تازہ ترین

ریاستی درجے کی بحالی کیلئے جدوجہد جاری رہے گی:منجیت سنگھ

بیروکریسی میں جوابدہی لازمی، جموں وکشمیر میں جلد اسمبلی انتخابات کی مانگ

تاریخ    2 اگست 2021 (00 : 01 AM)   


جموں//اپنی پارٹی صوبائی صدر جموں منجیت سنگھ نے کہاہے کہ ریاستی درجے کی بحالی کے لئے اُن کی جدوجہد جاری رہے گی۔ سانبہ میں پارٹی لیڈران اور ورکروں کی ایک میٹنگ میں بولتے ہوئے منجیت سنگھ نے کہاکہ اپنی پارٹی کے موقف کو جموں وکشمیر کی دیگر مین اسٹریم سیاسی جماعتیں بھی اپنا رہی ہیں جس کی پہلے انہوں نے مخالفت کی تھی۔ منجیت سنگھ نے دیگر علاقائی مین اسٹریم سیاسی جماعتوں کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا”اِنہوں نے پہلے کھوکھلے نعرو¿ں سے لوگوں کو گمراہ کیا، وہ وعدے جو کبھی پورے نہیں ہوسکتے ، لوگوں سے کئے۔ جنہوں نے پہلے اپنی پارٹی کی پالیسیوں کی مخالفت کی اور اُسی نظریہ کو اپنا ہے لیکن لوگ اب اُن کی کبھی حمایت نہیں کریں گے“۔انہوں نے کہاکہ اپنی پارٹی کا کئی معاماتل پر واضح موقف ہے اور یہ اپنی پارٹی صدر سید محمد الطاف بخاری کی کاو¿شوں کی وجہ سے ہوا کہ روزگار اور زمین کے حقوق ڈومیسائل کے لئے مخصوص کئے گئے۔ انہوں نے مزید کہاکہ اپنی پارٹی عوامی امور پر کبھی سمجھوتہ نہیں کرے گی اور جموں وکشمیر میں مکمل ریاستی درجے کی بحالی تک جدوجہد جاری رہے گی۔ انتظامیہ میں عوامی مسائل کے تئیں بیروکریسی کے مایوس کن رویہ پر افسوس ظاہر کرتے ہوئے منجیت سنگھ نے کہا”تاریخی ریاست کا درجہ گھٹا کر یوٹی بنائے جانے کے بعد لوگوں میں مایوسی ہے، جموں وکشمیر کا ریاستی درجہ بحال ہونا چاہئے اور یہاں منتخب حکومت ہوکیونکہ بیروکریٹک نظام عوامی توقعات پر کھرا اُترنے میں ناکام رہا ہے۔ لوگ سرکاری دفاتر جانا ہی نہیں چاہتے کیونکہ سرکاری حکام کا رویہ اُن کے تئیں سخت ہے ، انتظامیہ میں جوابدہی نام کی کوئی چیز ہی نہیں۔ انہوں نے مزید کہاکہ اگر جموں وکشمیر میں اسمبلی انتخابات ہوتے ہیں تو منتخب حکومت لوگوں کے اعتماد کو بحال کرنے کے قابل ہوگی۔