تازہ ترین

بانڈی پورہ،بڈگام اور پلوامہ اضلاع میں کووِڈ- 19کی صورتحال بہتر

مثبت مریضوں کی تعدادمیںکمی،صحتیابی کی شرح میں اضافہ،ٹیکہ کاری سرعت سے جاری

تاریخ    16 جون 2021 (00 : 01 AM)   


بڈگام//بڈگام ،پلوامہ اور بانڈی پورہ اضلاع میں کووِڈ- 19مثبت معاملوں کی شرح میں بتدریج نمایاں کمی ہورہی ہے اورصحتیاب ہونے والے مریضوں کی تعداد میں بھی اضافہ ہوا ہے۔ان باتوں کی جانکاری ان اضلاع کے ڈپٹی کمشنروں نے منگلوار کو میڈیا بریفنگ کے دوران ذرائع ابلاغ کے نمائندوں کو دی۔ضلع ترقیاتی کمشنر بڈگام شہباز احمد مرزا نے تفصیلات دیتے ہوئے کہا کہ اپریل 2021 سے اَب تک ضلع میں 13,662 مثبت معاملات سامنے آئے ہیں ۔اُنہوں نے کہا کہ اِن میں سے 12,685مریض صحتیا ب ہوچکے ہیں اور اَب ضلع میں صرف 999 مثبت معاملات ہیں۔اُنہوں نے کہا کہ کووِڈ مثبت معاملات کی صحتیابی کی شرح 93.55 فیصد ہو گئی ہے اور مثبت شرح بتدریج کمی واقع ہو ئی ہے ۔اُنہوں نے مزید کہا کہ گزشتہ ہفتے کی صورتحال کو مد نظر رکھتے ہوئے مثبت شرح 4 سے 4.3 فیصد کے مابین رہی ، اَب گزشتہ دو دِنوں سے یہ کم ہوچکی ہے اور فی الحال یہ 2.3فیصد ہے۔ضلع ترقیاتی کمشنر نے کہا کہ تمام پیرا میٹروں کے حوالے سے صورتحال میں بہت بہتر ی آئی ہے کیوں کہ گزشتہ تین دنوں سے وَبائی امراض کی وجہ سے کسی کی موت کی کوئی اِطلاع نہیں ہے ۔اُنہوں نے کہا کہ ضلع میں ماہ مارچ کے دوسرے نصف حصے سے اَب تک وبائی امراض کی وجہ ے 79 اَفراد کی موت واقع ہوچکی ہے ۔اُنہوں نے کہا کہ ضلع میں اس وقت 120 کنٹینٹ زون ہیں اور کنٹینٹ زون سے مثبت معاملات میں کمی واقع ہوئی ہے اور یہ 23.2 فیصد ہے۔ڈی سی بڈگا م نے عوام الناس سے اپیل کی کہ اِس وبائی بیماری کا خطرہ اب تک نہیں ختم نہیں ہوا ہے او راب بھی اس کا رُخ بڑھتا جارہاہے اور ہمیں سب کو چوکنا رہنا ہوگا۔کووِڈ ۔19 کے دیگر احتیاطی تدابیر پر عمل پیرا رہنے کے علاوہ ایس او پیز اور کووِڈ رہنما خطوط پر من و عن عمل کرنا ہوگا۔شہباز احمد مرزا نے ویکسی نیشن کے بارے میں کہا کہ یہ مہم اطمینان بخش طریقے سے جاری ہے ۔لوگ کووِڈ حفاظتی ٹیکے لگارہے ہیں۔اِس وقت 45 برس عمر اور اس سے اوپر کی عمر کے تقریباً 79 فیصد کا ہدف حاصل ہوچکا ہے اور توقع ہے کہ ہم بہت صد فیصد ہدف حاصل کرلیں گے ۔ ضلع ترقیاتی کمشنر پلوامہ نے کووِڈ ۔19 کے منظرنامے پر ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرنے کے دوران  ضلع میں اس بیماری کے اثرات کو کم کرنے کے لئے کئے جانے والے اقدامات کے بارے میں  جانکاری دی۔ضلع ترقیاتی کمشنر پلوامہ نے کہا کہ ضلع میںصحتیابی کی شرح میں نمایاں بہتری آئی ہے اور اِس عرصے کے دوران مثبت معاملات کی شرح میں بھی کمی واقع ہوئی ہے ۔اُنہوں نے ویکسی نیشن کے حوالے سے کہا کہ بلاک راج پورہ نے ترجیحی گروپوں کا صد فیصد ، پلوامہ میں 90فیصد ، ترال میں 85فیصد اور پانپور میں 72 فیصد کا ہدف حاصل ہوچکا ہے اور تین بلاکوں میں بھی ترجیحی گروپوں کی ٹیکہ لگانے کے لئے کوششیں تیز کی جار ہی ہیں۔بصیر الحق چودھری نے مزید کہا کہ اہداف کے حصول کے لئے گھر گھر جاکر ٹیکے لگانے اور یومیہ بنیاد پر اوسطً3000 سے 4000 ٹیسٹ بھی کئے جارہے ہیں۔ڈپٹی کمشنر بانڈی پورہ ڈاکٹر اویس احمد نے  میڈیا کو ضلع میں موجودہ کووڈ منظر نامے اور تخفیف کی کوششوں سے آگاہ کیا ۔ تفصیلات دیتے ہوئے ڈی سی نے بتایا کہ اس مہینے میں ضلع میں فعال کیسوں میں زبردست کمی واقع ہوئی ہے ۔ انہوں نے کہا ک ضلع میں گذشتہ دو ہفتوں سے مثبت شرح تقریباً 2.5 فیصد ہے ۔ ڈاکٹر اویس نے بتایا کہ روزانہ کی بنیاد پر 1500 سے 2000 ٹیسٹ کئے جاتے ہیں اب تک 2.42 لاکھ ٹیسٹ کئے گئے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ مجموعی طور پر مثبت واقعات کی تعداد بھی کم ہو کر 332 ہو گئی ہے جس میں سے صرف 49 مریض ہسپتال آئسولیشن میں ہیں اور ان میں سے 17 آکسیجن امدادی نظام پر ہیں ۔ ڈاکٹر اویس نے بتایا کہ صحتیابی کی شرح 95.2 فیصد ہو گئی ہے جبکہ 8578 مریض صحتیاب ہوئے ہیں اور گذشتہ سال سے 98 مریضوں کی اموات ہوئی ہے ۔ ویکسی نیشن کے بارے میں تفصیلات دیتے ہوئے ڈی سی نے کہا کہ 45 سال سے زیادہ عمر والے گروپ میں 88 فیصد افراد کو 102859 ٹیکے لگائے جا چکے ہیں ۔ ڈی سی نے عام لوگوں اور دیگر تمام اسٹیک ہولڈرز سے اپیل کی کہ وہ ضلع کو ییلو زون قرار دئیے جانے کے باوجود کووڈ مناسب رویہ ( سی اے بی ) کی سختی سے پیروی کریں ۔ انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ وہ اس وبائی مرض سے لڑنے کیلئے حکومت سے تعاون جاری رکھیں ۔ ضلع میں کورونا پابندیوں میں نرمی کے بارے میں ڈاکٹر اویس نے کہا کہ پابندیوں میں نرمی کا مطلب یہ نہیں ہے کہ وبائی مرض ختم ہو گیا ہے ۔ انہوں نے لوگوں سے اپیل کی کہ وہ حکومت کی جانب سے جاری کردہ ایس او پیز پر سختی سے عمل کریں ۔