بارش کے پانی کو ذخیرہ کرنے کےلئے جموں میں 850 آبی زخائر کی نشاندہی کی گئی

تاریخ    20 جون 2021 (00 : 01 AM)   


نیوز ڈیسک
  جموں // جموں میں پانی کو ذخیرہ کرنے کی سرگرمیوں کے تحت مزید 850 آبی ذخائر کی نشاندہی کی گئی ہے جبکہ 700 نئے اداروں کو تیار کرنے کا ہدف مقرر کیا گیا ہے ۔ضلع ترقیاتی کمشنر جموں انشول گرگ نے کہا کہ 750 ناکارہ ہینڈ پمپوں کی مرمت کی جائے گی اور پانی کے مسائل والے علاقوں میں 350 نئے ہینڈ پمپ لگائے جائیں گے۔انہوں نے کہا کہ ضلعی انتظامیہ نے اپنے منصوبے 'بونڈ' (ڈراپ) کے تحت پانی کے وسیع پیمانے پر تحفظ کی سرگرمیاں شروع کرنے کا منصوبہ بنایا ہے جس میں بارش کے پانی کو ذخیرہ کرنے ، موثر پانی کے نظم و نسق اور زمینی واٹر ری چارج کا تصور کیا گیا ہے۔گرگ نے کہا جل شکتی مہم کے تحت پنچایتی راج اداروں کے تعاون سے 3000 سے زائد کاموں کی منصوبہ بندی کی گئی ہے ۔انہوں نے کہا کہ اس منصوبے کے چھ بڑے اجزاءہیں جن میں موجودہ آبی ذخائر کی بحالی ، نئے آبی ذخائر کی تشکیل ، موجودہ ہینڈ پمپوں کی مرمت ، چھتوں سے آنے والے پانی کو زخیرہ کرنے اور چیک ڈیم بنانے شامل ہیں۔انہوں نے کہا کہ بحالی کےلئے 850آبی ذخائر کی نشاندہی کی گئی ہے۔جبکہ پنچایت کی سطح پر 700 نئے آبی ذخائر تیار کرنے کا ہدف بھی پانی ذخیرہ کرنے اور زمینی واٹر ریچارج کےلئے مقرر کیا گیا ہے۔ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ 350 سرکاری عمارتوں کی نشاندہی کی جاچکی ہے جہاں بارش کا پانی ذخیرہ کرنے میں مدد ملے گی ۔ادھر راجوری میں ضلعی انتظامیہ نے ڈپٹی کمشنر راجیش کمار شون کی سربراہی میں ایک خصوصی خواتین سیل قائم کرنے کا فیصلہ کیا ہے جہاں وہ پانی سے متعلق امور اور شکایات پر بات کر سکتی ہیں۔ 

تازہ ترین