا صدر اوم برلا نے آج یہاں نامہ نگاروں سے کہا کہ پارلیمنٹ کی نئی عمارت کے لئے کام شروع ہوچکا ہے ۔تعمیراتی کام میں اس بات کا پورا دھیان رکھا جائے گا کہ فضا اور صوتی آلودگی نہ ہو اور نہ ہی حالیہ عمارت میں پارلیمنٹ کی کارروائی یا انتظامیہ کام کاج میں رخنہ پڑے ۔انہوں نے کہا کہ اکتوبر 2022 تک یہ نیا پارلیمنٹ ہاؤس بن کر تیار ہوجائے گا اور آزادی کی 75ویں سالگرہ کے موقع پر پارلیمنٹ کا اجلاس نئی عمارت سے چلایا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ جلد ہی سنگ بنیاد کا پروگرام منعقد کیا جائے گا۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے واضح کیا کہ سنگ بنیاد دسمبر میں ہی ہوجائے گا۔مسٹر برلا نے کہا کہ موجودہ پارلیمنٹ تقریبات کے انعقاد کے لئے زیادہ موث

۔320 کروڑ کی لاگت سے 28 فوڈ پروسیسنگ یونٹس کے پروجیکٹوں کی منظوری

 نئی دہلی// حکومت نے 320.33کروڑ روپے کے پروجیکٹ کوسٹ سے بنائی جانے والی 28 فوڈ پروسیسنگ یونٹس کو منظوری دی ہے ۔دس ریاستوں میں منظور شدہ ان پروجیکٹوں سے 10 ہزار سے زائد افراد کو روزگار ملے گا۔ ان میں شمال مشرقی ہندوستان کے چھ منصوبے بھی شامل ہیں۔ ہفتہ کے روز فوڈ پروسیسنگ انڈسٹری کے مرکزی وزیر نریندر سنگھ تومر کی زیرصدارت منعقدہ میٹنگ میں فوڈ پروسیسنگ یونٹوں کو منظوری دی گئی۔ اس میٹنگ میں مرکزی وزیر مملکت برائے فوڈ پروسیسنگ انڈسٹریز رامشور تیلی بھی موجود تھے ۔ منصوبوں کے پروموٹرس نے بھی ویڈیو کانفرنس کے ذریعہ حصہ لیا۔ فوڈ پروسیسنگ یونٹوں کے قیام کے لیے پردھان منتری کسان سنپدا یوجناکے تحت تین مئی 2017 کو فوڈ پروسیسنگ اور تحفظ کی صلاحیت پیدا کرنے / توسیع اسکیم کومنظورکیا گیا تھا۔ اس اسکیم کا بنیادی مقصد پروسیسنگ اور تحفظ کی صلاحیتوں کی تعمیر اورموجودہ فوڈ پروسیسنگ یونٹس کی جدت طرازی/

امیت شاہ کاشاندار استقبال ، چنئی پہنچے

چنئی //بی جے پی کے سینئر رہنما اور مرکزی وزیر داخلہ امیت شاہ آئندہ چار پانچ مہینوں کے دوران ہونے والے تمل ناڈو اسمبلی انتخابات سے قبل ریاست کے دو روزہ دورے پر ہفتہ کو یہاں پہنچے۔مسٹر شاہ کی حکمت عملی کو حال ہی میں ختم ہونے والے بہار انتخابات میں قومی جمہوری اتحاد (این ڈی اے) کی کامیابی میں بہت اہم سمجھا جاتا ہے۔ تمل ناڈو میں اس کامیابی کو دہرانے کے ارادے سے ، بی جے پی مسٹر شاہ کے دورے کے لئے ایک مضبوط بنیاد فراہم کرنا اور انتخابات میں اپنا نشان چھوڑنا بہت اہم سمجھتی ہے۔مسٹر شاہ کی آمد پر ، ریاست کے وزیر اعلی اور حکمراں اے آئی اے ڈی ایم کے کے شریک کنوینر ای کے پلاینی سوامی ، نائب وزیر اعلی اور اے آئی اے ڈی ایم کے کنوینر اے پنیرسلوم اور سینئر وزرا کے علاوہ ریاستی بی جے پی صدر ایل مورگن ، پارٹی کے سینئر رہنما ایل گنیشن اور پارٹی انچارج سی ٹی روی نے ہوائی اڈے پر ان کا استقبال کیا۔ریاست

ریاست کے دیگر حصوں میں لوکل ٹرین چلانے کی حکومت نے اجازت دی

 کلکتہ//کالی پوجا سے قبل کلکتہ شہر اور مضافات میں لوکل ٹرین سروس شروع ہونے کے بعد اب مغربی بنگال حکومت نے ریاست کے دوسرے حصوں میں بھی لوکل ٹرین چلانے کی اجازت دیدی ہے۔اس سے قبل مغربی بنگال حکومت نے کلکتہ و مضافات میں لوکل ٹرین چلانے کی اجازت دی تھی۔مگر دوسرے حصوں میں لوکل ٹرین چلانے کی اجازت نہیں دئیے جائے کی وجہ سے مقامی لوگ ناراض تھے۔عوامی ناراضگی کے پیش نظر اب بنگال حکومت نے ریلوے کو خط لکھ کر دیگر علاقوں میں لوکل ٹرین چلانے کی اجازت دی ہے۔تاہم ، ریلوے کے حکام نے دعویٰ کیا ہے کہ ابھی تک کلیئرنس موصول نہیں ہوئیہیں۔اس وقت مرشدآباد۔بردوان ، برداون۔صاحب گنج۔ٹٹو کٹوا۔عظیم گنج کے درمیان لوکل ٹرین نہیں چل رہی ہے۔بہرام پور کے رکن پارلیمنٹ ادھیر چودھری نے وزیر ریلوے کو خط لکھ کر لوکل ٹرین چلانے کا مطالبہ کیا تھا۔کانگریس کے ایم ایل اے ملٹن راشد نے وزیر اعلی ممتا بنرجی کو خط لکھ کر ضلع ب