تازہ ترین

کرگل میں مذہبی رواداری کی زندہ مثال

کورونا کا شکار ہوئے رانچی کے عیسائی کی آخری رسوم ادا کی گئیں

تاریخ    18 مئی 2021 (00 : 01 AM)   


غلام نبی رینہ
کرگل//کرگل ضلع میں پیر کومقامی مسلمانوں نے رضاکارانہ طور پر ایک عیسائی کے آخری رسوم اداکئے جس کی موت کورونا وائرس کی وجہ سے واقع ہوئی ۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ کرگل میں این ایچ پی سی کے ایک ملازم سمیر آکا ساکن رانچی جھارکھنڈ کا کورونا ٹیسٹ گذشتہ ہفتے مثبت آیا تھا جس کے بعد مذکورہ ملازم کو ہسپتال میں داخل کیا گیا جہاں وہ فوت ہوگیا۔مذکورہ ملازم عیسائی مذہب سے وابستہ تھا۔اس کے فوت ہوتے ہی جمعیت العلماء اثنا عشریہ اور اہلسنت والجماعت کے رضاکاروں نے اُس کی لاش کو مسلم قبرستان سے متصل چمن موڈ کے قریب دفن کردیا۔ اہلسنت والجماعت نے دفن کرنے کیلئے زمین فراہم کی اورانجمن کے نوجوانوں نے کفن دفن کیلئے ساز و سامان فراہم کیا۔ان کے اہلخانہ کے آنے کے بعد لیہہ سے ایک عیسائی پادری کو بلا کر کووڈ19 کے رہنما خطوط پر عمل کرتے ہوئے دفن کیا گیا۔انجمن جمعیت العلماء اثنا عشریہ کرگل کے صدر نے اپنے ٹویٹر پر تدفین کی کچھ تصاویر بھی شیئر کیں۔انجمن اثناعشریہ کے صدر نظیر المہدی محمدی نے سبھی جوانوں کا شکریہ ادا کیا اور کرگل کی قوم سے ہمیشہ ایسی خدمات پیش رکھنے کی اپیل کی۔یاد رہے کرگل میں 4 سکھ گھرانے اور 3 ہندو گھرانے مقیم ہیں جن کے آخری رسوم بھی کرگل کے مسلمان ہی انجام دیتے ہیں۔

تازہ ترین