لعنت ہے ہم پر اگر آج بھی ہم اقتدار کے پیچھے بھاگیں گے: عمر عبداللہ

سری نگر// نیشنل کانفرنس کے نائب صدر و سابق وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ نے جمعرات کوکہا ”اگر ہم موجودہ سیاسی حالات میں بھی اقتدار کے پیچھے بھاگیں گے تو وہ ہمارے لئے لعنت ہے“۔ انہوں نے کہا” موجودہ حالات آپسی چھوٹی سیاسی لڑائیوں میں الجھے رہنے کے نہیں بلکہ ہمیں آج اپنے تشخص اور زمین کے لئے لڑائی لڑنی ہے“۔ نیشنل کانفرنس لیڈر پارٹی صدر دفتر پر ایک تقریب کے دوران اظہار خیال کررہے تھے۔ ان کا مزید کہنا تھا ” سال گذشتہ کے اوائل میں ہم سب جماعتیں الگ الگ راستوں پر چل رہی تھیں لیکن آج ہم ایک ہی پلیٹ فارم پر جمع ہونے کے لئے مجبور ہوئے ہیں“۔ عمر نے مزید کہا کہ یہاں کی سیاسی جماعتوں کو بہت پہلے متحد ہونا چاہئے تھا تاکہ حالات وہاں نہیں پہنچتے جہاں آج ہیں۔  

اراضی قوانین کی مخالفت کرنے والے اپنے ووٹ بینک کو غیر محفوظ محسوس کر رہے ہیں: جیتندر سنگھ

جموں// وزیر اعظم کے دفتر میں وزیر مملکت ڈاکٹر جیتندر سنگھ نے کہا ہے کہ نئے اراضی قوانین کے خلاف وہی لوگ آواز اٹھا رہے ہیں جو اپنے ووٹ بینک کو خطرے میں محسوس کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ نئے اراضی قوانین سے جموں و کشمیر کے اقتصادی حالات مزید بہتر ہوں گے اور اعلیٰ تعلیمی ادارے بھی مزید مستحکم ہوں گے۔ نیشنل کانفرنس کے نائب صدر و سابق وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ کے بیان کہ ’کشمیر کو فروخت کیا جا رہا ہے‘، کے ردعمل میں مرکزی وزیر نے کہا”کیا گپکار کے بنگلے برائے فروخت ہیں، کیا ان بنگلوں میں رہائش پذیر لوگ باہر کے کسی شخص کو ان میں رہنے کی اجازت دیتے ہیں“۔  

جموں کشمیر کے وسائل اور زمین کی لوٹ کی اجازت نہیں دیں گے: محبوبہ

سرینگر//سابق وزیر اعلیٰ اور پیپلز ڈیمو کریٹک پارٹی کی صدر محبوبہ مفتی نے جمعرات کو کہا کہ وہ کسی کو بھی جموں کشمیر کے وسائل اور زمین کی ”لوٹ“ کی اجازت نہیں دیں گی۔ انہوں نے اپنی رہائش گاہ پر نامہ نگاروں کو بتایا”ہم خاموش رہنے کے بجائے کسی کو بھی ہماری زمین اور وسائل لوٹنے کی اجازت نہیں دیں گے“۔ محبوبہ نے مرکز پر الزام عائد کیا کہ اُسے کشمیری عوام نہیں بلکہ یہاں کے وسائل پیارے ہیں۔ انہوں نے مرکز کو متنبہ کرتے ہوئے کہا”ہم صرف ٹویٹر سیاست دان نہیں، آج آپ نے ہمیں طاقت کے بل پر روک لیا لیکن اگلی بار ایسا نہیں ہوگا“۔ انہوں نے کہاکہ مرکز آئے دنوں نئے احکامات صادر کرکے جموں کشمیر کے لوگوں پر دباو ڈال رہی ہے۔محبوبہ نے وضاحت کرتے ہوئے کہا”اگر اُن کے پاس اتنی ہی طاقت ہے تو وہ چین کو لداخ میں بھارتی سر زمین سے کیوں نہیں نکالتے۔وہ چین کے سام

دنیا میں کورونا وائرس کی وجہ سے 11.73 لاکھ سے زیادہ افراد ہلاک

واشنگٹن / ریو ڈی جنیرو / نئی دہلی// دنیا میں کورونا وائرس (کووڈ-19) کی وبا کی وجہ سے اب تک 11.73 لاکھ سے زیادہ افراد ہلاک ہوچکے ہیں اور متاثرہ افراد کی کل تعداد 4.44 کروڑ کو عبور کرچکی ہے۔ جان ہاپکنز یونیورسٹی کے سائنس اور انجینئرنگ کے مرکز (سی ایس ایس ای) کے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق ، کورونا وائرس سے 44482604 افراد متاثر اور 1173292افراد کو ہلاک ہوگئے ہیں۔ کورونا سے سب سے زیادہ متاثر امریکہ میں انفیکشن کی وجہ سے اب تک227673 افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں اور متاثرہ افراد کی تعداد8855433 تک جا پہنچی ہے۔ ہندوستان میں ، پچھلے 24 گھنٹوں میں کورونا انفیکشن کی وجہ سے مزید 517 افراد کی موت ہوگئی ، جس سے ہلاک شدگان کی مجموعی تعداد 120526ہوگئی ، جب کہ اس وبا کے49881 نئے معاملوں کے ساتھ متاثرہ افراد کی تعداد 80.40 لاکھ سے زیادہ ہوگئی ہے۔  

ضلع گاندربل میں محکمہ پی ڈی ڈی کیخلاف احتجاج، شاہراہ پر ٹریفک میں رکاوٹ

کنگن//وسطی ضلع گاندربل میںتحصیل گنڈ کے گگن گیر علاقے میں جمعرات کومحکمہ بجلی کے خلاف احتجاجی مظاہرہ ہوا جس کے سرینگر۔ لداخ شاہراہ پر ایک گھنٹے تک ٹریفک کی نقل و حمل میں خلل پڑا۔  کشمیر عظمیٰ کو ملی تفصیلات کے مطابق چونہ دجی گگن گیر علاقے میں اس وقت سرینگر ۔لداخ شاہراہ پر ٹریفک کی آمدورفت بند ہو گئی جب چونہ دجی گوجر پتی کے مرد وزن نے محکمہ بجلی کے خلاف احتجاجی دھرنا دیا ۔ مظاہرین کا کہنا تھا کہ 100گھرانوں پر مشتمل آبادی کے لئے محکمہ نے 100KV بجلی ٹرانسفارمر نصب کیا ہے اور اسی ٹرانسفارمر سے نزدیکی سی آر پی ایف کیمپ کو بھی بجلی سپلائی کی جارہی ہے جس کی وجہ سے وہاں اکثر بجلی متاثر رہتی ہے اور مقامی بستی کے لوگوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ مظاہرین کا مطالبہ تھا کہ مقامی بستی میں 250KV بجلی ٹرانسفارمر نصب کیا جائے تاکہ لوگوں کو مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے۔  ب

کورونا کے روزانہ معاملوں میں پھر اضافے کا رجحان،49881 نئے کیس ظاہر

نئی دہلی// کیرالہ ، مہاراشٹر اور دہلی میں کورونا وائرس کے انفیکشن کے معاملات میں اضافے کی وجہ سے ، ملک میں مسلسل دوسرے دن ان کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے اور یہ تعداد ایک دن میں 50 ہزار کے قریب پہنچ گئی ہے اور ہلاکتوں کی تعداد 500 سے بھی تجاوز کرگئی۔ جمعرات کو صحت و خاندانی بہبود کی مرکزی وزارت کے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق ، گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا کے 49881نئے کیس رپورٹ ہوئے ہیں اور متاثرہ افراد کی تعداد 80.40 لاکھ ہوگئی ہے۔ ایک روز قبل بدھ کے روز43843 مریضوں میں انفیکشن کی اطلاع ملی تھی ، جبکہ منگل کو یہ تعداد36470 تھی۔ پچھلے 24 گھنٹوں کے دوران 56480 افراد نے وبا کو شکست دی۔ اس سے زیر علاج مریضوں کی تعداد7116سے گھٹ کر 603687ہوگئی ہے۔ وہیں 517 مریضوں کی موت کے بعد ، ہلاک ہونے والوں کی تعداد120527 ہوگئی ہے۔  

پارٹی کا احتجاجی پروگرام ناکام بنانے کیلئے سرینگر میں پی ڈی پی دفتر سیل:محبوبہ

سرینگر//پولیس نے جمعرات کو پیپلز ڈیمو کریٹک پارٹی (پی ڈی پی) کے سرینگر دفتر کو محاصرے میں لے لیا۔ یہ اقدام پارٹی کے اس بیان کے بعد اُٹھایا گیا جس میں آج اراضی قوانین کی ترمیم کیخلاف احتجاج کا اعلان کیا گیا تھا۔ سابق وزیر اعلیٰ اور پی ڈی پی صدر محبوبہ مفتی نے پارٹی دفتر کو محاصرے میں لینے پر انتظامیہ کی مذمت کی ہے۔ محبوبہ نے ایک ٹویٹ میں کہا” پی ڈی پی کا سرینگر دفتر سیل کرکے کارکنان کو گرفتار کیا گیا ہے۔ایسے ہی ایک احتجاج کیلئے جموں میں اجازت دیدی گئی، تو یہاں اس کو ناکام بنانے کی کیا وجہ ہے؟“ یاد رہے کہ پی ڈی پی کارکنان نے گاندھی نگر جموں میں گذشتہ روز اراضی قوانین میں ترمیم کیخلاف احتجاجی مظاہرہ کیا ۔  

شمالی قصبہ سوپور میں آگ کی واردات ،تین رہائشی مکا ن خاکستر، دو کو جزوی نقصان

سرینگر//شمالی ضلع بارہمولہ کے سوپور قصبہ میں آگ کی ایک واردات میں تین رہائشی مکانوں کو شدید جبکہ مزید دو مکانوں کو جزوی نقصان ہوا۔ آگ کی یہ واردات گذشتہ شام دیر گئے قصبہ کے نہار پورہ علاقے میں پیش آئی۔ اطلاعات کے مطابق آگ غلام نبی شاہ کے دو منزلہ مکان سے ظاہر ہوئی جس نے عبد المجید شاہ اور ریاض احمد شاہ کے مکان کو بھی لپیٹ میں لیا۔  اطلاعات میں بتایا گیا ہے کہ تین مکانوں کے خاکستر ہونے کے نتیجے میں ان میں موجود لاکھوں کا سامان بھی خاک ہوگیا۔ اس واردات میں علی محمد شاہ اور بشیر احمد شاہ کے مکانوں کو بھی جزوی نقصان ہوا۔ اس دوران فائر اینڈ ایمر جنسی محکمہ کی ٹیم جائے مقام پر پہنچی اور مقامی لوگوں کی مدد سے آگ کو مزید پھیلنے سے روک لیا۔   

دہلی کے لوگوں پر کورونا وائرس اور آلودگی کی دوہری مار

نئی دہلی// ملک کی دارالحکومت دہلی کے لوگ حال میں دوہری مار جھیل رہے ہیں۔ ایک تو آب و ہوا میں آلودگی کا ’زہر‘گھلا ہوا ہے تودوسری طرف جان لیوا کورونا وائرس کے ہر روز ریکارڈ توڑ نئے معاملے سامنے آرہے ہیں۔ دارالحکومت کی ہوا میں معیار کی سطح ایک بار پھر ’بہت خراب‘ زمرے سے بڑھکر ’شدید خراب حالت‘ میں پہنچ گئی ہے۔دارالحکومت میں ہوا کے معیار کا انڈیکس (اے کیو آئی) کی سطح 400 کو پار کرگئی ہے جو سب سے زیادہ خراب مانی جانے والے زمرے میں ا?تی ہے۔ دہلی آلودگی کنٹرول کمیٹی (ڈی پی سی سی) کے آج جاری اعدادو شمار کے مطابق صبح علی پور میں اے کیو آئی 405 تو آنند وہار میں یہ سطح 401 درج کی گئی۔وزیرپور میں یہ 410 تھا۔ مرکزی آلودگی کنٹرول بورڈ(سی پی سی بی) کے مطابق جہانگیر پوری میں اے کیو آئی کی سطح 420 درج کی گئی۔لودھی روڈ پرآئی کیو یو 311،آر کے پورم میں 376 ،آ

کشمیر اور دہلی میں چھ مقامات پر این آئی اے کے چھاپے

سرینگر//قومی تحقیقاتی ایجنسی (این آئی اے) نے جمعرات کو وادی کشمیر اور دہلی میں چھ مقامات پر چھاپے مارے۔یہ چھاپے غیر سرکاری رضاکار تنظیموں اور خیراتی اداروں کے دفاترمیں فنڈنگ کیس کے سلسلے میں ڈالے گئے ۔ این آئی اے بیان کے مطابق ان چھاپوں کے دوران بعض قابل اعتراض دستاویزات اور چیزیں ضبط کی گئیں۔ اطلاعات کے مطابق کشمیر اور دہلی میں جن مقامات پر چھاپے مارے گئے ان میں فلاح عام ٹرسٹ،جے کے یتیم فاونڈیشن،سالویشن مومنٹ،جے کے وائس آف وکٹمز اور چیئرٹی الائنس دہلی وغیرہ شامل ہیں۔ یہ چھاپے اُس کیس کے سلسلے میں ڈالے گئے جس کے بارے میں8اکتوبر کو ایف آئی آر درج کی گئی ۔  

تازہ ترین