تازہ ترین

لوگوں کی حفاظت کی ذمہ داری حکومت پر:ڈاکٹر فاروق

جموں میں کئی وفودنیشنل کانفرنس صدر سے ملاقی

تاریخ    23 اکتوبر 2021 (00 : 01 AM)   


سرینگر//نیشنل کانفرنس کے صدرڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا ہے کہ گذشتہ دنوں چن چن کر ہوئی ہلاکتیں انتہائی افسوسناک ہیںاور کشمیر میں ہر کوئی اس کی مذمت اور ملامت کرتا ہے، یہ حکومت کی ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ اُن لوگوں کی نشاندہی کرے جو ان ہلاکتوں کے پیچھے ہیں۔سیاسی لیڈران یا اپوزیشن جماعتوں کے ہاتھ میں کچھ نہیں ہے لوگوں کی حفاظت کی ذمہ داری حکومت پر ہی عائد ہوتی ہے۔ایک بیان کے مطابق جمعہ کوجموں میں اپنی رہائش گاہ پر ایک تقریب کے حاشیے پر ذرائع ابلاغ کے نمائندوں کے سوالوں کا جواب دیتے  انہوں نے کہا کہ سیاسی جماعتوں میں لوگ آتے جاتے رہتے ہیں، نیشنل کانفرنس کو کوئی دھچکا نہیںلگا ہے یہ جماعت چٹان کی مانند کھڑی تھی اور آج بھی ہے۔انہوں نے کہا کہ اس جماعت نے بڑے اتار چڑھائو دیکھے ہیں اور یہ جماعت ہمیشہ سروخ رو ہوکر اُبھری ہے۔ آج لوگوں خصوصاً اپنی جماعت کے کارکنوں کا جوش اور ولولہ دیکھ کر مجھے بے حد خوشی ہوئی اور یہ جوش و جذبہ اس بات کی نشاندہی کرتا ہے کہ نیشنل کانفرنس کا مستقبل روشن اور تابناک ہے ۔ اس سے قبل سماج کے مختلف طبقوں سے تعلق رکھنے والے کئی وفود نے ڈاکٹر فاروق عبداللہ سے اُن کی رہائش گاہ پر ملاقات کی اور اُن کے ساتھ موجودہ سیاسی صورتحال، خطہ جموں کے لوگوں کے مسائل و مشکلات اور دیگر معاملات پر تبادلہ خیال کیا۔  انہوں نے اس موقعے پر کہا کہ نیشنل کانفرنس تینوں خطوں کی جماعت ہے اور اس جماعت نے کسی بھی خطے کیساتھ امتیاز نہیں کیا ہے اور جموں کی تعمیر و ترقی کا بیشتر کام نیشنل کانفرنس حکومت کے دوران ہی ہوا ہے۔ اس دوران سینکڑوں سیاسی اور سماجی کارکنوں نے نیشنل کانفرنس میں شمولیت اختیار کی اور متعدد پرانے ساتھیوں نے بھی جماعت میں واپسی کی۔ جگتی جموں سے تعلق رکھنے والے کشمیری پنڈت سماجی کارکنوں اور بی جے پی سے وابستہ افراد کے علاوہ محمد ایوب ملک اور وارس گل نے بھی اپنے ساتھیوں سمیت نیشنل کانفرنس میں شمولیت اختیار کی۔ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے لوگوں سے اپیل کی کہ وہ فرقہ وارانہ ہم آہنگی کو بنائے رکھے اور اپنی ریاست کے صدیوں کے بھائی چارے کیخلاف ہورہی سازشوں کو ناکام بنائیں۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ وقت اس بات کا تقاضا کرتا ہے کہ ہم ایک ساتھ اور متحدہ ہوکر رہیں اور تمام چیلنجوں کا مل کر سامنا کریں۔