تازہ ترین

ضلع پونچھ میں کنٹرول لائن پر گولہ باری، فوجی ہلاک، دوسرا زخمی

سرینگر//ضلع پونچھ میں کنٹرول لائن پر جمعرات کو بھارت اور پاکستان کی افواج کے مابین گولہ باری کے نتیجے میں ایک فوجی اہلکار ہلاک جبکہ دوسرا زخمی ہوگیا۔ یہ واقعہ گذشتہ رات ضلع پونچھ کے منکوٹ سیکٹر میں پیش آیا۔ نیوز ایجنسی جی این ایس کے مطابق کراس ایل او سی گولہ باری کے اس واقعہ میں سپاہی کرنیل سنگھ اور رائفل مین وریندر سنگھ زخمی ہوگئے جنہیں راجوری میں قائم فوجی اسپتال لیجایا گیا جہاں کرنیل سنگھ تھوڑی ہی دیر بعد دم توڑ بیٹھا جبکہ وریندر سنگھ کا علاج جاری ہے۔ دفاعی ذرائع کے مطابق پاکستان نے کسی اشتعال کے بغیر بھارتی چوکیوں کو نشانہ بنایا اور بھارتی افواج نے اس کا ”بھر پور“ جواب دیا۔  

ڈوڈہ میں کورونا کے 18نئے کیس،1مریض کی موت

ڈوڈہ //ڈوڈہ ضلع سے کووڈ 19 کے 18نئے مثبت کیس سامنے آئے ہیں جبکہ ایک عمر رسیدہ شخص کی موت ہوئی۔بدھ کے روز ڈوڈہ سے کورونا وائرس کے 18 نئے مثبت کیس سامنے آئے اور اس کے ساتھ ہی ضلع میں کورونا وائرس متاثرین کی تعداد 1071 پہنچ گئی ۔ضلع میں 56 مریض شفایاب ہوئے ہیں اور اسطرح سے آج تک کل 1112 مریض صحت یاب ہوئے ہیں۔وہیں گورنمنٹ میڈیکل کالج ڈوڈہ 61 سالہ شخص کی موت ہوئی جس کی ٹیسٹ رپورٹ مثبت آئی ہے۔  

ڈوڈہ کے بیشتر علاقوں میں بجلی نظام تباہ | کانٹے دارتاراوربوسیدہ کھمبے ہٹانے کا مطالبہ

ڈوڈہ //ڈوڈہ ضلع کے بیشتر علاقوں میں بجلی کی کانٹے دار تار و لکڑی کے بوسیدہ کھمبے نصب ہیں جس کی وجہ سے مقامی آبادی کو شدید خطرہ لاحق رہتا ہے۔ڈوڈہ کے بلاک کاستی گڑھ، گندنہ،مرمت،بھالہ،چرالہ،بونجواہ سے تعلق رکھنے والے لوگوں نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ ایک طرف حکومت کوشل وکاس یوجنا و آر جی جی وی وائی کے تحت پسماندہ علاقوں میں بجلی کی ازسر نو مرمت کرنے کے لئے کروڑوں روپے واگذار کررہی ہے دوسری طرف دور دراز علاقوں میں آج بھی لکڑی کے کھمبے بوسیدہ ہو چکے ہیں جبکہ ترسیلی نظام بھی خستہ حال ہے۔اے آئی ایس ایف کے سابق ریاستی صدر مکیش پریہار نے خراب بجلی نظام پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ صدر مقام ڈوڈہ سے بیس کلومیٹر کی دوری پر واقع منجمی گاؤں میں بجلی نظام تباہی کے دہانے پر پہنچ گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ بوسیدہ کھمبے و کانٹے دار تار مقامی آبادی کے لئے وبال جان بن گئی ہے۔انہوں نے کہا کہ صارفین و

دور دراز علاقوں میں دستیاب سہولیات | ترقیاتی کمشنر ریاسی نے جائزہ لیا

مہور// ڈپٹی کمشنر ریاسی اندو کنول چب نے جاری بیک ٹو ولیج پروگرام کے تیسرے مرحلے کے پیش نظر یوم بلاک تقریبات میں شرکت کے لئے ضلع کے دور دراز بلاکوں کا دورہ کیا۔انہوں نے پنچایتی نمائندگان کو بیک ٹو ولیج پروگرام کے لئے مبارکباد پیش کی اور بی ڈی سی چیئرپرسن کو اسپورٹس کٹ دئے۔ یوم بلاک کی یہ تقریبات تھورو، مہور، گلاب گڑھ اور چسانہ میں منائی گئیں ۔دھرماری میںمقامی لوگوں نے محکمہ تعمیرات عامہ، پی ایم جی ایس وائی اور حکومت کی دیگر اسکیموں کے تحت تعمیر کی جانے والی مختلف سڑکوں کے امور اٹھائے۔ انہوں نے آدھار مراکز کھولنے کے ساتھ ساتھ کچھ سکولوں کی عمارتیں تعمیر کرنے کی مانگ کی۔مہور اور چسانہ میں سڑکوں کی تعمیر، آبپاشی کی اسکیموں کی تکمیل، نئے اسکولوں کے افتتاح، پانی کی فراہمی کی اسکیموں کا کام، سڑکوں کا معاوضہ، اسکولوں کی عمارتوں، بجلی کی فراہمی میں بہتری، پلوں کی تعمیر، کان کنی، نئے راشن کارڈ

راجوری اور پونچھ میں آر پار گولہ باری

راجوری//ہندوپاک افواج کے درمیان راجوری اور پونچھ کے تین سیکٹروں کرشنا گھاٹی، سندر بنی اور منکوٹ میں فائرنگ اور گولہ باری کا تبادلہ ہوا ۔ دفاعی ترجمان لیفٹنٹ کرنل دیونندر آنند نے بتایا کہ منگل کی صبح 4بج کر30 منٹ پر پاکستانی فوج نے پونچھ ضلع کے منکوٹ علاقے میں چھوٹے ہتھیاروں سے فائرنگ اور گولہ باری کی۔انہوں نے بتایاکہ دوپہر میںپاک فوج نے راجوری کے سندر بنی سیکٹر اور پونچھ کے کرشنا گھاٹی سیکٹرمیں مارٹروں اور چھوٹے ہتھیاروں سے گولہ باری کی ۔انہوں نے بتایا’’بھارتی فوج نے بلا اشتعال فائرنگ اور گولہ باری کا بھرپور جواب دیا‘‘۔دریں اثنا، گولہ باری کی وجہ سے کئی مویشی زخمی ہوئے ۔ادھر پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کے مطابق بھارتی فوج نے ایل او سی کے بروہ اور ٹینڈر سیکٹر میں فائر کھول دیا جس سے گاؤں بروہ کا پندرہ سالہ لڑکا مارا گیا جبکہ گاؤں کرتن کی خاتون

پونچھ میں کراس ایل او سی گولہ باری، نصف درجن مویشی زخمی

جموں//جموں و کشمیر کے ضلع پونچھ کے منکوٹ سیکٹر میں لائن آف کنٹرول پر منگل کی صبح ہندوستان اور پاکستان کی افوج کے درمیان شدید گولہ باری کا تبادلہ ہوا۔ ایک دفاعی ترجمان نے بتایا کہ ضلع پونچھ کے منکوٹ سیکٹر میں ایل او سی پر منگل کی صبح قریب ساڑھے چار بجے پاکستانی فوج نے بلا کسی اشتعال کے بھارتی چوکیوں کو نشانہ بنا کر شدید گولہ باری شروع کر دی۔ انہوں نے کہا کہ وہاں تعینات بھارتی فوجی اہلکاروں نے حملے کا بھر پور جواب دیا۔ کراس ایل او سی کے اس واقعہ میں نصف درجن مویشیوں کے زخمی ہونے کی اطلاع موصول ہوئی ہے۔  

مغل شاہراہ سے سفرکرنے کیلئے شرائط عوام کیلئے دردِ سر

پونچھ//اگرچہ موسم سرما سے عین قبل تاریخی مغل شاہراہ پر کو عام عوام کیلئے کھول دیاگیاہے لیکن ایسی شرط رکھی گئی ہے جسے پورا کرنے کیلئے پہلے جموں کا سفر کرناپڑے گا۔حکام کے مطابق اس شاہراہ پر وہی شخص سفر کر سکتا ہے جس کے پاس صوبائی کمشنر کا اجازت نامہ ہوگا ۔اس روڈ کو اس برس موسم گرما شروع ہونے پر نہیں کھولاگیا اور بظاہر اس کی وجہ کورونا وائرس کا پھیلائو بتائی گئی لیکن ضلع پونچھ میں اس کے باوجود کورونا وائرس تیزی سے پھیلا اور روڈ کو ایسے عالم میں کھولنے کا اعلان کیاگیاجب ضلع میں یومیہ کورونا معاملات 100سے بھی پار ہوگئے۔حکام کی جانب سے اس شاہراہ پر سفر کرنے والے لوگوں کو کچھ شرائط کے ساتھ سفری اجازت دی جارہی ہے اوران میں سے انہیں صوبائی کمشنر جموں سے اجازت نامہ بھی لیناہوگاجبکہ کورونا ٹیسٹ بھی لازمی قرار دیاگیاہے ۔تاہم عام لوگوں کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ ان لوازمات سے بہتر ہے کہ وہ جموںسرینگ

راجوری میں ایل او سی پر ہند۔پاک افواج کے مابین گولہ باری

سری نگر// جموں و کشمیر کے ضلع راجوری کے نوشہرہ سیکٹر میں لائن آف کنٹرول پر ہفتے کی صبح ہندوستان اور پاکستان کی افوج کے درمیان شدید گولہ باری کا تبادلہ ہوا تاہم کسی نقصان کی کوئی اطلاع نہیں ہے۔ ایک دفاعی ترجمان نے بتایا کہ راجوری کے نوشہرہ سیکٹر میں ایل او سی پر آج صبح قریب سوا گیارہ بجے پاکستانی فوج نے بلا کسی اشتعال کے بھارتی چوکیوں کو نشانہ بنا کر چھوٹے اور بڑے ہتھیاروں سے گولہ باری شروع کی۔ انہوں نے کہا کہ وہاں موجود بھارتی فوجی جوان حملے کا” بھر پور“ جواب دے رہے ہیں تاہم فی الوقت کسی بھی جانب کسی جانی یا مالی نقصان کی کوئی اطلاع نہیں ہے۔  

راجوری میں آرمی پورٹر کی پراسرار موت

راجوری //راجوری میں فوج کے ساتھ بطور پورٹر کام کرنے والے ایک شخص کی پراسرار طور پر موت ہوگئی جس پر پولیس نے تحقیقات شروع کردی ہے۔متوفی کی پہچان بالا رام ساکن چٹیار کے طور پر ہوئی ہے۔پولیس نے بتایاکہ بالارام چٹیار میں فوج کے ساتھ کام کررہاتھا اور اسے صحت بگڑ جانے پرفوج کے ذریعہ پی ایچ سی چٹیار لایاگیاجہاں اس کی موت ہوگئی ۔بعد ازآں نعش کو گورنمنٹ  میڈیکل کالج و ہسپتال راجوری منتقل کیاگیا جہاں پوسٹ مارٹم ہوا ۔پولیس نے اس سلسلے میں کیس درج کرکے مزید تحقیقات شروع کردی ہے۔  

مغل روڈ جزوی طور پر دوطرفہ ٹریفک کیلئے کھل گیا | صوبائی کمشنر کی اجازت کے بغیربین صوبائی سفر نہیں ہوگا

راجوری+سرنکوٹ //جمعہ کے روز تاریخی مغل روڈ دو طرفہ ٹریفک کے لئے کھول دی گئی جس دوران 100کے قریب گاڑیوں نے پیر گلی کوعبور کیا ۔ضلع مجسٹریٹ پونچھ راہل یادو نے جمعہ کے روز سے دونوں اطراف کے شہری ٹریفک کو سڑک پر جانے کی اجازت دینے کا حکم جاری کیا لیکن مسافروں کے لئے ڈویژنل کمشنردفتر سے اجازت حاصل کرنا لازمی قرار دیاگیاہے ۔عہدیداروں نے بتایا کہ جمعہ کے روزعام ٹریفک اور دیگر قسم کی گاڑیوںبشمول مالبردارٹرکوںکو دونوں اطراف سے روانہ کیاگیا۔انہوں نے بتایا’’جمعہ کے روز چلنے والی زیادہ تر گاڑیاں سامان بردار تھیں ‘‘۔ڈپٹی ایس پی ٹریفک زبیر مرزا نے بتایا کہ پہلے روز100 کے قریب گاڑیاں چلیں ۔ انہوں نے مزید کہا کہ پوشانہ میں فوج اور پولیس چیکنگ ہوتی ہے جبکہ بفلیاز کے قریب ٹریفک پولیس کے چیک پوائنٹس بھی موجود ہیں۔دریں اثناء مغل روڈ پر تارکول بچھانے کاکام شروع کیاگیاہے ۔ ایگزیکٹو ا

راجوری اور پونچھ میں 2اموات

راجوری//کورونا وائرس کی وجہ سے راجوری اور پونچھ اضلاع میں جمعرات کو 2اموات ہوگئیں جبکہ پونچھ سے 51 اور راجوری سے 86 نئے کیس رپورٹ ہوئے ہیں۔ڈپٹی کمشنر پونچھ راہل یادو نے بتایا کہ سرنکوٹ سے تعلق رکھنے والے ایک شخص کی طبیعت بگڑ جانے کے بعد اسے جموں منتقل کیاگیاتاہم وہ راستے میں ہی دم توڑ گیا۔اس کی کورونا رپورٹ مثبت آئی تھی ۔انہوں نے مزید بتایا کہ پونچھ میں کورونا وائرس کے 51 نئے کیس آئے ہیں جن میں سے 7 مسافر اور 44 مقامی افرادہیں۔دوسری طرف، ضلع راجوری میں بھی کورونا سے ایک موت ہوئی ہے۔عہدیداروں نے بتایا’’راجوری کی بابا غلام شاہ بادشاہ یونیورسٹی میں کام کرنے والے بدھل سموٹ گائوں کے ایک 45 سالہ شخص کی موت ہوگئی ہے۔عہدیداروں نے بتایاکہ مذکورہ شخص بیمار ہوگیا تھا اور اس میں کورونا کی علامات بھی پیدا ہوئی تھیں،وہ گذشتہ دو روز سے راجوری ہسپتال کے آئیسولیشن وارڈ میں زیر علاج تھا ج

پونچھ میں کنٹرول لائن پر تین سیکٹروں میں بھارتی چوکیوں پر پاکستان کی شیلنگ

سرینگر//حکام نے بدھ کو کہا کہ پاکستان کی افواج نے پونچھ ضلع میںکنٹرول لائن پر تین سیکٹروں میں بھارت کی اگلی چوکیوں کو مارٹر شیلنگ سے نشانہ بنایا۔ ایک دفاعی ترجمان کے مطابق پاکستان نے آج صبح کسی اشتعال کے بغیر جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کرتے ہوئے پونچھ کے کیرنی، قصبہ اور شاہپور سیکٹروں میں چھوٹے ہتھیاروں سے بھارت کی چوکیوں کو شدید گولہ باری کا نشانہ بنایا۔ ترجمان نے کہا کہ بھارتی افواج نے پاکستانی فائرنگ کا ”بھر پور اور مناسب“ جواب دیا۔ قابل ذکر ہے کہ گذشہ ہفتے ضلع راجوری میں کراس کنٹرول لائن گولہ باری میں ایک فوجی ہلاک اور دو زخمی ہوئے تھے۔2ستمبر کے روز ایک اور ایسے ہی واقعہ میں ضلع راجوری میں ہی ایک جے سی او ہلاک ہوا تھا۔  

سیزن ختم ہونے کے بعد مغل روڈ بحال

شوپیان /شاہد ٹاک/ ضلع انتظامیہ پونچھ نے بالآخر مغل روڑ کو دو طرفہ ٹریفک کیلئے کھولنے کا فیصلہ کیا ہے۔ضلع مجسٹریٹ نے جمعہ سے مسافر ٹریفک کو دو طرفہ طور چلنے کی اجازت دی ہے۔ مسافروں کی ٹیسٹنگ بفلیاز اور ہیر پورہ شوپیان میں کی جائیگی تاہم صوبائی ٹریفک کے چلنے کے بارے میں صوبائی انتظامیہ کی اجازے لازمی ہے۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ سرینگر جموں، جموں سرینگر،جموں دہلی کے علاوہ جموں پٹھانکوٹ، لدھیانہ یا دیگر ریاستوں کیلئے مسافر کے چلنے پر ساری پابندیاں ختم کی گئی تھیں اور کہیں پر بھی کوئی پابندی نہیں تھی لیکن صرف مغل روڑ کو بند کیا گیا تھا، جس پر پونچھ کی انتظامیہ نے مسافر گاڑیوں کے چلنے پر پابندی عائد کی تھی۔ضلع انٹطامیہ پونچھ کی جانب سے اس بلا جواز پابندی کی وجوہات اب تک سمجھ میں نہیں آرہی ہے حالانکہ پونچھ مین پہلے جب کورونا کیسز نہ ہونے کے برابر تھے تو مغل روڑ بند کیا گیا تھا اور اب جبکہ کیسز

راجوری میں جنوبی کشمیر کے 3جنگجو گرفتار

راجوری+ترال // راجوری ضلع میں سیکورٹی فورسز اور پولیس نے ایک خصوصی کارروائی کے دوران جنوبی کشمیر سے تعلق رکھنے والے تین جنگجوئوں کو گرفتار کرنے کا دعویٰ کیا ہے جبکہ ان کے قبضے سے بھاری مقدار میں اسلحہ و گولہ بارود کے علاوہ ایک لاکھ روپے نقدی بھی بر آمد کر لی گئی ۔ سنیچراعلیٰ صبح فورسز اور جموں کشمیر پولیس نے مشتر کہ طور پر ایک خصوصی کارورائی کے دوران تین جنگجوئوں کی گرفتار ی عمل میں لائی ۔ گرفتار کئے گئے جنگجوئوں کی شناخت راہل بشیر ساکن پلوامہ، عامر جان ساکن پلوامہ اور حافظ یونس ساکن شوپیان کے طور پرہوئی ہے۔ پولیس نے ان سے2اے کے 56، 6اے کے میگزین، دو چائنیز پستول، چار گرینیڈ، دو پاؤچ اور ایک لاکھ روپے نقدی برآمد کی ۔پولیس نے اس سلسلے میں ایف آئی آر نمبر 492/20 درج کیا گیا۔ادھرپولیس سربراہ دلباغ سنگھ نے کہا ہے کہ سر حد پار سے ڈورن کے ذریعے عسکریت پسندوں تک اسلحہ پہنچانے کیلئے نئی ک

بانہال میں آگ کی ہولناک واردات ،2 درجن سے زیادہ دکان خاکستر

سرینگر//ضلع رام بن کے بانہال علاقے میں دوران شب آگ کی ایک بھیانک واردات میں کم سے کم28دکان اور ایک رہائشی مکان خاکستر میں تبدیل ہوگئے۔یہ واقعہ تحصیل بانہال کے کھاری مارکیٹ میں پیش آیا۔ حکام کے مطابق آدھی رات کو آگ پُر اسرار طور نمودار ہوکر پورے مارکیٹ میں آناً فاناًپھیل گئی۔ آگ پر قابو پانے کیلئے مقامی لوگ اور متعلقہ عملہ جائے واردات پر پہنچ گئے لیکن وہ آگ کو قابو نہیں کر پائے۔ اس واردات میں تاہم کسی جانی نقصان کی کوئی اطلاع نہیں ملی ہے۔ ایس ایس پی رام بن حسیب الرحمان نے نیوز ایجنسی جی این ایس کو بتایا کہ آگ سے ہونے والے مالی نقصان کا تخمینہ لگایا جارہا ہے۔  

راجوری ضلع میں تین مشتبہ جنگجو گرفتار: پولیس

سرینگر//سیکورٹی فورسز نے ہفتہ کو دعویٰ کیا کہ اُنہوں نے ضلع راجوری میں تین مشتبہ جنگجوﺅں کو گرفتار کرکے اُن کی تحویل سے اسلحہ و گولہ بارود بر آمد کیا ہے۔ اطلاعات میں پولیس کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا گیا ہے کہ ایک جنگجو مخالف آپریشن کے دوران فورسز اور پولیس نے راجور قصبہ میں مشترکہ طور تین مشتبہ افراد کو گرفتار کیا۔  گرفتار شدگان کی تحویل سے اسلحہ و گولہ بارود بر آمد کرنے کا دعویٰ کیا گیا ہے۔ مزید تفصیلات کا انتظار ہے  

بالاکوٹ میں شدید گولہ باری

مینڈھر// مینڈھر پونچھ کے بالاکوٹ علاقے میں لائن آف کنٹرول کے اطراف  میںبھاری گولہ باری سے متعدد رہائشی ڈھانچوں کو نقصان پہنچا جبکہ ایک فوجی اہلکار زخمی ہو گیا۔حکام نے بتایا کہ جمعرات کی صبح تقریباً پونے سات بجے پاکستانی فوج نے بالاکوٹ میں حد متارکہ اور قریبی علاقوں پر فائرنگ اور شلنگ کی جس دوران بالاکوٹ ،سندوٹ،سوالہ، ڈبی، بالاکوٹ فارورڈ ، بسونی ، پنجنی علاقوں میں زبردست خوف وہراس پیداہوا۔حکام نے بتایا’’پاک فوج نے علاقے میں شہری آبادی کو نشانہ بناتے ہوئے طویل فاصلے پر 120 ملی میٹر کے مارٹر گولے بھی استعمال کئے‘‘۔  پاکستانی فوج کی طرف سے داغا گیا ایک مارٹر گولہ آرمی چوکی کے قریب پھٹنے سے فوج کااہلکار زخمی ہوگیاجسے ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں وہ زیر علاج ہے۔علاقے میں گولہ باری سے دس کے قریب ڈھانچوں کو بھی نقصان پہنچا۔ بالاکوٹ فارورڈ میں چار کچے مکانات کو

امشی پورہ شوپیاں انکائونٹر کی ہلاکتیں

 راجوری //رواں برس کے جولائی ماہ میں شوپیاں میں ہوئے مبینہ فرضی انکائونٹر اور راجوری کے 3نوجوانوں کی مشکوک گمشدگی و ہلاکت کے سلسلہ میں لواحقین پر مشتمل ایک وفد نے لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر بصیر خان سے ملا قات کی ۔وفد میں شامل اراکین نے نوجوانوں کی مبینہ جعلی انکائونٹر میں کی گئی ہلاکت کیساتھ منسلک پورا واقعہ کے بارے میں مشیر کو آگاہ کیا ۔وفد میں رشتہ داروں کیساتھ ساتھ علاقہ کے سرپنچ اعجاز احمد ودیگران بھی شامل تھے ۔سرپنچ نے بتایا کہ واقعہ کے سلسلہ میں لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر کو پوری جانکاری فراہم کی گئی جبکہ انہوں نے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ فرضی انکائونٹر میں ہلاک ہوئے نوجوانوں کے ڈی این اے کی رپورٹ کو جلدازجلد سامنے لایا جائے ۔انہوں نے بتایا کہ مذکورہ تینوں نوجوان بے گناہ تھے اور وہ وادی میں محنت مزدوری کیلئے گئے ہوئے تھے ۔مشیر نے وفد کو یقین دلاتے ہوئے کہاکہ مذکورہ معاملہ پہلے سے ہی ل

مغل شاہراہ پر ٹنل تعمیر کی جائے :ظفر منہاس

 سرینگر//اپنی پارٹی نائب صدر ظفر اقبال منہاس نے حکومت ِ ہند پرزور دیا ہے کہ جموں وکشمیر کے مختلف علاقوں اور ذیلی خطوں کے مابین سڑک رابطوں کو بحال کیاجائے۔ انہوں نے وفاقی حکومت سے مغل شاہراہ پر ’ٹنل ‘کی تعمیر کے لئے ضروری لوازمات مکمل کے عمل میں تیزی لائی پربھی زور دیا ہے ، جس کا مقصد سال بھر بلاخلل آمدورفت کے لئے سرینگر جموں شاہراہ کا متبادل فراہم کرنا ہے۔ سرینگر دفتر میں شوپیان سے آئے اپنی پارٹی ورکروں کی ایک میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے منہاس نے کہاکہ مغل شاہراہ خطہ پیر پنچال کی عوام کے لئے شہ ِ رگ کی حیثیت رکھتی ہے جنہیں بصورت دیگر گرمائی راجدھانی سرینگر تک پہنچنے میں کئی قسم کی دقتوںکا سامنا ہے۔ انہوں نے کہا’’ خطہ پیر پنچال کے اضلاع پونچھ اور راجوری کی عوام کے ساتھ ساتھ اِس طرف وادی خاص طور سے شوپیان میں رہنے والے لوگوں کوتاریخی مغل شاہراہ پر پبلک ٹریفک پر

پونچھ میں ایل او سی پر گولہ باری، جانی یا مالی نقصان کی اطلاع نہیں

جموں// جموں و کشمیر کے ضلع پونچھ کے بالاکوٹ اور مینڈھر سیکٹروں میں لائن آف کنٹرول پر جمعرات کی صبح ہندوستان اور پاکستان کی فوج کے درمیان گولہ باری کا تبادلہ ہوا تاہم کسی بھی جانب کسی جانی یا مالی نقصان کی کوئی اطلاع نہیں ہے۔ جموں میں تعینات دفاعی ترجمان کرنل دویندر آنند نے بتایا کہ پونچھ کے بالاکوٹ اور مینڈھر سیکٹروں میں ایل او سی پر جمعرات کی صبح قریب پونے سات بجے پاکستانی فوج نے بلا کسی اشتعال کے بھارتی چوکیوں کو نشانہ بنا کر گولہ باری اور فائرنگ شروع کی۔ انہوں نے کہا کہ وہاں تعینات بھارتی فوجی جوان حملوں کا بھر پور جواب دے رہے ہیں۔