بارہمولہ کی خاتون کا کورونا سے انتقال، اموات کی تعداد32

سرینگر// شمالی کشمیر کے بارہمولہ کی ایک بزرگ خاتون منگل کے روز کورونا سے متاثر ہوکر انتقال کر گئی اس طرح جموں کشمیر میںمہلک وائرس کی وجہ سے جاں بحق افراد کی تعداد32ہوگئی ہے۔ خبر رساں ایجنسی جی این ایس کے مطابق مذکورہ خاتون کا تعلق بارہمولہ کے خانپورہ سے تھا اور اُس کا انتقال گذشتہ روز یعنی پیر کو ہوگیا جس کے ایک دن بعد اُس کی کورونا رپورٹ مثبت آگئی۔ جی ایم سی بارہمولہ کے پرنسپل ڈاکٹر سید مسعود کا حوالہ دیتے ہوئے خبر رساں ایجنسی نے لکھا کہ مذکورہ خاتون کئی دیرینہ امراض میں مبتلاءتھی اور آخر کار اُس کا کورونا ٹیسٹ رپورٹ بھی مثبت آگیا۔اُس کی میت کو لاش گھر میں رکھا گیا تھا اور اب اُسے قواعد و ضوابط کے مطابق دفنانے کیلئے ورثاءکے حوالے کیا جائے گا۔ ضلع کمشنر بارہمولہ جی این ایتو کے مطابق مذکورہ خاتون اُس55سالہ شخص کی والدہ نسبتی تھی جو کورونا میں ملوث ہوکر گذشتہ ہفتے انتقال کرگی

ترال میں فورسز کارروائی کے دوران مسلح تصادم، ایک جنگجو جاں بحق

سرینگر//جنوبی کشمیر کے ترال علاقے میں منگل کو سیکورٹی فورسز کے آپریشن کے دوران جنگجوﺅں اور فورسز کے مابین مسلح تصادم آرائی کے نتیجے میں ایک جنگجو جاں بحق ہوگیا۔ پولیس کے مطابق یہ تصادم آرائی ضلع پلوامہ میں ترال کے سیموہ گاﺅں میں پیش آئی جہاں فورسز نے مصدقہ اطلاع کے بعد تلاشی آپریشن شروع کیا ۔اس دوران چھپے جنگجوﺅں نے فورسز کو گولیوں کا نشانہ بنایا جس کے بعد طرفین میں گولیوں کا شدید تبادلہ ہوا۔گولیوں کے اسی تبادلے کے دوران ایک جنگجو جاں بحق ہوگیا۔پولیس نے تاہم مارے گئے جنگجو کی شناخت کے بارے میں کچھ نہیں بتایا۔ خبر رساں ایجنسی جی این ایس کے مطابق جنگجو کی ہلاکت کے بعد سے جائے تصادم پر خاموشی چھائی ہوئی ہے تاہم فورسز کا آپریشن جاری ہے۔ پولیس ذرائع نے کہا کہ اس جنگجو مخالف آپریشن میں پولیس کے علاوہ فوج اور سی آر پی ایف کے اہلکارحصہ لے رہے ہیں۔  

ایک دن میں ریکارڈ اموات، 3فوت

سرینگر //جموں و کشمیر میں پیر کو کورونا وائرس سے مزید 3افراد کی موت واقع ہوئی ہے۔اس طرح وائرس سے مرنے والوں کی تعداد 31ہوگئی ہے جن میں سے 4جموں جبکہ 27کشمیر سے تعلق رکھتے ہیں۔کورونا وائرس بیماری پھوٹ پڑنے کے بعد وادی میں پہلی بارایک ہی دن میں 3افراد کی ہلاکت ہوئی ہے۔( کپوارہ کا ایک 25سالہ نوجوان جو صدر اسپتال میں زیر علاج تھا، پیر کی شام فوت ہوا ، اس کے نمونے تشخیص کیلئے بھیج دیئے گئے ہیں، اور حکام کا کہنا ہے کہ ٹیسٹ کے نتائج آنے کے بعد ہی لاش ورثاء کے حوالے کی جائیگی)۔ادھر سوموار کوایک ڈاکٹر ، 9حاملہ خواتین اور ایک ہی کنبہ کے 8  افراد سمیت مزید 155مشتبہ مریضوں کی ریورٹیں مثبت آئی ہیں۔جموں و کشمیر میں کورونا وائرس مریضوں کی  2601 تک پہنچ گئی ہے جن میں سے602جموں جبکہ1999مریضوں کا تعلق کشمیر سے ہے۔ مثبت قرار دیئے گئے 155افراد میں سے53رام بن،21ڈوڈہ،12اننت ناگ، 11کپوارہ، 10سرین

کشمیرمیں 70روز کے دوران 52حاملہ خواتین وائرس سے متاثر،ایک کی موت، 26زچگی کے بعد گھر روانہ،14نوزائد بچے تولد اور منفی قرار

 سرینگر //کشمیر میں 68دنوں کے دوران 52حاملہ خواتین وائرس سے متاثر ہوئی ہیں۔ ان حاملہ خواتین میں ایک کی موت واقع ہوئی ہے جبکہ51خواتین کو مختلف اسپتالوں میںعلاج و معالجے کیلئے داخل کیا گیاجن میں سے 26صحتیاب ہوکر گھر واپس لوٹ گئیں ہیں۔51حاملہ خواتین میں سے 14 کا زچگی عمل مکمل ہوگیا اور اُنکے ہاں14بچے تولد ہوئے جن کے نمونے منفی پائے گئے ہیں۔وادی میں 23مارچ سے کورونا وائرس متاثرین کیسز سامنے آنے شروع ہوگئے تھے۔ پچھلے لگ بھگ 70روز کے دوران31مئی تک52حاملہ خواتین وائرس سے متاثر پائی گئیں۔ ان خواتین میں سے 26اننت ناگ،15بارہمولہ،7کولگام،2گاندربل، ایک شوپیان اور ایک کا تعلق سرینگر سے ہے۔ ریاستی سرکار کی ہدایت پر جموں و کشمیر میں حاملہ خواتین کی سکریننگ کا عمل 16مئی کو شروع ہوا اور پہلے دن ہی ضلع اننت ناگ کے مختلف دیہات سے تعلق رکھنے والی12حاملہ خواتین کی رپورٹیں مثبت آئیں جبکہ 17مئی کو

نوشہرہ سیکٹر میں دراندازی کی کوشش،3جنگجوجاں بحق

نوشہرہ (راجوری)//نوشہرہ کے کبوتر گالا علاقے میں حد متارکہ پر دراندازی کی ایک بڑی کوشش ناکام بناتے ہوئے فوج نے 3جنگجوئوں کو جاں بحق کرنیکا دعویٰ کیا ہے۔اور ان کی تحویل سے امریکی ساختہ بندوق ایم۔16 اور دیگر اسلحہ بر آمد کیا گیا ہے۔دفاعی ذرائع نے بتایاکہ 28اور29مئی کی درمیانی شب کلال سیکٹر کے نزدیک حد متارکہ پر کبوتر گالا کے مقام پر بھاری ہتھیاروں سے لیس 6جنگجوئوں پر مشتمل ایک گروپ نے دراندازی کی کوشش کی تاہم اسی دوران ایک زور دھماکہ ہواجو امکانی طور پر کسی جنگجو کاپائوں زیر زمین بچھائی گئی بارودی سرنگ پر پڑنے سے ہوا۔ دھماکہ کی آواز سنتے ہی فوج نے مورچہ بندی کرلی اور 400میٹر علاقے کا محاصرہ کرکے تلاشی کارروائی شروع کی گئی اور بالآخر جنگجوئوں اور فوج کے درمیان جھڑپ ہوئی جس میں 3جنگجو ہلاک ہوئے۔ذرائع نے بتایاکہ نعشوں کو تحویل میں لینے کیلئے پچھلے تین روز کے دوران آپریشن جاری رہا تاہم پا

سکولوں کو جون کے وسط میں کھولنے کا امکان

سرینگر // کورونا وائرس کے باعث سکولوں کو جون کے وسط میں کھولنے کا امکان ہے اور جموں کشمیر سرکار نے ڈائریکٹر سکول ایجو کیشن جموں اور کشمیر کو لازمی احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کی غرض سے ضروری لوازمات پورا کرنے کیلئے کہا ہے۔ڈائریکٹر فائنانس سکول ایجو کیشن ڈیپارٹمنٹ کی جانب سے جموں اور کشمیر کے ڈائریکٹروں کے نام یکم مئی کو ایک مکتوب روانہ کردیا ہے جس میں ان سے کہا گیا ہے ’’ حکومت اس بات کی کوشش میں ہے کہ جون کے وسط میں سکولوں کو کھولا جائے گا، مجھے اس بات کی ہدایت دی گئی ہے کہ آپ تک یہ بات پہنچائی جائے کہ سبھی سرکاری سکولوں میں کورونا وائرس کے پھیلائو سے بچنے کیلئے طلاب اور اساتذہ کیلئے ضروری احتیاطی بندوبست کیلئے لازمی چیزیں فراہم کی جائیں‘‘۔مکتوب میں مزید کہا گیا ہے ’’ اس ضمن میں سبھی سکولوں کے منتظمین کو ہدایات دی جائیں کہ وہ بار بار استعمال کرنے کے

۔11جون کو دبئی اور 26جون کو کرغستان کیلئے خصوصی پروازیں

سرینگر//وسط ایشیائی ملک کرغستان اور دبئی میں در ماندہ کشمیریوں کو لانے کیلئے  11 اور 26جون کو خصوصی پروازیں چلیں گی ۔ 11جون کو دبئی سے 168در ماندہ کشمیریوں کو جبکہ کرغستان کیلئے 26جون کو ائر انڈیا کی پرواز سے168 کشمیریوں کو واپس لایا جائیگا۔ شہری ہوا بازی کی وزارت کی طرف سے تیسرے مرحلے کیلئے وندے بھارت مشن کیلئے جاری پروگرام کے تحت دبئی سرینگر اور کرغستان سرینگر کیلئے پروازیں ان 70پروازوں میں شامل ہونگی جو 11جون سے 30جون تک مختلف ممالک میں درماندہ بھارتی شہریوں کو لائیں گی۔کرغستان میں در ماندہ کشمیری طلاب نے حال ہی میںکشمیر چیمبر آف کامرس کو 381در ماندہ کشمیریوں کی ایک فہرست مکمل تفصیلات کیساتھ بھیجی ہے، جو سرینگر کی پرواز کیلئے انتظار کررہے ہیں اور چیمبر  نے اس فہرست کو مقامی انتظامیہ کے سپرد کردیا ہے۔کرغستان کے مختلف کالجوں میں زیر تعلیم درماندہ کشمیری طلاب  میں سے اب

فوج و نیم فوجی دستوں کے اہلکار

سرینگر//بیرون ریاستوں سے جموں کشمیر لوٹنے والے فوجی اور نیم فوجی دستوں کو انتظامی قرنطینہ میں لازمی طور رکھنے کے سرکاری احکامات سے مستثنیٰ قرار دیا گیاہے۔ چیف سیکریٹری بی وی آر سبھرامنیم ،جو جموں کشمیر میں کورونا سے متعلق بنائی گئی سٹیٹ ایگزیکٹو کمیٹی کے چیئرمین بھی ہیں،کی جانب سے24مئی کو احکامات صادر کئے گئے تھے کہ جموں کشمیر کی حدود میں داخل ہونے والے ہر شخص پر یہ لازم ہوگا کہ وہ 14روز تک قرنطین مرکز میں رہے گا اور اس کے نمونے تشخیص کیلئے بھیج دیں جائیں گے۔پیر کو چیف سیکریٹری کی جانب سے ان احکامات میں ترمیم کرکے سیکورٹی فورسز کو انتظامی قرنطین مراکز میں رکھنے سے مستثنیٰ رکھا گیا ہے۔احکامات کی رئو سے جو فوجی اہلکار یا مرکزی نیم فوجی دستوں کے جوان جموں کشمیر میں اپنی ڈیوٹیوں پر واپس آئیں گے وہ انتظامی قرنطین مراکز کے بجائے اپنے یونٹوں اور تنصیبات میں بنائے گئے قرنطین مراکز میں رہیں گ

ایک دن میں تیسری کورونا ہلاکت،اموات کی تعدادبڑھ کر31

سرینگر//جنوبی ضلع پلوامہ میں پیر کے روز ایک70سالہ شہری کی موت واقع ہونے سے جموں کشمیر میں کورونا ہلاکتوں کی تعداد31تک بڑھ گئی ہے۔ ضلع اسپتال پلوامہ کے میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر میر مشتاق نے خبر رساں ایجنسی جی این ایس کو بتایا کہ 70سالہ شہری کوآج صبح مردہ حالت میں اسپتال لایا گیا تھا جہاں اُس کے کورونا نمونے حاصل کئے گئے جن کی رپورٹ بعد میں مثبت آگئی۔مذکورہ شہری کی لاش کو رپورٹ آنے تک لاش گھر میں رکھا گیا تھا۔ اس سے قبل آج جنوبی ضلع شوپیان کا ایک45سالہ شہری اور ڈوڈہ ضلع کا 72سالہ شہری، جنہیں کورونا میں مبتلاءپایا گیا، زندگی کی جنگ ہار گئے تھے۔  

شوپیان اور ڈوڈہ کے2شہری کورونا سے جاں بحق،متوفین کی تعداد30

سرینگر//جنوبی ضلع شوپیان کا ایک45سالہ شہری اور ڈوڈہ ضلع کا 72سالہ شہری، جنہیں کورونا میں مبتلاءپایا گیا، پیر کے روز زندگی کی جنگ ہار گئے۔اس طرح مرکز کے زیر انتظام جموں کشمیر میں اب تک مہلک وائرس سے جاں افراد کی تعداد30ہوگئی ہے۔ شوپیان ضلع کے رامنگری علاقے کے ایک باشندے کوسکمز میں کئی امراض کے علاج کیلئے31مئی کو داخل کیا گیا تھا۔  میڈیکل سپر انٹنڈنٹ پروفیسر فاروق جان نے خبر رساں ایجنسی جی این ایس کو بتایا کہ ابتدائی مرحلے پر مریض کی حالت سدھر گئی تھی جس کے بعد کورونا میں مبتلاءہونے کے شبہ کے پیش نظر اُسے وارڈ2میں داخل کیا گیا جہاں اُس کے نمونے حاصل کئے گئے۔ انہوں نے کہا کہ گذشتہ شب کے دوران مذکورہ مریض کی موت واقع ہوگئی جس کے بعد آج اُس کی ٹیسٹ رپورٹ مثبت آگئی۔ڈاکٹر جان کے مطابق اس دوران جاں بحق شہری کی میت کو لاش گھر کے اندر رکھا گیا تھا۔ اسی طرح جی این ایس کے مطاب

بڈگام میں جنگجوﺅں کا نیٹ ورک فاش،6 گرفتار:پولیس

سرینگر//پولیس نے پیر کے روزدعویٰ کیا کہ اُنہوں نے وسطی ضلع بڈگام کے چاڈورہ علاقے میں جنگجوﺅں کا ایک نیٹ ورک فاش کرتے ہوئے جنگجوﺅں کے6معاونین کی گرفتاری عمل میں لاکر اُن کی تحویل سے اسلح کے علاوہ منشیات بھی بر آمد کی گئی۔ ایک بیان میں پولیس نے کہا کہ ایک مصدقہ اطلاع کے بعد پولیس، فوج اور سی آر پی ایف کی مشترکہ ٹیم نے جنگجوﺅں کے ایک نیٹ ورک کو فاش کیا اور اُن سے اسلح کے علاوہ منشیات بھی بر آمد کی۔ پولیس نے گرفتار شدگان کی شناخت مدثر فیاض ساکن کرالہ پورہ، شبیر گنائی ساکن واتھورہ،صغیر احمد پوسوال ساکن کپوارہ،اسحاق بٹ ساکن شوپیان اور ارشد ٹھوکر ساکن شوپیان کے طور کرتے ہوئے کہا کہ ان کا تعلق جیش محمد نامی جنگجو تنظیم سے ہے۔پولیس نے چھٹے گرفتار شدہ کی شناخت ظاہر نہیں کی ہے۔ پولیس کے مطابق گرفتار شدگان سے پرانا چینی ساخت کا پستول،میگزین،4پستول کی گولیاں،1ہینڈ گرینیڈ،1کلو گرام ہیروئ

بغیر سبسیڈی رسوئی گیس سلنڈر کی قیمت میں اضافہ

نئی دہلی//بین الاقوامی مارکیٹ میں ایل پی جی کی قیمتیں بڑھنے کی وجہ سے ملک میں بغیر سبسڈی والا رسوئی گیس سلنڈر پیر سے مہنگا ہو گیا۔ ملک کی سب سے بڑی تیل مارکیٹنگ کمپنی انڈین آئل کارپوریشن نے بتایا کہ قومی راجدھانی دہلی میں 14.2 کلو گرام کے بغیر سبسڈی والے گھریلو رسوئی گیس سلنڈر کی قیمت جون ماہ کے لئے 593 روپے مقرر کی گئی ہے۔ مئی میں اس کی قیمت 581.50 روپے تھی۔ اس طرح اس میں 11.50 روپے کا اضافہ کیا گیاہے۔ اس سے پہلے مئی میں اسکی قیمت میں 162.50 روپے کا بڑ ا اضافہ کیا گیا تھا۔ انڈین آئل کے بیان میں کہا گیا ہے”بین الاقوامی مارکیٹ میں جون ماہ کے لئے رسوئی گیس کی قیمت میں اضافہ ہوا ہے۔ بین الاقوامی مارکیٹ میں قیمت میں اضافہ کی وجہ سے دہلی میں رسوئی گیس کی مارکیٹ کی قیمت فی سلنڈر 11.50 روپے بڑھا دیا گیا ہے۔ حالانکہ اس سے وزیر اعظم اجولا اسکیم کے مستحقین متاثر نہیں ہوں گے

شمالی قصبہ سوپور میں نوجوان کی لاش بر آمد

 سرینگر//شمالی کشمیر کے سوپور میں پیر کی صبح پُر اسرار حالت میں ایک30سالہ نوجوان کی لاش بر آمد کی گئی۔ یہ واقعہ سوپور کے ہردہ شیوہ علاقے میں پیش آیا۔ اطلاعات کے مطابق پیشے سے ڈرائیور محمد اکبر شیخ ولد غلام محمد شیخ کو اپنے کمرے کے اندر مردہ حالت میں پایا گیا۔ پولیس کے مطابق اس سلسلے میں کیس درج کرکے تحقیقات شروع کی گئی ہے۔  

لاک ڈائون میں نرمی کا معاملہ | 8جون کے بعد فیصلہ لیا جائیگا:چیف سیکریٹری

سرینگر//جموں وکشمیرانتظامیہ نے کورونا کو پھیلنے سے روکنے کیلئے لاک ڈائون میں 8جون تک توسیع کردی ہے۔ یوٹی انتظامیہ نے کہا ہے کہ مرکزی وزارت داخلہ کے نئے رہنماخطوط کاموجودہ صورتحال کے تناظرمیں سرنوجائزہ لیاجائے گا۔جموں وکشمیر سرکارکی جانب سے جاری ایک آرڈر زیر نمبر 57- آف2020،بتاریخ 31مئی 2020میں کہا گیاہے کہ مرکزی وزارت داخلہ نے لاک ڈائون کے پانچویں مرحلے یاUn-Lockdownکے پہلے مرحلے کی مناسبت سے جونئے رہنماخطوط متعارف کئے ہیں ،اُن میں نیشنل ڈیزاسٹر منیجمنٹ کے چیئرمین کی حیثیت سے مرکزی داخلہ سیکریٹری نے واضح کیاہے کہ لاک ڈائون میں نرمی لانے کے حوالے سے ریاستوں اورمرکزی زیرانتظام علاقوں کی حکومتیں صورتحال کے حساب سے اپنے طور پرفیصلہ لینے کی مجاز ہیں ۔مرکزی داخلہ سیکریٹری نے اپنے جاری کردہ نئے رہنماخطوط یالاک ڈائون میں کچھ نرمی لانے یاکچھ سرگرمیاں بحال کئے جانے کے حوالے سے جورعایت دی ہے ،ا

لاک ڈائون کا70واں دن | وادی بدستور بند، سرگرمیاں معطل

سرینگر// ملک گیر لاک ڈائون کے71ویں روز اتوار کو وادی بھر میں بندشوں کی صورتحال تبدیل نہیں ہوئی ۔ بلکہ شبانہ  اور دن بھر بارشوں اور اتوار ہونے کے باعث بہت کم لوگوں کی آمد و رفت نظر آئی اور پرائیویٹ گاڑیاں بھی نہ ہونے کے برابر تھیں۔لاک ڈائون کے پانچویں مرحلہ کا آغاز پیر سے ہونے جارہا ہے اور صوبائی انتظامیہ نے فی الحال پوری وادی میں بندشیں بدستور عائد کرنیکا عندیہ دیا ہے۔ انتظامیہ کا کہنا ہے کہ بیرون ریاستوں سے واپس آنے والے افراد کے نمونے  مثبت آرہے ہیں اور جب سے شہریوں کی واپسی شروع ہوگئی ہے کورونا متاثرین میں بہت زیادہ اضافہ ہونے لگا ہے لہٰذا احتظامیہ کوئی بھی رسک نہیں لینا چاہتی۔اتوار کو وادی میں موسم  بدستور خراب رہا اور بارشیں ہوتی رہیں۔امتناعی احکامات کی وجہ سے لوگ گھروں سے باہر نہیں آرہے ہیں اور سرکاری احکامات پر عملدر آمد ہورہا ہے۔سنیچر کو نسبتاً  نجی ٹ

جموں کشمیر میں مزید 105مثبت قرار | بیکری کاریگر، نرسنگ آرڈرلی اور16 حاملہ خواتین متاثرین میں شامل

 سرینگر //سی ڈی اسپتال لیبارٹی میں تعینات نرسنگ آرڈرلی،دو ایس ایس جی کمانڈوز ،بیکری کاریگر،2کمسن بچوںاور 16 حاملہ خواتین سمیت جموں و کشمیر میں اتوار کومزید 95افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں اور اس طرح کل متاثرین کی تعداد 2446تک پہنچ گئی ہے جن میں سے 503جموں جبکہ 1943 کشمیر سے تعلق رکھتے ہیں۔ اتوار کو مثبت قرار دئے گئے 105 افراد میں سے 24 اننت ناگ، 17 کولگام، 8 سرینگر، 10کپوارہ، 15 بارہمولہ، 2 شوپیاں، 11 بڈگام( جن میں سے 10 سنیچر کو رپورٹ ہوئے ہیں، جن میں 8پولیس اہلکار اور دو افراد سوئیہ بگ کے تھے) ،3 پلوامہ ، 6 جموں،2رام بن ،3 کپوارہ، 3 راجوری اور ایک کا تعلق سانبہ سے ہے۔  سی ڈی اسپتال میڈیکل کالج سرینگر ترجمان ڈاکٹر محمد سلیم خان نے بتایا ’’پچھلے 24گھنٹوں کے دوران  510 نمونوں کی تشخیص کی گئی جن میں سے 50مریضوں کی رپورٹیں مثبت آئیں جبکہ 460 نمونے منفی ق

وادی میں موسلا دھار بارشیں | شاہراہ پر پتھر گرتے رہے، گاڑیاں چلتی رہیں

سرینگر // وادی کشمیر میں سنیچر اور اتوار کی درمیانی شب اور اتوار دن بھرہلکی و درمیانہ درجے کی بارشیں ہوئیں جس کے نتیجے میں سرینگر جموں شاہراہ پر بھی گاڑیوں کی آمد و رفت بھی متاثر رہی۔محکمہ موسمیات نے پیش گوئی کی ہے کہ وادی کشمیر میں موسمی صورتحال آج سے بہتر ہوجائے گی۔ سنیچر کو بارشیں ہونے کے بعد رات بھر بھی موسلا دھار بارشوں کا سلسلہ جاری رہا اور اتوار دن بھر بھی بارشیں ہوتی رہیں۔سرینگر جموں شاہراہ پر کیفٹیریا موڈ اور بانہال رام بن سیکٹر میں کئی مقامات پر شاہراہ پر پتھر گرتے رہے جس کے نتیجے میں ٹریفک کی روانی میں خلل پڑا، تاہم گاڑیوں کی آمد و رفت جاری رہی۔ادھر محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ سوموار بعد دوپہر سے موسم میں بہتری آنے کا امکان ہے ۔ سرینگر میں 1ملی میٹر بارش جبکہ سرمائی دارالحکومت جموں میں سنیچر کی شام ساڑھے 5بجے تک 9ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی ۔ان کا کہناتھا کہ سیاحتی مقام

کورونا نمونے لینے میں بے قاعدگیاں | ضلع مجسٹریٹ بارہمولہ کا تحقیقات کا حکم

  بارہمولہ// ضلع مجسٹریٹ بارہمولہ نے کورونا نمونے جمع کرنے میں بے قاعدگی اور قواعد و ضوابط کو ملحوظ نظر نہ رکھتے ہوئے قرنطین میں داخل مشتبہ افراد کو گھر جانے کی اجازے دینے کے معاملے کی تحقیقات کا حکم دیا ہے۔ اتوارکو ضلع مجسٹریٹ بارہمولہ غلام نبی ایتو کی جانب سے جاری احکامات میں کہا گیا ہے کہ یہ بات سامنے آگئی ہے جس کے بارے میں سوشل میڈیا میں بھی تذکرہ ہور ہا ہے کہ ضلع میں کئی جگہوں سے قرنطین میں رہنے والے لوگوں کے ٹسٹ پہلے منفی قرار دئے گئے ،اُس کے بعد سرٹیفکیٹ تھماکر انہیں گھر جانے کی اجازت دی گئی اور چند دنوں بعد اُن کے نمونے مثبت قرار دیئے گئے۔احکامات میں مزید کہا گیا ہے کہ نمونوں کے نتائج  میں پوری طرح سے قواعد و ضوابط پر عمل نہیں کیا گیا اور کچھ بلاک میڈیکل افسران کے ذریعہ منفی ٹیسٹ سرٹیفکیٹ جاری کی گئیںجبکہ حتمی اطلاعات کے مطابق وہ مثبت تھے۔ جموں میں نمونے لینے والوں،ج

دنیا میں کورونا وائرس کا قہر | متاثرین کی تعداد 60لاکھ سے متجاوز ، 3.69لاکھ افراد ہلاک

بیجنگ / جنیوا / نئی دہلی// عالمی وبا کورونا وائرس (کووڈ 19) سے متاثرین کی تعداد 60 لاکھ سے زیادہ ہو گئی ہے جبکہ اس وباء سے اب تک 3.64 لاکھ سے زائد افراد کی موت ہوچکی ہے ۔امریکہ کی جان ہاپکنز یونیورسٹی کی جانب سے جاری اعداد و شمار کے مطابق کورونا وائرس سے دنیا بھر میں اب تک 60لاکھ60 ہزار207لوگ متاثر ہوئے ہیں جبکہ 3 لاکھ،69 ہزار126 افراد کی موت ہو چکی ہے ۔  امریکہ دنیا بھر میں پہلے ، برازیل دوسرے اور روس تیسرے نمبر پر ہے ۔ دوسری طرف اس وباء سے ہونے والی اموات کے اعداد و شمار میں بھی امریکہ پہلے نمبر پر ہے جبکہ برطانیہ دوسرے اور اٹلی تیسرے نمبر پر ہے ۔ صرف امریکہ میں ہی ایک لاکھ سے زیادہ افرادکی کورونا وائرس کی زد میں آکر موت ہوچکی ہے ۔ہندوستان میں بھی کورونا وائرس میں شدت آتی جارہی ہے اور یہ دنیا بھر میں انفیکشن کے سب سے زیادہ کیسز والے ممالک میں نویں مقام پر پہنچ گیا ہے ۔ بھارت میں

بیرون ریاستوں سے لوٹے مزید 77افراد مثبت قرار | 9پولیس اہلکار اور 10حاملہ خواتین بھی متاثرین میں شامل

 سرینگر/ / سنیچر کو جموں کشمیر میں کورونا متاثرین کی تعداد میں مزید ایک سو سے زائد افراد کا اضافہ ہوا ہے۔ ان میں پولیس کے9اہلکار، 10حاملہ خواتین اوردیگر افراد شامل ہیں جن میں  بیرون ریاست سفر کرکے واپس لوٹنے والے 77افراد بھی شامل ہیں۔یاد رہے( جمعہ کو سرکاری اعدادشمار میں جو 58 معاملات ظاہر نہیں کئے گئے تھے،جس کی وجہ سے سرکاری طور پر صرف 128کی تعداد دکھائی گئی تھی، ان 58افراد کو سنیچر کے کورونا بلیٹن میں ظاہر کیا گیا ہے، جس کی وجہ سے  مثبت قرار دیئے گئے افراد کی تعداد 177بن جاتی ہے)۔لیکن کشمیر عظمیٰ نے متعلقہ حکام کی طرف سے جمعہ کی شب ہی 58افراد کو کل تعداد میں شامل کیا تھا۔سنیچر کو اعدادوشمار کے مطابق مزید 129مشتبہ مریضوں کی رپورٹیں مثبت آئیں ہیں( ان میں جے وی سی بمنہ کے 10 معاملات بھی شامل ہیں ، جو سرکاری بلیٹن میں شامل نہیں کئے گئے ہیں)  جموں و کشمیر میں کورونا و