تازہ ترین

کانگریس جموں وکشمیر انچارج کی جموں میں پارٹی رہنماؤں کے ساتھ بات چیت

حکومت ، بی جے پی کے کشمیر میں نارملسی کے دعوے کھوکھلے ثابت ہوئے: رجنی پاٹل

تاریخ    21 اکتوبر 2021 (00 : 01 AM)   


 جموں// اے آئی سی سی انچارج جموں و کشمیر امور رجنی پاٹل نے سینئر کانگریس لیڈروںکے ساتھ موجودہ صورتحال کا جائزہ لیا۔ انہوں نے اقلیتوں اور بیرونی مزدوروں کے قتل کے ساتھ ساتھ پونچھ راجوری علاقے اور دیگر جگہوں پر کئی جوانوں کی ہلاکت کے بعد مجموعی منظر نامے کا جائزہ لیا۔ رجنی پاٹل نے کہا ہے کہ حکومت اوربھاجپا کی طرف سے مکمل نارمل ہونے کے دعوے کھوکھلے ثابت ہوئے ہیں اور بے گناہ خاص طور پر اقلیتوں کو مارا جا رہا ہے اور آئے دن نشانہ بنایا جا رہا ہے ، جو کہ انتہائی سنجیدہ اور چونکا دینے والا ہے۔موجودہ صورت حال پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ 1990 کی دہائی کے بعد یہ بدترین صورتحال ہے اور یہ کہ حکومت کے دعوے کھوکھلے ہیں جو زمینی صورتحال کے بارے میں غلط ثابت ہوئے۔انہوںنے پارٹی کے لوگوں کے ساتھ موجودہ منظر نامے اور لوگوں میں عدم تحفظ کے احساس کے بارے میں بات چیت کی۔ انہیںبے گناہوں کی ٹارگٹ کلنگ پر لوگوں میں شدید تشویش سے آگاہ کیا گیا۔ پارٹی رہنماؤں نے تمام کمزور طبقات بالخصوص اقلیتوں کے لیے مناسب حفاظتی انتظامات طلب کیے ، جن میں جموں کے ملازمین اور باہر کے باشندے شامل ہیں۔ مرکز حکومت اور UT انتظامیہ ان بے گناہ لوگوں کو تحفظ دینے میں مکمل طور پر ناکام ہوچکی ہے ، جنہیں دو سال سے منتخب طور پر نشانہ بنایا جارہا ہے اور اب صورتحال وادی میں قوم پرست لوگوں کے لیے بدترین اور غیر محفوظ ہوگئی ہے۔ پاٹل نے پارٹی رہنماؤں کو جموں و کشمیر کی صورتحال پر سی ڈبلیو سی میں تفصیلی بات چیت اور موجودہ صورتحال پر کانگریس پارٹی کی قیادت کی طرف سے شدید تشویش سے آگاہ کیا۔ اس نے عوامی تشویش کے مسائل خاص طور پر نقل مکانی کرنے والوں کی حفاظت ، سلامتی اور فلاح و بہبود کے مسائل اٹھائے۔انہوں نے پارٹی رہنماؤں کو مشورہ دیا کہ وہ بڑھتی ہوئی صورتحال پر گہری نظر رکھیں اور انتظامیہ کے ساتھ اجاگر کریں۔