تازہ ترین

نیوزی لینڈ کیخلاف دوسرا ٹیسٹ

بھارت کی وراٹ کوہلی کی واپسی پر سیریز جیتنے کی امیدیں

تاریخ    3 دسمبر 2021 (00 : 01 AM)   


ممبئی//کانپور میں پہلا ٹیسٹ خراب روشنی کی وجہ سے ڈرا ہونے کے بعد ہندوستان کی نیوزی لینڈ کے خلاف دو ٹیسٹ میچوں کی سیریز جیتنے کی امیدیں کپتان وراٹ کوہلی کی واپسی پر ٹکی ہوئی ہیں، جو جمعہ سے یہاں شروع ہو نے والے دوسرے کرکٹ ٹیسٹ میں حصہ لیں گے اور ٹیم کی کپتانی سنبھالیں گے ۔ وراٹ کو کانپور میں کھیلے گئے پہلے ٹیسٹ اور اس سے پہلے ٹی 20 سیریز میں آرام دیا گیا تھا۔ کانپور ٹیسٹ آخری لمحات میں خراب روشنی کی وجہ سے ڈرا پر ختم ہوا، حالانکہ ہندوستان کو جیتنے کے لیے صرف ایک وکٹ درکار تھا۔ دوسرا اور آخری ٹیسٹ کل سے شروع ہو رہا ہے اور ہندوستان کو سیریز جیتنے کے لیے دوسرے ٹیسٹ پر قبضہ کرنا ہو گا۔ وراٹ کو نیوزی لینڈ سے پچھلی کئی شکستوں کا حساب بھی چکانا ہے ۔ ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کے گروپ میچ میں ملی شکست اور اس سے پہلے جون میں انگلینڈ میں ہونے والی ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ کے فائنل میں نیوزی لینڈ کے ہاتھوں پچھلی شکست کے زخم اب بھی تازہ ہیں ۔ وراٹ کو ان شکستوں کا حساب ایک ساتھ چکانا پڑے گا۔ ہندوستانی کوچ راہل ڈراوڑ کے لیے وراٹ کی واپسی کسی بڑے درد سر سے کم نہیں ہوگی۔ ڈراوڑ کو دیکھنا ہوگا کہ وہ وراٹ کی جگہ کس کھلاڑی کو ڈراپ کریں گے ۔ کانپور میں شریئس ائیر نے یادگار کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے پہلی اننگز میں سنچری اور دوسری اننگز میں نصف سنچری بنا کر ٹیم میں اپنی جگہ پختہ کی  وراٹ کی جگہ لینے کے لیے گزشتہ کچھ وقت سے تقریباً فلاپ چل رہے اجنکیا رہانے اور چیتشور پجارا میں سے کسی ایک کوباہر جانا ہو گا۔ حالانکہ رہانے نے کانپور میں ہندوستان کی کپتانی سنبھالی تھی لیکن رہانے نے ایک بار پھر بلے سے مایوس کیا۔ لیکن میچ کے بعد ڈراوڑ کا یہ کہنا کہ رہانے کو فارم میں واپسی کے لیے صرف ایک اننگز کی ضرورت ہے ، انہیں حوصلہ دے سکتی ہے ۔ لیکن وراٹ کے لیے ایک کھلاڑی کی قربانی دی جائے گی۔ ممبئی ٹیسٹ ]ر اس وقت ممبئی میں ہورہی بے موسم بارش کا اثر پڑسکتا ہے جس کی وجہ سے بدھ کو دونوں ٹیموں کا پریکٹس سیشن ضائع ہو گیا۔ بحیرہ عرب میں گردابہ دباؤ کے باعث ہندوستانی ٹیم انتظامیہ نے ممبئی کرکٹ ایسوسی ایشن سے ان ڈور پریکٹس فراہم کرنے کے لئے کہا ہے ۔ سمجھا جاتا ہے کہ یہ درخواست کپتان وراٹ کی طرف سے آئی ہے ۔ مہمان ٹیم کی طرف سے کوئی درخواست نہیں آئی ہے جو جمعرات کی سہ پہر میچ کے مقام وانکھیڑے اسٹیڈیم میں پریکٹس کرے گی۔ جمعہ سے یہ دباؤ کم ہو جائے گا اور شہر میں ہونے والے پہلے بین الاقوامی میچ کو تقریباً 22 ماہ بعد موسم کی کسی رکاوٹ کا سامنا نہیں کرنا پڑے گا۔ نیوزی لینڈ کے بائیں ہاتھ کے اسپنر اعجاز پٹیل ایک ماہ کے تھے جب نیوزی لینڈ نے ممبئی میں اپنا آخری ٹیسٹ کھیلا اور وہ آٹھ سال کے تھے جب پٹیل نے اپنے ‘خوابوں کے شہر’ ممبئی کو چھوڑا۔ اب جب وہ یہاں ٹیسٹ کھیلنے آئے ہیں تو یہ شہر اس کے خوابوں میں بھی نہیں آتا۔ وہ 25 سال بعد اپنے ملک کے لیے کھیلنے کے لیے یہاں واپس آئے ہیں۔یواین آئی

تازہ ترین