تازہ ترین

بنیادی حقوق کی خلاف ورزیاں

اعلیٰ عدالتوں میں مفادعامہ کی7800عرضیاں دائر

تاریخ    2 اگست 2021 (00 : 01 AM)   


 نئی دہلی//سرکاری اعداوشمار کے مطابق 2019 سے ملک بھر میں مختلف عدالتوں میں بنیادی حقوق کی خلاف ورزیوں کے خلاف مفاد عامہ کی 7800عرضیاں داخل کی گئی ہیں ۔اگرچہ کئی عدالتوں نے مفاد عامہ کی ایسی عرضیوں کی کوئی الگ فہرست نہیں بنائی ہے لیکن کئی ہائی کورٹوں نے برسوں کے حساب کے بغیرایسی عرضیوں کی فہرست بنائی ہے ۔یہ اعدادوشمار حکومت نے گزشتہ ہفتے راجیہ سنبھامیں ایک تحریری سوال کے جواب میں پیش کئے جس میں بنیادی حقوق کی خلاف ورزیوں سے متعلق سپریم کورٹ اور ہائی کورٹوں میں داخل عرضیوں کی تفصیل طلب کی گئی تھی۔2019سے اس سال کے جولائی مہینے تک 7832مفاد عامہ کی عرضیاں جوبنیادی حقوق کی خلاف ورزیوں سے متعلق ہیں،ملک بھر کے ہائی کورٹوں میں داخل کی گئیں ۔سپریم کورٹ میں دائر ایسی عرضیوں کی تعداد کے بارے میں حکومت نے راجیہ سبھاکو مطلع کیا کہ سپریم کورٹ میں اس طرح کا ریکارڈ نہیں رکھا جاتا ہے جیساکہ طلب کیاگیا ہے۔تاہم اس نے سپریم کورٹ کے کیٹگری8جولیٹر پیٹشنز اورپی آئی ایل سے متعلق ہیں،کے اعدوشمارظاہر کئے۔