تازہ ترین

تما م اضلاع میں کورو نا کے مخصوص ہسپتالوں میں ٹیسٹنگ کی جارہی ہے: ناظم صحت

سری نگر// جموں وکشمیر میں کورونا وائرس کے لئے جو ہسپتال مخصوص کئے گئے ہیں اُن میں موثر طور ٹیسٹ کئے جاتے ہیں۔ناظم صحت کشمیر ڈاکٹر سمیر مٹو نے اتوار کوکہا کہ کشمیر میں 8 جبکہ جموں میں 3مخصوص ہسپتال کوروناکے لئے مخصو ص کئے گئے ہیں ۔ اُنہوں نے مزید کہا کہ محکمہ صحت کے عملے کو کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لئے دِن رات دستیاب رہنے کی ہدایت دی گئی ہے ۔ڈاکٹر سمیر مٹو نے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ عالمی صحت تنظیم کی ہدایات کے مطابق تمام طرح کی احتیاط برتیں تاکہ اس وائرس کے پھیلاﺅ کو روکا جاسکے۔ اُنہوں نے کہا کہ حکومت نے مشتبہ مریضوں کو کورنٹین کرنے اور آئیسولیشن کی سہولیات فراہم کرنے کے لئے مناسب اقداما ت کئے ہیں۔ڈائریکٹر موصوف نے کہا کہ محکمہ صحت 25لیب ٹیکنشنز کو خصوصی تربیت دے رہی ہے اور ان سے کہا گیا ہے کہ وہ ریڈ زون اور بفر زون کا جائزہ لیں تاکہ کورونا وائرس کے مریضوں کے رابطے

کورونا :جموں کشمیر میں 33,503 اَفراد زیر نگرانی

جموں//حکومت نے اتورا کو کہا کہ جموںوکشمیر میں آج کورونا وائر س کے 14نئے معاملات سامنے آئے ہیں ۔ ان سبھی کا تعلق کشمیر صوبے سے ہے۔اس طرح جموں وکشمیر میں مثبت معاملات کی کل تعداد 106تک پہنچ گئی ہے۔  حکومت کی طرف سے جاری کئے گئے روزانہ میڈیا بلٹین میں بتایا گیا ہے کہ نوول کورونا وائرس کے 106 مثبت معاملات میں سے 100 سرگرم معاملات ہیں ،04 مریض صحتیاب ہوئے ہیں اور 02کی موت واقع ہوئی ہے۔ اب تک 33,503 ایسے اَفراد کو نگرانی میں رکھا گیا ہے جن کا سفری پس منظر ہے یا جو مشتبہ معاملات کے رابطے میں آئے ہیں ۔ ان میں سے 10,981 اَفراد کو ہوم کورنٹین میں رکھا گیا ہے جس میں سرکار کی طرف سے چلائے جارہے کورنٹین مراکز بھی شامل ہیں ۔ اس کے علاوہ619 اَفراد کو ہسپتال کورنٹین میں رکھا گیا ہے۔100کو ہسپتال آئیسولیشن میں رکھا گیا ہے جبکہ 16,237 اَفراد کو گھروں میں نگرانی میں رکھا گیا ہے۔اسی طرح بلیٹن

کورونا وائرس کے مزید14ٹیسٹ مثبت،جموں کشمیر میں تعداد106ہوگئی

سرینگر//اتوار کے روز کورونا وائرس کے مزید ٹیسٹ مثبت آنے کے بعد جموں کشمیر میں اس مہلک وائرس میں مبتلاءافراد کی تعداد106تک پہنچ گئی۔ سرکاری ترجمان روہت کنسل نے ایک ٹویٹ کرتے ہوئے کہا” کشمیر صوبے میں کورونا وائرس کے مزید14کیس سامنے آئے ہیں،اس طرح جموں کشمیر میں ایسے کیسوں کی تعداد106تک پہنچ گئی ہے ،کشمیر میں اس وقت 82کیس جبکہ جموں صوبے میں 18کیس ایکٹیو ہیں“۔ مہلک کورونا وائرس کے تیزی سے پھیلاﺅ نے پوری دنیا میں ہا ہا مچارکھی ہے یہاں تک کہ اس کو ورلڈ ہیلتھ آرگنازیشن نے عالمی وباءقرار دیتے ہوئے پوری دنیا کے اندر طبی ایمرجنسی کا اعلان کر رکھا ہے۔  

کپوارہ میں دراندازی مخالف آپریشن کے دوران5جنگجو ،فوجی اہلکار ہلاک: فوج

سرینگر//دفاعی ذرائع نے اتوار کو بتایا کہ شمالی ضلع کپوارہ میں کنٹرول لائن پر دراندازی کی ایک کوشش کوناکام بناتے ہوئے فوج نے 5جنگجوﺅں کو جاں بحق کیا جبکہ اس آپریشن کے دوران1فوجی اہلکار بھی ہلاک ہوگیا۔ انہوں نے کہا کہ شمالی کشمیر کے کیرن سیکٹر میں در اندازی مخالف آپریشن کے دوران جن5 جنگجوﺅں کو ہلاک کیا گیا وہ کنٹرول لائن عبور کرنے کی کوشش کررہے تھے ۔ اس آپریشن کے دوران ایک فوجی اہلکار بھی ہلاک اور 2 دیگرشدید زخمی ہوگئے تھے۔ فوجی ترجمان راجیش کالیا نے کہا کہ علاقے میں موسم خراب ہونے کے نتیجے میں زخمیوں کو اسپتال پہنچانے میں دشواریوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ انہوں نے تاہم کہا کہ علاقے میں فوج کا آپریشن جاری ہے۔  

کورونا مخالف اقدام:وادی بھر میں لاک ڈاﺅن کا سلسلہ لگاتار جاری

سرینگر//کورونا وائرس کے مریضوں میں مزید 14کے اضافے کے دوسرے روز اتوار کو وادی بھر میں کورونا مخالف لاک ڈاﺅن جاری ہے۔جموں کشمیر میں لاک ڈاﺅن کا سلسلہ 22مارچ سے جاری ہے جبکہ وزیر اعظم نریندر مودی کے اعلان کے بعد پورے ملک میں لاک ڈاﺅن 24مارچ سے جاری ہے۔ سرکاری حکام کے مطابق لاک ڈاﺅن کا مقصد مہلک کورونا وائرس کے پھیلاﺅ کو روکنا ہے۔ شہر سرینگر اور وادی بھر کی سبھی شاہراﺅں اور رابطہ سڑکوں پد پولیس اورفورسز نے رکاوٹیں کھڑی کر رکھی ہیں تاکہ لاک ڈاﺅن کو موثر بنایا جاسکے۔ وادی کشمیر کے سبھی چھوٹے بڑے قصبہ اور دیہات میں دکانیں اور کاروباری مراکز اور تعلیمی ادارے بند ہیں اور سڑکوں پر ہُو کا عالم ہے تاہم انتظامیہ نے اشیائے ضروریہ کی فراہمی کیلئے ضروری انتظامات کررکھے ہیں۔

کپوارہ جھڑپ میں زخمی 2 فوجی دم توڑ بیٹھے، ہلاکتوں کی تعداد8

سرینگر//دفاعی ذرائع نے اتوار کو بتایا کہ جو 2فوجی اہلکار کپوارہ میں کنٹرول لائن پر در اندازی مخالف آپریشن کے دوران زخمی ہوئے تھے، وہ زخموں کی تاب نہ لاکر دم توڑ بیٹھ گئے ہیں۔ اس طرح مذکورہ آپریشن میں مرنے والوں کی تعداد8ہوگئی ہے جن میں5جنگجو اور3فوجی اہلکار شامل ہیں۔ اس سے قبل دفاعی ترجمان نے کہا تھا کہ شمالی ضلع کپوارہ میں کنٹرول لائن پر دراندازی کی ایک کوشش کوناکام بناتے ہوئے فوج نے 5جنگجوﺅں کو جاں بحق کیا جبکہ اس آپریشن کے دوران1فوجی اہلکار بھی ہلاک ہوگیا۔انہوں نے کہا کہ شمالی کشمیر کے کیرن سیکٹر میں در اندازی مخالف آپریشن کے دوران جن5 جنگجوﺅں کو ہلاک کیا گیا وہ کنٹرول لائن عبور کرنے کی کوشش کررہے تھے ۔ اس آپریشن کے دوران ایک فوجی اہلکار بھی ہلاک اور 2 دیگرشدید زخمی ہوگئے تھے۔ دفاعی ذرائع کا کہنا ہے کہ مذکورہ دونوں فوجی بعد میں زخموں کی تاب نہ لاکر دم توڑ بیٹھے۔ واضح رہے

سی بی ایس ای سکولوں سے وابستہ سٹاف اورطلاب کو دیئے جلانے کی ہدایت

سرینگر//سینٹرل بورڈ آف سیکنڈری ایجو کیشن (سی بی ایس ای) نے اپنے سکولوں سے وابستہ طالبان علم اور سٹاف ممبران سے کہا ہے کہ وہ اتوار رات نو بجے اپنے اپنے گھروں کے اندر دیئے یا اپنے سیل فونوں کی ٹارچ جلاکر اُن کوششوں میں شامل ہوجائیں جو مہلک کورونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کیلئے کی جارہی ہیں۔ یہ ہدایت وزیر اعظم نریندر مودی کی اُس اپیل کے بعد دی گئی ہے جس میں اُنہوں نے لوگوں پر زور دیا کہ وہ 5اپریل بروز اتوار رات نو بجے بجلی بند کرکے اپنے اپنے گھروں میں نو منٹوں تک دیئے یا سیل فونوں کی ٹارچ جلائیں۔ سی بی ایس سی کے ڈائریکٹر اکیڈیمکس نے سکولوں کے نام جاری ایک خط میں لکھاہے”طالبان علم ، سکولوں کا دیگر سٹاف اور اُن کے اہل خانہ 5اپریل رات نو بجے نو منٹوں تک دیئے،شمع، یا اپنے موبائیل فونوں کی ٹارچ جلائیں تاکہ پورے ملک کی یکجہتی کا اظہار ہو“۔ خط میں مزید درج ہے” یاد ر

تازہ ترین