قریب 2برس بعدجموں وکشمیر کی سیاسی جماعتوں سے مرکز کا رابطہ | آئندہ ہفتے کل جماعتی اجلاس

سرینگر //5 اگست ، 2019 کودفعہ 370 منسوخ کرنے کے بعد پہلی بار ، نئی دہلی نے جموں کشمیر کی مین سٹریم پارٹی لیڈروں کو24جون کو ہونے والی کل جماعتی میٹنگ میں شرکت کی دعوت دی ہے۔ وزیر اعظم نریندر مودی کے زیر صدارت ہونے والے اس اہم اجلاس میں شرکت کیلئے باقاعدہ طور پر 14لیڈران کو آگاہ کیا گیا ہے۔جموں کشمیر کے 4سابق وزرائے اعلیٰ ڈاکٹر فاروق عبداللہ، عمر عبداللہ، غلام نبی آزاد اور محبوبہ مفتی کے علاوہ سبھی سیاسی پارٹیوں کے صدور اورجموں و کشمیر کے نائب وزرائے اعلیٰ کو بھی مدعو کیا گیا ہے۔ذرائع نے بتایا کہ ہوم سیکریٹری اجے بھلہ نے 17 جون کو ڈاکٹر فاروق عبداللہ، عمر عبداللہ اور غلام نبی آزاد سے فوج پر رابطہ قائم کیا اور کل جماعتی میٹنگ کے بارے میں انکی رائے طلب کی۔ معلوم ہوا ہے کہ مثبت رائے سامنے آنے کے بعد ہی کل جماعتی اجلاس طلب کرنے کا فیصلہ کیا گیا اور سینچر کی شام تک سبھی 14لیڈران کو دعوت د

سیاسی جماعتوں کا خیر مقدم | کہامسائل کا حل دلی میں

سرینگر // مین سٹریم جماعتوں نے جموں کشمیر کی سیاسی صورتحال اور دیگر اہم ایشوز پر بات چیت کرنے کیلئے نئی دہلی اجلاس کا خیر مقدم کیا ہے۔نیشنل کانفرنس کا کہنا ہے کہ ایسا لگتا ہے کہ مرکز جموں و کشمیر کے مرکزی دھارے کے رہنماؤں کے ساتھ اس خلا کو ختم کرنا چاہتے ہیں ، جو 5 اگست ، 2019 کے بعد پیدا ہوگیا ہے۔انکا کہنا ہے کہ مرکزی دھارے میں شامل تمام رہنماؤں کو نئی دہلی بلانے کے اقدام کا مقصد دوبارہ پل تعمیر کرنا ہے۔ ہمیں یقین ہے کہ یہ ایک اچھا اقدام ہے لیکن 24 جون کے اقدام پر زیادہ سے زیادہ بات کرنا قبل از وقت ہوگا اور اس سے پہلے اجلاس کا انتظار کرنا بہتر ہوگا ۔ ڈاکٹر فاروق کاکہناتھاکہ ہم بات چیت پریقین رکھتے ہیں اورہماراموقف ہے کہ بات چیت سے ہی مسائل حل ہوسکتے ہیں۔ پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر غلام احمد میر نے کا کہنا تھا کہ ہمارا واضح موقف ہے کہ جموں وکشمیرکے لوگوں کو اعتماد میں لے کر بات چیت ک

بارہمولہ میں بین ریاستی منشیات و اسلحہ سمگلنگ نیٹ ورک بے نقاب | 10افراد گرفتار،45کروڑ کی ہیروئن، کئی لاکھ نقدی،گاڑیاں اوراسلحہ ضبط

 بارہمولہ// بارہمولہ پولیس نے’ منشیات و جنگجو نیٹ ورک‘ کو بے نقاب کر کے کروڑوں روپے کی ہیروئن اور اسلحہ و گولہ باردو ضبط کر کے10 افراد کی گرفتاری عمل میںلائی اور کئی لاکھ نقدی و کئی گاڑیوں کو بھی ضبط کیا۔ ایس ایس پی بارہمولہ محمد رئیس بٹ نے سنیچر کو پولیس لائنز بارہمولہ میں پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ پولیس نے 18 جون کو ایک مخصوص اطلاع ملنے پر ایس ڈی پی او اوڑی کی سربراہی میں فوج کی 3 راجپوت اور 53  بٹالین سی آر پی ایف  کے ہمراہ ناکہ چیکنگ کے دوران ایک گاڑی ماروتی سوئفٹ جو لگامہ سے بارہمولہ کی طرف آرہی تھی، کو روکا۔ تاہم ڈرائیور نے فرار ہونے کی کوشش کی لیکن یہ کوشش ناکام بنائی گئی۔نجی کار میںموجود تین مشتبہ افراد سجاد احمد شاہ ولد محمد نذیر شاہ ساکن لال پورہ لولاب کپوارہ ، شرافت خان لال بادشاہ خان ساکن کیرن کپوارہ اور شاہد حسین ولد ولی محمد راتھر ساکن کھئی

’ہر مہینے ایل جی سے ملاقات‘ | ضلع، بلاک اور پنچایتی نمائندے شامل ہونگے

سرینگر//لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نچلی سطح پر گُڈ گورننس اور جمہوریت کو مضبوط بنانے کیلئے ہر مہینے میں ایک بار ڈی ڈی سی ، بی ڈی سی اور پنچایت نمائندوں سے بات چیت کریں گے ۔ جس سے منتخب نمائندوں کیلئے آواز اٹھانے کا ایک پلیٹ فارم مہیا ہو گا جو لوگوں کی خواہشات اور علاقہ سے متعلق ضروریات ، سب کیلئے مساوی ترقی کو یقینی بنائے گا ۔ جموں و کشمیر حکومت پنچایتی راج کو حقیقی معنوں میں یو ٹی میں متحرک ادارہ بنانے کیلئے پوری کوشش کر رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ انتظامیہ کے کام کاج پر پی آر آئیز سے آراء لینا ، زمینی سطح پر کاموں پر عملدرآمد اس کے علاوہ ان سے متعلق امور کے بارے میں پہلے معلومات حاصل کرنا اس ماہانہ بات چیت کے کچھ اہم پہلو ہیں ۔ محکمہ دیہی ترقی اور پنچایتی راج ہر مہینے ایک بار ڈی ڈی سیز سمیت پنچایتی راج اداروں کے تینوں درجات کے ساتھ لیفٹیننٹ گورنر سے بات چیت کیلئے طریقہ کار وضع کرے گا

ڈاکٹروں و ہیلتھ ورکروں پر حملے ملوثین کیخلاف کیس درج کیا جائے: مرکز

نئی دلی// مرکزی سرکار نے تمام ریاستی اور مرکزی زیر انتظام علاقوں کی حکومتوں سے کہا ہے کہ وہ ڈاکٹروں اور دیگر ہیلتھ ورکروں پر حملہ کرنے والوں کے خلاف وبائی بیماریوں(ترمیم) ایکٹ 2020کے تحت کیس درج کریں۔ مرکزی داخلہ سیکریٹری اجے بھلہ نے ریاستوں اور مرکزی زیر انتظام علاقوںمیں ڈاکٹروں اور دیگر ہیلتھ ورکروں پر حملوں کے بعد یہ مکتوب روانہ کیا ہے۔ریاستوں اور مرکزی زیر انتظام علاقوں کی حکومتوں کے نام مکتوب میں بھلہ نے لکھا  ’’ آپ اس بات سے اتفاق رکھتے ہونگے کہ ڈاکٹروں پر کسی بھی حملہ سے انکے اعتماد کو دھچکہ لگ سکتا ہے اور وہ غیر محفوظ تصور کرسکتے ہیں‘‘۔انہوں نے کہا کہ اس سے پورے شعبہ صحت پر برے اثرات مرتب ہوسکتے ہیں۔داخلہ سیکریٹری نے کہا کہ موجودہ صورتحال میں یہ بات لازمی بن گئی ہے کہ ایسے لوگوں کے خلاف کاروائی کی جائے جو ڈاکٹروں اور ہیلتھ ورکروں پر حملہ کرسکتے ہیں

مزید 60ہزار سے زائد معاملات ملک میں1647ہلاکتیں

نئی دہلی// ملک میں گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس (کووڈ - 19) کے 60 ہزار، 753 نئے کیسز درج کئے گئے اور 1 ہزار،647 مریضوں کی اس وبا سے موت ہو گئی۔ اس دوران جمعہ کو 33 لاکھ 85 افراد کو کورونا کے ٹیکے لگائے گئے۔ ملک میں اب تک 27 کروڑ 23 لاکھ 88 ہزار 783 افراد کو کورونا کے ٹیکے لگائے جا چکے ہیں۔ متاثرہ افراد کی تعداد بڑھ کر 2،98،23،546 ہوگئی۔ اس دوران 97 ہزار 743 مریضوں کے صحتیاب ہونے سے اس وبا کو شکست دینے والوں کی مجموعی تعداد دو کروڑ 86 لاکھ 88 ہزار 390 ہوگئی ہے۔ ایکٹو کیسز 38 ہزار 637 کم ہوکر سات لاکھ 60 ہزار 19 رہ گئے ہیں۔ مرنے والوں کی تعداد تین لاکھ 85 ہزار 137 ہوگئی ہے۔ملک میں ایکٹوکیسز کی شرح کم ہوکر 2.55 فیصد ، شفایابی کی شرح 96.16 فیصد اور شرح اموات 1.29 فیصد ہوگئی ہے۔ ۔

تازہ ترین