تازہ ترین

سیاسی جماعتوں کا خیر مقدم | کہامسائل کا حل دلی میں

تاریخ    20 جون 2021 (00 : 01 AM)   


بلال فرقانی
سرینگر // مین سٹریم جماعتوں نے جموں کشمیر کی سیاسی صورتحال اور دیگر اہم ایشوز پر بات چیت کرنے کیلئے نئی دہلی اجلاس کا خیر مقدم کیا ہے۔نیشنل کانفرنس کا کہنا ہے کہ ایسا لگتا ہے کہ مرکز جموں و کشمیر کے مرکزی دھارے کے رہنماؤں کے ساتھ اس خلا کو ختم کرنا چاہتے ہیں ، جو 5 اگست ، 2019 کے بعد پیدا ہوگیا ہے۔انکا کہنا ہے کہ مرکزی دھارے میں شامل تمام رہنماؤں کو نئی دہلی بلانے کے اقدام کا مقصد دوبارہ پل تعمیر کرنا ہے۔ ہمیں یقین ہے کہ یہ ایک اچھا اقدام ہے لیکن 24 جون کے اقدام پر زیادہ سے زیادہ بات کرنا قبل از وقت ہوگا اور اس سے پہلے اجلاس کا انتظار کرنا بہتر ہوگا ۔ ڈاکٹر فاروق کاکہناتھاکہ ہم بات چیت پریقین رکھتے ہیں اورہماراموقف ہے کہ بات چیت سے ہی مسائل حل ہوسکتے ہیں۔ پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر غلام احمد میر نے کا کہنا تھا کہ ہمارا واضح موقف ہے کہ جموں وکشمیرکے لوگوں کو اعتماد میں لے کر بات چیت کا سلسلہ شروع کیا جانا چاہئے ۔ اسمبلی انتخابات منعقد کرنے کے بارے میں پوچھے جانے پر میر کا کہنا تھا’’'جموں و کشمیر کا ہر فرد چاہتا ہے کہ ایک منتخب حکومت ہونی چاہئے اور خصوصی درجہ واپس دیا جانا چاہئے ‘‘۔اپنی پارٹی کے صدرسیدالطاف بخاری نے مرکزی سرکارکی جانب سے جموں وکشمیرکے لیڈروں کوبات چیت کیلئے مدعوکئے جانے کاخیرمقدم کرتے ہوئے واضح کیاکہ ہمارے مسائل اسلام آباد،لندن یانیویارک میں نہیں بلکہ دہلی میں ہی حل ہونگے ۔ بخاری نے کہاکہ یہ اچھی بات ہے کہ مرکز نے سبھی جماعتوں کے لیڈروںکو بات چیت کیلئے بلایا ہے ،کیونکہ ہماراروزاول سے یہی موقف رہاہے کہ بات چیت سے ہی جموں وکشمیرسے جڑے مشکلات یامسائل کوحل کیا جاسکتا ہے ۔سی پی آئی (ایم) لیڈر اور پی اے جی ڈی کے ترجمان  محمد یوسف تاریگامی نے کہا کہ گپکار اتحاد نے کبھی بھی مرکز کیلئے دروازے بند نہیں کئے تھے۔ انکا کہنا  تھا کہ اتحاد کی میٹنگ میں مثبت فیصلہ لیا جائیگا کیونکہ سبھی جماعتیں جموں کشمیر کی موجودہ صورتحال کا خاتمہ چاہتے ہیں۔ ابھی تک انہیں بھی نئی دہلی سے کوئی دعوت نہیں ملی ہے۔ انہوں نے کہا کہ نہ تو مجھے کوئی رسمی نہ ہی غیر رسمی دعوت موصول ہوئی ہے۔۔اس دوران عوامی نیشنل کانفرنس کے نائب صدر مظفر شاہ نے بتایا کہ مرکزی سرکار کے ساتھ بات چیت کرنے کے حوالے سے انہوں نے پارٹی کے سینئر لیڈران کا اجلاس طلب کیا ہے اور اجلاس میں تمام امور پر غور و خوض کرنے کے بعد اس حوالے سے حتمی فیصلہ لیا جائیگا۔

پی ڈی پی سینئر لیڈر سرتاج مدنی |  خانہ نظر بندی ختم کردی گئی

نیوز ڈیسک
 
سرینگر//نئی دلی میںکل جماعتی میٹنگ کے انعقاد سے قبل پی ڈی پی کے سینئر لیڈرسرتاج مدنی کی خانہ نظر بندی ختم کر دی گئی ہے ۔ انتظامیہ نے سنیچر کو سرتاج مدنی کو رہا کر دیا ۔ سرتاج مدنی کو سال 2019میں 6اگست کو اس وقت حراست میںلیا گیا تھا جب مرکزی سرکار نے جموں کشمیر کی خصوصی پوزیشن کا خاتمہ کر دیا تھا۔کئی ماہ تک انہیں ایس کے آئی سی سی میں دیگر لیڈروں کیساتھ نظر بند رکھا گیا اور بعد میں انہیں ایم ایل اے ہوسٹل میں رکھا گیا ۔اسکے بعد انہیں گپکار روڑ پر ایک گیسٹ میں منتقل کردیا گیا اور سنیچر کو اس پر لگے پہرے ہٹائے گئے۔