راجوری کے متعدد دیہات میں لوگوں کی زبردستی ویکسی نیشن

سوشل میڈیا کے ذریعہ انتظامیہ پر تنقید ، زبردستی کے بجائے بیدار کرنے پر زور

تاریخ    20 جون 2021 (00 : 01 AM)   


سمت بھارگو
راجوری //سرحد ی ضلع راجوری کے کئی ایک دیہا ت میں محکمہ صحت اور پولیس کی ٹیموں کی جانب سے لوگوں کو زبردستی کووڈ کی ویکسین لگائی جارہی ہے جبکہ اس طرح کے واقعات سامنے آنے کے بعد سوشل میڈیا پر لوگوں نے انتظامیہ کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ زبردستی کے بجائے لوگوں کو اس سلسلہ میں بیدار کیا جائے تاکہ وہ خود ویکسین لگوانے کےلئے آمادہ ہو جائیں ۔راجوری میں متعلقہ محکمہ کی جانب سے زبردستی لگائی جارہی ویکسین کے دوران ایک خاتون کو کھیت میں ویکسین دینے کے بعد بےہوشی کی حالت میں ہی چھوڑ دیا گیا ۔ضلع میں ایک خاتون کو زبردستی ویکسین لگانے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو ئی جس میں محکمہ کے ملازمین اور پولیس کی خواتین ایک خاتون کو کھیت میں زبردستی ویکسین لگاتی ہیں جسکے بعد وہ بےہوش ہو جاتی ہے تاہم متعلقہ ملازمین اس کو یوں ہی کھیت میں چھوڑ کر چلے جاتے ہیں ۔مقامی لوگوں نے مذکورہ معاملہ پر انتظامیہ کو سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ مذکورہ ملازمین کےخلاف کارروائی عمل میں لائی جائے ۔کشمیر عظمیٰ کے پاس موجود ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ سندر بنی کے ایک گاﺅں میں پیش آئے واقعہ کے دوران ایک خاتون کو زبردستی کھیت میں ویکسین لگائی گئی ۔اس ویڈیو میں خاتون کی جانب سے انکار کرنے کے باوجود بھی اس کو ویکسین لگائی جاتی ہے جبکہ مذکورہ خاتون اس عمل کو غیر انسانی قرار دے رہی ہے ۔اسی طرح کی ایک اور ویڈیومیں ایک بزرگ خاتون کو زبردسی ویکسین لگا دی جاتی ہے ۔ویڈیو میں ایک ملازم کی جانب سے کہا گیا ہے کہ زبردستی ویکسین نہ لگائی جائے کیونکہ انجکشن کی سوئی ٹوٹ بھی سکتی ہے تاہم اس کے باوجود کچھ ملازمین نے خاتون کو زبردستی انجکشن لگا دیا ۔سوشل میڈیا پر تبصرہ کرتے ہوئے محمد امین نامی ایک صارف نے کہاکہ ’آپ کسی کو ویکسین کےلئے زبردستی نہیں کرسکتے ‘۔صارفین نے کہاکہ سماج میں ایک بڑی تعداد میں لوگوں نے رضاکارانہ طورپر ویکسین لگوائی ہے تاہم باقی رہ گئے لوگوں کو اس سلسلہ میں بیدار کرنا چائے تاکہ وہ خود اس کےلئے آمادہ ہوں ۔چیف میڈیکل آفیسر راجوری ڈاکٹر شمیم بھٹی نے بتایا کہ مذکورہ معاملہ ان کے نوٹس میں آیا ہے تاہم اس سلسلہ میں تحقیقات کی جارہی ہیں ۔
 

تازہ ترین