تازہ ترین

نوجوانوں سے جنگجویت کاراستہ ترک کرنے کی محبوبہ مفتی کی اپیل

کشمیرمیں پک رہا لاوا کبھی نہ کبھی پھٹے گا تو بہت بڑا نقصان ہوگا

تاریخ    13 اپریل 2021 (00 : 01 AM)   


 سری نگر//پی ڈی پی صدرمحبوبہ مفتی نے کشمیری نوجوانوں سے جنگجویت کاراستہ ترک کرنے کی اپیل کرتے ہوئے کہاکہ شاید کچھ لوگ چاہتے ہیں کہ لوگ بندوق اٹھائیں تاکہ وہ دنیا کو بتا سکیں کشمیری دہشت گرد ہیں۔دفعہ370کی بحالی کوپیپلز الائنس کابڑا مقصد قرار دیتے ہوئے محبوبہ مفتی نے خبردارکیاکہ کشمیرمیں لاوا پک رہا ہے جو کبھی نہ کبھی پھٹے گا تو بہت بڑا نقصان ہوگا۔انہوں نے وزیراعظم مودی کو صلح صفائی کا راستہ اپنانے کی صلاح دیتے ہوئے کہاکہ آخر کار ہندوستان اور پاکستان کو بات کرکے جموں وکشمیر کے مسئلے کا حل نکالنا پڑے گا۔ پی ڈی پی صدر اور سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے سوموارکو ایک تقریب کے حاشئے پر نامہ نگاروں کے ساتھ بات کرتے ہوئے کہاکہ شاید کچھ لوگ چاہتے ہیں کہ جموں وکشمیر کے نوجوان بندوق اٹھائیں تاکہ ہم دنیا کو بتا سکیں کہ یہ دہشت گرد ہیں اور ان کا کوئی مسئلہ نہیں ہے۔موصوفہ کا کہنا تھاکہ میں بار بار نوجوانوں سے گذارش کرتی ہوں کہ وہ گولیوں سے اپنی جان نہ گنوائیں بلکہ جمہوری طریقے سے بات کریں، آج نہیں کل نہیں لیکن آخر کار دونوں ہندوستان اور پاکستان کو بات کرکے جموں وکشمیر کے مسئلے کا حل نکالنا پڑے گا۔پیپلز الائنس برائے گپکار اعلامیہ کے بارے میں پوچھے جانے پر پی ڈی پی صدرمحبوبہ مفتی نے کہاکہ پی اے جی ڈی کا مقصد دفعہ 370 بحال کرنے کے لئے کوشش کرنا ہے، فاروق صاحب کی طبیعت ناساز ہونے کی وجہ سے میٹنگ نہیں ہو رہی ہے، پی اے جی ڈی ابھی صحیح و سالم ہے کیونکہ لوگ اس کے ساتھ ہیں۔جموں و کشمیر میں اسمبلی حلقوںکی سر نو حد بندی کے بارے میں پوچھے جانے پر پی ڈی پی صدراورپی اے جی ڈی کی نائب صدر محبوبہ مفتی نے کہاکہ مرکزی حکومت چاہتی ہے کنٹرول زیادہ سے زیادہ وقت تک ان کے ہاتھوں میں ہی رہے۔انہوں نے کہاکہ اگر یہاں انتخابات ہوئے تو کنٹرول ان کے ہاتھوں میں نہیں رہے گا اور ان کی مداخلت بند ہوجائے گی۔سابق وزیراعلیٰ کا کہنا تھا کہ یہاں کے سارے فیصلے جیسے پکڑ دھکڑ وغیرہ دلی سے آتے ہیں۔انہوںنے کہا کہ کشمیری پھنسا ہوا ہے یہاں لائوا پک رہا ہے جو کبھی نہ کبھی نہ پھٹے گا تو بہت بڑا نقصان ہوگا۔محبوبہ مفتی نے کہاکہ میں مرکزی سرکار سے کہتی ہوں کہ ایسا نہ کریں کہ کل سارے راستے بند ہوں گے۔انہوں نے ہندوستان اور پاکستان کے درمیان بات چیت کی بحالی پر زور دیتے ہوئے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی پاکستان جائیں اور صلح و صفائی ہوجائے۔انہوں نے دونوں ممالک کے درمیان بات چیت کا سلسلہ بحال ہونے پر زور دیا۔ادھر محبوبہ مفتی نے دفعہ370 کی بحالی کیلئے جدوجہد جاری رکھنے کاعزم کرتے ہوئے کہاکہ جموں وکشمیرکوخصوصی پوزیشن چین یا پاکستان نے نہیں، بلکہ بھارت نے کچھ شرائط پردی تھی۔انہوں نے مرکزی سرکار کے فیصلے کوناقابل قبول قرار دیتے ہوئے اس یقین کااظہارکیاکہ مرکز کو جموں و کشمیر کی خصوصی حیثیت بحال کرنا ہوگی۔محبوبہ مفتی نے وزیراعظم مودی کوپاکستان جانے کی صلاح دیتے ہوئے اٹل بہاری واجپائی کاقول دوہرایاکہ ہم دوست بدل سکتے ہیں لیکن ہمسایے نہیں ۔جے کے این ایس کے مطابق پی ڈی پی صدر محبوبہ مفتی نے سوموارکویہاں پارٹی کارکنوں کے ایک کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ان کی جماعت(پی ڈی پی ) جموں و کشمیر کی خصوصی حیثیت کی بحالی کے لئے جدوجہد جاری رکھے گی۔انہوں نے کہاکہ ہم جموں و کشمیر کی خصوصی حیثیت کی بحالی کے لئے اپنی جدوجہد جاری رکھیں گے۔محبوبہ مفتی کاکہناتھاکہ ہم مرکز ئی حکومت کے اس فیصلے(دفعہ370کی منسوخی) کو قبول نہیں کرتے ہیں۔جموں وکشمیر کے سابق وزیر اعلی نے کہا کہ سابقہ ریاست کو خصوصی حیثیت آئین ہند نے دی ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ پوزیشن، چین یا پاکستان نے نہیں دی تھی۔ بلکہ ہم (جموں وکشمیر)نے کچھ شرائط پر ہندوستان کے ساتھ الحاق کیا تھا اور ان میں سے ایک ہماری شناخت کی حفاظت کرنا تھا۔انہوں نے کہاکہ جب ہم اس کی بحالی چاہتے ہیں تو بی جے پی حکومت کو تکلیف کیوں ہوجاتی ہے ؟۔محبوبہ مفتی نے کہا کہ مرکز کو جموں و کشمیر کی خصوصی حیثیت بحال کرنا ہوگی۔انہوں نے کہاکہ اگر آپ(مرکز) جموں و کشمیر کے لوگوں کی پرواہ کرتے ہیں تو آپ نے جو کچھ ہم سے چھین لیا ہے اسے آپ کو واپس کرنا پڑے گا۔سابق وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی نے زوردیکرکر کہا کہ کشمیر سمیت تمام بقیہ امور کے حل کیلئے ہندوستان اور پاکستان کو مذاکرات کی میز پر بیٹھنا ہوگا۔ محبوبہ مفتی نے وزیراعظم مودی کوپاکستان جانے کی صلاح دیتے ہوئے اٹل بہاری واجپائی کاقول دہرایاکہ ہم دوست بدل سکتے ہیں لیکن ہمسایے نہیں۔