تازہ ترین

پیر پنچال کے بالائی و میدانی علاقوں میں برف و باراں

 پونچھ// جموں کشمیر کے دیگر اضلاع کی طرح خطہ پیرپنچال میں بھی موسم نے ایک بار پھر کروٹ بدلتے ہوئے پہاڑی علاقو ں میں تازہ برفباری جبکہ میدانی علاقوں میں موسلا دھار بارشوں سے معمول کی زندگی بری طرح سے متاثر ہوئی جس کی وجہ سے لوگوں کو سخت مشکلات کا سامنا کر نا پڑ رہا ہے۔ پونچھ ضلع کے بالائی علاقوں میں بھی برفباری اور بارشوں کا سلسلہ جمعہ اور سنیچر کی درمیانی شب سے مسلسل جاری و ساری ہے اور لوگوں کو سخت مشکلات کا سامنا کر نا پڑ رہا ہے۔گزشتہ کچھ روز موسم خو شگوار ہو نے کی وجہ سے جہاں لوگوں نے راحت کی سانس لی تھی وہیں پھر سے برفباری اور بارشوں کا سلسلہ شروع ہونے کے ساتھ ساتھ سردی کی لہر میں بھی اضافہ ہو گیا ہے جس کی وجہ سے لوگوں کی پریشانیوں میں اضافہ ہوا ہے۔ ضلع پونچھ کی تحصیل منڈی، سرنکوٹ، مینڈھر اور حویلی کے علاقوں میں برفباری کی وجہ سے شدید نقصان کے ساتھ ساتھ سردی کی لہر میں اضافہ ہو

بارش نے محکمہ دیہی ترقی کی پول کھول دی

مینڈھر//سنیچر کے روز ہوئی بارش نے محکمہ دیہی ترقی و پنچایتی راج کی مینڈھر میں قلعی کھل کر رہ گئی جب مینڈھر قصبہ و گردونواح کے علاقوں میں پانی سڑکوں پر بہنے کے ساتھ ساتھ دکانوں اور مکانات کے اندر بھی داخل ہواجس سے لاکھوں روپے مالیت کا نقصان ہواہے۔مقامی دکانداروں اور لوگوں نے بتایاکہ قصبہ مینڈھر کی صفائی ستھرائی کیلئے محکمہ کی طرف سے لاکھوں روپے بولی لگائی جاتی ہے لیکن صفائی کاکوئی بندوبست نہیں اور اگر کبھی صفائی کی بھی جائے تو ساری گندگی جمع کرکے نالیوں میں پھینک دی جاتی ہے جس وجہ سے یہ نالیاں بارش میں بند ہوجاتی ہیں۔ان کاکہناہے کہ دکانداروں کو خود کئی مرتبہ صفائی کرواناپڑتی ہے۔ان کاکہناہے کہ ہر سال بارش کے دوران ایسی ہی صورتحال کاسامناکرناپڑتاہے لیکن حکام کو ٹس سے مس نہیں۔دکانداروں کاکہناہے کہ اڈہ بولی پر وصول ہونے والی رقم کا حساب دیاجائے کیونکہ جب صفائی ہی نہیں کی جارہی ہے تو وہ پھر

بالاکوٹ کلر موڑہ کی لفٹ سکیم بے کار،لوگ پانی کی بوند بوند کوترساں

میندھر//مینڈھر کے بالاکوٹ کلر موڑہ میں قریب سات آٹھ برس پہلے ایک لفٹ سکیم قایم کی گئی تھی جس کا مقصد علاقہ کو پینے کا صاف پانی فراہم کرنا تھا تاہم یہ سکیم لوگوں کیلئے بے سود ہیںکیوں کہ یہ سکیم بار بار خراب رہتی ہے جس کی وجہ سے لوگوںکو کئی کلو میٹر کا سفر پیدل طے کرکے پینے کیلئے پانی حاصل کرنا پڑتا ہے ۔ لوگوںنے اس سلسلے میںمتعلقہ حکام سے مداخلت کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ علاقہ کو پینے کا پانی فراہم کرنے کیلئے اقدامات اُٹھائے جائیں ۔ کرنٹ نیو زآف انڈیا کے مطابق سب ڈویڑن مینڈھر کی بلاک بالاکوٹ کی پنچائت کلر موڑہ کی عوام کا کنہا ہے کہ پنچائت کلر میں ایک لفٹ سکیم سال 13/2012 میں تعمیر کی گئی تھی جس پر سرکار کے لاکھوں خرچ ہوئے تھے تاکہ پسماندہ علاقہ کی عوام کو بروقت تازہ اور صاف پانی دستیاب ہو سکے جو محکمہ جل شکتی کے ملازمیں کی عدم توجہی اور لاپرواہی کے باعث کلی طور نکارہ ہو چکی ہے جس کام پس