تازہ ترین

تعلیمی ادارے کھولنے کے منصوبے پر کام کر سکتے ہیں:لیفٹیننٹ گورنر

کووڈ صورتحال پر ضلعی افسران سے تبادلہ خیال،کالج اور یونیورسٹی طلاب کی ٹیکہ کاری لازمی قرار

تاریخ    1 اگست 2021 (00 : 01 AM)   


سرینگر//لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے جموں و کشمیر کے کووڈ ٹاسک فورس ، ڈپٹی کمشنرز اور ڈسٹرکٹ ایس ایس پی کے ساتھ منعقدہ ایک میٹنگ کی صدارت کی ۔ لیفٹیننٹ گورنر نے یو ٹی میں ضلع وار کووڈ منظر نامے کا جائیزہ لیا اور ضلعی انتظامیہ سے کاروائی کی رپورٹ طلب کی ۔ انہوں نے کہا کہ جموں و کشمیر حکومت کو عالمی وبائی امراض کے خلاف لڑائی میں مرکزی حکومت کی مکمل حمایت حاصل ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت نے ویکسی نیشن کی 6.5 لاکھ خوراکوں کے بجائے جموں و کشمیر کو 16 لاکھ سے زیادہ خوارکیں فراہم کی ہیں ۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس سے یو ٹی حکومت کو اگست تک پہلی خوراک کے ساتھ 60 فیصد آبادی کا احاطہ کرنے کا ہدف حاصل کرنے میں مدد ملے گی ۔لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ 45 سال اور اس سے زیادہ عمر کے گروپ میں پہلی خوراک کی جموں و کشمیر کی اوسط ویکسی نیشن کووریج 99.9 فیصد ہے اور مثبت شرح 0.2 فیصد رہ گئی ہے ۔ لیفٹیننٹ گورنر نے ڈی سیز اور ایس ایس پیز کو ہدایت دی کہ وہ کووڈ مناسب رویے پر عمل نہ کرنے کے خلاف زیرو ٹالرنس اپنائیں تا کہ اس بات کو یقینی بنایا جا سکے کہ کووڈ کی صورتحال کنٹرول میں رہے ۔ انہوں نے ڈویژنل کمشنرز اور ڈی سیز کو ہدایت دی کہ کنٹینمنٹ اقدامات کے موثر نفاذ کیلئے مشترکہ ٹیموں کے کام کی نگرانی کریں ۔ لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ کووڈ مناسب رویے پر عمل پیرا ہونا ، ہدف شدہ آبادی کی 100 فیصد ویکسی نیشن کووریج ، زیادہ سے زیادہ ٹیسٹنگ ، ماسک پہننا ، مائیکرو کنٹینمنٹ زون پر سختی سے عملدرآمد ، موثر طبی انتظام کو تیسری لہر کے خطرے کو ختم کرنے کیلئے مشن موڈ میں یقینی بنانے کی ضرورت ہے ۔ لیفٹیننٹ گورنر نے محکمہ صحت کو ہدایت دی کہ وہ کالج اور یونیورسٹی کے طلبا کی ویکسی نیشن کو ترجیح دیں ۔ انہوں نے مزید کہا کہ چونکہ جموں و کشمیر میں کووڈ کی صورتحال میں نمایاں بہتری آئی ہے ، اب ہم تعلیمی ادارے کھولنے کے منصوبے پر کام کر سکتے ہیں ۔ ایڈیشنل چیف سیکریٹری محکمہ صحت اور طبی تعلیم اتل ڈلو نے کووڈ 19 وبائی امراض کا تفصیلی ضلع وار تجزیہ دیا جس میں ویکسین کی دستیابی ، کووڈ 19 معاملات کا روزانہ کا رحجان ، روزانہ کی جانچ کا رحجان وغیرہ شامل ہیں ۔