جموں وکشمیر پنچایت ایکٹ میں ترمیم| ضلع ترقیاتی کونسلوں کا قیام

سرینگر // جموں کشمیر میں انتخابی حلقوں کی حد بندی کے عمل کا آغاز کردیا گیا ہے اور سب سے پہلے ایک اہم اقدام کے طور پر ضلع ترقیاتی کونسلوں کے قیام کیلئے جموں و کشمیر پنچایتی راج قانون1989 میں ترمیم کی گئی ہے جس کیلئے ہر ضلع کو ارکان کے انتخاب کیلئے 14 علاقائی انتخابی حلقوں میں تقسیم کیا جائے گا، جن کا براہ راست انتخاب عمل میں لایا جائیگا۔ مرکزی سرکار کی جانب سے جاری جموں وکشمیر تنظیم نو (ریاستی قوانین کی اصلاح) کے چوتھے حکم نامہ ، 2020 کے مطابق ، ہر ضلع کیلئے ایک ضلعی ترقیاتی کونسل ہوگی۔ ترقیاتی کونسل کادائرہ پورے ضلع ماسوائے قانون کے تحت تشکیل دی گئی میونسپلٹی یا میونسپل کارپوریشن پر ہوگا۔ ضلعی ترقیاتی کونسل میں ضلع کے علاقائی حلقوں سے براہ راست منتخب ممبران ، قانون ساز اسمبلی کے ممبران اور ضلع کی تمام بلاک ڈیولپمنٹ کونسلوں کے چیئرپرسن شامل ہونگے۔جموں و کشمیر کی پنچایت میں وزارت داخلہ

کورونا وائرس| مہلوکین 6،متاثرین 610

 سرینگر // جموں و کشمیر میں کورونا وائرس سے مزید 6افراد فوت ہوگئے۔ مہلوکین کی مجموعی تعداد 1372تک پہنچ گئی جن میں سے 454جموں جبکہ 918کشمیر سے تعلق رکھتے ہیں۔ سنیچر کو 28سفر کرنے والوں سمیت 610 افراد  کی رپورٹیں مثبت آئیں۔ متاثرین کی مجموعی تعداد 87364 ہوگئی۔ ان میں 52311 کشمیر جبکہ جموں میں یہ تعداد 35ہزار کا ہندسہ پار کرکے 3505تک پہنچ گئی ہے۔ تازہ 610متاثرین میں363کشمیر جبکہ247جموں صوبے سے تعلق رکھتے ہیں۔ کشمیر کے363متاثرین میں 129سرینگر، 32بڈگام، 58بارہمولہ، 28پلوامہ، 25کپوارہ، 19اننت ناگ، 36بانڈی پورہ، 24گاندربل،6شوپیان اور 6کولگام سے تعلق رکھتے ہیں۔ جموں کے 247متاثرین میں 116سرینگر، 16راجوری، 10ادھمپور، 17ڈوڈہ، 8کٹھوعہ، 11پونچھ، 8سانبہ، 38کشتواڑ،19رام بن اور 4ریاسی سے تعلق رکھتے ہیں۔   ۔ 6اموات  پچھلے 24گھنٹوں کے دوران جموں و کشمیر میں کورونا وائرس

لارنو کوکر ناگ میں تصادم،پلوامہ کاجنگجو جاں بحق

 اننت ناگ //جنوبی کشمیر میں ضلع اننت ناگ کے لار نو جنگلاتی علاقے میں مسلح جھڑپ کے دوران پلوامہ کا ایک جنگجو جاں بحق جبکہ ایک فرار  ہوا۔مذکورہ جنگجو سی آر پی ایف کا سابق کانسٹیبل تھا، جو نوکری چھوڑ کر پلوامہ میں دکانداری کرتا تھا۔پولیس نے پہلے دعویٰ کیاتھا کہ مذکورہ جنگجو ایک غیر ملکی تھا جو حال ہی میں دیگر ساتھیوں کے ہمراہ دراندازی کر کے وادی میں داخل ہوا تھا اور جو بارودی سرنگ بنانے کا ماہر تھا۔ادھر پانپور میں پولیس نے جنگجوئوں کے ایک بالائی ورکر کو گرفتار کیا ہے ۔ پولیس بیان پولیس کے مطابق19آر آر ،164سی آر پی ایف اور ایس او جی کوکر ناگ نے ژہ لارنو کوکر ناگ کے نزدیکی جنگلات میں 2سے3جنگجوئوں کی موجود گی کی اطلاع موصول ہونے کے بعدجمعہ اور سنیچر کی درمیانی شب محاصرے میںلیااورسنیچر کی صبح تلاشی کارروائیوں کا آغاز کیا۔پولیس نے بتایا کہ یہاں فورسزکے محاصرے میں آنے وا

ساڑے پانچ ہیکٹراراضی پر ہانگل کنزرویشن سنٹر شکار گاہ 9سال سے تشنہ تکمیل

ترال //جنوبی کشمیر کے مشہور صحت افزاء مقام شکار گاہ ترال میں20کروڑ روپے کی مالیت سے زیر تعمیر ہانگل کنزرویشن سنٹر 9سال گزر جانے کے باجود بھی تشنہ تکمیل ہے ،جس کے نتیجے میں وادی میں ہانگل کی نسل کی افزائش میں مزید کمی واقع ہورہی ہے ۔5.5 ہیکٹرکنال اراضی پر پھیلے اس سنٹر کو خصوصی طور پر ہانگل کی افزائش کیلئے بنانے کا مقصد تھا۔جسے’ جنگلی جانوروں کی پناہ گاہ‘ قرار دیا گیا ہے۔ مزکورہ سنٹر کومرکزی محکمہ زو اتھارٹی آف انڈیا کی گائیڈ لائنز پر تعمیر کیا گیا، تاکہ سنٹر سے باہر کا کوئی بھی جانور اس کے اندر نہ جا سکے ۔ وائلڈ لائف وارڑن شوپیان پلوامہ انتسار سہیل نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’سنٹر کا بنیادی ڈھانچہ مکمل ہے، اب افزائش کیلئے نر اور مادہ ہانگل کو پکڑ کر یہاں لانا ہے‘‘۔شکارگاہ‘‘ ترال میں زو اتھارٹی آف انڈیاکی معالی معاونت سے سال2011میں 5.5ہیکٹ

ربیع الاول کا چاندنظر نہیں آیا

سرینگر//برصغیر میں کل ربیع الاول کا چاند نظر نہیں آیا لہٰذا 19اکتوبرسوموار کو یکم ربیع الاول ہوگااور اس نسبت سے 30اکتوبرکو عید میلاد النبیﷺ ہوگا۔پاکستان میں مرکزی رویتِ ہلال کمیٹی کو ملک کے مختلف حصوں سے چاند کی عدم رویت کی رپورٹ موصول ہوئی جس کے بعد چیئرمین مفتی منیب الرحٰمن نے اعلان کیا کہ ماہِ ربیع الاوّل کا چاند نظر نہیں آیا، لہٰذا یکم ربیع الاوّل 1442 ہجری پیر کو ہوگی جبکہ عید میلادالنبیؐ 30 اکتوبر بروز جمعہ کو منایاجائے گا۔اس دوران مفتی اعظم جموں کشمیر مفتی ناصر الاسلام نے اعلان کیا کہ ماہ ربیع الاول کا چاندنظر نہیں آیا۔انہوںنے کہاکہ 19 اکتوبر کو ربیع الاول کی پہلی تاریخ ہوگی۔انہوں نے کہا کہ اس نسبت سے30اکتوبرکو عید میلاد النبیﷺ ہوگا۔  

تازہ ترین