تازہ ترین

ساری نظریں نئی دلی پر مرکوز

تاریخ    24 جون 2021 (09 : 03 PM)   


نیوز ڈیسک
سرینگر// وزیر اعظم نریندر مودی کی صدارت میں جمعرات کو نئی دلی میں جموں وکشمیر کی سیاسی جماعتوں کے ساتھ کل جماعتی اجلاس کا آغاز ہوگیا۔اس سے قبل اجلاس میں شامل ہونے کیلئے سبھی مدعو لیڈران وزیر اعظم ہاوس پہنچ گئے۔ 
5 اگست2019 کو جموں و کشمیر کے خصوصی ریاستی درجہ کے خاتمے اور اس کو دو مرکزی خطوں میں تقسیم کرنے کے بعد ، مرکز نے جموں کشمیر کی سیاسی پارٹیوں کے ساتھ پہلی بار بات چیت کی پیش کش کی ہے جس کو سب نے قبول کیا ہے۔
گپکار اتحاد کے رہنماو¿ں نے جموں و کشمیر کے خصوصی درجہ کے خاتمے اور اس سے متعلق خصوصی مراعات کے خاتمے کی مخالفت کرتے ہوئے وزیر اعظم کی طرف سے آل جماعتی اجلاس میں شرکت کی دعوت قبول کرلی ہے ۔ اس اتحاد کی نمائندگی کیلئے نیشنل کانفرنس کے صدر فاروق عبد اللہ، پی ڈی پی رہنما محبوبہ مفتی، عمر عبد اللہ اور کیمونسٹ پارٹی (ایم) کے لیڈر یوسف تاریگامی اجلاس میں شرکت کررہے ہیں۔
اس کے علاوہ کانگریس لیڈرغلام نبی آزاد اور آٹھ دیگر سیاسی جماعتوں کے لیڈران بھی اجلاس میں شریک ہیں۔ اجلاس میں ممکنہ طور پربعض مرکزی وزرا بھی حصہ لے رہے ہیں۔
 اجلاس کے لئے کوئی سرکاری ایجنڈا طے نہیں ہے ، لیکن ذرائع کا کہنا ہے کہ خطے میں سیاسی عمل شروع کرنے کے اقدامات پر تبادلہ خیال کیا جاسکتا ہے۔دوسری طرف گپکار اتحاد کے رہنماو¿ں نے کہا ہے کہ وہ اس اجلاس میں جموں و کشمیر کےلئے خصوصی درجہ کی بحالی کا مطالبہ کریں گے۔