ڈاکٹروں و ہیلتھ ورکروں پر حملے ملوثین کیخلاف کیس درج کیا جائے: مرکز

تاریخ    20 جون 2021 (00 : 01 AM)   


نیوز ڈیسک
نئی دلی// مرکزی سرکار نے تمام ریاستی اور مرکزی زیر انتظام علاقوں کی حکومتوں سے کہا ہے کہ وہ ڈاکٹروں اور دیگر ہیلتھ ورکروں پر حملہ کرنے والوں کے خلاف وبائی بیماریوں(ترمیم) ایکٹ 2020کے تحت کیس درج کریں۔ مرکزی داخلہ سیکریٹری اجے بھلہ نے ریاستوں اور مرکزی زیر انتظام علاقوںمیں ڈاکٹروں اور دیگر ہیلتھ ورکروں پر حملوں کے بعد یہ مکتوب روانہ کیا ہے۔ریاستوں اور مرکزی زیر انتظام علاقوں کی حکومتوں کے نام مکتوب میں بھلہ نے لکھا  ’’ آپ اس بات سے اتفاق رکھتے ہونگے کہ ڈاکٹروں پر کسی بھی حملہ سے انکے اعتماد کو دھچکہ لگ سکتا ہے اور وہ غیر محفوظ تصور کرسکتے ہیں‘‘۔انہوں نے کہا کہ اس سے پورے شعبہ صحت پر برے اثرات مرتب ہوسکتے ہیں۔داخلہ سیکریٹری نے کہا کہ موجودہ صورتحال میں یہ بات لازمی بن گئی ہے کہ ایسے لوگوں کے خلاف کاروائی کی جائے جو ڈاکٹروں اور ہیلتھ ورکروں پر حملہ کرسکتے ہیں۔ اجے بھلا نے مزید لکھا ہے کہ ایسے لوگوں کے خلاف ادارتی سطح پر کیس درج کیا جاسکتا ہے اور ان کیسوں کو جلد نپٹانے کی بھی اجازت ہوگی۔ ضرورت پڑے پر وبائی بیماریوں کے ایکٹ 2020کے تحت بھی ایسے لوگوں کے خلاف کیس درج کیا جاسکتا ہے۔ اس قانون کے تحت ڈاکٹر اور دیگر ہیلتھ وکروں پر حملہ کرنے والوں کو 5سال کی سزا یا پھر 2لاکھ روپے کا جرمانہ عائد کیا جاسکتا ہے۔بھلا نے مزید لکھا ہے کہ میں یہ دوبارہ بتایا چاہوں گا کہ سماجی رابطوں کی ویب گاہوں پر غلط مواد اپلوڈ کرنے والوں پر بھی نظر رکھیں ۔ پوسٹروں، سماجی رابطوں کی ویب گاہوں اور دیگر ذرائع سے ڈاکٹروں اور دیگر ہیلتھ ورکروں کی جانب سے کورونا مخالف لڑائی میں انکے رول کی جانکاری فراہم کی جائے۔ 
 

تازہ ترین