تازہ ترین

دنیا میں کورونا سے متاثرہ افراد کی تعداد 13.82 کروڑ سے متجاوز

واشنگٹن / ریو ڈی جنیرو / نئی دہلی// دنیا میں کورونا وائرس کاپھیلاو¿ رکنے کا نام نہیں لے رہا ہے اور اب تک 13.82 کروڑ سے زیادہ افراد وائرس کے انفیکشن سے متاثر ہوچکے ہیں اور 29.73 لاکھ افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں۔ امریکہ کی جان ہاپکنز یونیورسٹی کے سینٹر برائے سائنس اینڈ انجینئرنگ (سی ایس ایس ای) کے جاری کردہ تازہ ترین اعداد و شمار کے مطابق دنیا کے 192 ممالک اور خطوں میں متاثرہ افراد کی تعداد 138276238 ہوگئی ہے جبکہ اب تک 2973058 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ عالمی سپر پاور سمجھے جانے والے امریکہ میں کورونا وائرس کا قہر بدستوربڑھتا ہی جا رہا ہے اور یہاں متاثرہ افراد کی تعداد 13 لاکھ سے زیادہ ہوگئی ہے جبکہ پانچ لاکھ 64 ہزار 402 مریض فوت ہوچکے ہیں۔  

صومالیہ میں بم دھماکہ، 17 کی موت

موغادیشو// صومالیہ کی راجدھانی موغادیشو کے نزدیک سڑک کے کنارے ہوئے بم دھماکہ میں کم از کم 17 لوگوں کی موت ہوگئی۔ مقامی میڈیا نے اس کی اطلاع دی۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق اس دھماکے میں دو لوگ زخمی ہوئے ہیں۔ دھماکے کی زد میں ایک بس بھی آگئی جو کہ راجدھانی موغادیشو سے جنوبی شوبیلے علاقے کی جانب جارہی تھی۔ اس حملے کے لئے الشباب کو ذمہ دار مانا جارہا ہے۔ مشرقی افریقہ میں سرگرم الشباب صومالیہ میں حکومت کے خلاف طویل عرصے سے مہم چلا رہا ہے۔   

امریکہ کاستمبر میں افغانستان سے مکمل فوجی انخلا کا فیصلہ

 واشنگٹن// امریکی صدر جوبائیڈن نے کہا ہے کہ افغانستان سے امریکی فوجیوں کا انخلا اس سال گیارہ ستمبر سے شروع ہوگا۔اپنے بیان میں انہوں نے کہا ہے کہ اس سے قبل صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور افغان طالبان کے درمیان یکم مئی کی ڈیڈلائن رکھی گئی تھی جس پر عمل درآمد ممکن نہیں۔امریکی صدر کی انتظامیہ کے سینئر افسر نے ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ بہت غوراور پالیسی تجزیوں کے بعد صدر بائیڈن نے کہا ہے کہ 20 برس بعد افغانستان میں موجود باقی ماندہ امریکی فوجیوں کو واپس بلایا جائے گا۔واضح رہے کہ بائیڈن انتظامیہ نے گیارہ ستمبر کی تاریخ بہت سوچ سمجھ کررکھی ہے کیونکہ اس سال نیویارک اور پینٹاگون میں القاعدہ کی جانب سے کیے گئے فضائی حملوں کو 20 برس مکمل ہوجائیں گے۔اس وقت افغانستان میں امریکی فوجیوں کی تعداد 2500 کے لگ بھگ ہے۔ اس سے قبل طالبان یہ کہہ چکے ہیں کہ اگر امریکا نے یکم مئی کی متفقہ ڈیڈ

دنیا میں کورونا سے متاثرہ افراد کی تعداد 13.74کروڑ سے متجاوز

واشنگٹن //یو این آئی// دنیا میں کورونا وائرس کاپھیلاؤ رکنے کا نام نہیں لے رہا ہے اور اب تک 13.74 کروڑ سے زیادہ افراد وائرس کے انفیکشن سے متاثر ہوچکے ہیں اور 29.59 لاکھ افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں۔امریکہ کی جان ہاپکنز یونیورسٹی کے سینٹر برائے سائنس اینڈ انجینئرنگ (سی ایس ایس ای) کے جاری کردہ تازہ ترین اعداد و شمار کے مطابق دنیا کے 192 ممالک اور خطوں میں متاثرہ افراد کی تعداد 137456881 ہوگئی ہے جبکہ اب تک 2959641 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔عالمی سپر پاور سمجھے جانے والے امریکہ میں کورونا وائرس کا قہر بدستوربڑھتا ہی جا رہا ہے اور یہاں متاثرہ افراد کی تعداد 13 لاکھ سے زیادہ ہوگئی ہے جبکہ پانچ لاکھ 63 ہزار 446 مریض فوت ہوچکے ہیں۔دنیا میں ایک کروڑ سے زیادہ کورونا انفیکشن والے تین ممالک میں بھارت نے برازیل کو پیچھے چھوڑ کر دوسرا نمبر پرآگیا ہے اور اس سے متاثرہ افراد کی کل تعداد 13873825 پہنچ گئی ہے ۔

اسرائیلی جہاز پر اماراتی ساحل کے قریب حملہ

دوبئی // اسرائیل کے ایک جہاز پر متحدہ عرب امارات کے ساحل کے قریب حملہ ہوا ہے۔اسرائیل کے چینل 12 ٹی وی کے مطابق نامعلوم اسرائیلی آفیشلز نے چینل کو بتایا کہ ’انہوں نے اس حملے کا ذمہ دار ایران کو ٹھہرایا ہے۔‘ رپورٹ کے مطابق اس حملے میں ابھی تک کسی قسم کے جانی نقصان کی خبر نہیں ا?ئی ہے۔شپ ٹریکنگ ویب سائٹس کے مطابق ہاپریئن رے فجیرہ کے راستے میں تھا۔اسرائیلی ٹی وی چینل 12 کے مطابق سکیورٹی ذرائع کا کہنا ہے کہ ’حملے سے جہاز کو معمولی نقصان پہنچا ہے اور حملے کا شبہ ایران پر ظاہر کیا گیا ہے۔‘لبنان کے المیادان ٹی وی چینل کے مطابق ایران اور شام کے قریب اسرائیلی کمپنی رے شپنگ کے بحری جہاز ہائپریئن رے کو نشانہ بنایا گیا ہے۔‘اسی کمپنی کا ایک اور جہاز ہیلیوس رے فروری میں اس وقت حملے کا نشانہ بنا تھا جب وہ سعودی شہر دمام سے سنگاپور جا رہا تھا۔ایران کی جانب سے حملے کے الزا

سوڈان نے ایتھوپیا کے 61قیدیوں کو آزاد کردیا

صنعا//سوڈانی حکومت نے سرحد سے پکڑے 61 ایتھپیائی قیدیوں کو ایتھوپیا کے حوالے کردیا۔غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق سوڈانی فوج نے بیان جاری کیا ہے کہ اس نے 61 قیدیوں کو ایتھوپیا کے حوالے کردیا ہے جنھیں پچھلے کچھ مہینوں میں سرحد پار کرنے پر حراست میں لیا گیا تھا۔سوڈانی مسلح افواج نے ملک کے مشرقی شہر القدرائف کے قریب کلابات بارڈر کراسنگ پر 61 قیدیوں کو ایتھوپیا کی حکومت کے حوالے کیا ہے۔بیان میں مزید کہا گیا کہ یہ ترسیل دونوں اطراف کے نمائندوں کی موجودگی میں کی گئی ہے۔حالیہ مہینوں میں خرطوم کے ٹگرے کے سرحدی علاقے پر کنٹرول کے اعلان کے بعد سوڈان اور ایتھوپیا کی سرحدوں پر کشیدگی بڑھ گئی ہے۔ ایتھوپیا نے سوڈانی فوج پر الزام لگایا تھا کہ وہ اْس کے علاقے میں گھْس کر مہاجرین کیمپوں کو ضبط کررہی ہے تاہم خرطوم نے اس الزام کی تردید کی ہے۔