تازہ ترین

نیٹو سربراہان نے چین کو عالمی تحفظ کیلئے خطرہ قرار دیا

تاریخ    16 جون 2021 (00 : 01 AM)   


یو این آئی
برسلز //دی نارتھ ٹریٹی آرگنائیزیشن (نیٹو) کے رکن ممالک کے سربراہان نے چین کو گلوبل سیکیورٹی کے لیے چیلنج قرار دیتے ہوئے اس کی جانب سے تیزی سے میزائلوں کی تیاری پر خدشات کا اظہار کردیا۔ برسلز میں اجلاس میں نیٹو رکن کے ممالک نے مشترکہ بیان میں چین کو عالمی سیکیورٹی رسک قرار دیا۔عہدیداروں نے اپنے بیان میں اس بات پر بھی تشویش کا اظہار کیا کہ چین تیزی سے ایٹمی میزائل بنا رہا ہے۔بیان میں چین کی جانب سے تیزی سے میزائلوں کی تیاری کو انٹرنیشنل قوانین اور سیکیورٹی الائنس کے لیے منظم چیلنج بھی قرار دیا گیا۔اگرچہ بیان میں نیٹو کے رکن ممالک کے 30 سربراہان نے چین کو حریف کہنے سے گریز کیا لیکن چین کے اقدامات پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اس کی جانب سے اپنی مسلح افواج کو جدید کرنے اور اسے ڈس انفارمیشن کے پھیلاو کے استعمال پر بھی خدشات کا اظہار کیا گیا۔بیان میں بیجنگ سے عالمی وعدوں اور معاہدوں پر عمل کرنے اور ذمہ دارانہ رویہ اختیار کرنے کا مطالبہ بھی کیا گیا۔  نیٹو اجلاس کے آغاز پر اسٹولٹن برگ نے پریس کانفرنس میں کہا کہ چین ہر محاذ میں نیٹو کے قریب پہنچ رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ چین مغربی اقدار سے میل نہیں کھاتا، اس لیے اس کی طاقت کا مشترکہ انداز سے جواب دینا ضروری ہے۔ دوسری جانب چین نے پیر کے روز کہا ہے کہ جی سیون ممالک سیاسی دھوکا دہی میں ملوث ہیں۔ اس سے قبل جی سیون نے سنکیانگ اور ہانگ کانگ میں انسانی حقوق کے معاملے میں بیجنگ حکومت کے کردار پر تنقید کی تھی۔ 
 

تازہ ترین